سیرت النبی ﷺ (ابن کثیر) جلد۔2

النبی ﷺ (ابن کثیر) جلد۔2

 

مصنف : حافظ عماد الدین ابن کثیر

 

صفحات: 616

 

حافظ ابن کثیر﷫(701۔774ھ) عالمِ کے معروف محدث، مفسر، فقیہہ اور مورخ تھے۔ پورا نام اسماعیل بن عمر بن کثیر، لقب عماد الدین اور ابن کثیر کے نام سے معروف ہیں۔ آپ ایک معزز اور خاندان کے چشم وچراغ تھے۔ ان کے والد شیخ ابو حفص شہاب الدین عمر اپنی بستی کے خطیب تھے اور بڑے بھائی شیخ عبدالوہاب ایک ممتاز عالم اور فقیہہ تھے۔کم میں ہی والد کا سایہ سر سے اٹھ گیا۔ بڑے بھائی نے اپنی آغوش تربیت میں لیا۔ انہیں کے ساتھ دمشق چلے گئے۔ یہیں ان کی نشوونما ہوئی۔ ابتدا میں کی اپنے بڑے بھائی سے پائی اور بعد میں شیخ برہان الدین اور شیخ کمال الدین سے اس فن کی تکمیل کی۔ اس کے علاوہ آپ نے وغیرہ سے بھی استفادہ کیا۔ تمام عمر آپ کی درس و افتاء ، تصنیف و تالیف میں بسر ہوئی۔ آپ نے تفسیر ، حدیث ، سیر ت اور میں بڑی بلند پایہ تصانیف یادگار چھوڑی ہیں۔ ابن کثیر اور البدایۃ والنہایۃ آپ کی بلند پایہ ور شہرہ آفاق کتب شما ہوتی ہیں۔ البدایۃ والنہایۃ 14 ضخیم جلدوں پر مشتمل ہے۔ اس وقت ’البدایۃ والنہایۃ‘ کا قالب ’تاریخ ابن کثیر‘ کی صورت میں موجود ہے۔ ابن کثیر کی یہ تاریخ بھی دوسری تاریخوں کی طرح ابتدائے آفرینش سے شروع ہوتی ہے اور اس کے بعد اور مرسلین کے حالات سامنے آتے ہیں، یہ کئی لحاظ سےاہم ہیں۔ ابن کثیر حضرت آدم سے لے کر عراق و بغداد میں تاتاریوں کے حملوں تک وسیع اور عریض زمانے کا احاطہ کرتی ہے اور غالباً سب سے پہلی تاریخ ہے جس میں ہزاروں لاکھوں سال کی روز و شب کی گردشوں، کروٹوں، انقلابوں اور حکومتوں کومحفوظ کیا گیا ہے۔ پھر ابن کثیر نے جن حالات و کا احاطہ کیا ہے وہ اس قدر صحیح اور مستند ہیں کہ ان کا مقابلہ کوئی دوسری کتاب نہیں کر سکتی۔ زیر کتاب’’ النبی ﷺ‘‘ امام ابن کثیر ﷫ کی مذکورہ کتاب البدایۃ والنہایۃ میں سے ﷺ پر مشتمل ایک حصہ ہے۔ اس حصے کواردو قالب میں ڈھالنے کی سعادت مولانا ہدایت ندوی صاحب نے حاصل کی۔ یہ کتاب اپنے اندر بے پناہ مواد سموئے ہوئے ہے۔ امام ابن کثیر نے واقعات کا انداز کے حساب سے رکھا ہے۔ سن وار واقعات کو درج کیاگیا ہے۔ اس کتاب کے مطالعہ سے قارئین کو بہت سے ایسی حاصل ہوں گئی جودیگر کتبِ میں نہیں ہیں۔ امام ابن کثیر ﷫ چونکہ اعلیٰ پائے کےادیب او رعمدہ شعری ذوق کے مالک تھے۔ البدایۃ میں انہو ں نےجابجار اشعار درج کیے ہیں۔محترم ندوی صاحب نے ان اشعار کوبھی قالب میں ڈھالا ہے ۔