جمع و تدوین قرآن (عبد القیوم)

جمع و تدوین قرآن (عبد القیوم)

 

مصنف : ڈاکٹر حافظ محمد عبد القیوم

 

صفحات: 383

 

مجید واحد ایسی کتاب کے جو پوری انسانیت کےلیے رشد وہدایت کا ذریعہ ہے تعالیٰ نے اس کتاب ِ ہدایت میں کو پیش   آنے والے تمام کو   تفصیل سے بیان کردیا ہے جیسے کہ ارشاد گرامی ہے کہ و نزلنا عليك الكتاب تبيانا لكل شيء مجید سیکڑوں موضوعا ت پرمشتمل ہے۔ مسلمانوں کی دینی زندگی کا انحصار اس مقدس کتاب سے وابستگی پر ہے اور یہ اس وقت تک ممکن نہیں جب تک اسے پڑ ھا اورسمجھا نہ جائے۔ اسے پڑھنے اور سمجھنے کا شعور اس وقت تک پیدا نہیں ہوتا جب تک اس کی اہمیت کا احساس نہ ہو۔ اور قرآن مجید وہ عظیم الشان کتاب ہے، جس کی حفاظت کی ذمہ داری خود تعالیٰ نے اٹھائی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ چودہ سو سال گزر جانے کے باوجود آج تک اس کی میں کوئی تحریف و تصحیف سامنے نہیں آئی۔ اور اگر کسی نے یہ مذموم کوشش کی بھی تو اللہ تعالیٰ نے اسے ذلیل وخوار کر کے رکھ دیا۔ قرآن مجید عہد نبویﷺ سے ہی زبانی حفظ کے ساتھ ساتھ کتابی شکل میں بھی لکھا جاتا رہا ہے۔ آپ ﷺ نے متعدد کرام کو کاتب کے طور پر مقرر کر رکھا تھا۔ خلیفہ ثالث سید نا عثمان ﷜ نے اپنے دور میں مجید کو مکمل کتابی صورت میں جمع کیا اور اس کے نسخے مختلف علاقوں کی طرف بھی روانہ کیے۔ لیکن قرآن مجید پر اعتراض کرنے والے نے کریم پر جہاں مختلف پہلوؤں سے اعتراضات کیے ہیں وہاں انہوں نے قرآن مجید کی تدوین اورجمع کرنے کے متعلق بھی اعتراضات کیے ہیں۔ جن کے امت محمدیہ نے شافی کافی جوابات بھی تحریرکیے ہیں۔ زیر مقالہ ’’جمع وتدوین قرآن‘‘ محترم جناب ڈاکٹر حافظ محمدعبد القیوم صاحب کے ایم فل کے لیے لکھے گے تحقیقی مقالہ کی کتابی صورت ہے۔ یہ کتاب دس ابواب پر مشتمل ہے۔ فاضلہ مقالہ نگار نے ابتداء میں اس کا جائزہ لیا ہے کہ کریم پر اعتراضات کی ابتدا کب ہوئی اور کس کے ہاتھوں میں ہوئی۔ معترضین کی کتابوں کے حوالہ سے انہوں نے اعتراضات کا احاطہ کیا اور پھر بڑی منطقی ترتیب سے انداز میں ان کے جوابات تحریرکیے ہیں۔ یہ کتاب جمع وتدوینِ قرآن کی پر مشتمل بڑی اہم کتاب ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
اظہار تشکر 15
تقریظ 17
تعارف 19
تقدیم 27
باب اول:

عہد نبوی میں کیفیت نزول اوراورجمع

کامفہوم اوراس کی اقسام 53
اقسام 54
نزول 57
’’ماانابقاری ‘‘کی وضاحت 58
کاتبین 66
جمع بعہد نبوی ﷺ اوراس کی کیفیت 62
حفاظت 66
تعلیم کانبوی طریق 66
عہد نبوی کی درس گاہیں 69
حفاظت بذریعہ عمل بالقرآن 74
حفاظت بذریعہ حفظ قرآن 75
حواشی وحوالہ جات 80
باب دوم

