اسلاف کے سنہرے اقوال

کے سنہرے

 

مصنف :

 

صفحات: 347

 

تجربہ کا ایسا ساتھی ہے جو اسے اس وقت ملتا ہے جب وہ بہت کچھ کھو چکا ہوتا ہے اور اس کے پاس ان تجربوں سے فائدہ اٹھانے کے لیے تھوڑی سے فرصت باقی رہ جاتی ہے۔ جوں جوں انسان کی عمر بڑھتی ہے اس کے تجربات بھی بڑھتے رہتے ہیں۔ فطرت کا مشاہدہ کرنے سے معلوم ہوتا ہے کہ انسان کے تجربات اس کی اپنی ذات کے لیے نہیں بلکہ دوسروں کے لیے ہوتے ہیں۔ اس لیے عقل مند قومیں ہمیشہ اپنے بزرگوں کے تجربات‘ مشاہدات اور آراء سے فائدہ اٹھاتی ہیں اور انہیں ساتھ لے کر زندگی گزارتی ہیں۔ بزرگوں کے وتجربات نوجوانوں کے افکار بناتے ہیں اور یہ افکار تخلیق کی جڑ قرار دیئے گئے ہیں۔ ۔ زیرِ کتاب بھی خاص اسی موضوع پر لکھی گئی ہے۔ اس میں نبیﷺ کے ساتھ ساتھ‘ نبیﷺ کے اصحاب‘ دین‘ صوفیا‘ عظام‘ کرام اور اہل ودانش میں سے کچھ مایۂ ناز شخصیات کے کو جمع کیا گیا ہے۔  مصنف نے اختصار کے ساتھ جامع مفاہیم پر مشتمل اقوال کو جمع کرنے کی کوشش کی ہے۔ اور ہر قول کو وسیر اور کی معتبر کتابوں سے نقل کیا گیا ہے اور مکمل حوالہ بھی دیا گیا ہے تاکہ ان کی استنادی حیثیت باقی رہے اور پڑھنے والوں کو کامل تشفی حاصل ہو۔ اس میں جمع کردہ اقوال: عقائد وعبادات‘ معاملات ومعاشرت‘ وتصوف‘ اخلاق حسنہ کے اور اخلاق سیئہ کے رذائل وغیرہ کے موضوعات پر مشتمل ہیں۔ ۔ یہ کتاب’’ کے سنہرے اقوال ‘‘ کی مرتب کردہ ہے۔آپ تصنیف وتالیف کا عمدہ شوق رکھتے ہیں‘ اس کتاب کے علاوہ آپ کی اور کتب بھی ہیں۔ ہے کہ تعالیٰ مؤلف وجملہ معاونین ومساعدین کو اجر جزیل سے نوازے اور اس کتاب کو ان کی میزان میں حسنات کا ذخیرہ بنا دے اور اس کا نفع عام فرما دے۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
ورق ورق سے 10
باب ……..1آقائے دوعالم حضرت محمدﷺکےسنہری 13
باب ……2 کرام﷢ کےسنہری 47
حضرت ابوبکرالصدیق﷜ 49
حضرت عمربن خطاب الفاروق ﷜ 53
بن عفان﷜ 59
المرتضیٰ ﷜ 61
حضرت عباس بن عبدالمطلب ﷜ 77
حضرت معاویہ﷜ 77
حضرت ابوعبیدہ بن جراح ﷜ 78
ام المومنین حضرت عائشہ صدیقہ ؓ 79
حضرت حسن بن علی﷜ 80
حضرت حسین بن علی﷜ 85
حضرت معاذبن جبلﷺ 86
حضرت بن مسعود﷜ 87
حضرت بن عباس﷜ 91
حضرت ابوموسیٰ اشعری﷜ 92
حضرت بن عمر﷜ 93
حضرت ابوالدرداء﷜ 94
حضرت حسان بن ثابت ﷜ 94
حضرت ابی بن کعب﷜ 100
حضرت سلمان فارسی﷜ 101
حضرت عمیربن حبیب ﷜ 102
حضرت حذیفہ ﷜ 103
حضرت انس بن مالک﷜ 104
