خطبات شیخ الحدیث مولانا محمد عبد اللہ رحمہ اللہ تعالیٰ

شیخ الحدیث مولانا محمد رحمہ تعالیٰ

 

مصنف : حافظ عبد الرزاق اظہر

صفحات: 427

 

شیخ الحدیث  مولانا محمد رحمہ  (1920ء-2001ء) بھلوال کے نواحی گاؤں چک نمبر ۱۶ جنوبی میں پیدا ہوئے۔ آپ کے والد گرامی مولانا عبدالرحمن نے آپ کا نام محمد رکھا۔ بعدازاں آپ ’شیخ الحدیث‘ کے لقب کے ساتھ مشہور ہوئے۔ اکثر و بیشتر و طلباء آپ کو شیخ الحدیث کے نام سے ہی یادکیا کرتے تھے۔مولانا موصوف نے ۱۹۳۳ء میں مقامی گورنمنٹ سکول سے مڈل کا امتحان پاس کیا، پھردینی کی طرف رغبت کی وجہ سے ۱۹۳۴ء میں مدرسہ محمدیہ، چوک اہلحدیث، گوجرانوالہ میں داخلہ لیا۔ اسی مدرسہ سے دینی مکمل کرکے ۱۹۴۱ء میں سند ِفراغت حاصل کی۔مدرسہٴ محمدیہ کے جن اساتذہ سے آپ نے اکتسابِ فیض کیا، ان میں سے سرفہرست اُستاذ الاساتذہ مولانا حافظ محمد گوندلوی ہیں۔ ان سے آپ نے مشکوٰة المصابیح، موطأ امام مالک، ہدایہ، شرح وقایہ، مسلم الثبوت، شرح جامی، اشارات، کافیہ اور صحیح پڑھیں۔آپ کے دوسرے نامور استاد شیخ الحدیث مولانا محمد اسماعیل سلفی ہیں جن سے آپ نے جامع ترمذی، سنن نسائی، ابوداود اور کے علاوہ مختصر المعانی اور مطوّل وغیرہ کا حاصل کیا۔ ۱۹۴۲ء میں سے فراغت کے بعد مستقلاً مدرسہٴ محمدیہ چوک ،گوجرانوالہ میں تدریس کا آغاز کیا۔ مولانا اسماعیل سلفی کی وفات (۱۹۶۸ء)کے بعد گوجرانوالہ کی جماعت نے انہیں مولانا اسماعیل سلفی کا جانشین مقرر کردیا ۔مولانا   محمد اسماعيل سلفی رحمہ کی وفات کے بعد  مولانا عبد اللہ  جامعہ محمد یہ چوک نیائیں میں اپنے ایمان افروز جمہ  سے لوگوں کو مستفید کرتے رہے۔آپ کے خطبات میں میں دینی اور شرعی میں وحدیث سے استدلال نیزملک کی سیاسی صورت حال اور پیش آمدہ پر جامع تبصرہ  بھی ہوا  کرتا تھا۔موصوف تقریباً دس سال تک مرکزی جمعیت اہلحدیث کے رہے۔مولانا مرحوم زہد و تقویٰ، گزاری، دیانتدارانہ اور کریمانہ اخلا ق واوصاف کے حامل تھے۔۲۸؍اپریل ۲۰۰۱ء کو صبح چھ بجے گوجرانوالہ میں اپنے خالق حقیقی سے جاملے۔ ان کی جنازہ سہ پہرساڑھے پانچ بجے شیرانوالہ باغ میں پڑھی گئی جو گوجرانوالہ شہر کی تاریخی نماز جنازہ تھی۔ جس میں بلا امتیاز ہر مکتب ِفکر کی مذہبی، سیاسی اور سماجی شخصیات نے شرکت کی ۔زیر کتاب’’ شیخ الحدیث  مولانا محمد رحمہ اللہ ‘‘  مرکزی  جمعیت  ،پاکستان  کے سابق سرپرست اعلیٰ شیخ الحدیث مولانا محمد عبد اللہ  رحمہ کے کا مجموعہ ہے ۔اس مجموعۂ خطبات میں  اتباع وسنت اور اس کا نفاذ، عقیدۂ توحید، کی مذمت اہل کی دعوت ،فکرآخرت، اہل حدیث کی دینی وعلمی اورمسئلہ کشمیر ایسے اہم موضوع شامل ہیں۔اس مجموعۂ کو  مولانا عبد الرزاق اظہر صاحب (مدرس امام یونیورسٹی،سیالکوٹ)  نے  صاحب خطبات  شیح الحدیث مولانا محمد رحمہ کے  صاحبزادہ  جناب حافظ محمد عمران عریف حفظہ اللہ کی مشاورت سے  بڑے خوبصورت انداز میں مرتب کیا ہے۔اللہ تعالیٰ شیخ الحدیث  مولانا  عبد اللہ رحمہ اللہ  کی مرقد پر اپنی رحمت  کی برکھا برسائے  اور انہیں جنت الفردوس  میں اعلی وارفع مقام عطا فرمائے ۔اور اس کتاب کے  مرتب وناشرین کی  اس کاوش کو قبول فرمائے اور اسے  علماء ، طلباء  ، خطباء کے لیے نفع بخش بنائے ۔(آمین) 

