Categories
Islam اسلام تقابل ادیان روح قادیانیت نبوت

سادہ لوح مسلمان اور قادیانی حربے

سادہ لوح مسلمان اور قادیانی حربے

 

مصنف : خاور رشید بٹ

 

صفحات: 58

 

اسلامی تعلیمات کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ سیدنا آدم ﷤ سے شروع ہوا اور سید الانبیاء  خاتم المرسلین سیدنا محمد ﷺ پر ختم ہوا اس کے  بعد جوبھی نبوت کادعویٰ کرے گا وہ  دائرۂ اسلام سے خارج ہے  ۔ ختم نبوت ناصرف اسلام کی روح ہے  بلکہ وہ بنیادی عقیدہ  ہے جس پر تمام امت مسلمہ کا روزِ اول سے اتفاق، اتحاد اوراجماع ہے ۔قادیانیت اسلام کے متوازی ایک ایسا مصنوعی مذہب ہے جس کا مقصد اسلام دشمن سامراجی طاقتوں کی سرپرستی میں ا سلام کی بنیادوں کو متزلزل کرنا  ہے۔قادیانیت کے یوم پیدائش سے لے کر  آج تک  اسلام  اور قادیانیت میں جنگ جار ی ہے یہ جنگ گلیوں ،بازاروں سے لے کر حکومت کے ایوانوں اور عدالت کےکمروں تک لڑی گئی اہل علم  نے  قادیانیوں کا ہر میدان میں تعاقب کیا تحریر و تقریر ، سیاست و  قانون اور عدالت میں  غرض کہ ہر میدان  میں انہیں شکستِ فاش دی ۔ مولانا خاور رشید بٹ ﷾ (انچار ج شعبہ  تقابل ادیان وسیرت سیکشن ادارہ حقوق الناس ویلفیئر فاؤنڈیشن ،لاہور )کی زیر نظر کتاب   بعنوان’’سادہ لوح مسلمان اور قادیانی حربے‘‘ بھی  اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے  ۔فاضل مصنف نے اس کتاب میں  میں قادیانیوں کے 15حربوں  پیش کر کے ان کے جوابات تحریر کیے ہیں ۔ اللہ تعالیٰ فاضل مصنف کی دعوتی وتدریسی، تحقیقی وتصنیفی خدمات کو شرفِ قبولیت سے نوازے۔آمین 

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ 7
پہلا حربہ:کلمہ طیبہ 9
جواب 9
دوسرا حربہ: ہماری اور مسلمانوں کی نماز، روزہ اور قبلہ ایک ہی ہے 16
الزامی جواب 16
تحقیقی جواب 18
تیسرا حربہ: السلام علیکم 20
چوتھا حربہ، تئیس سالہ معیار نبوت 23
1۔فورا سزا 24
2۔دس سال 24
3۔بارہ سال 24
4۔اٹھارہ اور پچیس سال 24
5۔بیس سال 25
6۔تئیس سال 25
عقل کے خلاف 29
اصل حقیقت 30
پانچواں حربہ: ظالم کامیاب نہیں ہوتے ،پھر ہم کیوں کامیاب ہیں؟ 31
مرزا صاحب قادیانی سے دلیل 33
چھٹا حربہ: مسیح﷤ اور ختم نبوت 34
ایک سوال 35
جواب 35
ساتواں حربہ: جھوٹ بولنے والے کا جھوٹ اسی پر ہے 36
جواب 36
آٹھواں حربہ: عیسیٰ ﷤ کا بوڑھا ہونا 38
نواں حربہ: عیسیٰ﷤ کاجسم سمیت آسمانوں پر جانا قرآن میں کہاں؟ 39
مرزا صاحب قادیانی سے دلیل 40
دسواں حربہ: عیسیٰ﷤ نازل  ہونے کے بعد قرآن پڑھیں گے تو کیا محسوس کریں گے؟ 41
گیارہواں حربہ: مرزا صاحب کی سچائی جانے کے لیے استخارہ 43
الزامی جواب 44
بارہواں حربہ: عیسیٰ﷤ آسمان پر زندہ اور ہمارے نبی زمین میں مدفون 45
جواب 45
تیراہواں حربہ: تہتر فرقے 47
جواب 47
چودہواں حربہ: استاذ کی قابلیت 50
پندرہواں حربہ: توفی کی بحث 54
جواب 54

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام انسانی حقوق زبان علماء قادیانیت نبوت نماز

رد قادیانیت کے زریں اصول

رد قادیانیت کے زریں اصول

 

مصنف : منظور احمد چنیوٹی

 

صفحات: 435

 