کتابت کریم اوراس کاتاریخی پس منظر

جزیرہ کاعلمی پس منظر 87
کی حالت 87
میں خواندہ عورتیں 89
کی حالت 89
طائف کی حالت 90
یمن کی حالت 90
انباراورعین تمر کی حلت 91
عناوین کتابت 95
’’مصحف ‘‘کی حقیقت 100
’’ورق ‘‘کی وضاحت 101
جزیرہ کی حالت اورمعتدل نقظہ 108
رسم الخط کی خصوصیات 110
عربوں کاحافظہ 115
حواشی وحوالہ جات 117
باب سوم

عہد صدیقی میں تدوین کےمحرکات وعوامل

عہد صدیقی میں فتنہ ارتداد کاعمومی جائزہ 123
فتنہ ارتداد اورکبارصحابہ کرام ؓکی شرکت وشہادت 127
جنگ یمامہ کےنتائج 130
حضرت زید بن ثابت ؓاورحضرت ابوسعید خدری ؓ کی جنگ یمامہ میں شرکت 131
فتنہ ارتداد اورشہداءجنگ کی تعداد 131
معرکہ یمامہ اورآغاز اوراختتام 134
فتنہ ارتداد کےاثرات 135
تدوین کےدیگر محرکات کاجائزہ 135
مرتدین کاتعارف اوران کےمعاشرہ پر اثرات 136
مدعیان نبوت اوران کاتصوردین 137
حواشی وحوالہ جات 141
باب چہارم

تدوین بعہد صدیقی کےمنہج کاتحقیقی جائزہ

روایت تدوین 147
تدوین کامقصد 152
دو گواہاں کی شرط اوراس کی 154
نتائج بحث 160
تدوین اورسبعہ احرف 162
عہد صدیقی میں کس پر لکھا گیا؟ 162
صحف اورمصحف میں فرق 164
صحف اورصدیقی میں فرق 164
صحف صدیقی اورصحیفہ امام 165
حواشی وحوالہ جات 167
باب پنجم

تدوین بعہد صدیقی کےمنہج کاتحقیقی جائزہ

سورۃ کی مفقود کےقصہ کی وضاحت 173
حضرت ابوخزیمہ ؓکی شخصیت کاتعین 173
علامہ ابن جوزی کاموقف 174
علامہ کرمانی کی رائے 174
علامہ ابن بطال کی رائے 174
علامہ بدر الدین عینی کاموقف 175
علامہ قسطلانی کانقطہ 175
علامہ ابن حجر کی رائے 176
امام کارجحان 177
علامہ زرکشی کےموقف کاجائزہ 177
علامہ سیوطی کےموقف کی وضاحت 178
الاتقان کےمتداول نسخوں کاجائزہ 179
علامہ سیوطی کی آخری تحقیقی 180
سورۃ کی اورنصاب 181
سورۃ کی کااثبات بذریعہ خبرواحد 184
قول فیصل 185
صحف صدیقی بعداز عہد صدیقی 186
صحف صدیقی کی حفاظت 187
تدوین کےمتعلق حضرت ابوبکر ؓکےتحفظات 187
کریم کس میں لکھا گیا؟ 188
تدوین کی شرعی حیثیت 189
تدوین کےفوائد وثمرات 191
حواشی وحوالہ جات 194
باب ششم:

شرف صحابیت اورقراءت وکتابت کاباہمی ربط وتعلق

دوشہادتوں میں 206
قراءقرآن کی حقیقت 207
معارضہ اورشرف صحابیت کی اہمیت 211
عہد میں عرضہ اخیرہ کاشیوع 212
حواشی وحوالہ جات 215
باب ہفتم

