اسلام میں تصور مزاح اور مسکراہٹیں

میں تصور مزاح اور مسکراہٹیں

 

مصنف :

 

صفحات: 184

 

ایک فطرت ہے جو ہر کو کے تابع رہتے ہوئے تمام فطری تقاضوں کو پورا کرنے کی اجازت دیتا ہے- انسان کے اندر چونکہ مزاح اور خوش طبعی کا فطری میلان پایا جاتا ہے اس لیے اسلام میں شرعی حدود وقیود کے اندر رہتے ہوئے اس پر کسی قسم کی کوئی قدغن نہیں لگائی بلکہ اس کی حوصلہ افزائی بھی کی گئی ہے -لیکن بدقسمتی سے ہمارے معاشرے میں مزاح اور ہنسی کے نام پر ایسے رسائل وجرائد دستیاب ہیں جو یا تو انتہائی فحش ہیں یا پھر جھوٹ سے بھرے ہیں اس لیے زیر مطالعہ کتاب میں مصنف نے  اسلام کے اندر تصور مزاح پر اپنی معروضات پیش کرتے ہوئے انسانی سے ایسے معتبر اور معیاری جمع کر دئیے ہیں جنہیں پڑھ کر یقیناً آپ کے چہرے پر بکھر جائے گی

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ از مؤلف 1
کی کے مطابق فیصلہ نہ کرنا 8
تعالی کے اسماء و صفات میں 15
اسماء و صفات پر ایمان کا درجہ 17
اسماء و صفات سے متعلق ایک شبہ کا ازالہ 19
اسماء و صفات پر ایمان بنیادی 22
اسماء و صفات میں کا معانی 24
صالحین کے بارے ایک غلط فہمی کا ازالہ 26
کسی مخلوق کے بارے میں غیب جاننے کا عقیدہ رکھنا 27
نجومی , جوتشی اورچوری کا پتہ بتانے کےپاس جانا 33
نجومی,کاہن اور جوتشی سے متعلق ایک غلط فہمی کاازالہ 36
غیراللہ سے و فریاد کرنا 40
غیراللہ سے و فریاد کے متعلق ایک غلط فہمی ازالہ 46
سے روکنے والوں پر ایک بہتان کا جواب 60
غیراللہ کے لیے نذر ماننا اور جانور ذبح کرنا 65
جادو اور شعبدہ بازی 72
قرآن, اور رسول کا مذاق اڑانا 82
فحاشی اور بے حیائی کو حلال سمجھنا اور ان پر راضی ہونا 84
تعویذ و گنڈے 87
فہرست 97
ضعیف پرعمل کرنے والوں کے لیے ایک لمحہ فکریہ 99

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...