اسلامی تعلیم کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ حضرت آدم سے شروع ہوا اور سید الانبیاء خاتم المرسلین حضرت محمد ﷺ پر ختم ہوا۔ اس کے بعد جوبھی نبوت کادعویٰ کرے گا وہ دائرۂ اسلام سے خارج ہے ۔ نبوت کسبی نہیں وہبی ہے یعنی اللہ تعالی نے جس کو چاہا نبوت ورسالت سے نوازاکوئی شخص چاہے وہ کتنا ہی عبادت گزارمتقی اور پرہیزگار کیوں نہ وہ نبی نہیں بن سکتا ۔قایادنی اور لاہوری مرزائیوں کو اسی لئے غیرمسلم قرار دیا گیا ہے کہ ان کا یہ عقیدہ ہے کہ مرزا غلام احمد قادیانی نبی تھے ان کو اللہ سےہمکلام ہونے اور الہامات پانے کاشرف حاصل تھا۔اسلامی تعلیمات کی رو سے سلسلہ نبوت او روحی ختم ہوچکاہے جوکوئی دعویٰ کرے گا کہ اس پر وحی کانزول ہوتاہے وہ دجال ،کذاب ،مفتری ہوگا۔ امت محمدیہ اسےہر گز مسلمان نہیں سمجھے گی یہ امت محمدیہ کا اپنا خود ساختہ فیصلہ نہیں ہے بلکہ نبی کریم ﷺ کی زبان صادقہ کا فیصلہ ہے ۔ قادیانیت کے رد میں اہل اسلام کے تقریبا ہر مکتب فکر علماء نے مختلف انداز میں خدمات سرانجام دی ہیں ۔ زیر تبصرہ کتاب’’رد قادیانیت کے زریں اصول‘‘ ربوہ کے پڑوس میں رہ کرقادیانیت کے خلاف نصف صدی سے زائد عرصہ تک جھوٹی نبوت سے ایک زبردست جنگ لرنے والے مرد مجاہد مولانا منظور احمد چنیوٹی کی زندگی کا حاصل ہے ۔مولانا نے اس کتاب میں حقانیت عقیدہ ختم نبوت پر قرآن وحدیث کے فولادی دلائل، حیات ونزول مسیح پر آفتاب روشن سے براہین کا انباراور قادیانی دجل وتلبیس اور ان کے پیدا کردہ شکوک وشبہات کاعلمی جائزہ پیش کیا ہے ۔الغرض یہ کتاب رد قادیانیت کا انسائیکلوپیڈیا اورمرزا قادیانی کا شناختی کارڈ ہے ۔۔ اللہ تعالیٰ قادیانیت کے رد میں مولانا منظور چنیوٹی کی کاوشوں کو قبول فرمائے اور آخرت میں ان کی نجات کا ذریعہ بنائے ۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
حضرت مولانا مفتی عاشق الہی صاحب 31
حضرت مولانا خواجہ خان محمد صاحب 35
حضرت مولانا محمد تقی عثمانی صاحب 36
حضرت مولانا محمد یوسف لدھیانوی صاحب 38
حضرت مولانا سرفراز خان  صفدر صاحب 40
حضرت مولانا سلیم اللہ خان صاحب 43
شیخ الحدیث حضرت مولانانذیر احمد صاحب 45
ڈاکٹر محمود احمد غازی صاحب 46
راجہ محمد ظفر الحق صاحب 48
گزارش احوال واقعی 50
پیش کتاب از فضیلۃ الشیخ حضرت مولانا عبدالحفیظ مکی صاحب 61
مقدمہ از علامہ خالد محمود صاحب 68
مختلف طبقات کی خدمت اسلام 68
امت کے دوگروہ ہدایت یافتہ اور ملحدین 69
قادیانی ملحدین میں سے ہیں 69
ملحدین کےخلاف کام کی فضیلت 69
فتہ گروں سے مقابلہ کی مختلف صورتیں 69
انگریزی دورمیں برصغیر کاسب سے بڑا فتنہ 70
وہ وجوہ جن کےباعث یہ وقت کاسب سے بڑا فتنہ بنا 71
قادیانیت کاپودا انگریزوں نےکاشت کیا 74
مہاراجہ کشمیر کی مرزاغلام احمد سےملنے کی خواہش 75
حکیم نورالدین کاغلام احمدکو دعوی مسیحیت میں مشورہ دینا 76
قادیانیوں کاوائسرائے ہندکےنام خط 77
مرزاغلام احمد کےملکہ وکٹوریہ کےنام خط سے چند اقتباسات 77
مرزاغلام احمد نےکن شرمناک کاموں کےباعث قادیان کوچھوڑا 80
مرزاغلام احمد کےعملیات میں سےایک عمل 80
مرزاغلام احمد کااس عمل میں استاد کون تھا 81
موعظہ عبرت 82
خواب کوظاہری شکل میں پور ا کرنےکی عادت پڑگئی تھی 82
ردقادیانیت پر کام کرنے کاعظیم فائدہ 83
قائداعظم کی ظفر  اللہ خان پر نظر 84
پاکستان کاسب سے پہلا سیاسی مسئلہ 84
پاکستان بننے سےمرزاغلام احمد کاکذب اورنمایاں ہوا 85
قادیان سےمرزائیو ں کاذلت آمیز اخراج 86