نیز فاضل مترجم نے واقعات کے جابجا ذیلی عنوانات بھی دیئے ہیں جو بڑے مفید ہیں اورکہیں کہیں کچھ تشریحات بھی کی ہیں جوکہ ’’ندوی‘‘ کے تحت بریکٹ میں درج ہیں ۔اس کتاب کو سے قالب میں ڈھال کر حسنِ طباعت سے آراستہ کرنے کی سعادت شہید ملت علامہ احسان الٰہی ظہیر ﷫ کے ساتھ پیش آنےوالے الم ناک واقعہ میں کا رتبہ پانے والے ان کے رفیق خاص جناب مولانا عبد الخالق قدوسی شہید (بانی مکتبہ قدوسیہ، لاہور) کےصاحبزدگان نے حاصل کی ۔ مدیر مکتبہ جناب ابو بکر قدوسی صا حب نے 1996ء میں اس النبی ﷺ کو تین جلدوں میں بڑے خوبصورت انداز میں شائع کیا۔اس سے قبل 1987ء میں بھی البدایۃ والنہایۃ   کےعربی نسخے کو 14 جلدوں میں مکتبہ قدوسیہ نے شائع کیا ۔اب توجناب ابو بکر قدوسی اور جناب اوران کے دیگر برادران کی محنت سے مکتبہ قدوسیہ ماشاء بیسیوں معیاری کتابیں شائع کرچکا ہے۔ اللہ ان برادران کے وعمل میں خیر وبرکت فرمائے اوران کی کاوشوں کو شرف ِقبولیت سے نوازے۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
غزوہ نجدیا ذی امر 15
غورث کا واقعہ 15
غزوہ فرع جانب بحران 16
مدینہ میں یہودی قینقاع کا واقعہ 16
خاتون کی بے حرمتی 16
عبادہؓ اور ابن ابی سلول 17
زید بن حارثہ کے فوجی دستہ کی ابو سفیان یا صفوان کےتجارتی قافلہ کی طرف روانگی 17
سریہ ارسال کرنے کا سبب اور فرات کا ہونا 18
حضرت ام کلثومؓ کی 18
کعب بن اشرف کا قتل 18
کعب کافتویٰ 20
رسول ﷺ کی مخالفت 20
حویصہ کا ہونا اوریہودہ کے قتل کاحکم 23
غزوہ احد شوال3ھ 24
احد 24
انتقامی جذبہ 24
ابوعزہ اور نافع شاعر 25
وحشی 26
وحشی کی تحریض 26
26
اور اس کی تعبیر 26
کےجذبات 28
حضرت نعیم ﷜ 28
مسلمانوں کی پشیمانی 29
ابن سلول کاعلیحدہ ہونا 29
الگ میدان کا نقشہ 31
درے پر تیر اندازوں کا تقرر 31
سمرہ اوررافع کی عمر 31
ہندکے اشعار اورعلم برداری 32
ابودجانہ 33
حضرت حمزہ ﷜ کی 34
وحشی اور حضرت حمزہؓ 34
حضرت مصعب ؓ کی 37
رسول ﷺ کاانصار کے تلے آنا 37
حضرت عاصمؓ   کاکارنامہ 38
شکست کاسبب 40
درہ کا خالی ہونا 40
رسول ﷺ کےزخم 41
ابی بن خلف کاقتل 42
ابوسفیان کااترانا 43
رسول ﷺ کےزخموں کی تفصیل 43
جنگ کا نقشہ 43
تیراندازوں کی جلد بازی 45
سات انصاری شہیدہوئے 46
حضرت سعدبن ابی وقاص﷜ 47
حضرت ابوطلہ ؓ انصاری 48
حضرت عثمان ؓ کی بریت 49
احد میں بدر ایسے 49
کی حفاظت ونگہداشت 51
حضرت انس بن نضرؓ 52
ابی بن خلف جمحی مقتول 53
حضرت جابر کے والد حضرت کی فضیلت 54
حضرت یمانؓ کی 54
