راہ نجات

راہ نجات

 

مصنف : رحمت ربانی

 

صفحات: 275

چوتھی صدی ہجری  میں امت مسلمہ  نے  بحثیت مجموع   اجتہاد  کا  راستہ  چھوڑ کر تقلید کا راستہ اپنا لیا۔اور پھر بتدریج یہ تقلیدی جمود اس قدرپختہ ہوگیا کہ  آج چودہ صدیاں گزرنے کے باوجود اسے خرچنا مشکل ہی نہیں بلکہ محال آتا ہے۔لیکن  اس امت کی نجات صحیح معنوں صرف اور کتاب وسنت کے تمسک سے ہی ہے۔اگرچہ مسلمانوں  میں موجود تمام مسالک و فرق یہی کہتے ہیں کہ ہم کتاب و سے ہی  منسلک ہیں لیکن عملا صورتحال مختلف  ہے۔زیرنظر کتاب میں مصنف نے اسی فکر کے خدوخال واضح کرنے کی کوشش فرمائی ہے۔اور اس ہر فرقے و مسلک کتاب و سنت سے تمسک کی قلعی کھولنے کی سعی کی ہے۔اس سلسلے میں موصوف نے کئی ایک شرعی مسائل  و احکام  کو پیش رکھتے ہوئے جائزہ لیا ہے۔اور  غیر جانب دار ہو کر تجزیہ کیا ہے۔کیونکہ اس موصوف خود اس باب میں حقیقت کے شدت سے متلاشی تھے۔اسی وجہ سے انہوں نے اپنی کتاب کا نام راہ نجات رکھا ہے۔ تاہم  یہ فقہی ہوتے ہیں ان کے بناء پر جدل و نزاعات  کی راہ ہموار نہیں کرنی چاہیے۔اگرچہ مصنف کا رویہ  بحثیت مجموع اعتدال کی طرف  ہی مائل  ہے۔ ان کی کاوش کو کامیابی ء درین کا ذریعہ بنائے۔
 

عناوین صفحہ نمبر
باب نمبر 1۔ نمبر 1 تا 16 5
1۔ لفظ کی وضاحت سے لے کر سے متعلقہ
2۔تعدیل ارکان
باب نمبر 2۔ نمبر 17 تا 43 45
17۔ رکوع کے بعد سیدھا کھڑا ہونا فرض ہے
43۔ کو سلام سے ختم کرو
باب نمبر 3۔ نمبر 44 تا 65 84
44۔ اگر نمازی کی ہوا خارج ہو جائے تو ….
65۔ مدت رضاعت
باب نمبر 4۔ نمبر 66 تا 70 118
66۔ اذان ترجیع کا حکم
70۔ نبی کریم ﷺ کو گالی دینے والا واجب القتل ہے
باب نمبر 5۔ نمبر 71 تا 109 128
71۔ کے قضائی روزے
109۔ اہل قبور کا عدم سماع
باب نمبر 6۔ نمبر 110 تا 113 177
110۔ مسئلہ غیب
113۔ گستاخ رسول ﷺ کون ؟
باب نمبر 7۔ نمبر 114 تا 134 215
114۔ اور شوری کا تعلق
134۔ ختم کے استدلال پر بحث

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...