مرزاکےالہام کے مطابق قادیان سے نکلنے والے یزیدی فطرت ہیں 86
مرزابشیر الدین کی پیش گوئی غلط نکلی 87
قادنیوں کےساتھ یہ سب کچھ اپنے باپ کےایک الہام کےتحت ہوا 87
باپ کی نافرمانی نے بیٹے کواس انجام تک پہنچایا 88
مرزا قادیانی کے متعلق ایک انگریز کی رائے 89
مرزا قادیانی کےبارے میں اس کےایک ارادتمندکی رائے 89
زانی وہی ہوسکتاہے جس کاعام عورتوں سےاختلاط رہا ہو 90
قادیانی گوریلوں کی پہلی وار دات عربی کےسائے میں 92
قادیانی گوریلوں کی دوسری وار دات دومسئلوں پر سوالات کی بوجھاڑ 93
قادیانی گوریلوں کی تیسری وار دات اپنی مظلومی کی فریاد 94
قادنیوں کااپنا کلمہ اردومیں ہے 94
حکیم نورالدین کی نظر میں مرزا کیاتھا 94
قادنیوں کی نماز میں فارسی 95
کیا قادیانی ہماری نماز میں شریک ہوتے ہیں 96
ایمان کی حقیقت قرآن وحدیث کی رو سے 99
ایمان کی حقیقت امام محمد کےالفاظ میں 100
ایمان کی حقیقت ابن تیمیہ کے الفاظ میں 101
مرزاقادیانی کی امت کےاجماعی عقائد کےساتھ موافقت 102
قادیانیت پر  غور کرنے کاآسان راستہ 114
پیغمبر اپنے نبی نہ ہونے کاکبھی سوچ بھی نہیں سکتے وہ اسے کسی شرط سے مشروط نہیں کرتے 105
پیغمبر انہ دعوت  کاعالی اسلوب 105
مرزا غلام احمد کااسلوب دعوت 106
مخالفوں کی فوری موت سےڈرانا 106
مولانا سعداللہ کو موت کی دھکمی 106
مولانا ثناءاللہ کےمرنے کی پیشگوئی 107
پادری عبداللہ آتھم کی موت کی پیش گوئی 107
ڈاکٹر عبدالحکیم کی ہلاکت کی پیشگوئی 107
محمد ی بیگم کےخاوند کی موت کی پیش گوئی 107
پنڈت لیکھ رام کی غیر معمولی موت کی پیش گوئی 107
مرزا کےاپنی نبوت کی دعوت دینے کےغیر فطر ی پیرائے 108
مرزا قادیانی کی اس چھٹی پیش گوئی کی کچھ ضروری تفصیل 108
ایک حیرت اورتعجب کاازالہ 110
مرزا غلام احمد کی ایک ناوانی اورایک چالاکی 110
مرزاغلام احمد کی جھوٹی پیشگوئیاں 112
عبداللہ آتھم کی موت کی پیش گوئی 113
پیشگوئی پوری نہ ہونے پر قادیان میں ماتم 114
محمدی بیگم سے نکاح کی پیشگوئی 115
مرزا کامحمدی بیگم کاخواب میں دیکھنا 115
محمدی بیگم سے مرزاقادیانی کی رشتہ داری 115
محمدی بیگم سےنکاح کی تحریک کیسے ہوئی 116
مرزاسلطان محمدکی موت کی پیش گوئی 118
اصل پیش گوئی کی طرف پھر آئیں 118
محمد ی بیگم سےنکاح کوتقریر مبرم ٹھہرانا 119
محمدی بیگم کےآنے کےسات الہامات 119
مرزاغلام احمد کی کوشش کہ خدا کی بات غلط نکلنے اسےسچاثابت کیاجائے 120
ہمیشہ کی لعنتوں کی خبر 121
دس لاکھ آدمیوں میں رسوائی کاخوف 121
دجال کی آمد کایقین دلانا 121
یہ پیشگوئی کسی پر عذاب اترنے کی نہ تھی 122
مرزا کےلئے رحمت کاایک نشان جوا س نےمانگا 123
لڑکے کی بجائے لڑکی کی پیدائش 124
دل کی پیدائش ووفات 124
لوگوں کی تنقید اورچہ میگوئیاں 125
ڈاکٹر عبدالحکیم خان کی موت کی پیشگوئی 125
مرزاغلا م احمدکی عمر کی پیشگوئی 127
مرزاغلام احمد کالین دین امانت ودیانت کےنقطہ نظر سے 128
کتاب براہین احمد یہ کے اشتہارات 128
غلط لین دین میں مرزا اپنے عوام میں 130
براہین احمدیہ کے پانچویں حصہ کی اشاعت 131
براہین احمد یہ کی تالیف میں علماء سے علمی مدد لینا 131
براہین احمدیہ میں مرزا غلام احمد کاحصہ 132
براہین احمدیہ کی تصنیف کےوقت مرزاقادیانی کی ذہینت 134
حقوق العباد کےاجڑے دیار میں انسانی حقوق کاتماشا 135
نصرت بیگم کےآنے پر حرمت بی بی کاحال 136
محمدی بیگم سےنکاح کےشوق میں حرمت بی بی کوطلاق 137
لڑکی کےوالد کوزمین دینے کالالچ 138
نکاح نہ ہونے کی صورت میں اپنے آپ کوچوہڑا چمار کہنا 140
ایک اورپیشگوئی ملاحظہ کریں 142