حضرت قتادہؓ کی آنکھ 55
رسول ﷺ کی کمان 56
رسول اللہﷺ نے بیٹھ کر نمازپڑھائی 58
فاسق کےذریعہ کی امداد 58
ایساجنتی جس نے کوئی نہ پڑھی ہو 59
عمربن جموح کاجہاد پر اصرار 59
الوداعی گفتگو 61
نقل وحرکت کاجائزہ 61
جنگ کے اجتماعی 61
حضرت سعدبن ربیع کاپیغام 62
سیدالشہداء حضرت حمزہ﷜ 63
حضرت حمزہ﷜اور شہدائے احدپر نمازجنازہ 63
حضرت صیفہؓ کا صبروثبات 65
شاح کا آہنی تلوار بن جانا 66
شہیدکا خون 66
قبر گہری اور فراح ہو 66
حضرت جابرکے والدکاواقعہ 67
شہداء کی لاشوں کی حالت 67
زیا رت قبور کی روایت 69
شہداء کی ارواح 70
شہداء کی تعداد 70
بنی دینار کی خاتون 71
او ردیگر کے حسن کردا رکی تعریف 72
حضرت حمزہ ﷜ کانوحہ 72
پس منظر او روضاحت 73
ابوسفیان کاتعاقب 74
معبد خزاعی کی خیر خواہی 75
حسبنا کی فضیلت 76
بن ابی کی پوزیشن 78
70شہیداور22ہلاک جنگ احد کے بارے اشعار 78
واقعہ احد کا تکملہ 93
کی 94
سریہ ابوسلمہ 94
واقعہ رجیع 95
حضرت خبیب ؓ 95
حضرت خبیب ؓ کا قاتل 96
مشرک سے کراہت 97
حضرت بن طارق 98
دورکعت کادستور 99
محبت کی انتہاء 100
طریقہ قتل خبیب 100
خبیب کی لاش 100
بعض کاشان نزول 101
کاکلام 101
رسول ﷺ کے قتل کی سازش 104
سریہ عمروبن امیہ ضمری 105
سریہ بئیرمعونہ 106
غزوہ بنی نضیر 110
بنی نضیر کی جلاوطنی 111
شراب کی حرمت 111
سورہ حشر کانزول 111
نخلستان کے جلانے کی 113
مال فے 117
عمروبن سعدی القرضی کاقصہ 118
غزوہ بنی لحیان 119
نمازخوف 120
غزوہ ذات الرقاع 122
وجہ تسمیہ 122
غورث بن حارث کاقصہ 123
ایک شوہر کاقصہ 124
میں محویت 125
حضرت جابر کے اونٹ کاقصہ 125
غزوہ بدر دوم 127
4ھ کے حوادثات کا اجمالی خاکہ 130
حضرت ام سلمہؓ سے 131
5ھ ہجری کےواقعات 132
غزوہ خندق 133
سن ہجرین کب شروع ہوا 133
غزوہ خندق کےمحرک 134
حضرت جابر کی دعوت 137
کھجوروں میں اعجاز 140
چٹان کی چمک سے عجائبات 140
خندق کی کھدائی کی تقسیم 141
ایک اور 142
چٹان کی روایت او رمیمون 143
احزاب کامحاصرہ 145
حی اور کعب مکالمہ 145
حال 146
محاصرہ اور غطفان سےصلح 147
حضرت علی ﷜ کی شجاعت 148
حضرت علی ؓ کی پیشانی زخمی 150
نوافل کی لاش 151
حضرت سعدبن معاذ﷜ 153
حضرت حسانؓ قلعہ کے اندر 153
حملے کی شدت اور عصر 153
موخر کرنا 154
نمازبر وقت پڑھنا 154
رسول ﷺ کی 155
نعیم بن مسعود اشجعیؓ کی تدبیر 156
حضرت حذیفہ بن یمان اوراحزاب کانقشہ 158
آسمانی مدد 161
شہدائے خندق 161
غزوہ بنی قریظہ 162
بنی قریظہ میں نمازعصر 163
حضرت ابولبابہؓ 166
کعب کی سعی لاحاصل 166
