تاریخ ابن کثیرترجمہ البدایہ والنہایہ ۔ جلد2

ابن کثیرترجمہ البدایہ والنہایہ ۔ جلد2

 

مصنف : حافظ عماد الدین ابن کثیر

 

صفحات: 195

 

اس وقت آپ کے سامنے حافظ عماد الدین ابن کثیر کی شہرہ آفاق کتاب ’البدایۃ والنہایۃ‘ کا قالب ’ ابن کثیر‘ کی صورت میں موجود ہے۔ اگر آپ تاریخوں کامطالعہ کریں تو آپ کو صاف طور پر یہ بات معلوم ہو گی کہ مؤرخوں نے اپنی تاریخوں میں تسلسل زمانی کا برابر خیال رکھا ہے ان کی ہر آدم ؑ کی کے ذکر سے شروع ہوتی ہے اور پھر اور بیانات کا سلسلہ ان واقعات تک پہنچتا ہے جن میں ان کا لکھنے والا سانس لے رہا ہے ۔ ابن کثیر کی یہ تاریخ بھی دوسری تاریخوں کی طرح ابتدائے آفرینش سے شروع ہوتی ہے اور اس کے بعد اور مرسلین کے حالات سامنے آتے ہیں، یہ کئی لحاظ سے اہم ہیں۔ اس سے پہلے جو تاریخیں لکھی گئی ہیں یا اس کے بعد جن تاریخوں کو دریافت کیا گیا ہے ان میں یہ تمام اساطیری سے لیے گئے ہیں یا ان کو اسرائیلی روایتوں پر اکتفاء کرتے ہوئے آگے بڑھایا گیا ہے اس کے برعکس ابن کثیر نے اپنا تمام مواد ہی سے لیا ہے اور یہ اس کے ایمان اور یقین کے مضبوطی کی علامت ہے ۔ تاریخ ابن کثیر حضرت آدم سے لے کر عراق و بغداد میں تاتاریوں کے حملوں تک وسیع اور عریض زمانے کا احاطہ کرتی ہے اور غالباً سب سے پہلی تاریخ ہے جس میں ہزاروں لاکھوں سال کی روز و شب کی گردشوں، کروٹوں، انقلابوں اور حکومتوں کومحفوظ کیا گیا ہے۔ پھر ابن کثیر نے جن حالات و کا حاطہ کیا ہے وہ اس قدر صحیح اور مستند ہیں کہ ان کا مقابلہ کوئی دوسری کتاب نہیں کر سکتی۔

 

