تحریک ختم نبوت جلد 64

تحریک جلد 64

 

مصنف : ڈاکٹر محمد بہاؤ الدین

 

صفحات: 305

 

پروفیسر ڈاکٹرمحمد سلیمان بہاؤ الدین فاتح قادیان شیخ الاسلام مولانا ابو الوفا امرتسری ﷫ کے مرزائیت کے رد ّمیں تیار کردہ معروف  مبلغ کہ جن کی ساری زندگی قادیانیت کے تعاقب اور مسلکِ اہل کے فروغ و اشاعت میں بسر ہوئی۔ بابائے تبلیغ، مولانا محمد گورداسپوری رحمہ کے صاحبزادہ ہیں ۔موصوف  دینی و دنیوی سے آراستہ ہیں لکھنے پڑھنے کا ذوق اچھا ہے۔ستر اور اسی کی دہائی میں  پاک وہند کےمعروف  مجلات میں انکے کئی علمی وتحقیقی شائع ہوئے ۔مجلہ محدث،لاہور میں بھی درجن سے زائد  مضامین شائع ہوئے ۔ڈاکٹر  بہاؤ الدین صاحب  شہید ملت علامہ احسان الہی ظہیر  کےجاری کردہ رسالہ ’ترجمان الحدیث ‘ کی مجلس ادارت میں بھی شامل رہے ۔ 1970ء کے عشرے میں جامعہ سلفیہ میں انگریزی کے اُستاد رہےاور  جامعہ اِسلامیہ بہاولپور اور بعض دوسرے سرکاری کالجز میں پروفیسر رہے۔ 1987ء سے برطانیہ میں مقیم ہیں۔ ’تحریک ختم نبوت‘ اور ’ اہل حدیث‘ ان کی شاہکار تصانیف ہیں جو پاک و ہند سے شائع ہو کر اہل سے دادِ تحسین حاصل کر چکی ہیں۔ ڈاکٹر صاحب کے تفصیلی حالات ان کی تصنیف ’ تحریک ختم نبوت‘ کی جلد نمبر 9کے شروع  میں ملاحظہ کیے جاسکتے ہیں۔ زیر کتاب’’تحریک ختم نبوت ‘‘ ڈاکٹر بہاؤالدین  حفظہ اللہ  کی وہ  شاہکار تصنیف ہے  جوختم نبوت کےسلسلے میں  علمائے اہل کی  تحقیقی وتصنیفی پرمشتمل  ہے۔ ڈاکٹر صاحب نے اس کتاب میں 1891ء سے تقسیم ہند تک  ردّ قادیانیت کے سلسلے میں  اہل  علم کی تحقیقی وتصنیفی کاوشوں  کو تن تنہاء ذوق و شوق اوربڑی محنت و ہمت سے 74؍جلدوں میں مرتب کرکے عظیم  الشان تاریخی  کارنامہ انجام دیا ہے۔ جو میں سنہری حروف سے لکھا جائے گا۔ دیار غیر میں  رہتے ہوئے پروفیسر محمد سلیمان اظہر (ڈاکٹر بہاء الدین) کو تعالیٰ نے یہ سعادت بخشی ہے کہ انہوں نے ختم نبوتﷺ  اور ردِّ قادیانیت کے حوالے سے ایک بے مثال ’’انسائیکلوپیڈیا‘‘ مرتب کرکے ثابت کیا ہے کہ وہ نمونہ کے امین ہیں۔ اس انسائیکلو پیڈیا میں برصغیر کے مختلف مکاتب فکر کے اکابرین کی کا تزکرہ ہے جنہوں نے مرزا غلام احمد کی زندگی  اور کے بعد بھی اس کی جھوٹی نبوت کا ردّکیا اور پھر تحریک ختم نبوتﷺ اور ردقادیانیت میں تقریری اور تحریری پیش کیں ۔74 میں سے 60 جلدیں  تو باقاعدہ  مختلف مکتبات سے پرنٹ ہوچکی ہیں باقی جلدیں ابھی طباعت کے انتظار  میں  ہیں۔تحریک کی ابتدائی  جلدیں  اولاً  سے شائع ہوئی بعد ازاں مکتبہ قدوسیہ ،لاہور نے  اس کی پہلی 17 ؍جلدیں شائع  کیں۔جلد17 کےبعد60تک تمام جلدیں مکتبہ اسلامیہ ،لاہور سے شائع ہوئیں۔یادر ہے  اس قدر  وسیع اور عظیم کام  ایک ادارے ،جماعت  یاتنظیم کام ہے جوکہ ڈاکٹر بہاؤالدین صاحب نے اپنے صاحبزادے سہیل اظہر صاحب کی معاونت سے خود ہی انجام دیا ہے۔جس  میں مواد کا حصول وتلاش  ،ایڈیٹنگ وترتیب   کے امور شامل ہیں ۔حصول مواد اور اشاعت وطباعت    پر اٹھنے والے سارے  مالی اخراجات  کاانتظام بھی خود صاحب تصنیف نے  کیا ہے۔ تعالیٰ   ڈاکٹر   کی اس  عظیم کاوش کو قبول  فرما کر ان کے میزانِ  حسنات میں اضافے کا باعث بنائے اور انہیں  ایمان وسلامتی  والی زندگی سےنوازے ۔(آمین)تحریک کی جلدیں جیسے  جیسے تیار ہوتی رہیں  کتاب وسنت سائٹ پر پبلش ہوتی رہیں اب  تک  اس کی 53جلدیں کتاب وسنت سائٹ  پبلش ہوچکی ہیں  افادۂ عام کےلیے اب اس  کی اس کی مزید جلدوں کو بھی  پبلش کیا  جارہا ہے ۔تحریک ختم نبوت کی تمام جلدیں ڈاکٹر بہاؤ الدین کی اپنی سائٹ(https://drsuleman.com/) پربھی موجود ہیں   ۔

