پیغمبر امن ﷺ

امن ﷺ

 

مصنف : منیر احمد وقار

 

صفحات: 466

 

موجودہ دور میں او رامت مسلمہ کوجس طرح الزام تراشی اور معاندانہ پراپیگنڈہ کانشانہ بنایا گیا ہےاس سے ہر حساس کا دل زخمی ہے ۔اور یہ ضرورت ماضی سے کہیں بڑھ کر محسوس کی جار ہی ہے کہ ان الزامات واتہامات کا مناسب اور شافی جواب دیا جائے ۔ کیونکہ حقیقت بھی یہی ہے کہ اگراس دنیا میں انسانوں کے مختلف طبقات میں چھوٹے سے لیکر بڑے تک ،بچے سے لیکر بوڑھے تک،ان پڑھ جاہل سے لیکر ایک ماہر عالم اور بڑے سے بڑے فلاسفر تک،ہر شخص کی جد وجہد اور محنت وکوشش میں اگر غور سے کام لیا جائے تو ثابت ہو گا کہ اگرچہ محنت اور کوشش کی راہیں مختلف ہیں مگر آخری مقصد سب کا قدرے مشترک ایک ہی ہے ،اور وہ ہے “امن وسکون کی زندگی”اور نبی کریم اسی امن وسلامتی کا بردارمذہب لے کر آئے۔ ایک امن وسلامتی والا ہے ،جو نہ صرف انسانوں بلکہ حیوانوں کے ساتھ بھی نرمی کرنے کی ترغیب دیتا ہے۔ اس عظیم کا حسن دیکھئے کہ اسلام ’’سلامتی‘‘ اور ایمان ’’امن‘‘ سے عبارت ہے اور اس کا نام ہی ہمیں امن و سلامتی اور احترام انسانیت کا درس دینے کیلئے واضح اشارہ ہے۔نبی کریم ﷺ کی حیاتِ طیبہ ، صبر و برداشت، عفو و درگزر اور رواداری سے عبارت ہے۔ زیر کتاب ’’ امن ‘‘مرکزی جمعیت اہل حدیث ،سیالکوٹ کے زیر اہتمام امام بخاری ﷫ انٹرنیشنل یونیورسٹی میں ’’ پیغمبر امن … حضرت محمد ﷺ‘‘ کے عنوان پر مقالہ آل پاکستان نگار ی کے مقابلے میں ملک بھر سےپیش گئے 27 میں سے اول دو م سوم آنے والے تین قیمتی اور مفید مقالات کامجموعہ ہے ۔اس تحریر ی مقابلہ سیرت نگار ی میں مولانا منیر احمد وقار کے مقالے کو اول ، ملتان کےپروفیسر جناب اشفاق احمد خان کےمقالے کو دوم اور یونیورسٹی کے پروفیسر محترم ڈاکٹر حمید عبدالقادر کےمقالے کوسوم انعام دیا گیا ہے۔ان تینوں مقالہ نگاروں نےنہایت اہم ، مستند اورمسلمہ مآخذ سے استفادہ کیا۔علامہ شبلی، قاضی محمد سلیمان منصورپوری، ڈاکٹر حمید اللہ ، مولاناابوالکلام آزاد ، مولانا اور مولانا صفی الرحمٰن مبارپوری﷫ کے علاوہ قابل مغربی سکالرز سے بھی استفادہ کیا ہے ۔اور بڑی وجستجو کے بعد وضاحت سےبتایا ہے کہ جب عالم انسانیت کی سب سے بڑی شخصیت حضرت محمدﷺ پیدا ہوئے تو اس دنیا کی کیا حالت تھی۔ یہ مذہبی ، سماجی اور اخلاقی لحاظ سے کتنی تاریکیوں میں گم اور کتنی مہلک پستیوں میں گری ہوئی تھی اور جب وہ اس دنیا سے رخصت ہوئے تو یہ کہاں سے کہاں تک پہنچ گئی تھی۔دارالسلام کے ڈائریکٹر مولانا عبدالمالک مجاہد﷾ نے ان تینوں تحقیقی کوبڑی افادیت کا حامل پایا اور دار السلام کے ریسرچ سکالزر سے ان مقالات پر مزید ضروری کام کروا طباعت کے عمدہ پر شائع کیا ہے۔ تعالیٰ مؤلفین اور ناشرین کی اس کاوش کو قبول فرمائے (آمین)