اوس کی عرضداشت 168
حضرت سعد﷜ 168
حضرت علی ؓ کااعلان جنگ 169
کافیصلہ 169
حضرت سعدکا زخم ہراہونا 170
حضرت سعد کی مستجاب 170
حضرت عائشہؓ کاتنہا جانا 171
بنی قریضہ کو یکجاکرنا 173
مقتولوں کی تعداد 173
حی نضیری 173
عطیہ قرظی اور علامت بلوغ 174
مال غنیمت کی تقسیم 175
حضرت ریحانہ ؓ 175
حضرت سعدبن معاذ کی وفات 176
عذاب قبر اور حضرت سعدؓ 176
غزوہ خندق اور بنی قریظہ کے بارے اشعاروقصائد 181
ابورافع یہودی کاقتل 190
خالدبن سفیان ھذلی کاقتل 194
عمرو بن عاص کی نجاشی کے ساتھ ملاقات کاقصہ 196
نبی ﷺ کا حضرت ام حبیبہؓ کے ساتھ 198
مہر 198
ولی اور وکیل 199
کاپیغام 199
خطبہ 199
کے بعد دعوات طعام 199
مسلم پر اعتر اض 200
نبی ؑ کازینب بنت جحش سے عقدکرنا 201
مہر 201
آیت کانزول 203
203
6ھ کے حالات 205
بنی لحیان کی طرف 205
غزوہ ذی قرد 206
حضرت ابو عیاش زرقی 206
حضرت محرز شہید 207
حضرت ابو قتادہؓ 207
حضرت عکاشہ 207
خوف وہراس 210
عورت کاقصہ اور ناقہ عضباء 211
غزوہ بنی مصطلق 214
ایک شہید ہوا 214
ابن ابی کی خبث باطن 215
منافق کی معذرت 216
آندھی 217
کاجذبہ 217
اطاعت رسولﷺ 217
عزل 217
حضرت جویریہؓ سے 218
218
مہر 219
واقعہ افک 219
تہمت حد 222
غزوہ حدیبیہ 224
عوام کو دعوت عمرو 225
حدیبیہ 226
بدیل 226
مکرز 227
حلیس 227
عروہ ثقفی 227
حضرت ابوبکر ؓ کاایمانی جوش 227
عجب منظر 228
سفارت 228
بیعت رضوان 229
پہلے کس نے بیعت کی 229
خود بیعت کی 229
سہیل بن عمرو اور مصالحت 229
حضرت عمر کاجوش وجذبہ 229
شرائط صلح 230
حضرت ابوجندل ﷜ 230
گواہ 231
ابوجہل کااونٹ 231
صلح حدیبیہ (صحیح کی روشنی میں) 232
232
پرسکون حالات کارستہ 233
233
شجر 234
پہلے کس نے بیعت کی 235
کیاحضرت ابن عمر پہلے ہوئے 235
عمروحدیبیہ کا بیان 236
بدیل خزاعی 236
عروہ ثقفی 237
حضرت مغیرہؓ کاقصہ 237
رسول ﷺ کی ہیبت 238
شرائط 239
پہلی شرط 239
حضرت عمر ؓ کامکالمہ 240
ابو بصیر اور ابوجندل 241
صلح صفین کے بارے 242
سریہ حضرت عکاشہ بن محصن 243
سریہ حضرت ابوعبیدہ 243
سریہ حضرت محمدبن سلمہ 243
سریہ حضرت زیدؓبن حارثہ 243
سریہ حضرت زیدؓ 243
ابوالعاص کاتجارتی قافلہ 243
سریہ حضرت زیدؓ 244
سریہ حضرت علی ؓ 244
سریہ حضرت عبدالرحمان 244
سریہ حضرت کرزفہریؓ 244
6ھ کےاہم 246
غزوہ خبیر 247
مدینہ 247
حضرت ابوہریرہؓ کی آمد 247
رسول ﷺ کےپڑاؤ 247
گدھے کاگوشت 248
شہیدعامرؓ 248
ام المومنین حضرت صفیہؓ 250
فاتح خیبر 251
محمودبن مسلمہ شہید خیبر 253
