تحریک ختم نبوت جلد 73

تحریک جلد 73

 

مصنف : ڈاکٹر محمد بہاؤ الدین

 

صفحات: 275

 

پروفیسر ڈاکٹرمحمد سلیمان بہاؤ الدین فاتح قادیان شیخ الاسلام مولانا ابو الوفا امرتسری ﷫ کے مرزائیت کے رد ّمیں تیار کردہ معروف  مبلغ کہ جن کی ساری زندگی قادیانیت کے تعاقب اور مسلکِ کے فروغ و اشاعت میں بسر ہوئی۔ بابائے تبلیغ، مولانا محمد گورداسپوری رحمہ کے صاحبزادہ ہیں ۔موصوف  دینی و دنیوی سے آراستہ ہیں لکھنے پڑھنے کا ذوق اچھا ہے۔ستر اور اسی کی دہائی میں  پاک وہند کےمعروف  مجلات میں انکے کئی علمی وتحقیقی شائع ہوئے ۔مجلہ محدث،لاہور میں بھی درجن سے زائد  مضامین شائع ہوئے ۔ڈاکٹر  بہاؤ الدین صاحب  شہید ملت علامہ احسان الہی ظہیر  کےجاری کردہ رسالہ ’ترجمان الحدیث ‘ کی مجلس ادارت میں بھی شامل رہے ۔ 1970ء کے عشرے میں جامعہ سلفیہ میں انگریزی کے اُستاد رہےاور  جامعہ اِسلامیہ بہاولپور اور بعض دوسرے سرکاری کالجز میں پروفیسر رہے۔ 1987ء سے برطانیہ میں مقیم ہیں۔ ’تحریک ختم نبوت‘ اور ’ اہل حدیث‘ ان کی شاہکار تصانیف ہیں جو پاک و ہند سے شائع ہو کر اہل سے دادِ تحسین حاصل کر چکی ہیں۔ ڈاکٹر صاحب کے تفصیلی حالات ان کی تصنیف ’ تحریک ختم نبوت‘ کی جلد نمبر 9کے شروع  میں ملاحظہ کیے جاسکتے ہیں۔ زیر کتاب’’تحریک ختم نبوت ‘‘ ڈاکٹر بہاؤالدین  حفظہ اللہ  کی وہ  شاہکار تصنیف ہے  جوختم نبوت کےسلسلے میں  علمائے کی  تحقیقی وتصنیفی پرمشتمل  ہے۔ ڈاکٹر صاحب نے اس کتاب میں 1891ء سے تقسیم ہند تک  ردّ قادیانیت کے سلسلے میں  اہل  کی تحقیقی وتصنیفی کاوشوں  کو تن تنہاء ذوق و شوق اوربڑی محنت و ہمت سے 74؍جلدوں میں مرتب کرکے عظیم  الشان تاریخی  کارنامہ انجام دیا ہے۔ جو میں سنہری حروف سے لکھا جائے گا۔ دیار غیر میں  رہتے ہوئے پروفیسر محمد سلیمان اظہر (ڈاکٹر بہاء الدین) کو تعالیٰ نے یہ سعادت بخشی ہے کہ انہوں نے ختم نبوتﷺ  اور ردِّ قادیانیت کے حوالے سے ایک بے مثال ’’انسائیکلوپیڈیا‘‘ مرتب کرکے ثابت کیا ہے کہ وہ نمونہ کے امین ہیں۔ اس انسائیکلو پیڈیا میں برصغیر کے مختلف مکاتب فکر کے اکابرین کی کا تزکرہ ہے جنہوں نے مرزا غلام احمد کی زندگی  اور کے بعد بھی اس کی جھوٹی نبوت کا ردّکیا اور پھر تحریک ختم نبوتﷺ اور ردقادیانیت میں تقریری اور تحریری پیش کیں ۔74 میں سے 60 جلدیں  تو باقاعدہ  مختلف مکتبات سے پرنٹ ہوچکی ہیں باقی جلدیں ابھی طباعت کے انتظار  میں  ہیں۔تحریک کی ابتدائی  جلدیں  اولاً  سے شائع ہوئی بعد ازاں مکتبہ قدوسیہ ،لاہور نے  اس کی پہلی 17 ؍جلدیں شائع  کیں۔جلد17 کےبعد60تک تمام جلدیں مکتبہ اسلامیہ ،لاہور سے شائع ہوئیں۔یادر ہے  اس قدر  وسیع اور عظیم کام  ایک ادارے ،جماعت  یاتنظیم کام ہے جوکہ ڈاکٹر بہاؤالدین صاحب نے اپنے صاحبزادے سہیل اظہر صاحب کی معاونت سے خود ہی انجام دیا ہے۔جس  میں مواد کا حصول وتلاش  ،ایڈیٹنگ وترتیب   کے امور شامل ہیں ۔حصول مواد اور اشاعت وطباعت    پر اٹھنے والے سارے  مالی اخراجات  کاانتظام بھی خود صاحب تصنیف نے  کیا ہے۔ تعالیٰ   ڈاکٹر   کی اس  عظیم کاوش کو قبول  فرما کر ان کے میزانِ  حسنات میں اضافے کا باعث بنائے اور انہیں  ایمان وسلامتی  والی زندگی سےنوازے ۔(آمین)تحریک کی جلدیں جیسے  جیسے تیار ہوتی رہیں  کتاب وسنت سائٹ پر پبلش ہوتی رہیں اب  تک  اس کی 53جلدیں کتاب وسنت سائٹ  پبلش ہوچکی ہیں  افادۂ عام کےلیے اب اس  کی اس کی مزید جلدوں کو بھی  پبلش کیا  جارہا ہے ۔تحریک ختم نبوت کی تمام جلدیں ڈاکٹر بہاؤ الدین کی اپنی سائٹ(https://drsuleman.com/) پربھی موجود ہیں   