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8.9 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام قادیانیت نبوت

ربوہ کی پر اسرار کہانیاں

ربوہ کی پر اسرار کہانیاں

 

مصنف : محمد طاہر رزاق

 

صفحات: 202

 

اللہ تعالی نے نبی کریم ﷺ کو آخری نبی اور رسول بنا کر بھیجا ہے۔آپ خاتم النبیین اور سلسلہ نبوت کی بلند مقام عمارت کی سب سے آخری اینٹ ہیں ،جن کی آمد سے سلسلہ نبوی کی عمارت مکمل ہو گئی ہے۔آپ کے بعد کوئی برحق نبی اور رسول نہیں آسکتا ہے ۔لیکن آپ نے فرمایا کہ میرے بعد متعدد جھوٹے اور کذاب آئیں گے جو اپنے آپ کو نبی کہلوائیں گے۔آپ کے بعد آنے والے متعدد کذابوں میں سے ایک جھوٹا اور کذاب مرزا غلام احمد قادیانی ہے ،جس نے نبوت کا دعوی کیا اور شریعت کی روشنی میں کذاب اور مردود ٹھہرا۔لیکن اللہ رب العزت نے اس کےجھوٹ وفریب کوبے نقاب کرد یا اور وہ دنیا وآخرت دونوں جہانوں میں ذلیل وخوار ہو کر رہ گیا۔زیر نظر کتاب “ربوہ کی پر اسرار کہانیاں ” میں قادیانی فتنے کے مرکزی مقام ربوہ میں وقوع پذیر ہونے والی سازشوں اور اسلام مخالف کرداروں پر لکھی گئی ہے۔جو قادیانی فتنے کے خلاف لکھنے والے معروف قلمکار محترم محمد طاہر عبد الرزاق کی کاوش ہے۔ان سے پہلے محترم محمد متین خالد بھی اس فتنے کے خلاف ایک موثر آواز اٹھا چکے ہیں۔مولف نے اس میں قادیانیوں کے مذہبی مرکز ربوہ اور اس میں وقوع پذیر ہونے والے تہلکہ خیز انکشافات،ناقابل یقین حقائق اور چشم کشا واقعات سے پردہ اٹھایا گیا ہے،اور قادیانی کلچر سے متعلق ہوش ربا مشاہدات وتجربات کا آنکھوں دیکھا حال بیان کیا ہے۔ اللہ تعالی ان کی اس محنت کو قبول ومنظور فرمائے اور تمام مسلمانوں کو اس فتنے سے محفوظ فرمائے۔آمین

 

میں نے بھی ربوہ دیکھا
بات دل میں کہاں سے آتی ہے
قادیانی طلسم کدہ کی نقاب کشائی
موضع ڈگیاں کا نام ربوہ کیسے؟ قادیانی،
قادیان کو مکہ اور مدینہ کے برابر سمجھتے ہیں 25
مرتدوں کی نگرانی 29
ہم نے بھی ربوہ دیکھا 42
ربوہ میں آزادی رائے پر پابندی 51
قرآن کریم کے ،لفظ ’’ربوہ‘‘ کا تحقیقی مطالعہ 55
امریکی قونصل جنرل ربوہ میں معاملہ کیا ہے؟ 65
ربوہ کا سٹیٹ بینک 68
ربوہ کی کہانی، مرزا طاہر کی زبانی 75
ربوہ سازشوں کا مرکز 82
پاکستان میں قادیانیوں کی خطرناک خفیہ سرگرمیاں 87
دار الکفر ربوہ میں اسلام کا داخلہ 92
مظلوم قادیانیوں پر قادیانی پوپ کے مظالم 109
شہر ارتداد ربوہ بسانے میں ایک غدار کا کردار 117
مجلس تحفظ ختم نبوت پاکستان۔۔ ربوہ میں منزل بہ منزل 119
ربوہ میں مجاہدین ختم نبوت کیسے داخل کیسے داخل ہوئے 128
اہل ربوہ کے مظالم 137
ختم نبوت کانفرنس 146
ربوہ ایک نیا قادیان 147
مولانا چنیوٹی۔۔۔ جنہوں نے ربوہ کا نام تبدیل کر ایا 148
خلیفہ ربوہ کی فوجی تنظیم 153
قادیان سے چناب نگر تک 161
قادیانیوں کے ہتھے چڑھ گیا 170
خلیفہ ربوہ کے حکومت پر قبضہ کرنے کے خواب 178
میں نے ربویہ دیکھا 183
خلیفہ ربوہ کا نظام حکومت 189
ہر فیصلہ پر خلیفہ کی منظوری 194
ربوہ میں یہ پہرہ کیسا؟ 198
کوشش جماعت سخت انتشار کا شکار 201

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
7.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام پاکستان علماء قادیانیت نبوت

قادیان سے اسرائیل تک

قادیان سے اسرائیل تک

 

مصنف : ابو مدثرہ

 

صفحات: 235

 