دردشقیقہ 254
مرحب کاقاتل کون؟ 256
مجہول اور منقطع روایت 257
جنتی جس نے ایک سجدہ بھی نہیں کیا 258
گھوڑے کاگوشت 261
لہن 261
متعہ 261
سلالم آخر میں فتح ہوا 063
ابو الیسر کےلئے 263
صفیہ بنت حی نضریہ کا قصہ 264
265
266
بدعہد ی اور مخبری 266
قلعہ زبیر 267
قلعہ ابی اور سموان 268
قلعہ بزاۃ 268
وطیح اور سلالم 268
مصالحت 268
خیبر کی تقسیم 270
مزارع تابع مرضی مالک 270
تقسیم میں اختلاف 271
رسول ﷺ کا حصہ 272
کس نے پیمائش کی 273
فدک 273
رسول ﷺ کی 273
حضرت جعفرؓ کی آمد 277
حضرت جغفرؓ کے رفقا 277
حضرت ابو ہریرہ ؓ کی آمد 279
مدعم غلام 279
زہر آلود بکری کے گوشت کاقصہ اورمعجزے کااظہار 279
اعتراف جرم 080
عورت کو قتل کرایا 281
زینب زوجہ سلام یہودیہ 282
عیینہ کا جھوٹاخواب اور یہودکا اعتراف 283
حضرت ابوایو ب کے لئے 284
یاد آنے پرنماز پڑھ لی 285
’’لاحول ‘‘کی فضیلت 286
شہدائے خیبر 287
حجاج بن علاط بہنری کا قصہ 287
خوشی سے غلام آزاد 289
وادی قریٰ پرنبی ﷺ کا گزرنا‘یہودکامحاصرہ کرنا اور ان سےمصالحت کرنا 291
جلاوطنی 292
حضرت عمرؓ نے جلا وطن کیا 293
عہد نامہ اوراس کی اہمیت 293
حضرت ابن عمرؓ پر حملہ 293
سریہ حضرت ابوبکر ﷜ 294
سریہ حضرت عمر ﷜ 294
سریہ بن رواحہ ﷜ 294
سریہ بشیر بن سعد﷜ 295
سریہ بن کلبی ؓ 295
کلمہ توحیدکی عظمت 295
سریہ کدیہ 296
کرامت 297
سریہ بشیربن سعد 297
سریہ ابی حدرد‘ 297
اقرع بن حابس کی مصالحت کی کوشش 299
محلم کوزمین نے قبول نہ کاکیا 299
سریہ بن حذافہ سہمی 300
عمرۂقضا 301
عمرۂ قصاص 301
رمل 302
ابن رواحہ کےاشعار 302
سواری پرطواف کیا 303
دعوت 304
ھدی کےجانوروں کانگران 306
307
رمل اور حضرت ابن عباس 307
رمل میں اختلاف 308
اذان سے نفرت 308
رسول ﷺ کاحضرت میمونہ سے شاد ی کا قصہ 308
عمرہ قضاکی ادائیگی کے بعد مکہ سے روانگی 310
دخترحمزخ 310
عمارہ کی 311
سریہ ابن ابی العوجاسلمی 312
8ھ کے 312
حضرت عمر بن عاص﷜ 312
حضرت خالد بن ولید کااسلام قبول کر نا 315
ولیدؓ 316
316
سریہ شجاع بن وھب اسدی 317
سریہ کعب بن عمیر غفاری 318
غزوہ موتہ 318
یہودی کا 319
کس روز روانگی ہوئی 320
کفار کی فوج دولاکھ 320
حضرت ابن رواحہ ؓ کی ولولہ انگیزتقریر اور جذبہ 321
صف آرائی 322
نصرت کثرت سے نہیں 322
حضرت جعفرطیارؓ 323
ابن رواحہ کےاشعار 323
حضرت خالدؓ کی امارت 324
شہداءکی خبر 324
نوے سے زیادہ زخمی 324
حضرت جعفر ؓ کی جرات 325
عملی 327
استقبال 328
حضرت سلمہ ؓ 329
تعزیت اور کھانا تیارکرنا 332
