علم اصول فقہ ایک تعارف جلد دوم

اصول ایک تعارف جلد دوم

 

مصنف : ڈاکٹر عرفان خالد ڈھلوں

 

صفحات: 504

 

وہ جس  میں کے مصادر ،ان کے کے ، استدلال  کے  مراتب اور استدلال کی شرائط سےبحث کی جائے اوراستنباط کے طریقوں کووضع کر کے  معین قواعد کا استخراج کیا جائے  کہ جن قواعد کی پابندی کرتے ہوئے  مجتہد  تفصیلی  دلائل سے احکام  معلوم کرے ، اس کا  نام اصول ہے ۔ علم فقہ ، الٰہی  اور عقل انسانی دونوں کے تقاضوں سے ہم آہنگ ہے۔ جس طرح کسی بھی کو جاننے کےلیے  اس زبان کے قواعد واصول  کو سمجھنا ضروری ہے  اسی طر ح میں مہارت حاصل  کرنےکے لیے  اصول  فقہ  میں دسترس  اور اس پر عبور حاصل کرناضروری ہے  اس کی اہمیت  کے  پیش نظر  فقہاء و محدثین نے  اس موضوع پر  کئی کتب تصنیف کی ہیں۔ زیر کتاب’’علم فقہ ایک تعارف‘‘ڈاکٹر عرفان خالد ڈھلوں(چئیرمین شعبہ علوم اسلامیہ یو ای ٹی ،لاہور ) کی تین جلدوں پر مشتمل  تصنیف  ہے ۔فاضل مصنف نے یہ کتاب اسلامی میں دلچسپی رکھنے والے اصحاب کے لیے مرتب کی ہے ۔اس  کتاب میں  اصول کی ،مصادر فقہ، قواعدکلیہ، اور فقہ کے اصولِ تعبیر وتشریح جیسے موضوعات کا تفصیلی تعارف پیش کیا گیا ہے۔نیز اس کتاب میں  اصولِ فقہ اسلامی کا  ایک بھر پور اورجامع تعارف پیش کیا گیا ہے۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
باب چہارم :فقہِ میں حکم شرعی 1
فصل اول:حکم شرعی تکلیفی 3
حکم شرعی 3
حکم کی تعریف 3
حکم کی اقسام 3
حاکم کی تعریف 7
حاکم کےبارےمیں تین 9
معتزلی نظریہ 9
اشاعرہ کانظریہ 10
ماتریدیہ 11
اقسام افعال 12
محکوم فیہ یامحکوم بہ 14
محکوم فیہ کی شرائط 14
نسبت کےاعتبارسےمحکوم فیہ کی اقسام 18
محکوم علیہ 21
محکوم علیہ کی شرائط 22
شرائط تکلیف پراعتراضات اوران کاجواب 24
عقل وشعورکےچارادوار 29
حکم شرعی تکلیفی 31
حکم تکلیفی کی اقسام 32
واجب 33
فرض اورواجب میں فرق 33
اقسام واجب 35
تقسیم واجب بلحاظ ادا 35
تقسیم واجب بلحاظ تعین مطلوب 37
تقسیم واجب بلحاظ نوعیت 39
تقسیم واجب بلحاظ مکلف 40
مندوب 41
مندوب کی خصوصیات 43
حرام 45
حرام کی اقسام 45
مکروہ 50
مکروہ کی اقسام 51
مباح 52
مصاردومراجع 54
فصل دوم:حکم شرعی وضعی 57
حکم وضعی کامفہوم 57
حکم وضعی کی وضاحت 58
حکم وضعی اورحکم تکلیفی میں فرق 59
حکم وضعی کی شرعی حیثیت 61
حکم وضعی کی اقسام 63
سبب 63
سبب کامفہوم 63
سبب اورعلت میں فرق 66
سبب کی اقسام 69
سبب  اورمسبب کےدرمیان تعلق 71
سبب کاحکم 72
شرط 72
شرط کامفہوم 72
رکن اورشرط میں فرق 75
سبب اورشرط میں فرق 75
شرط کی اقسام 76
شرط کی شرعی حیثیت 80
مانع 81
مانع کامفہوم 81
سبب،شرط اورمانع میں فرق 82
مانع کی اقسام 83
علامہ شاطبی کےنزدیک مانع کی اقسام 84
کےنزدیک مانع کی اقسام 85
مانع کاشرعی حکم 87
صحیح وباطل 88
کامفہوم 88
افعال کےصحیح یاباطل ہونےمیں مختلف 90
باطل یابطلان کامفہوم 93
فاسد کامفہوم 96
باطل کی اقسام 96
عزیمت ورخصت 97
عزیمت کی اقسام 99
رخصت کامفہوم 100
رخصت کی اقسام 100
باب پنجم:فقہِ میں تعبیر وتشریح 109
فصل اول: تعبیر وتشریح 111
تعبیر وتشریح کی تدوین 111
مفسر کےلیے ضروری علوم 114
تعبیر بغیر کی ممانعت 116
رائے کےاستعمال میں احتیاط 118
رضی عنہم کی تعبیرات کی پابندی 119
مغربی تعبیر وتشریح 120
چند اہم مغربی تعبیر وتشریح 121
مغربی تعبیر وتشریح کےچند اہم مفروضات 122
ومغربی تعبیر وتشریح کاموازنہ 123
وہ فقہی جوتعبیر وتفسیر میں ملحوظ خاطر رہنےچاہییں 124
کےعمومی مقاصد 124
ضروریات کاتحفظ 125
حاجیات کی فراہمی 126
تحسینیات کی فراہمی 126
اورحقوق العباد 127
تعبیر وتفسیر کی حدود 128
دیگرچند اہم تعبیر وتشریح 128