عناوین صفحہ نمبر
باب:1
حضرت موسی ؑ کے بعد انبیائے بنی اسرائیل میں سے ایک جماعت کا ذکر 6
قصہ حزقیل 6
قصہ یسع علیہ السلام 10
قصہ شمویل ؑ (اسی سے قصہ داؤد ؑ کی ابتدا ہوتی ہے) 12
قصہ داؤد علیہ السلام،ان کے زمانے کے حالات، ان کے فضاول و شمائل، ان کی نبوت کے اور ذکر اظہار 19
داؤد ؑ کی کمیت و کیفیت وفات 24
قصہ سلیمان بن داؤد ؑ 33
باب:2
داؤد و سلیمان ؑ کے بعد اور زکریا و یحیی ؑ سے قبل بنی اسرائیل کی ایک جماعت کے کا ذکر جن کے ادوار نبوت ہیں- 36
قصہ ارمیا بن حلقیا علیہ السلام 38
کا تباہی کا ذکر 39
ذکر دانیال سے بعض کا ذکر 42
اپنی سرزمین کے تحفظ، قومی سلامتی او ربیت المقدس از سرنو کے لئے وہاں سرداران بنی اسرائیل کا اجتماع 45
قصہ عزیز علیہ السلام 48
قصہ زکریا و یحیی ؑ 51
یحیی ؑ کے سبب قتل کابیان 56
قصہ عیسی بن مریم ؑ 59
باب:3
تعالی کے ولدیت سے منزہ ہونے اور ظالموں کی طرف سے اس پر سب سے بڑے اتہام کا بیان 64
حضرت عیسی بن مریم ؑ کی ولادت ، صغر اور لڑکپن میں ان کی  تربیت او ران پر تعالی  کی طرف سے کے آغاز کا ذکر 67
چار آسمانی کتابوں کے نزول اور ان کے اوقات نزول کابیان 71
شجر طوبی کی وضاحت 72
خبر مائدہ کا ذکر 73
عیسی ؑ کے آسمان کی طرف اٹھائے جانے کا ذکر 75
عیسی ؑ کے اوصاف اور شمائل و کا ذکر 77
بیت لحم او رالقمامہ کی تعمیر 78
ذکر ذی القرنین 79
ذی القرنین کی چشمہ آب کی تلاش کا بیان 82
کی قوم کا ذکر 84
قصہ 86
دو مؤمن و کافر اشخاص کا قصہ 91
قصہ اصحاب الجنۃ 93
ان اصحاب ایلہ کا قصہ جواپنا روز ہفتہ منانے میں حد سے تجاوز کرگئے تھے 94
قصہ لقمان 95
قصہ اصحاب الاخود 97
باب:4
بنی اسرائیل کی خبریں او ران کی باتیں بیان کرنے کے بارے میں اجازت کا ذکر 100
بنی اسرائیل میں ایک عبادت گزار بندہ جریج کا ذکر 102
قصہ برصیصا 104
ان تین آدمیوں کا قصہ جوایک غار میں پھنس کر رہ گئے تھے 105
ایک نابینا، ایک مبروص او رایک گنجے کا قصہ 107
اہل کتاب کی تحریفات او راپنے میں ان کے ردوبدل کا ذکر 109
ذکر اخبار العرب 111
قصہ سبا 113
ربیعہ بن نصر بن ابی حارثہ بن عمرو کا ذکر 115
یمن کے ملوک تبابعہ میں سب سے نیک خصلت بادشاہ کا اہل مدینہ سے سلوک 117
یمن پر لخنیعہ ذی شناتر کی حکومت کا ذکر 118
یمن کے حمیری بادشاہ کا حبشہ کے علاقہ سوڈن کے خلاف خروج 120
حاکم یمن اریاط پرابرہہ اشرم کی فوج کشی 121
ابرہہ کا کو مسمار کرنےکے لئے ہاتھی لے کر آنا اور اس کا بحکم الہی فوراً مارا جانا جیسا کہ مجید کی درج ذیل میں تعالی نے فرمایاہے 122
یمن پراہل فارس کے حملے 124
ملوک الطوائف کا ذکر 125
باب:5
حجازی عربوں کے بنی اسماعیل کا ذکر جو زمانہ جاہلیت سے قبل بعثت نبوی تک وہاں کے حکمران رہے 126
خزاعہ عمرو بن لحی اور دوسرے عربوں میں اصنام پرستی کا ذکر 128
باب:6
کے ایام جاہلیت 130
حجازی عربوں کا جداعلی عدنان جس پر آنحضرت ﷺ کا قدیم سلسلہ نسب ختم ہوتا ہے 131
حجار کے قبائل کا عدنان تک انساب قریش کے نسب، ان کی شاخوں او ران کی ایک شاخ بنو نضر بن کنانہ کے فضلاء کا ذکر 135
قصی بن کلاب کے بیت کی تولیت قریش کو منتقل کرنے بنی خزاعہ کے اس میں مزاحمت کرنے اور قریش کے حرم میں (جسے اللہ تعالی ن اپنے بندوں کے لئے جائے امن بنایا ہے) اجتماع کا ذکر 137
زمانہ جاہلیت کے سب سے بڑے سخی حاتم طائی کا ذکر 139
امری القیس بن حجر، معلقات میں سے ایک کے مصنف کا ذکر 141
زمانہ جاہلیت کے شاعروں میں زمانہ پانے والے شاعر ابی صلت ثقفی کا کچھ ذکر 144
بحیرا راہب کا ذکر 146
قیس بن ساعدہ الایادی کا ذکر 147
زید بن عمرو بن نفیل ؓکا ذکر 148
زمانہ جاہلیت کے کچھ مزید 149
کعب بن لوی کا ذکر 150
چاہ زمزم کی کھدائی کی تجدید 151
جناب عبدالمطلب کا کے قریب بطور نذر اپنے ایک بیٹے کی کا ارادہ 153
عبدالمطلب کا اپنے بیٹے کی آمنہ بنت وہب الزہریہ کے ساتھ کرنے کا ذکر 155
باب:7
کتاب رسول 158
باب:8
رسول صلی اللہ ﷺ کی ولادت باسعادت 161
آنحضرت ﷺ کی صفت ولادت 162
آنحضرت ﷺ کی شب ولادت کے علامتی 166
آنحضرت ﷺ کی ولادت پر قیصر و کسری میں ظہور پذیر 169
آنحضرت ﷺ کی دایہ اور دودھ شریک کا ذکر 171
آنحضرت ﷺ کا ذکر رضاعت 172
آنحضرت ﷺ کی والدہ آمنہ بنت وہب کی وفات اور آپ ﷺ کا یکے بعد دیگر اپنے دادا عبدالمطلب او راپنے چچا ابوطالب کے زیر پرورش و تربیت رہنے کا ذکر 176
قبل بعثت آنحضرت ﷺ کی مبارکہ کا ذکر 178
آنحضرت ﷺ کامشرکین کے مابین جنگ ملاحظہ فرمانے کا ذکر 181
آنحضرت ﷺ کا حلف الفضول ملاحظہ فرمانے کا ذکر 182
حضرت خدیجہ بن ت خویلد بن عبدالعزی بن قصی کے ساتھ آنحضرت ﷺ کی کا ذکر 184
قبل بعثت قریش کے ہاتھوں بیت کی ازسرنو تعمیر کا ذکر 186
باب:9
کتاب مبعث رسول 189
نشانیاں 192
عمرو بن مرہ الجہنی کا قصہ 194
قصہ سیف بن یزن اور اس کی آنحضرت ﷺ کے بارے میں بشارت کا ذکر 196
ہواتف الجان کا تذکرہ 198

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
14 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...