تین روز تک رونے کی مہلت 333
محمدبن ابوبکر 335
شفقت 335
قثم بن عباس 335
حضرت زید بن حارثہ ﷜ 336
حضرت زید ؓ کی فضیلت 337
حضرت جعفرطیار﷜ 338
حضرت بن رواحہ 340
طاعت کا نمونہ 340
زہدتقویٰ 340
نعت گوشاعر 341
غزوہ موتہ کے شہداء 342
غزوہ موتہ کےامراءکی فضیلت 343
بادشاہوں کے نام ‘ رسول ﷺ کے مکاتیب 345
شاہانہ اغزاز 346
346
ابوسفیان دربارمیں 347
سوالات 347
گرامی 348
ہرقل کااعتراف 348
حضرت ابوسفیان ﷜ کاتبصرہ 351
ابن ناظورکابیان 351
ایک اور نجومی کی تائید 351
نیاجال اور ہرقل کاحال 351
ابوسفیان ایلیامیں 352
صفاطر پادری کی 353
آنحضورﷺ کا نامہ مبارک ‘شام میں عیسائیوں کے شاہ کےنام 354
کسریٰ شاہ فارس کے نام 355
باذام کا دو آدمیوں کوآپؐ کولانے کے لئے بھیجنا 356
مکتوبت شیرویہ 357
باذام کااسلام 357
عورت کی سربراہی 358
عجب مبلغ 358
پیشں گوئی 359
رسول ﷺ کانامہ مبارک‘مقوقس ‘ اسکندریہ کے نام 359
تحائف 360
غزوہ ذات سلاسل 361
حضرت عمرؓ کااجتہاداور غسل کرنا 362
شخیین کا ورع وتقویٰ 363
سریہ حضرت ابوعبیدہ 364
مچھلی کی جسامت 365
سریہ اسامہ بن زید 365
نجاشی کی وفات اور غائبانہ جنازہ 366
فتح مکہ 366
فتح مکہ کے اسباب 366
باعث نزاع 367
پیش گوئی 369
ابوسفیان آستانہ نبوی میں 369
رازداری کی انتہا 373
زاد راہ 373
حاطب بن ابی بلتعہ کا قصہ 374
لکھنے کی معذرت 375
بازپرس 375
روانگی کب ہوئی 376
376
فتح کب ہوئی 377
راستہ میں کھول دیا 377
حضرت عباس﷜ 378
ابوسفیان بن حارث اورعبداللہ کااسلام 378
مرالظہران میں 379
بن مسعود﷜ 379
ابوسفیان کی گرفتاری 380
حضرت عباس ؓ کی تشویش 380
بدیل اور حکیم کامسلمان ہونا 380
ابوسفیان اور حضرت عمرؓ 381
ابوسفیان اورحکم کا اعزاز 381
حضرت عباسؓ اور حضرت عمر ؓ کی تکرار 381
لشکر کا منظر 382
نبوت ہے نہ کہ بادشاہت 382
قومی غیرت 383
حضرت ابوسفیان ؓ کا شکوہ 383
نمازکانظارہ 383
جھنڈاحجون پر 385
مکہ میں کیسے داخل ہوئے 385
سیاہ 385
سفیدجھنڈا 386
تلاوت 386
تواضع اور انکساری 386
ہیبت 386
ابوقحافہ کامسلمان ہونا 387
لشکر کی ترتیب 388
حضرت سعدؓ کاعلم 388
خیف بن کنانہ میں قیام 389
نامہ کی غلطی اور حضرت خالدؓ کاعمل 391
بن سعد بن ابی سرح 391
ابن خطل 392
حویرث 392
مقیس بن صبابہ 392
سارہ 392
حضرت عکرمہ﷜ 392
نمازچاشت 394
لکڑی کا کبوتر 395
قریش سے خطاب 395
او رکلیدکعبہ 396
حضرت ابراہیم کی 396
360بت 396
بت کواشارہ 397
کعبہ کے اندر 398
کعبہ کےاندر نمازپڑھی 398
کعبہ میں اذان بلالی 399