عناوین صفحہ نمبر
فاتحۃ الکتاب 7
برق آسمانی برخرمن 8
اخبار اہل امرتسر 1938ءسے 56
مجھ پر قاتلانہ حملہ اورقادیان میں شماتت 56
برتذکرہ۔1 57
اورمصری نزاع اوراس کے فیصلے کی صورت 61
یہ ہے یا آریہ سماج 75
قادیان کے ایک مصنف کو سزائے قید وجرمانہ 79
نبی قادیان اوررب قادیان 80
خلیفہ قادیان اپنے مقصد 81
برتذکرہ۔2 83
مرزا اپنے مقصد میں فیل 88
مختلفہ کا نمونہ 91
برتذکرہ۔3 92
ڈاکٹر صاحب سچے ہیں یا مرزا صاحب 95
مرزا اپنے دعوی میں فیل 98
مرزا اورمولانا محمد حسین مرحوم بٹالوی 100
ڈاکٹر بشارت اپنے مسیح کی تکذیب پر اتر آئے 102
بہائی اوردین 103
برتذکرہ۔4 107
قرآنی لفظ خاتم النبیین کی صحیح اور معتبر 112
مرزا فیل گئے ہیں 120
مرزائیوں کا رشتہ ناطہ 132
ڈاکٹر بشارت احمد ،مرزا کی تکذیب پر 134
فاروق قادیان کا باطل دعوی 131
مرزائیوں کا رشتہ ناطہ 132
ڈاکٹر بشارت احمد،مرزا کی تکذیب پر 134
محمدی بیگم کا 136
یہ ہے یا آریہ سماج 141
کیا شیخ بہاءاللہ تھے 146
بر تذکرہ۔5 149
یہ ہے یا آریہ سماج 152
سوامی دیانندسرسوتی اورمرزا 156
لاہوریوں کوخلیفہ قادیان کے سامنے جھک جانا چاہیے 160
کے کلاس فیلو 161
امر جامع پر جمع ہوجاؤ 163
مرزاصاحب چینی مغل تھے یا الاصل ایرانی 168
ان دو میں تیسرے ہم ہوں گے 170
آسمانی اورقادیان میں اضطراب 171
خلیفہ قادیان کا ایک عجیب فیصلہ 173
کیا احمدیہ جماعت سے حکومتیں بھی ڈرتی ہیں 174
جرمن ترجمہ 175
شیخ بہاءاللہ ایرانی مدعی الوہیت تھے یا رسالت 176
مرزا کا احیائے 178
مرزا کی کامیابی میں 181
احمدیوں کو ضروری کام پر توجہ کرنی چاہیے 183
مسیح موعود اورتقسیم مال 184
کیا مرزا،توہین رسول کرنیوالا تھا؟ 186
خلیفہ قادیان کی خدمت میں عریضہ 187
چوہدری عبدالغنی مرزائی کے ساتھ مباہلہ 189
مرزائیوں کو کھلا چیلنج 191
احمدیہ اخباروں کا مسیح موعود نمبر 192
مرزا بری طرح فیل ہوئے 198
آخری فیصلہ پر فیصلہ کن مناظرہ 201
مرزاغلام احمد کا قدوم 204
سوالات متعلقہ مسیح کے جوابات ۔6 223
مسلمانوں کی بدحالی اورمرزا کی ناکامی 226
مغالطہ: کی تاویل اور اس کا جواب 232
پیغام صلح کے الفاظ میں مرزا صاحب کی دعوت 234
بہاءاللہ کی بابت سوال اور اس کا جواب 237
تقدیم وتاخیر اور اخبار فاروق 238
سوالات متعلقہ مسیح کے جوابات 241
اورلاہوری مرزائیوں میں مباحثہ کب ہوگا؟ 245
ساون کے اندھوں کو ہراہی نظرآتا ہے 246
ترجمان اورقادیان 249
سوالات متعلقہ مسیح کے جوابات 250
مرزا کرشن صاحب 253
معیار صداقت مسیح موعود 256
تیلی بھی کیا اور روکھا کھایا 258
کذبات مرزا۔2 261
نبیوں اور نجومیوں کی پیش گوئیوں میں فرق 265
تبرکات مرزا 267
کی عظیم الشان پیش گوئی 268
کیا مانع نبوت نہیں؟ 271
مرزا صاحب کی دورخی بابانانک کے متعلق 273
مسیح اسرائیلی اور مسیح محمدی 274
گورنمنٹ برطانیہ پرمرزا صاحب کا حملہ 277
مسیح قادیان ،خلیفہ قادیان اورمسیح علیہ السلام 280
چیلنج متعلقہ نویسی کی حقیقت 281
میری وفات اورقادیان میں شادیانے 285
رسول کیم کا مرتبہ قادیان کی میں 287
مرزا کی زندگی پر انصاف سے غورکرو 289
مرزا کی خدمت اسلامیہ 295
مرزائیانہ تحریف کا جواب 296
فرقہ ناجیہ جماعت احمدیہ ہے؟ 298
مباہلہ اوراس کا ہولناک انجام 301
میں سرمایہ اصحاب الحدیث کا نگہبان 302
اعتراف وخراج عقیدت 303

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2

You might also like
Comments
Loading...