اسلامی نظریہ اجتماع

نظریہ اجتماع

 

مصنف : حیدر زمان صدیقی

 

صفحات: 186

نے ا نسان کے یقین اور اس  کےاعمال کی بنیاد رکھی  ہے اس  ناقابل انکار حقیقت پر  کہ خود بخو د  پیدا نہیں ہوا بلکہ کسی ذی شعور صاحب ادراک ہستی برتر نے اسے پیدا کیا ہے ۔ اور اس لیے انسانی  اعمال  وافکار کا محض اس کی رضا واطاعت کے لیے ہونا ضروری ہے ۔انسان کی زندگی انفرادی ، عائلی اوراجتماعی تمام تر اسی مقصد واصول کے تحت تو صحیح  ہے ورنہ غلط ہے۔انسان بولے تواس کے لیے  اور چپ رہے تو اس کے لیے ، کرے بچوں سے محبت کر ے، پڑسیوں کی امداد  کرے یا ملی وقومی فرائض  کو ادا کر ے  الغرض تمام تر امور اسی  ذات واحد کی منشاء  کےلیے  ہوں۔ زیر کتا ب’’ نظریہ اجتماع‘‘   جناب حیدر زماں صدیقی کی   مرتب شدہ ہے ۔ اس کتاب میں  اسلام کے ہمہ گیر نظریہ اجتماع کی حقیقت اوراجزاء ترکیبی  سےبحث کی گئی ہے۔طرزِ بیان شگفتہ اور مدلل ہے مصنف نے دلنشیں انداز میں زیربحث سے متعلق تقریباً سب کچھ کہہ دیا ہے   پہلی دفعہ یہ کتاب تقسیم ہند کےوقت اگست؍1947ء کو  حید رآباد سے شائع ہوئی۔موجود ہ ایڈیشن ادارہ  ترجمان القرآن ،لاہور نے  1989ء میں شائع کیا ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ 7
پیش لفظ 17
مقدمہ طبع ثانی 19
اجتماعیت کا قرآنی تصور 27
آدم کا مفہوم 32
اجتماع انسانی کاقرآنی تصور 37
مملکت کاجدید تصور 41
شعورذات کی تکمیل اور معاشری نشووارتقاء 47
انسانیت کا مقام شرف 48
فرد کی تکمیل ذات اور ارتقائی 53
مدنیت صالحہ اور مدنیت فاسدہ 58
انسانی اعمال کے طبعی اثرات ونتائج 64
نظام اجتماع کے اختلال کاتاریخی پس منظر 75
جاہلیت کانیابھیس 88
میں وجاہلیت کی ٹکر 95
جاہلیت کا نیا کارنامہ 97
علامہ افغانی کا ایک مضمون 100
اقوام حاضرہ کے نظریہ ہےئے اجتماع 103
عصر حاضر کے عناصر قومیت 115
وطنیت 116
عالم اور تصور وطنیت 118
قومیت متحدہ کی پہلی کوشش 123
قومیت کے دیگرعناصر 126
کا نظریہ قومیت 129
اصطلاحی قومیت 131
قومیت 133
کانظام اجتماع 139
نظریہ اجتماع کی ہمہ گیرافادیت 149
انسانی مرض کی نوعیت 156
اس مرض کا حقیقی علاج کیاہے ؟ 157
معاشرتی 158
سیاسی اور ملکی 162
مذہبی 163
معاشی 161
قانونی 163
اجتماع وتمدن کے چند اہم اجزاء 167
کاجہاد ملی 168
تنظیم ملی کی اساس 170
کا تصور 174
غیرمسلموں کامفہوم 175
کی 176
استقلال مرکز 178
دائرہ اطاعت 183

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
5.4 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...