حرم کے 400
مکہ صلح سے فتح ہوایا بزور 400
خراش خزاعی 401
دعوت میں کااہتمام 402
فضالہ لثیی کاارادۂ قتل 404
مجاہدین کی تعداد 407
فتح مکہ کے موقعہ پرحضرت حسان ؓ کاکلام 407
حضرت خالدؓ بن ولید کی بنی جذیمہ کی طرف روانگی 411
رسول اللہﷺ کی بیزاری 411
ابن عمر اور سالم کااعتراض 412
حضرت خالدؓ کو عتاب 413
عوف کےقتل کاواقعہ 413
حضرت خالد بن ولیدؓ کاعزیٰ کو مسمار کرنا 415
مکہ میں رسول ﷺ کے قیام کی مدت 416
قیام مکہ کےدوران 417
شرعی حدودمیں سفارش 417
متعہ 418
بیعت 418
بیعت کادستور 419
حضرت ابن عباس کی فضیلت 421
ایک غلط روایت 422
غزوۂ ہوازن او رغزوۂ حنین 423
مشرک سے ہتھیار مستعار 425
12ہرازفوج 426
ذات انواط 426
غنیمت کامثردہ 427
انس ؓ غنوی کا رتبہ 427
آغازجنگ میں اہل کافرار پھر بہتر انجام 427
ثابت قدم لوگ 428
حضرت انسؓ سے سوالات 429
رسول ﷺ کی شجاعت 430
حضرت ابوقتادہؓ کی شجاعت 431
مکی لوگوں کی روانگی 432
جاسوس 433
آغازجنگ 433
صفوان کا قول 433
حضرت عباس کی منظرکشی 433
حضرت سلمہ ؓ کی صاف گوئی 434
حضرت ابن مسعودؓ کا بیان 435
70قتل کئے 435
کلام کی تاثیر 435
دعاءمستجاب 436
رعب کی کیفیت 436
شیبہ کا رسول اللہﷺ کے قتل کاارادہ کرنا 436
بنی مالک کے 70 آدمی 439
ختنہ نہیں کرتے 439
مالک کی فراست اور زبیر ؓ 441
عورت کوجنگ میں نہ قتل کرنا 442
غزوۂ اوطاس 442
دس مشرک بھائی اورابوعامر 443
ابوعامر کی 444
لونڈی کامسئلہ 445
عجب نکتہ 445
شہدائے حنین اور اوطاس 445
غزوۂ ہوازن کےبارے اشعار 445
غزوۂ طائف 454
پہلا قصاص 456
سرتابی 456
ابو دغال 456
طائف 456
کتنے روز محاصرہ 456
23آدمی اترے 458
منجنیق 459
حضرت ابوسفیان ؓ اور حضرت مغیرہ ؓ کاکارنامہ 459
سفارت میں خیانت 459
اعمال جہادکاثوا ب 460
مخنث ھیث 460
461
شہدائے طائف 462
صخرکاعجب واقعہ 463
طائف سے واپسی اور ہوازن کےمال غنیمت کی تقسیم 464
رسول ﷺ کی عملی 465
فراخدلی 466
ہوازن کی آمد 466
ایک کوڑے کامعاوضہ 467
اسیر کب واپس کئے 468
انصار نے صبر نہ کیا 469
انصار کوتسلی 471
انصار کی شکایت 471
خوش اخلاقی اور تبرک 474
تالیف قلبی کی ایک مثال 475
مالک بن عوف نضری ؓ 475
عمروؓ بن ثعلب 476
حضرت حسان ؓ کاشکوہ 476
رسول ﷺ کی تقسیم پراعتراض 477
رسول ﷺ کی رضاعی ہمشیرہ کاجعرانہ میں آنا 479
بہن سےسلوک 479
نضیر کااظہار تشکر 480
ذی قعدہ میں عمروجعرانہ 481
عمرہ قعدہ میں جعرانہ 481
چاشت اور عمر ہ جعرانہ 482
احرام 483
حضرت معاویہ ؓ نےبال کاٹے 484