اسلامی تعلیم کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ حضرت آدم ﷤ سے شروع ہوا اور سید الانبیاء  خاتم المرسلین حضرت محمد ﷺ پر ختم ہوا اس کے  بعد جوبھی نبوت کادعویٰ کرے گا وہ  دائرۂ اسلام سے خارج ہے  نبوت کسبی نہیں وہبی ہے  یعنی اللہ تعالیٰ نے  جس کو چاہا نبوت ورسالت سے  نوازاکوئی شخص چاہے وہ کتنا ہی عبادت گزارمتقی اور پرہیزگار کیوں نہ وہ نبی نہیں  بن سکتا ۔قادیانیت کے یوم پیدائش سے لے کر  آج تک  اسلام  اور قادیانیت میں جنگ جار ی ہے یہ جنگ گلیوں ،بازاروں سے لے کر حکومت کے ایوانوں اور عدالت کےکمروں تک لڑی گئی اہل علم  نے  قادیانیوں کا ہر میدان میں تعاقب کیا تحریر و تقریر ، خطاب وسیاست میں  قانون اور عدالت میں  غرض کہ ہر میدان  میں انہیں شکستِ فاش دی ۔  سب سے پہلے قادیانیوں سے  فیصلہ کن قانونی معرکہ آرائی بہاولپور   کی سر زمیں میں ہوئی جہاں ڈسٹرکٹ جج بہاولپور نے مقدمہ تنسیخ نکاح  میں مسماۃ عائشہ بی بی کانکاح عبد الرزاق قادیانی  سے فسخ کردیاکہ ایک مسلمان عورت مرتد کے نکاح میں نہیں رہ سکتی  1926ء سے  1935 تک  یہ مقدمہ زیر سماعت رہا  جید  اکابر علمائے  کرام   نے عدالت   کے  سامنے  قادیانیوں کے خلاف  دلائل کے انبار لگا دیئے  کہ ان  دلائل کی روشنی میں  پہلی  بار عدالت کے ذریعے  قادیانیوں کو غیر مسلم  قرار دیا گیا  ۔   پھر  اس کے بعد بھی  قادیانیوں کے خلاف یہ محاذ جاری رہا     ۔1953ء میں پاکستان کے غیور عوام نے ان کے خلاف تحریک  چلائی اور انہیں غیر مسلم  قرار دینے کا مطالبہ کیا مگر اس تحریک کو طاقت کےذریعے کچل دیا گیا بے شمار مسلما ن حکومت کے معتوب ٹھرے۔تین علماء کو سزائے موت سنائی گئی ۔ پولیس اور فوج نے کئی بچوں کو یتیم کیا اور نہ جانے کتنی عورتوں کے سہاگ لٹے  مگر کوئی حکومت قادیانیوں کے خلاف فیصلہ کرنے کی ہمت نہ کرسکی۔بالآخر تحریک ختم نبوت کی کوششوں سے  1974ء  کو  قومی اسمبلی ، پاکستان نے  ایک تاریخی بحث اور ملزموں کو مکمل صفائی کا موقع فراہم کرنے اور ان کے دلائل کما حقہ سننے کےبعد  یہ عظیم کارنامہ انجام دیا اور یہ فیصلہ صادر کیا کہ اب سے قادیانی  آئین او رملکی قانون کی رو سے بھی غیر مسلم  ہیں ۔مرزا قاديانی  کے  دعوۂ نبوت  سے لے کر  اب تک اس کے رد ّ میں چھوٹی بڑی بے شمار کتب شائع ہوچکی ہیں  جن کا ریکارڈ پاک وہند کی سیکڑوں لائبریریوں میں موجود ہے ۔ زیر نظر کتاب ’’ قادیان سے اسرائیل تک‘‘ ابو مدّثرہ کی تصنیف ہے ۔ مصنف  نے اس کتاب کو 13 ابواب میں تقسیم کیا ہے  اور اس میں  برطانوی صیہونی سامراج اور قادیانیوں کے باہمی گہرے روابط وتعلقات  ،اسلام دشمنی کی مشترکہ سرگرمیوں اور شرمناک سیاسی کردار  کا   مستند اور تحقیقی  جائزہ پیش کیا ہے ۔

 

 

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.30MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام پاکستان تاریخ قادیانیت نبوت

قادیانیوں کے صد سالہ جشن پر پابندی جائز ہے

قادیانیوں کے صد سالہ جشن پر پابندی جائز ہے

 

مصنف : جسٹس خلیل الرحمن خاں

 

