اسلام اور جدید معاشی تصورات

اور جدید معاشی تصورات

 

مصنف : ڈاکٹر نعیم صدیقی

 

صفحات: 817

 

یہ بات اظہر من الشمس ہے کہ اقتصادی نظام وسنت کی گرانمایہ پر مبنی ہے کیونکہ ان کے توسل سے ہی ہدایات ملتی ہیں۔ اس کے پختہ‘ ابدی اور درخشندہ ہیں۔ اگر معاشی نظام ان پر استوار کیا جائے تو اسے دوم واستمرار حاصل ہو گا اور وہ دیگر سب نظاموں پر سبقت لے گا۔ کا معاشی نظام ایک ایسے ہمہ گیر پر قائم ہے جس کا نام ہے جو عالمگیر دعوت اور ہمہ گیر کا داعی ہے۔ دنیائے انسانی کی صرف معاشی وفلاح کا ہی خواہشمند نہیں ہے بلکہ روحانی‘مذہبی‘ اخلاقی‘ سیاسی‘ معاشرتی اور معاشی  غرض ہر قسم کی دینی ودنیوی فلاح وبہبود اور رُشد وہدایت کا علمبردار ہے۔معاشی  کے حوالے سے بہت سا کام ہو چکا ہے۔زیرِ کتاب  بھی معاشی اور کی تعلیمات  کے حوالے سے عظیم کاوش ہے۔ اس میں کی تعریف‘ تعارف ودیگر تفصیل نہایت عمدگی کے ساتھ بیان کی گئی ہے۔ معاشی اقدار‘ معاشی سرگرمیوں کی اہمیت ونوعیت  ‘ میں تقسیم دولت‘انتقال دولت یا ارتکاز دولت کی ممانعت‘اسلام میں معاشی ترقی ومنصوبہ بندی‘ ریاست کی مالیاتی پالیسی اور معاشی کردار‘ مسلم ریاست کی ذمہ داریاں اور کے معاشی جیسے اہم عناوین کو کتاب کی زینت بنایا گیا ہے۔ حوالہ جات بھی دیے گئے ہیں۔ کتاب کا اسلوب نہایت عمدہ‘سادہ اور عام فہم ہے۔ یہ کتاب’’ اور جدید معاشی تصورات‘‘ پروفیسر ڈاکٹر محمد نعیم صدیقی کی مرتب کردہ ہے۔آپ تصنیف وتالیف کا عمدہ شوق رکھتے ہیں‘ اس کتاب کے علاوہ آپ کی درجنوں  کتب اور  بھی ہیں۔ ہے کہ تعالیٰ مؤلف وجملہ معاونین ومساعدین کو اجر جزیل سے نوازے اور اس کتاب کو ان کی میزان میں حسنات کا ذخیرہ بنا دے اور اس کا نفع عام فرما دے۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
تشکیل نظام کےعوامل 85
سرمایہ داری 85
سرمایہ دارانہ نظام کی اہم خصوصیات 85
سرمایہ دارانہ نظام کی خوبیاں 88
سرمایہ دارانہ نظام کی خامیاں 90
92
کاپس منظر 95
کی تعریف 95
اشتمالیت 98
دونوں میں فرق 99
مارکس کےتخیل کےاہم نکات 100
کی مادی تعبیر 100
طبقاتی چپقلش 102
نظریہ قدرزائد 105
جدلیاتی مادیت 106
سلطنت اورمظالم 107
ہیگل کامنصقیانہ 108
کےنمایاں خصاص 110
کےوفوائد 111
کےنقصانات 113
فاشزم اورنازی ازم 135
فاشزم کےمحاسن 135
فاشزم کی خامیاں 137
اورسرمایہ داریت میں مقابلہ 138
واشتراکیت میں تقابل 132
نظام کی فوقیت کی عوامل 135
حوالہ جات 147
چوتھا باب : نظام کےاساسی تصورات 150
بنیادی یاخصوصیات 150
اسلامی کےاساسی 161
حوالہ جات 172
پانچواں باب : کی معاشی اقذار 173
تقوی 173
عدل 180
احسان 186
معاونت 191
اخوت 193
199
حلال وحرام 205
قناعت 214
کاروباری ضابطہ اخلاق 217
حوالہ جات 223
چھٹا باب :معاشی سرگرمیوں کی اہمیت ونوعیت 225
پیدائش دولت 226
