شرح اسماء حسنیٰ کتاب و سنت کی روشنی میں

شرح اسماء حسنیٰ کتاب و کی روشنی میں

 

مصنف : سعید بن علی بن وہف القحطانی

 

صفحات: 306

 

تعالی ٰ کے بابرکت نام او رصفات جن کی پہچان اصل ہے ،کیونکہ ان صفات کی صحیح معرفت سے ذاتِ باری تعالیٰ کی معرفت حاصل ہوتی ہے ۔عقیدۂ توحید کی معرفت اور اس پر تاحیات قائم ودائم رہنا ہی اصلِ ہے ۔اور اسی پیغامِ توحیدکو پہنچانے اور سمجھانے کی خاطر و رسل کومبعوث کیا گیا او رکتابیں اتاری گئیں۔ تعالیٰ کےناموں او رصفات کے حوالے سے کی اس مستقل قسم کوتوحید الاسماء والصفات کہاجاتاہے ۔ واحادیث میں اسماء الحسنٰی کوپڑھنے یاد کرنے کی فضیلت بیان کی گئی ہے ۔ارشاد باری تعالی ہے۔’’ وَلِلَّهِ الْأَسْمَاءُ الْحُسْنَى فَادْعُوهُ بِهَا ‘‘اور تعالیٰ کے اچھے نام ہیں تو اس کوانہی ناموں سےپکارو۔اور اسی طرح ارشاد نبویﷺ ہے«إِنَّ لله تِسْعَةً وَتِسْعِينَ اسْمًا مِائَةً إِلَّا وَاحِدًا، مَنْ أَحْصَاهَا دَخَلَ الجَنَّةَ»یقیناً اللہ تعالیٰ کے نناوےنام ہیں یعنی ایک کم 100 جس نےان کااحصاء( یعنی پڑھنا سمجھنا،یادکرنا) کیا وہ جنت میں داخل ہوگا۔(صحیح بخاری )اسماء الحسنٰی کے سلسلے میں اہل نے مستقل کتب تصنیف کی ہیں اور بعض نے ان اسماء کی شرح بھی کی ہے۔ زیر کتاب ’’ شرح اسماء الحسنیٰ کتاب و کی روشنی میں‘‘ڈاکٹر سعید بن علی بن وہف الحقانی﷾ کی تالیف ہے، اس کا اردو مولانا عنایت سنابلی مدنی صاحب نے کیا ہے۔جس میں سب سے پہلے یہ واضح کیا ہے کہ اللہ تعالیٰ کے اسماء توقیفی ہیں۔ مزید اس کتاب میں اسماء حسنیٰ پر ایمان کے ارکان، اللہ کے ناموں کی اقسا اور تعالیٰ کے ننانوے ناموں کی بنظیر شرح کی گئی ہے۔ اللہ تعالیٰ سے ہے کہ صاحب تصنیف و مترجم کی کاوشوں کو قبول فرمائے اور میں ان کی نجات کا ذریعہ بنائے ۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
فہرست 3
تقدیم 14
پیش 16
اسماءحسنیٰ 19
مقدمہ مولف 21
پہلامبحث: کےاسماءتوقیفی ہیں 31
دوسرمبحث: اسماءحسنیٰ پرایمان کےارکان 33
تیسرا مبحث: کومتصف کئےجانےوالےامورکی قسمیں 34
چوتھامبحث:اسماءحسنیٰ کی دلالت کی تین قسمیں ہیں 41
پانچواں مبحث: کےاسماءمیں الحادکی حقیقت 42
کےناموں میں الحادکی قسمیں 44
چھٹامبحث: اسماءحسنی کاشمارعلم کی بنیادہے 48
ساتواں مبحث: کےتمام اسماءبہایت عمدہ ہیں 49
آٹھواں مبحث: کےناموں میں سےبعض کااطلاق اللہ تعالیٰ پرعلیحدہ اوردوسرےنام سےمل کرہوتاہےاور 51
نواں مبحث: کےبعض اسماءحسنی کی صفات پردلالت کرتےہیں 53
دسواں مبحث: کےوہ اسماءحسنیٰ جوتمام اسماءوصفات کامرجع ہیں 55
سورۃ الفاتحہ توحیدکی تینوں قسموں کوشامل ہے 56
توحیدعلمی 57