صفحات: 50

اسلامی تعلیم کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ حضرت آدم سے شروع ہوا اور سید الانبیاء خاتم المرسلین حضرت محمد ﷺ پر ختم ہوا اس کے بعد جوبھی نبوت کادعویٰ کرے گا وہ دائرۂ اسلام سے خارج ہے نبوت کسبی نہیں وہبی ہے یعنی اللہ تعالی نے جس کو چاہا نبوت ورسالت سے نوازاکوئی شخص چاہے وہ کتنا ہی عبادت گزارمتقی اور پرہیزگار کیوں نہ وہ نبی نہیں بن سکتا ۔قادیانیت کے یوم پیدائش سے لے کر آج تک اسلام اور قادیانیت میں جنگ جار ی ہے یہ جنگ گلیوں ،بازاروں سے لے کر حکومت کے ایوانوں اور عدالت کےکمروں تک لڑی گئی اہل علم نے قادیانیوں کا ہر میدان میں تعاقب کیا تحریر و تقریر ، خطاب وسیاست میں قانون اور عدالت میں غرض کہ ہر میدان میں انہیں شکستِ فاش دی۔ سب سے پہلے قادیانیوں سے فیصلہ کن قانونی معرکہ آرائی بہاولپور کی سر زمیں میں ہوئی جہاں ڈسٹرکٹ جج بہاولپور نے مقدمہ تنسیخ نکاح میں مسماۃ عائشہ بی بی کانکاح عبد الرزاق قادیانی سے فسخ کردیاکہ ایک مسلمان عورت مرتد کے نکاح میں نہیں رہ سکتی 1926ء سے 1935 تک یہ مقدمہ زیر سماعت رہا جید اکابر علمائے کرام نے عدالت کے سامنے قادیانیوں کے خلاف دلائل کے انبار لگا دئیے کہ ان دلائل کی روشنی میں پہلی بار عدالت کے ذریعے قادیانیوں کو غیر مسلم قرار دیا گیا ۔ پھر اس کے بعد بھی قادیانیوں کے خلاف یہ محاذ جاری رہا بالآخر تحریک ختم نبوت کی کوششوں سے 1974ء میں قومی اسمبلی پاکستان نے بھی قادیانیوں کو غیر مسلم قرار دے دیا اور اس کے بعد پاکستان کی اعلیٰ عدالتوں نے بھی قادیانیوں کو غیرمسلم قرار دینے کے فیصلے جاری کیے ۔قادیانیوں نے جماعت کی تشکیل کے 100 برس پورے ہونے پردنیا بھر کے دوسرے احمدیوں کی طرح ربوہ کے احمدیوں نے بھی 23 مارچ 1989ء سے صدسالہ جشن کی تقریبات منانے کا فیصلہ کیا ۔ان تقریبات کو شایان شان طریقہ سےمنانے کے لیے نئے ملبوسات زیب تن کرنے ،بچوں میں مٹھائیاں بانٹنے ، محتاجوں کو کھانا کھلانے اور بغرض اجلاس جمع ہونے کاپروگرام بنایا تاکہ جلسہ عام میں احمدیہ جماعت کی 100سالہ تاریخ کے اہم واقعات پر روشنی ڈالی جائے ۔قادیانی جماعت کی اس تیاری پر اسلامیان پاکستان کو تشویش لاحق ہوئی۔عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت نے فوری طور پر 12 مارچ 1989ء کو اجلاس طلب کیا اور لاہور ، کراچی ، ملتان، راولپنڈی کے تمام اہم اخبارات کے تمام ایڈیشنوں میں آخری صفحہ پر ہزاروں روپیہ کی لاگت سے اشتہار دیا جس میں قادیانیوں کے جشن پر پابندی لگانے کا پر زور مطالبہ کیا اور بابندی نہ لگنے کی صورت میں 23 مارچ کو آل پاکستان ختم نبوت ریلی منعقد کرنے کا اعلان کیا گیا۔اور ملک بھر عظیم الشان احتجاجی کانفرنسز منعقد کی گئیں۔علماء کرام نے بھرپور جدوجہد سے عوام الناس اور حکمران طبقہ کو قادیانیوں کی خرافات سے اگاہ کیا۔بالآخر پنجاب کے ہوم سیکرٹری نے مؤرحہ 20 مارچ 1989ء کو قادیانیوں کے صدسالہ جشن کی تقریبات پر بابندی کا اعلان کردیا۔یوں ایک بار پھرکفر ہار گیا اوراسلام اور مسلمان جیت گئے۔بعد ازاں قادیانیوں نے اس جشن پر لگائی گئی پابندی کو لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا۔اس کیس کی سماعت ہائی کورٹ کے سینئر جج جسٹس خلیل الرحمٰن نےکی 22 مئی 1991ء کو اس کیس کی سماعت مکمل ہوئی اور 17 ستمبر 1991ء کو جسٹس خلیل الرحمٰن نے قادیانیوں کے خلاف اپنا فیصلہ سنایا اور صد صالہ جشن پر پابندی کو جائز قرار دیا ۔جس سے مرزائیت پر اوس پڑ گئی اور انکے چہرے ان کے دلوں کی طرح سیاہ ہوگئے۔زیر نظر کتابچہ لائی ہائی کورٹ کےاسی تاریخی فیصلہ پر مشتمل ہے ۔

 

 

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
3.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام پاکستان قادیانیت قانون و قضا نبوت

قادیانیوں کی توہین رسالت پر لاہور ہائی کورٹ کا تاریخی فیصلہ

قادیانیوں کی توہین رسالت پر لاہور ہائی کورٹ کا تاریخی فیصلہ

 

مصنف : جسٹس میاں نذیر اختر

 

صفحات: 34

 

اسلامی تعلیم کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ حضرت آدم   سے شروع ہوا اور سید الانبیاء  خاتم المرسلین حضرت محمد ﷺ پر ختم ہوا اس کے  بعد جوبھی نبوت کادعویٰ کرے گا وہ  دائرۂ اسلام سے خارج ہے  نبوت کسبی نہیں وہبی ہے  یعنی اللہ تعالی نے  جس کو چاہا نبوت ورسالت سے  نوازاکوئی شخص چاہے وہ کتنا ہی عبادت گزارمتقی اور پرہیزگار کیوں نہ وہ نبی نہیں  بن سکتا ۔قادیانیت کے یوم پیدائش سے لے کر  آج تک  اسلام  اور قادیانیت میں جنگ جار ی ہے یہ جنگ گلیوں ،بازاروں سے لے کر حکومت کے ایوانوں اور عدالت کےکمروں تک لڑی گئی اہل علم  نے  قادیانیوں کا ہر میدان میں تعاقب کیا تحریر و تقریر ، خطاب وسیاست میں  قانون اور عدالت میں  غرض کہ ہر میدان  میں انہیں شکستِ فاش دی۔  سب سے پہلے قادیانیوں سے  فیصلہ کن قانونی معرکہ آرائی بہاولپور   کی سر زمیں میں ہوئی جہاں ڈسٹرکٹ جج بہاولپور نے مقدمہ تنسیخ نکاح  میں مسماۃ عائشہ بی بی کانکاح عبد الرزاق قادیانی  سے فسخ کردیاکہ ایک مسلمان عورت مرتد کے نکاح میں نہیں رہ سکتی  1926ء سے  1935 تک  یہ مقدمہ زیر سماعت رہا  جید  اکابر علمائے  کرام   نے عدالت   کے  سامنے  قادیانیوں کے خلاف  دلائل کے انبار لگا دیے  کہ ان  دلائل کی روشنی میں  پہلی  بار عدالت کے ذریعے  قادیانیوں کو غیر مسلم  قرار دیا گیا  ۔   پھر  اس کے بعد بھی  قادیانیوں کے خلاف یہ محاذ جاری رہا     بالآخر تحریک ختم نبوت کی کوششوں سے 1974ء میں  قومی  اسمبلی پاکستان  نے  بھی قادیانیوں کو غیر مسلم قرار دے  دیا  اور اس کے بعد  پاکستان کی اعلیٰ عدالتوں  نے بھی قادیانیوں کو غیرمسلم  قرار دینے کے  فیصلے جاری کیے ۔  زیرنظر کتابچہ وہ تاریخی فیصلہ ہے جسے 2 اگست 1992ء کو قادیانیوں کی توہین رسالتﷺ،توہین اہل  بیت  اور اسلام دشمن سرگرمیوں  پر لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس میاں نذیر اختر صاحب   نےصادرکیا۔ جس کاہر ایک لفظ امت مسلمہ کودعوتِ فکر وعمل  دیتاہے ۔ رد قادیانیت کے سلسلے میں اللہ تعالی تمام اہل اسلام  کی کوششوں  کو قبول   فرمائے  (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
حدیث دل 3
لاہور ہائی کورٹ لاہور 7
ضمیمہ الف 26
تحریک ختم نبوت 1974 28