پیدائش دولت کےمقاصد 226
پیدائش دلوت کےمختلف شعبے 228
انسانی ضرورتوں میں عطیات قدرت سےاستفادہ 228
حیوانات سے استفادہ 230
نباتات سےاستفادہ 235
جمادات سےفائدہ لینا 238
سمندر کی تہ سےاشیاء کی برآمد 239
صنعت وحرفت 239
نقل حمل 245
سرمایہ اوراس کی اقسام 249
سرمایہ جمع کرنا 253
ملکی یااندرونی وسائل 253
اجارہ داری 256
اجارہ داری کےرفاہی اثرات 257
اجارہ داری کےبرے اثرات 259
جدید میں رویہ فرم 261
دوجارہ اورچند جارہ 263
ملکیت 265
شرعی طریقہ جات 266
حصول ملکیت کےشرعی طریقے 267
مباح چیزوں پر قبضہ 267
جائیدا د کی منتقلی بذریعہ معاہدہ 270
سوم وارثت 271
تصرف اوراستعمال پر پابندیاں 275
انفرادی ملکیت کاتصور 277
اوررااضی 282
تحدید ملکیت 286
ملکیت زمین 286
ملکیت کی حدازروئے 290
حکومت کی طرف سے تحدید ملکیت 291
عارضی تحدید ملکیت 292
احیاء موات 294
ارض موات 294
قطیعہ کےاحکام ومسائل 303
محنت کی عظمت 306
معاشی تنظیم وکاروباری کی مختلف شکلیں اوراسلامی 309
اورتجارت 310
کےاصول 304
کےارکان اورشروط 323
عہد جاہلیت کی کچھ تجارتی صورتیں 330
مین کاروبارکی شکلیں 332
شراکت 332
مضاربت 334
338
مساقات 343
حوالہ جات 347
ساتواں باب : میں صرف اورمارکیٹگ 357
میں صرف کےفوائد 357
صرف کےاصول 358
حصول آمدن کےممنوع ذرائع 364
اسراف 364
تبذیر 366
اکتناز 369
احتکار 371
رویہ صارف کامغربی تصور تصور کاموازنہ 377
حوالہ جات 379
آٹھواں باب: میں تقسیم دولت 380
مین گردش دولت کی اہمیت 380
معاشی ناہمواریوں کےاثرات ہٹانا 381
آمدنی کومنضبط کرنےکے اہم 382
لگان 383
منافع 388
اجرت 394
مزدور کےحقوق 394
اجرکےحقوق 396
حوالہ جات 396
نواں باب :انتقال دولت یاارتکازدولت کی ممانعت 397
ارتکازدولت کےانسداد کےیے وجوبی اقدامات 397
ارتکاز دولت کے انسداد کےلیے اختیاری اقدامات 400
حوالہ جات 429
دسواں باب : میں معاشی ترقی ومنصوبہ بندی 431
اورمعاشی ترقی 431
کی ترقیاتی پالیسی کےمقاصد 434
معاشی منصوبہ بندی 439
میں معاشی منصوبہ بندی 440
معاشی منصوبہ بندی کے فوائد 442
منصوبہ بندی کےمقاصد 445
حوالہ جات 448
گیارہوان باب : ریاست کی مالیاتی پالیسی اورمعاشی کردار 450
پالیسی کےمقاصد واغراض 450
بطوراعلی مالیاتی پالیسی 453
کامفہوم 453
کی فرضیت 453
کانصاب 455
زکوۃ  دینےوالے کےحق میں کی حکمتیں اورمصلحتیں 457
لینےوالے کےحق میں زکوۃ کی حکمتیں اورمصلحتیں 460
کےمقاصد 465
اہم خصوصیات 470
اورٹیکس میں فرق 476
عشر 479
بیت الما 483
وارتقاء 483
اکرم کی مالباتی عملی 485
بیت المال کےوسائل آمدن 487
آمدنی کےچند دیگر ذرائع 496
بیت المال کےمصارف 502
حکومتی اخرجات کےاصول 516
بجب کےمقاصد 520

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
15.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...