فصل دوم:خاص 131
خاص کی تعریف 131
خاص کاحکم 132
خاص کی مثالیں 132
خاص کی اقسام 134
مطلق 134
تعریف 134
مطلق کاحکم 134
مطلق کی مثالیں 134
مقیّد ،مقید کی تعریف 136
مقید کاحکم 137
مطلق سےمقید مراد لینا 137
امر کی تعریف 143
امرکی صیغے 144
صیغہ امرکےمعانی 145
مطلق صیغہ امرکی دلالت 148
وجوب،صیغہ امرسےثابت ہوتاہے،فعل سےنہیں 152
ماموربہ کی اقسام 154
ماموربہ کاحسن وقبح ثواب وعذاب کےلحاظ سے 155
وصف حسن کےاعتبارسےماموربہ کی اقسام 156
حسن لذاتہ 156
حسن لغیرہ 157
کیاامرتکرارچاہتاہے 160
کیاامرجلدی چاہتاہےیاتاخیر 163
ادااورقضا 166
ادا 166
اداکامل 166
اداقاصر 166
قضا 167
قضاکامل 167
قضاقاصر 167
اداوقضاکےدیگراحکام 168
اداکےلیے قدرت کی شرط 169
قدرت مطلقہ 170
قدرت کاملہ 171
امرکے دیگراحکام 172
نہی ،نہی کی تعریف 177
نہی کےصیغے 178
صیغہ نہی کےمعانی 179
نہی کی اقسام 181
منہی عنہ کی اقسام 182
افعال شرعیہ پرمطلق نہی کااثر 184
افعال شرعیہ کی نہی سےان کی مشروعیت میں فقہی اختلاف کااثر 186
افعال شرعیہ پرنہی کاقرینہ کےساتھ آنا 187
کیانہی اپنی ضد کاامرچاہتی ہے 188
فصل سوم:عام 193
عام کی تعریف 193
عام اورمطلق میں فرق 193
عام کےالفاظ 194
عام کاحکم 199
عام کی دلالت 199
پہلی حالت:عام بعدازتخصیص 199
دوسری حالت:عام قبل ازتخصیص 199
عام کی انواع 201
عام جس سےقطعی طورپرعموم مراد ہو 201
عام جس سے قطعی طورپرخصوص مرادہو 202
عام مطلق 202
عام کی تخصیص 203
پہلاطریقہ:تخصیص بذریعہ مستقل کلام 204
دوسراطریقہ:تخصیص بذریعہ غیرمستقل کلام 207
خاص اورعام کےحکم میں اختلاف 210
خاص اورعام کےحکم میں اختلاف 210
عام کی دلالت میں فقہی اختلاف کامسائل پراثر 213
عام کےدیگر 214
فصل چہارم:مشترک 223
تعریف 223
مشترک اورعام میں فرق 225
مشترک کی اقسام 225
مشترک کےوجود کےاسباب 225
مشترک کاحکم 227
مشترک کی عمومی حیثیت 229
مشترک کی عمومی حیثیت میں اختلاف کااثر 230
فصل پنجم:حقیقت ومجاز 235
حقیقت کی تعریف 235
لغوی حقیقت 235
شرعی حقیقت 236
عرفی حقیقت 237
حقیقت کاحکم 238
حقیقت کی اقسام 238
حقیقت متعذرہ 239
حقیقت مہجورہ 239
حقیقت مستعملہ 239
مجاز کی تعریف 240
مجاز کاحکم 241
مجازکی اقسام 243
استعارہ 243
مجاز مرسل 245
مجاز کےقرائن 250
قرینہ حسّیہ 250
قرینہ عادیہ 250
قرینہ شرعیہ 251
لفظ کی اپنی ماہیت کاقرینہ 251
متکلم کاحال وارادہ 252
سیاق کلام کاقرینہ 252
محل کلام کاقرینہ 253
حقیقت اورمجاز کوجمع کرنا 254
اگرحقیقت اورمجاز دونوں پرعمل ناممکن ہو 256
فصل ششم:صریح وکنایہ 261
صریح 261
صریح کاحکم 261
کنایہ 264
کنایہ کاحکم 264
فصل ہفتم:دلالات 269
واضح الدلالت الفاظ 269
ظاہر 270
نص 273
مفسر 375
محکم 277
واضح الدلالت الفاظ میں تعارض اوران میں ترجیح کااصول 279
غامض الدلالت الفاظ 284
خفی 284
مشکل 288
مجمل 291
متشابہ 298
اپنےمعنی پرلفظ کی دلات کےطریقے 300
عبارۃ النص 300
اشارۃ النص 302
دلالۃ النص 307
اقتضاء النص 309
دلالات اربعہ کاحکم 311
دلالات اربعہ کےمراتب 311
دلالات اربعہ میں تعارض اوران میں ترجیح کااصول 312
مفہوم مخالف 313
باب ششم: کےقواعد کلیہ 337
قاعدہ کلیہ کی تعریف 339
قواعد کلیہ کی فقہی وقانونی حیثیت 341
قواعد کلیہ میں استثناءات 344
قواعد کلیہ کی ابتداءوتاریخ 346
فصل دوم:قواعد کلیہ کاموضوعاتی مطالعہ 371
عمومی قواعد 371
اصولی قواعد 415
قواعد بابت معاملات دیوانی 444
قواعد بابت معاملات فوجداری 465
قواعد بابت ضابطہ 469
قواعد متعلقہ عبادات 478
مصادرومراجع 483

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2

You might also like
Comments
Loading...