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام روح قادیانیت نبوت

قادیانیوں کا کفر کے اندھیروں سے اسلام کی روشنیوں تک

قادیانیوں کا کفر کے اندھیروں سے اسلام کی روشنیوں تک

 

مصنف : مفتی عظمت اللہ سعدی

 

صفحات: 116

 

اسلامی تعلیمات کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ سیدنا آدم ﷤ سے شروع ہوا اور سید الانبیاء  خاتم المرسلین سیدنا محمد ﷺ پر ختم ہوا اس کے  بعد جوبھی نبوت کادعویٰ کرے گا وہ  دائرۂ اسلام سے خارج ہے  ۔ ختم نبوت ناصرف اسلام کی روح ہے  بلکہ وہ بنیادی عقیدہ  ہے جس پر تمام امت مسلمہ کا روزِ اول سے اتفاق، اتحاد اوراجماع ہے ۔قادیانیت اسلام کے متوازی ایک ایسا مصنوعی مذہب ہے جس کا مقصد اسلام دشمن سامراجی طاقتوں کی سرپرستی میں ا سلام کی بنیادوں کو متزلزل کرنا  ہے۔قادیانیت کے یوم پیدائش سے لے کر  آج تک  اسلام  اور قادیانیت میں جنگ جار ی ہے یہ جنگ گلیوں ،بازاروں سے لے کر حکومت کے ایوانوں اور عدالت کےکمروں تک لڑی گئی اہل علم  نے  قادیانیوں کا ہر میدان میں تعاقب کیا تحریر و تقریر ، سیاست و  قانون اور عدالت میں  غرض کہ ہر میدان  میں انہیں شکستِ فاش دی۔بے شمار لوگ   ایسے  ہیں جو قادیانی   مبلغین سے متاثر ہو  کر مرتد  ہوگئے  تھے لیکن جب قادیانیت کا کفر ان پر واضح ہوا تووہ  قادیانیت پر لعنت بھیج کر دوبارہ  قادیانیت کے کفر کےاندھیروں سے نکل اسلام  کی روشنی میں  آچکے ہیں اللہ انہیں استقامت عطا فرمائے ۔آمین زیر نظر کتاب’’قادیانیت اورمرزائیت  کے اندھیروں سے اسلام کی روشنیوں تک‘‘مولانا مفتی عظمت اللہ سعدی کی تصنیف ہے ۔یہ کتاب سابقہ قادیانیوں ،مرزائیوں اور ہندوؤں کی قبول اسلام کے دل چونکا دینے والی ایمان افروز واقعات اور حیرت انگیز انکشافات مشتمل  ہے۔قادیانی  ملعون مسلمانوں کو کیسے قادیانی کرتے ہیں کیا کیا حربے استعمال کرتے ہیں ۔اور جو قادیانی مسلمان ہونا چاہتے ہیں ان پر کیا کیا ظلم ڈھاتے ہیں یہ سب آپ کو اس کتاب میں ملیں گے ۔ اس کتاب کامطالعہ کریں  اور قادیانیوں کی ہر چال سے  واقفیت حاصل کریں۔

 

عناوین صفحہ نمبر
حصہ اول
انتساب 4
حروف اولیں 5
من الظلمت الی النور 9
دوزخ کی آگ سے کنارہ کشی 20
ندامت کے آنسو 24
میں نے حق کو پالیا 29
مولانا لال حسین اختر کا مرزائیت سے تائب ہونے کا واقعہ 35
سابقہ قادانی مربی کا قبول اسلام اور حیرت انگیز انکشافات 38
مرزا مسرور کا رضاعی بھتیجا، ختم نبوت کا مبلغ جناب شمس الدین صاحب کا بیان 62
سراب کا سحر ٹوٹتا ہے 82
حصہ دوم
اسلام قبول کرنے کی پاداش میں ’’حراء‘‘ کو اس کے باپ اور چچا نے زندہ جلا دیا 86
جنا سیٹھ محمد عمر( رام جی لال گیتا) سے ایک ملاقات 98
محترمہ شہناز صاحب(نومسلمہ) سے ایک ملاقات 103

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام پاکستان زبان علماء قادیانیت مفسرین نبوت

قادیانی مسئلہ ( جدید ایڈیشن )

قادیانی مسئلہ ( جدید ایڈیشن )

 

مصنف : سید ابو الاعلی مودودی

 

صفحات: 134

 