عہد عثمانی میں صحف صدیقی کی ترویج

عہد عثمانی میں جمع کےاسباب ومحرکات 217
صحف صدیقی اورحضرت عمر کی نگاہ دوراندیش 218
جمع کےاسباب ومحرکات 220
بلاداسلامیہ کی طرف مراسلہ عثمانی 224
جمع بعہد عثمانی کی کاتعین 225
کرام کااختیار 225
اختلاف قراءات کی نوعیت 226
کارم سےمشاورت 228
جمع صحف کےلیے کمیٹی کی تشکیل 229
جمع کاطریقہ کار 230
صحف صدیقی اورکتابت مصاحف میں ان کی اہمیت 230
مصحف عائشہ صدیقہ ؓاوراس کی اہمیت 231
جمع کےدیگر مراحل 231
قریش کی اہمیت 233
قراءات قرآنیہ 236
جمع عثمانی اورنص قرآنی کاتعین ؟ 237
سورۃ احزاب کی آیت کےمفقود ہونےکامسئلہ 238
جمع صدیقی وعثمانی میں فرق 239
مصحف عثمانی کی حیثیت 240
انتشار مصاحف   عثمانیہ 240
حضرت بن مسعودؓ کےموقف کاجائزہ 241
کیاحضرت عثمان ؓ جامع نہیں ہیں؟ 245
اتفاق کرام 246
حواشی وحوالہ جات 249
باب ہشتم

جمع وتدوین اورنسخ قرآن وقراءت

عہد نبوی میں منسوخ شد ہ حصہ 255
عہد صدیقی اورمنسوخ شدہ حصہ 259
عہد عثمانی اورسبعہ احرف کی منسوحیت 260
سبعہ احرف پر نزول کی حقیقت 261
سبعہ احرف کی منسوحیت کامسئلہ 262
ابوجعفر طحاوی کانقطہ 263
امام طحاوی اورسبعہ احرف کی منسوحیت 266
بعض معاصر محققین کےنقطہ کاجائزہ 268
علامہ رشید گنگوہی کاموقف 269
علامہ طبری کےموقف کی وضاحت 270
ادبی ورثہ اورمنسوخ شدہ حصہ 272
موقوف روایات کی مختلف امثلہ 274
کرام کےذاتی مصاحف کی حقیقت اوران کی منسوخیت 275
جمع وتدوین قرآن کرام کی میں 285
حواشی وحوالہ جات 288
باب نہم

روایات جمع وتدوین قرآن …..معاصر مسلم استشر اقی فکر

مصحف حضرت عثمانؓ 295
مصحف حضرت علی ؓ 296
مصحف حضرت سالم ؓ 299
مصحف حضرت ابی بن کعب ؓ 300
کیاحضرت عمرؓ جامع تھے ؟ 302
کیاتدوین عہد صدیقی وفاروقی میں ہوئی ؟ 305
کیاعہد صدیقی وفاروقی میں مجید کی تدوین نہیں ہوئی ؟ 309
حضرت ابن عباس ؓ اورروایت تدوین 311
جنگ یمامہ اورقرآن ضیاع 314
’’اسطوانۃ المصحف ‘‘کی حقیقت 315
’’جمع قرآن‘‘کےمختلف مفاہیم کاجائزہ 318
تدوین پر کےاشکالات کاجائزہ 319
حواشی وحوالہ جات 326
باب دہم

روایات تدوین پر اشکالات کاجائزہ

تنقید روایت کےاصول 331
روایات جمع وتدون پر اشکالات کاتاریخی پس منظر 335
روایات تدوین پر اشکالات کاجائزہ 339
مسلم محققین کےاشکالات کاجائزہ 339
علامہ تمنا اعمادی کےاشکالات کاجائزہ 340
علامہ عمادی کےعبید بن سباق پر اشکالات 340
کیاابن سباق مجہول الحال راوی تھے؟ 341
ابن سباق اورعلمائےجرح وتعدیل 342
عبید بن سباق سےمروی روایات 344
مولانا رحمانی کےاشکالات اوران کاجائزہ 351
تدوین کےمتعلق مولانا فراہی کانقطہ 357
تدوین پر علامہ باقلانی کےاشکالات کاجائزہ 357
حواشی وحوالہ جات 364
کتابیات 369

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
7.9 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...