 

عناوین صفحہ نمبر
تقریظ 19
مقدمہ 21
خالات زندگی 26
نام 26
ولدیت 26
ولادت 26
26
اساتذہ کرام 27
ذمہ داریاں 27
دیانت وامانت 29
قناعت پسندی 30
خطبہ جمعۃ المبارک 32
وفات 33
چند 34
دوسرا واقعہ 39
تیسرا واقعہ 45
چوتھا واقعہ 52
53
اتباع رسول صلی اللہ علیہ وسلم محبت الہی کے حصول کاذریعہ ہے 54
تمہیدی کلمات 54
محبت الہی کاعجیب طریقہ 55
یہ کو بھی ناگوارہے 56
محبت کاانوکھا ذریعہ 57
یہی توگمراہی ہے 58
محبت کایہ بھی طریقہ نہیں 60
یہ کیسی محبت ہے؟ 62
بزرگوں کوکون مانتاہے؟ 64
بھی اتباع رسول صلی علیہ وسلم میں 64
صرف وحدیث کانام ہے 67
وہ توپھر بھی غلام ہیں 69
اگر موسی علیہ السلام بھی زندہ ہوتے تو….. 70
اورفکرآخرت 73
تمہیدی کلمات 73
عظیم نصیحت 74
وحیات کااختیار صرف کےپاس ہے 75
لذتیں توڑڈالتی ہے 77
کاصدمہ نہیں بھولے گا 78
کاش میں مٹی ہوتا 79
کےدن کوئی سفارش نہیں چلےگی 81
نظام لپیٹ لیاجائے گا 82
اعمال سے بنتی ہے 84
فکرآخرت اورابوبکررضی عنہ 84
ایماندارہی کی فکرکرتاہے 87
کامیاب کون؟ 88
نیکوکارلوگوں کی 89
نیکوں کےباغ لگ رہے ہیں 90
کی قدرنہ کرنے والا لعنتی ہے 91
فکرآخرت کاایک اورزینہ 93
سے ہی شروع 94
میں نیک اعمال ہی نجات دلائیں گے 97
تمہیدی کلمات 97
علیہم السلام کی جان بھی مٹھی میں ہوگی 98
مشرک کی سفارش نہیں ہوگی 99
نبی صلی علیہ وسلم کی وفات کے متعلق رضی عنہم کاعقیدہ 100
میں تمہیں دوچیزیں دےکرجارہاہوں 102
نبی صلی علیہ وسلم کی وفات کے بعد رضی عنہم کاحال 103
اگر وفات نہیں توپھر کاجھگڑا کیوں؟ 105
نبی صلی علیہ وسلم کی نہیں ہوتی 106
عمر رضی عنہ کی 107
کے سواکسی کو ہمیشہ زندہ ماننا جہالت ہے 108
یہ آپ کی امت نہیں 110
ان کودفع کردیں 111
پرجانثاری کاجذبہ ہی لاتا ہے 114
تمہیدی کلمات 115
کب آئے گی؟ 117
ایمان کے مقابلہ میں کی اہم چیز 118
نعمت عظمی ہے 119
بن ابی اورایمان 121
ایمان ایک مضبوط طاقت ہے 122
ایمان اورفکرآخرت 123
سے بڑھ کرکون سچاہے 124
اوراس کے رسول پرایمان کیسے 125
میرے دینے کابھید کسی کو نہیں 127
یہودیوں پرکاری ضرب 127
مجھے کھانا نہیں کھلایا 128
فرشتوں کی دعاکے مستحق 129
ایمان اورجذبہ 131
ہلاک کون
آج حکمرانی کے بھوکوں کاحال 132
منصب اورعبداللہ بن عمر رضی عنہما کی بے نیازی 134
اختلاف کیوں؟ 136
تمہیدی کلمات 137
بے عیب ذات 138
بصیرت مند لوگ 139
نبی اکرم صلی علیہ وسلم سے پہلا اختلاف 140
غلطی کے بغیر اختلاف نہیں ہوسکتا 141
میں یہ کردارادارکریں 143
کاحل 145
رضی عنہم کو یہ مقام کیسے ملا 147
اورہمارامزاج 148
صحیحہ وسنت کے نفاذمیں…. 151
تمہیدی کلمات 151
اصلی خلیفہ کون 152
سیدہ عائشہ رضی عنہا کی گواہی 153
خلیفہ ہم سے ہوگا 155
صدیقی پرواضح 156
صدیقی پردوسری دلیل 158
کیاحضرت علی رضی کمزوردل تھے 160
صدیقی اورفاروقی کے متعلق علی رضی عنہ کاموقف 161
خلیفہ کےلئے کمیٹی تشکیل 162
