تصویر سازی اور فوٹو گرافی کی شرعی حیثیت اور شبہات کا ازالہ

سازی اور فوٹو گرافی کی شرعی حیثیت اور شبہات کا ازالہ

 

مصنف : گوہر رحمان

 

صفحات: 62

 

شخصیت پرستی اور بت پرستی سے منع کرتا ہے،جو کا ایک بہت بڑا ذریعہ ہے۔شرک کی ابتداء اسی امر سے ہوئی کہ لوگوں نے شیطان کے بہکاوے میں آکر پہلے تو اپنے نیک اور بزرگ لوگوں کی تصویریں بنائیں،پھر انہیں مجسمے کی شکل دی اور پھر ان کی پوجا پاٹ شروع کر دی۔مغرب کی بے دین   حیوانی تہذیب میں بت سازی ، سازی اور فوٹو گرافی کو بنیادی حیثیت حاصل ہے،اور بد قسمتی سے مسلمان دانوں کی سیاست بھی مصورین اور فوٹو گرافروں کے گھیرے اور نرغے میں آ چکی ہے۔نبی کریم ﷺ کی تحریک اورسیاست نہ صرف سے خالی تھی بلکہ تصویروں اور مجسموں کو مٹانا آپ ﷺ کے لائحہ عمل میں شامل تھا۔اگر دعوت وجہاد اور وحکومت میں تصویروں کی کوئی اہمیت ہوتی تو حرمین میں نبی کریم ﷺ کی تصویروں کے بینر لٹکا دئے جاتے،اور کی کتب میں   اس کا تذکرہ موجود ہوتا۔فوٹو گرافی تو عہد نبویﷺ اور عہد صحابہ ﷢میں موجود نہیں تھی،البتہ سازی کے ماہرین ہر جگہ دستیاب تھے۔اگر تصویر بنانا جائز ہوتا تو کرام ﷢ضرور نبی کریم ﷺکی بنا کر اپنے پاس محفوظ کر لیتے۔زیر کتاب” تصویر سازی اور فوٹو گرافی کی شرعی حیثیت اور شبہات کا ازالہ “تصویر سازی کی اسی قباحت اور حرمت کےبیان پر مشتمل ہے،جو ایک سوال کے جواب میں مولانا گوھر رحمن کے تفصیلی جواب پر مشتمل ہے۔مولانا موصوف نے اس میں کو بڑی تفصیل سے بیان کیا ہے۔ تعالی مولف کی اس محنت کو قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
پیش لفظ 3
جواب 7
کیاغیر سایہ دار بنانا جائز ہے 9
علامہ یوسف قرضاوی کا تجدد 11
الارقمانی ثوب کی تاویل و توجیہ 12
فقہائے کے 21
شافی 21
حنفی 26
حنبلی 28
مالکی 28
شبہات کا ازالہ 33
پہلا شبہ 33
دوسرا شبہ 35
تیسرا شبہ 37
فوٹو گرافی کا حکم 39
صرف چہرے یا نصف اعلیٰ کی کا حکم 51
بچوں کے کھلونےاور گڑیاں بنانے کا حکم 53
بہت زیادہ چھوٹی کا حکم 55
شناختی کارڈ، پاسپورٹ اور دوسری تمدنی ضرورت کے لیے کا حکم 57
کیا دعوتی اور تحریکی سرگرمیوں کے لیے کی اجازت دی جا سکتی ہے؟ 60

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.9 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...