اسلام میں حلال و حرام

میں

 

مصنف : ڈاکٹر یوسف القرضاوی

 

صفحات: 432

 

تبارک وتعالیٰ نے کو اپنی عبادت کے لیے پیدا فرمایا اورانبیاء ورسل ﷩ کےذریعے اپنےاحکامات ان تک پہنچائے۔ تعالیٰ کے اوامر ونواہی کی پابندی کرنا عین عبادت ہے۔ منہیات سے بچنا اور حرام سے اجتناب کرنا ایک کی رو سے عبادت ہی ہے۔ حرام کےاختیار کرنے سے عبادات ضائع ہوجاتی ہیں اورایک شخص کو مومن ومتقی بننے کے لیے حرام کردہ چیزوں سےبچنا ضروری ہوتا ہےاور نےبہت سی اشیاء کوحرام قرار دیا ہے جن کی تفصیل وحدیث کے صفحات پربکھری پڑی ہے۔ بعض علما ء نےاس پر مستقل کتب تصنیف کی ہیں ۔ان میں سے علامہ یوسف قرضاوی کی زیرتبصرہ کتاب ’’اسلام میں حلال وحرام ‘‘ بڑی اہم ہے اس کتاب میں علامہ قرضاوی نےحلال وحرام پر مفصل بحث کی ہے۔ لیکن انہوں نے چند مقامات پر ٹھوکر کھائی ہےجس پر علامہ البانی اور دیگر نے ان کاخوب محاکمہ کیاہے۔۔ البتہ مجموعی لحاظ سے کتاب بہت مفید ہے۔ محدث العصر علامہ محمد ناصر الدین البانی ﷾ نے اس کتاب کا بغور مطالعہ کیاا ور اس کی تمام کی فنی تخریج کی جس سے اس   کتا ب کی افادیت میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ اور اسی طرح فاضل مترجم جناب شمس پیر زادہ نے کے ساتھ ساتھ بعض مفید حواشی اورتبصرے بھی کیے ہیں جس سے کتاب کی اہمیت وافادیت میں مزید اضافہ ہوا ہے ۔ اپنے موضوع پر یہ ایک نہایت جامع اور بے نظیر کتاب ہے اور مصنف کایہ دعویٰ بالکل صحیح ہے کہ حلال وحرام کے موضوع پر اسلامی میں یہ کتاب اولین اضافہ ہے۔کتاب ہذا کا زیر ایڈیشن کراچی سے شائع شد ہے ۔ اس کتاب کا جدید ایڈیشن دارالابلاغ کے مدیر جناب طاہر نقاش صاحب نے بڑی عمدگی کےساتھ شائع کیاہے ۔جس پر کےنامور عالم مفتی مبشرربانی ﷾نے بعض مقامات پر تعلیق لگادی ہےاور محترم طاہر نقاش صاحب نے شیخ البانی اور شیخ صالح بن فوزان کی تعلیقات وتحقیقات کواردو قالب میں ڈھال کر اس کتاب

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
1۔ تعریف 28
2۔ تمام اشیاء اصلا مبا ح ہیں 30
3۔ تحلیل و تحریم ہی کا ہے 35
4۔حلال کو حرام اور حرام کو حلا ل دینا کے قبیل سے ہے 39
5۔ حرام چیزیں باعث مفت ہیں 42
6۔ حلال حرام سے بے نیاز کر دیتا ہے 44
7۔ جو چیز حرام کا باعث نبے وہ بھی حرام ہے 46
9۔ نیک نیتی حرام کو حلال نہیں کرتی 48
10۔ حرام میں مبتلا ہوجانے کے اندیشے سے مشبہتا ت سےبچنا 51
11۔ حرام سب کے لیے حرام ہے 52
12۔ ضرورتیں محظورات کو مباح کر دیتی ہیں 54
باب دوم :
13۔حلال و احرام مسلمانوں کی انفرادی زندگی ہیں 56
14۔ ماکولات و مشروبات 57
15۔ بر ہمنو ں کے نز دیک جانوروں کو ذبح کرنے اور کھانے کا 57
16۔ حرام جانوریہود نصار ی ٰ کے نزدیک 58
17۔ جاہلیت میں عربوں کے نزدیک 59
18۔ نے پاک چیزوں کو جائز قرار دیا ٍ 59
19۔ مرُ دار کی تحریم اور اس کی مصلحتیں 61
20۔ بہائے ہوئے خون کی حرمت 63
21۔ سور کا گوشت 63
22۔ غیر کے لئے نا مزد کردہ جانور 63
23۔ مُردار کی قسمیں 64
24۔ مُردار کی ان قسموں کو حرام کرنے کی مصلحتیں 65
25۔ استھان کا ذیبحہ 66
26مچھلی اور ٹڈ ی مردار کے حکم سے مستشنی ہے 67
27۔مردار کی کھال ، ہڈ ی اور بال سے فائدہ ا ُٹھانا 68
28۔ مجبوری کی حالت مسشنی ہے 69
29۔ علاج کی مجبوری 71
30۔ فرد کی مجبوری اس صورت میں باقی نہیں رہتی جبکیہ میں اس کی
ضرورت پوری کرنے کا سامان موجود ہو 72
ذبح کرنے کا شر عی طریقہ۔۔
31۔ بحری جانور حلا ل ہیں 73
32۔ حرام بر ی جانور 74
33۔ مانوس جانور وں کی اباعت کے لئے ذبح کرنے کی شرط 75
34۔ شرعی طریقہ پر ذبح کرنے کے شرائط 76
35۔ ذبح کرنے کے اس طریقہ کی و مصلحت 78
36۔ ذبح کرتے وقت کا نام لینے کی مصلحت 80
37۔ اہل کتاب کا ذبیحہ 80ٍ
38۔ جو کینساوںاور تہواروں کے لئے ذبح کیا جائے 82
39۔ الکڑک شاک کا ذبیحہ اوربند ڈ بوں کے گو شت کا حکم 83
40۔ مجو سیوں وغیرہ کا ذیبحہ 85
41۔ قاعدہ جو چیز وں سے غائب ہے اس کی تفشیش میں نہیں پڑنا چاہیے 86
شکار
42۔ وہ شرائط جو شکار کرنے والے سے متعلق ہیں 87
43ج۔ جس کا شکار کیا جائے اس متعلق شرائط 89

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
19.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...