خلیفہ کےلئے عبدالرحمن بن عوف رضی عنہ کی تجویز 163
رضی عنہ اورصحابہ کامتفقہ فیصلہ 164
جھگڑے کیوں؟ 165
خلفاءاربعہ اورقرآن 166
خلفائے اربعہ نبوی صلی علیہ وسلم میں 168
کی مذمت 171
تمہیدی کلمات 171
جب امیدیں ختم ہوجائیں 172
کیاہے؟ 173
مشرکین مکہ اورشرک 174
ابوبکر رضی عنہ اورعقیدہ حیاۃ النبی صلی اللہ علیہ وسلم 175
جن اورعقیدہ 178
کےدن عیسی علیہ السلام کی سے برات 180
بدترین گناہ ہے 182
کاپیغام موسی علیہ السلام کے نام 184
حضرت عیسی علیہ السلام کو بھی آئے گی 186
لعنت ہے 187
حصول جنت کی دوچیزیں 191
تمہیدی کلمات 192
ایمان اورعمل صالح میں تلازم 193
صالح اعمال کی پہچان 195
یہی پکےمومن ہیں 196
نبی اکرم صلی علیہ وسلم پرایمان ایسا ہو 197
طاقت سے زیادہ ہم بوجھ نہیں ڈالتے 199
یہ جنتی ہیں 200
کفران نعمت 202
ہم نے کھول کربیان کردیاہے 203
سبابستی اورکفران نعمت 204
قوم سنبا کی بربادی 206
باغات کیاسماں پیش کررہے تھے 208
بارش میں رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی 209
طوفان نوح سے بربادی 210
جنت کی قیمت ایمان 212
تمہیدی کلمات 212
جنت عجیب وغریب چیز ہے 213
ایمان کیاہے 214
ایمان کی پہلی چیز 216
ایمان کی باقی چیزں 217
پرایمان 218
تقدیرپرایمان 218
فرعون بھی مان گیاتھا 220
مال وہ جواللہ کی راہ میں خرچ ہو 223
مال دےکر آزمایا 224
جودیتاہےوہ لے بھی لیتاہے 228
مال صرف ہی دیتا ہے 229
مال کم نہیں ہوتا 232
شیخ سعدی اوراللہ کاشکر 236
نہ دینے والوں کاانجام 237
مال کاحساب اورسوال ہوگا 239
بدعات کی تردید 243
تمہیدی کلمات 243
کےآئینے میں 244
نبی کے بغیر بھی خبردےسکتاہے 245
میں یہودیوں کی مطابقت 247
ہم زیادہ دارہیں 248
یہودیوں کی مخالفت کرو 249
احد کے شہداءپرماتم نہیں کیا 250
مومنو!غمزدہ نہ ہونا 253
گریبان چاک کرنا منع ہے 254
واقعہ کی مبادیات 255
واقعہ پرطائرانہ 256
کی نعمتیں اورقربانی 259
تمہید ی کلمات 259
کی نعمتیں اورنبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم 260
کی کس نعمت کاتذکرہ کروں 261
نعمتیں جانوروں کی شکل میں 262
اے ابن آدم میں نے تجھ سے کھانا مانگا تھا 263
نعمتیں اورآزمائش 265
کاتاریخی پس منظر 267
کس کی قبول 268
متقی کون 269
نہ کرے تو 271
جسم کی اورزکوۃ مال کی پاکیزگی ہے 275
تمہیدی کلمات 275
بیماریوں کاعلاج ہے 276
کھانے میں اعتدال کیوں ضروری 277
جسم کی ہے 278
مال کو پاک رکھو 279
کیاتجھے آگ کے کنگن پسند ہیں 280
صدقات وزکوۃ کیاہیں 281
صدقہ کو حقیر مت جانو 283
صدقہ مال کو بڑھاتا ہے 284
رحمت کے مستحق لوگ 285
خسارہ پانے والے 288
صدقہ کےفوائد 289
ہم تم کو آزمائیں گے 293
بادلوپانی پلادو 294
اگریہ جان لیتے 295
کےدن مالداروں سے سوال 296
کشمیر کاجزولاینفک ہے 298
ہندوکی پھر بددیانتی 300
مسلم کےلئے کوئی نہیں…….؟ 301
وملک کادفاع ہی سے ہے 301