عناوین صفحہ نمبر
حرف آغاز 19
تقدیم 24
تعارف 26
باب:1 امن اورتلاش امن
امن دور حاضر میں 36
امن کو تلاش 37
امن کیساہوا 38
تلاش امن کاصحیح طریق اورمعیار 38
نقشہ عالم پر امن کےنظریات ومذاہب کاہجوم 39
یہودیت اورامن 40
صرف اسرائیلوں کےلیے پیغام امن 41
اورامن 44
اورحقوق وفرائض 45
کی حفاظت 46
اعمال کےدفاتر 47
بدھ مت اور امن 49
بدھ مت کی 50
آرین اورامن 51
ہند ومت اورامن 52
ہند ومت کانظام عدل وانصاف 52
پس چہ باید کرد؟ 55
امن عالم کاتنہا علمبر دار 53
باب :2 امن بعثت نبوی ﷺ سے پہلے اوربعد
امن ﷺ سےپہلے کازمانہ اور امن 58
یہودیت ،بعثت نبوی ﷺ سےپہلے 59
عیسائیت ،بعثت نبوی ﷺ سےپہلے 59
مجوسیت ،بعثت نبوی ﷺ سےپہلے 60
بدھ کی حالت 61
ہندومذہب کی حالت 61
قدیم کی احوال 61
متمدن ممالک کےحوال 62
کریم  کاتبصرہ 62
امن ﷺ کاولادت وسلسلہ نسب 63
والدہ اورانکاسلسلہ نسب 64
مقام نسب 65
قبیلہ خاندان اوررضاعت 65
دنیاوی سہاروں سے  محرومی 65
امن کاپہلا 65
حلف الفضو ل کامتن 67
حلف الفضول کااہمیت 68
امن کادوسرا 68
اسلوب امن کی تلاش 69
پیام امن آگیا 70
امن کافارمولہ 70
مکی دور اورامن عالم کےلیے افراد سازی 72
حزب کی صفات وخصوصیات 76
اور نور امن پھیلتا گیا 79
امن ﷺ طائف میں 80
موسم اور درس امن 80
چھ سعادت مندروحیں امن کی شاہراہ پر 80
مکہ سے مدین کی طرف 82
امن کادوسرا فارمولہ 82
باب :3 امن ﷺ مدینہ منورہ  میں
امنﷺ میں 84
مدینہ میں امن ﷺ کی مساعی امن 87
پہلااقدام 87
دوسرا قدام 87
تیسرا قدام 88
پہلے عہد وپیماں کی دفعات 89
امن وامان کاپیکر 91
چوتھا اقدام 91
میثاق مدینہ کی دفعات 92
پوری دینا کی دستور امن 93
قبیلہ جہینہ سے معاہدہ امن 94
بنو ضمرہ سے معاہدہ امن 95
بنو مدلج سے معاہد ہ امن 95
صلح حدیبیہ کی دفعات 96
مسلمانوں کااضطرات 97
تیماء کے یہودیوں سے معاہدہ امن 97
امن وامان کابجرذخار 98
ابوسفیان کی مرعوبیت 101
امن ﷺ کادریائے کرم 102
ام ہانی ﷜ کےپناہ گزیں 104
انسانی امن ﷺ کی زبانی 104
عام معافی کااعلان 105
امن ﷺ کی رحیمی وکریمی 106
بےمثال حسن سلوک 107
کوئی اورہوتا تو 108
امن وامان کےمظاہرے 108
حنین کےلیے تیاری 111
حنین کےمال غنیمت کی تقسیم 112
پرانے دشمنوں سےحسن سلوک 114
حنین کےاسیران جنگ 115
نبی ﷺ فاتح یاپیغمبر امن ﷺ 116
دومتضاد حالتوں کاانجام 121
وفو د وعجم کاستقبال 122
امن عالم کاابدی اورعالمی چارٹر 124
مغربی دستور امن اورپیغمبر امنﷺ کادستور 125
خطبہ حجۃ الوداع کی آفاقیت اوردفعات 128
امن ﷺ کی اخلاقی 141
وفرائض 142
142
اخلاق ورذائل اخلاق 142
وفرائض ایک نظرمیں 142
ایک میں 143
اخلاق ایک نظرمیں 143
رذائل الخاق ایک میں 143
کےموضوع پر کتب 144
عقیدہ اوراس کازندگی پراثر 145
انسانی اخوت کابلیغ اورتاریخی اعلان 147
انسانی کی شرافت وعظمت کااعلان 149
ودنیاکااجتماع 151
حدود اورتعزیری کانفاذ 153
زنا 154
قذق 154
چوری 155
رہزنی وقزاقی 155
شراب نوشی 155
ظالموں کی ستم ظریفی 156
کیا امن ﷺ انسانیت کےدشمن ہیں 157
امن ﷺ کی جنگی پالیسی 158
جنگوں میں جانی نقصانات کےعداد وشمار 160
امن پسند مہذبوں کی امن پسندی 163
مغرب کاپیغام 166
حادثہ یاسازش 167
سازش کاپس منظر 167
سازش پر عمل درآمد کی وجہ سے جواز 169
افغانستان پر حملہ اوربعد کی مہمات 170
کی عالمی دہشت گردی 171
امن ﷺ کےغزوات پر ایک 173

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...