توحیدقصدی ارادی اوراس کی دوقسمیں ہیں 57
توحیدربوبیت 57
توحیدالوہیت 57
کےاسماءکی دلالت اسماءوصفات پر 57
اصل اول:رب تعالیٰ کےاسماءاس کےصفات کمال پردلالت کرتےہیں 58
اصل دوم: تعالیٰ کانام تضمن والتزام کےذریعہ صفت پردلالت کرتاہے 60
دعاکی قسمیں 68
آپ تعالیٰ سےاس کی اسماءوصفات کےوسیلہ سےمانگیں 68
آپ تعالیٰ سےاپنی محتاجگی فقیری اورانکساری کےذریعہ مانگیں 68
آپ اپنی حاجت کاسوال کریں 69
گیارہواں مبحث: کےاسماءوصفات اللہ ہی کےساتھ خاص ہیں ناموں کی یکسانیت اشخاص میں مماثلت کی موجب نہیں ہے 71
بارہواں مبحث: چندباتیں جن کی ہونی چاہیے 91
پہلی بات: جوچیزیں کےبارےمیں خبردینےکےباب میں 91
دوسری بات:جب کوئی صفت کمال اورنقض دوحصوں میں تقسیم ہو 91
تیسری بات: خبردینےجانےسےاللہ کامطلق نام مشتق کیاجانالازم نہیں آتا 91
چوتھی بات: کےاسماءحسنیٰ اعلام (نام)اوراوصاف 92
پانچویں بات: کےاسماءحسنیٰ کےدواعتبارہیں 92
چھٹی بات: کےاسماءوصفات توقیفی ہیں 92
ساتویں بات: کےنام سےمصدراورفعل مشتق کرناجائزہے 92
آٹھویں بات: کےافعال اس کےاسماءوصفات سےصادرہوتےہیں 93
نویں بات:صفات کی تین قسمیں ہیں 93
تیرہواں مبحث: کےاسماءحسنیٰ کےشمارکےمراتب جس پرذخول جنت 95
پہلامرتبہ:اسماءحسنیٰ کےالفاظ وتعدادکاشمار 95
دوسرامرتبہ: ان کےمعانی ومفاہیم کوسمجھنا 95
تیسرامرتبہ: ان کےذریعہ سےدعاکرنا 95
چودہوں مبحث:اسماءحسنی کی تعدادمحدودنہیں ہے 97
پندرہواں مبحث: کےاسماءحسنیٰ کی شرح 100
الآول(پہلا) 100
الآخر(آخری) 100
الظاہر(ظاہروغالب) 100
الباطن(پوشیدہ) 100
العلی(بلند) 103
الاعلیٰ(بالا) 103
المتعال(برتر) 103
العظیم(عظمت والابڑا) 105
المجید(بڑائی وکشادگی والا) 109
الکبیر(بڑائی والا) 110
السمیع(سننےوالا) 111
سماعت کی دوقسمیں ہیں 111
پہلی قسم: تعالیٰ کاتمام آوازوں کوسننا 111
دوسری قسم: تعالیٰ کامانگنےوالوں کی سننااورقبول کرنا 111
البصیر(دیکھنےوالا) 112
العلیم(جاننےوالا) 114
الخیر(خبررکھنےوالا) 114
الحمید(لائق تعریف خوبیوں والا) 117
کی خوبیوں کی دوحیثیتیں ہیں 117
اول: تمام مخلوقات کی حمدوثناءکی گن گارہی ہیں 117
دوم: تعالیٰ اپنےاسماءحسنیٰ اورصفات علیاکی ملہ پرحمدکامستحق ہے 117
العزیز(غالب) 119
قوت وطاقت کاغلبہ 119
بےنیازی کاغلبہ 119
تمام پرقہرکاغلبہ 119
القدیر 119
القادر(طاقت ور) 119
المقتدر(قدرت والا) 119
القوی(قوت والا) 119
المتین(ٹھوس زورآور) 119
الغنی(مالداربےنیاز) 124
الحکیم( ودانائی والا) 126
کی دوقسمیں ہیں 127

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
9.2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Leave A Reply