لیاقت خان کی بزدلی وغلطی 302
جب صدرایوب ہوتے ہوئے بلی بن گئے 302
بے نظیر کی سے وفاداری 303
کشمیر کی مظلومیت پرمسلم حکمرانوں ونوجوانوں کاکردار 304
آگے آگے دیکھئے ہوتا ہےکیا 305
بے نظیر کابیان کدھر گیا 305
نسوانی حکومت کےکمالات 306
کشمیر پرحکمرانوں کامنفی رویہ 306
حکومت کس کی ہمدرد ،مسلم کی یا؟ 307
جل توجلال تون آئی بلاٹال توں 307
کی دینی وتعلیمی 308
تمہیدی کلمات 308
کانام کبھی نہیں مٹا 309
اوراسلام ملاوٹ سےپاک ہے 311
مین رکھ رکھاؤنہیں 312
عقیدہ کی وجہ سے ایذائیں 313
خالص اوراہل 314
ترویج میں کاکردار 316
اب حالات بدل چکے ہیں 317
ملک اورعلماءکاحال 318
اشاعت میں کی محنت 321
کتاب وسنت سے دوری گمراہی ہے 323
تمہیدی کلمات 323
صرف نسبت سے کام نہیں چلتا 324
نبی صلی علیہ وسلم کابچہ ہی کیوں نہ ہو 325
رضی عنہم  اوراتباع 327
کتاب سماوی اوریہود کاکردار 329
میں عالمگیریت ہے 330
حدود کانفاذ حکومت کی ذمہ داری ہے 332
مسلمانوں کےلئے لمحہ فکریہ 334
وسنت سے دوری گمراہی ہے 335
فہم صدیق اورقرآن وسنت 338
ہماری قیادت اورنظریہ 338
دورجاہلیت اوراسلامی اصلاحات 342
تمہید کلمات 342
عظیم مصلح اوراصلاح 343
رسم مٹ گئی 346
جہالت کےنکاحوں کی رسمیں 346
ولی کے بغیر نہیں 348
قتل اولاد کی رسم اوراس کی 351
رازق صرف ہے 352
جس نے پیدا ہونا ہے وہ ہورکررہےگا 352
کےبگاڑ کی 354
حلالہ لعنت ہے 355
ایک ظہار کی شکل میں 357
ایمان کی اہمیت واثرات 360
تمہیدی کلمات 360
کیامومن اورغیر مومن برابر ہیں 361
ایمان کے بغیر اعمال برباد ہیں 363
صاحب ایمان ہی باعزت ہیں 365
ایمان بغیر سخاوت کسی کام نہیں آتی 366
نبی اکرم صلی علیہ وسلم کوایمان کیسے ملا؟ 368
ایمان سے گناہ مٹتے ہیں 369
ابوبکر صدیق رضی عنہ کاایمان 370
یہی تو ایمان کاتقاضا ہے 371
یہ ایمان ہی کی طاقت ہے 372
اہل ایمان کی بستیاں 375
بدرمیں معوذومعاذرضی عنہما کی ایمانی طاقت 376
ایمان کی چٹان 378
ورطہ حیرت میں ڈالنے والا واقعہ 380
ہماری دعوت 383
جلسے کاانعقاد 383
یہ حالات نبی اکرم صلی علیہ وسلم کے زمانہ میں بھی موجود تھے 384
کابے پناہ دینی جزبہ 384
نبی اکرم صلی علیہ وسلم کاارشاد گرامی 384
ہماری دعوت 385
اتحاد کی اہمیت 386
ہماری بے بسی 386
حکمرانوں کاطرز عمل 387
جمعیت کانظریہ 388
اختلاف کیسے ختم ہو 389
32 کے 22نکات 389
ایک ضروری وضاحت 391
عقیدہ 394
قوموں کی گمراہی کاسبب 406
تمہیدی کلمات 406
مفسر کافتوی 407
گمراہی سے بچنے کاواحد 408
نبی کاتابعدار گمراہ نہیں ہوسکتا کیوں؟ 409
بطورنمونہ کون؟ 411
قومیں گمراہ کیوں ہوئیں؟ 412
قبر میں بھی سوال اطاعت کا 413
گمراہی سے بچنے کاعظیم فارمولا 415
میں تورسول کے پرہوں 417
گمراہی کامنبع ہے 418
ہمارا مؤقف 422

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
13.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Leave A Reply