حضرت بن بسر﷜ 104
حضرت  جندب بجلی﷜ 105
حضرت ابوحازم﷜ 106
حضرت عدی بن حاتم﷜ 107
باب 3…….تابعین ،تبع تابعین کرام اوراولیاءعظام کےسنہری 109
حضرت عمربن عبدالعزیز﷫(م:101ھ) 111
حضرت حسن بصری﷫(م،110ھ) 115
امام  اعظم ابوحنیفہ نعمان بن ثابت ﷫(م:150ھ) 122
حضرت سفیان ثوری﷫(م:161ھ) 128
حضرت ابراہیم بن ادہم ﷫(م:894/161ھ) 129
بن انس﷫(م:179ھ) 131
حضرت فضیل بن عیاض﷫(م:187ھ) 136
امام محمدبن ادریس الشافعی﷫(م:204ھ) 139
حضرت ابوسلیمان دارانی ﷫(م:215ھ) 143
حضرت بشرحافی ﷫(م:227ھ) 146
امام حاتم اصم﷫(م:237ھ) 147
امام احمدبن حنبل﷫(م:241ھ) 151
حضرت ذوالنون مصری﷫(م:245ھ) 155
حضرت ابوتراب نخشی﷫(م:245ھ) 158
حضرت یحییٰ بن معاذرازی﷫(م:258ھ) 159
حضرت بایزید بسطامی ﷫(م:261ھ) 161
حضرت حمدون بن احمدبن قصار﷫(م:271ھ) 163
حضرت سہل تستری﷫(م:283ھ) 164
حضرت ابراہیم خواص﷫(م:291ھ) 166
حضرت جنیدبغدادی﷫(م:297ھ) 167
حضرت شاہ بن شجاع کرمانی﷫(م:300ھ) 170
حضرت ابوعثمان جبری﷫(م:298ھ) 171
شیخ ابوعبداللہ بلنحی ﷫(م:319ھ) 172
حضرت ابوبکرمحمدبن موسی واسطی﷫(م:320ھ) 173
حضرت ابوعلی احمدروذباری﷫(م:322ھ) 174
امام ابوحامدبن محمدغزالی﷫(م:505ھ) 175
علامہ عبدالرحمن ابن الجوزی﷫(م:597ھ) 179
شیخ عبدالوہاب شعرانی﷫(م:973ھ) 196
امامربانی شیخ احمدسرہندی﷫(م:1624ھ) 198
باب نمبر4……..اہل کےسنہری 205
علامہ انورشاہ کشمیری ﷫(م:1352ھ) 207
مولانا اشرف علی تھانوی﷫(م:1362ھ) 211
مولانامحمدالیاس صاحب﷫(م:1944ھ) 225
علامہ سیدسلیمان ندوی﷫(م:1953ھ) 230
شیخ الاسلام مولاناحسین احمدمدنی﷫(م:1957ھ) 234
مولاناعبدالکلام آزاد﷫(م:1958ھ) 240
مولاناعطاءاللہ شاہ بخاری﷫(م:1961ھ) 248
مفتی محمدحسن صاحب﷫(م:1961ھ) 253
مولاناشاہ عبدالقادررائےپوری﷫(م:1962ھ) 258
مولانامحمدیوسف کاندھلوی ﷫(م:1965ھ) 263
مولاناشاہ محمدیعقوب مجددی ﷫(م:1970ھ) 272
مفتی محمدشفیع صاحب﷫(م:1396ھ) 277
شیخ الحدیث مولانامحمدزکریاکاندھلوی﷫(م1982ھ) 282
حکیم الاسلام قاری محمدطیب صاحب﷫(م:1402ھ) 287
شیخ الحدیث مولاناعبدالحق صاحب﷫(م:1989ھ) 294
مولاناابوالحسن علی ندوی﷫(م:1420ھ) 298
مولانامحمدعاشق الہیٰ صاحب بلند شہری﷫ 313
باب نمبر5……..چندمتفرق مایہ نازشخصیات کےسنہری 321
فہرس المراجع 332

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.9 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Leave A Reply