مدینہ کب آئے 484
کعب بن زہیر کامسلمان ہونا 485
اور قصیدہ بانت سعاد 485
انصار کااعتراض 492
8ھ کےمشہور 493
غزوۂ تبوک 495
ناسخ آیت 496
جد کابہانہ 496
منافقوں کی ردش 496
غنی ﷜نے سب زیادہ مال دیا 497
بر سرمنبر چندہ کی اپیل 497
جنگ سے پھیچھے رہنےوالوں کابیان 498
ابویعلی اور ابن مغفل 499
حضرت ابوموسیٰ ﷜ کاواقعہ 499
تبوک کی طرف 501
مدینہ 501
حضرت ابوذر ﷜ 503
’’ساعتہ عسرۃ‘‘کی 503
معجزا نہ بارش 503
طعام میں معجزانہ برکت 504
ثمودکےمکانات سے گزرنا 505
ناقہ والے کنوئیں پر 505
آندھی کی پیش گوئی او ردو آدمیوں کی خلاف ورزی 506
ایلہ کابادشاہ اور امن کاپروانہ 507
دو نمازوں کو جمع کرنا 507
تبوک میں کھجور کےتنے سے ٹیک لگاکر خطبہ دینے کابیان 508
نمازی کے آگے سے گزرنے کی سزا 509
معاویہ بن ابی معاویہ کی غائبانہ نمازجنازہ 510
تبوک میں رسول اللہﷺ کے پاس قیصر کےقاصد کی آمد 510
نبوی برائے یحنہ بن رۂبہ باشندگان ایلہ 512
نبوی برائے اہل جرباء واذرح 513
حضرت خالدؓ بن ولید کو اکیدردو مہ کی طرف روانہ کرنا 513
وادی مشفق میں پانی کامعجزہ 513
آپﷺ کی ہلاکت کامنصوبہ 515
صرف حضرت حذیفہ ؓ کو ان کے ناموں کاعلم تھا 516
چودہ فراد منافق تھے 516
کاقصہ 518
کی رخصت 518
قبایا مسجد نبویؐ 579
رسول ﷺ کاحضرت ابن عوف ؓ کی اقتدادکر نا 520
معذورلوگ برابر کے حصہ دار 520
استقبال 520
حضرت کعب ﷜ 521
ابوقتادہؓ کی بے رخی 523
شاہ غسان کامکتوب 523
کی 524
بشارت 524
ان نافرمانوں کابیان جوپیھپھے رہ گئے تھے 526
حضرت ابولبابہؓ 526
وفد ثقیف کی آمد 529
حضرت عروہ ثقفی ؓ کا اور 529
بت مسمار نہ کرنا 531
نمازنہ پڑھنا 531
کے بعد زکوٰۃ اور 531
عثمان ؓ کو امام نامزد کر دیا 531
امام کونصیحت 532
رسول اللہﷺ نے خود دم کیا 533
سحری اور افطاری 533
بت خانے کامال 534
اندھی عقیدت 534
گرامی 536
بن ابی کی 536
رحمت عالم 537
کو قبرسے نکالنا 538
ثعلبہ بن حاطب 538
حضر ت ابوبکر صدیق ﷜کوامیر بنا کر بھیجنا 539
مشرک اور برہنہ شخص نہ کرے نہ طواف 540
معاہدہ کی تفصیل 541
کیا حضرت ابوبکر ﷜ واپس چلے آئے ؟ 542
9ھ کےاہم 543
نجاشی کی وفات 543
حضرت ام کلثوم کی وفات 543
543
معاویہ لیثی اور بن ابی کی نمازجنازہ 543
رسول ﷺ کی خدمت میں آنے والے وفد 544
بعض وفد فتح مکہ سے قبل آئے 544
مزینہ کاسب سےپہلاوفد 545
خزاعی مزنی 545
وفدبنی تمی

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
17.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Leave A Reply