 

عناوین صفحہ نمبر
فاتحۃ الکتاب 5
قسط اول۔تحریک تحفظ کا نقطہ آغاز 6
قسط دوم۔تحریک تحفظ ۔2 11
قسط سوم۔تحریک تحفظ ۔3 16
قسط چہارم۔تحریک تحفظ ۔4 23
قسط پنجم۔ میں کا چیلنج مباحثہ۔5 30
قسط ششم ۔مباحثہ ۔6 40
قسط ہفتم ۔لکھوی خاندان کی رفیع الشان ۔7 48
قسط ہشتم ۔تحریک کے حقیقی بانی وقائدین کون ہیں؟۔8 59
تحریک کے کارواں :پیر کولڑوی یامولانا بٹالوی؟ 76
قسط نہم ۔سید محمد نذیر حسن محدث دہلوی۔9 87
قسط دہم ۔نشان آسمانی ۔10 104
قسط یازدہم ۔فتوی تکفیر۔11 113
قسط یادوزدہم۔مرزا غلام احمد اور محمدی بیگم۔12 123
قسط سیزدہم ۔مرزا غلام احمد اورمحمدی بیگم۔13 134
قسط چہاردہم۔منذرالہام بابت مولانا بنا بٹالوی۔14 145
قسط پانزدہم۔لاہور اور امر تسر میں مباہلے ۔15 156
قسط شانزدہم۔قادنیوں کے ساتھ مباہلہ اور غزنوی خاندان۔16 170
ہمیں کسی نئے مباہلے کی ضرورت نہیں 181
قسط ہفدہم ۔بٹالوی رجوع پیشگوئی۔17 186
قسط ہثردہم۔موسی وفرعون ۔18 197
قسط نوزدہم۔سلطنت برطانیہ تا ہشت سال۔19 208
قسط بستم ۔مقابلہ نویسی۔20 222
قسط بست ویکم۔براہین احمدیہ اورمولانا گنگوہی۔21 230
قسط بست ودوم۔مولانا کی تحریک ۔22 237
قسط بست وسوم۔1896ء کے مدعووین مباہلہ۔23 247
قسط بست وچہارم۔مرزا غلام احمد کا فقہی مسلک ۔24 256
قسط بست وپنجم ۔نرم گوشہ۔25 266

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2

You might also like
Comments
Loading...