اسلامی تعلیم کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ حضرت آدم سے شروع ہوا اور سید الانبیاء خاتم المرسلین حضرت محمد ﷺ پر ختم ہوا۔ اور عقیدہ ختم نبوت اسلام کے بنیادی عقیدہ کا حامل ہے۔ نبی آخر الزماں خاتم المرسلین حضرت محمدپر رسالت ونبوت کا سلسلہ ختم کردیاگیاہے ۔اب آپﷺ کے بعد کوئی نبی آنے والا نہیں اسی عقیدہ پر پوری امت مسلمہ کا اجماع ہوچکا ہے۔ آپ ﷺ کےبعد جوبھی نبوت کا دعوی کرےگا وہ دائرہ اسلام سے خارج ہوگا او رجو کوئی بھی توحید ورسالت کے شعوری اقرار ویقین کےبعد کسی دوسرے کو اپنا نبی تسلیم کر ے گا وہ بھی ملت اسلامیہ سے خارج ہوگا اوراگر توبہ کیے بغیر مرجائے تو جہنم رسید ہوگا۔نبوت کسبی نہیں وہبی ہے یعنی اللہ تعالیٰ نے جس کو چاہا نبوت ورسالت سے نوازاکوئی شخص چاہے وہ کتنا ہی عبادت گزارمتقی اور پرہیزگار کیوں نہ ہو وہ نبی نہیں بن سکتا ۔قایادنی اور لاہوری مرزائیوں کو اسی لئے غیرمسلم قرار دیا گیا ہے کہ ان کا یہ عقیدہ ہے کہ مرزا غلام احمد قادیانی نبی تھے ان کو اللہ سےہمکلام ہونے اور الہامات پانے کاشرف حاصل تھا۔اسلامی تعلیمات کی رو سے سلسلہ نبوت او روحی ختم ہوچکاہے جوکوئی دعویٰ کرے گا کہ اس پر وحی کانزول ہوتاہے وہ دجال ،کذاب ،مفتری ہوگا۔ امت محمدیہ اسےہر گز مسلمان نہیں سمجھے گی یہ امت محمدیہ کا اپنا خود ساختہ فیصلہ نہیں ہے بلکہ نبی کریم ﷺ کی زبان صادقہ کا فیصلہ ہے ۔ علمائے اسلام نے قادیانی فتنے کے خلاف ہرمیدان میں ناقابل فراموش خدمات سرانجام دی ہیں او ردے رہے ہیں۔تحریری میدان میں بھی علماء کرام کی یادگار خدمات ہیں۔ زیر تبصرہ کتاب ’’ مسئلہ قادیانی ‘‘ سیدابو الاعلی مودودی ﷫ کا وہ کتابچہ جو انہوں نے 1953ء کی تحریک ختم نبوت کے دنوں میں عوام وخواص کے لیے قادیانیت کے عقائد کی اگاہی کےلیے علمی اور تحقیقی انداز میں ’’ قادیانی مسئلہ ‘‘ کےنام سے تالیف کیا تھا۔اس کی بڑے پیمانےپر اشاعت ہوئی اور وہ لاکھوں افراد تک پہنچا۔ اسی کتابچہ کی بیناد پر حکومت نے مولانا مودودی کوگرفتار کیااور مارشالا کےضابطہ نمبر 8اور تعزیرات کی دفعہ 153 (الف) کے تحت مقدمہ چلا کر موت کی سزا سنادی۔سزائے موت کے خلاف شدید عوامی رد عمل اور عرب حکومتوں نےبھی احتجاج کیا۔ بالآخر اندورنی وبیرونی دباؤ کی وجہ سےحکومت پاکستان نے سزائے موت منسوخ کردی اور اسے عمر قید میں بدل دیا۔ پھر 1955ء میں مولانا کو رہا کردیاگیا ۔ رہائی کےبعد مولانا نے متعدد مواقع پر تحقیقاتی عدالت میں مفصل بیانات دیے جن میں قادیانیت کا مکمل پوسٹ مارٹم کیا اور حکومتی اقدامات کی قلعی کھول کر رکھ دی۔زیر تبصرہ کتاب میں مولانا مودودی کے اصل کتابچہ ’’ مسئلہ قادیانی ‘‘ مودودی صاحب کے تحقیقاتی عدالت میں پیش کئے گئے بیانات کےاقتباسات اور ان کی کتاب ’’ رسائل ومسائل ‘‘ میں سےقادیانیت سے متعلق قیمتی مواد بھی اس میں شامل کردیا گیا ہے۔لہذا ’ قادیانی مسئلہ ‘ کی ترتیب وتدوین نو سے یہ کتابچہ زیادہ جامع اور مفید ہوگیا ہے ۔ترتیب وتدوین نو کا یہ کام انڈیا کے عظیم سکالر جناب ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی ﷾ نے کیا ہے ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
پیش لفظ 7
قادیانی مسئلہ 13
ختم نبوت کی نئی تفسیر 15
مرزاغلام احمدکادعوی نبوت 16
قادیانی ایک علیحدہ امت 17
قادیانیوں کامذہب مسلمانوں سےجدا ہے 18
نئے مذہب کےنتائج 19
قادیانیوں کوعلیحدہ امت قرار دینےکامطالبہ 20
مسلمانوں میں شغل تکفیر 22
مسلمانوں میں دوسرے فرقے 24
قادیانیوں کی تبلیغ کی حقیقت 24
انگریزی حکومت کی وفاداری 26
قادیانیت کےبنیادی خداوخال 29
تحقیقاتی عدالت میں مولانا مودودی کےبیانات 33
پہلے بیان کےضروری اقتباسات 35
اصل مسئلہ اوراس کاپس منظر 35
معاشرتی پہلو 36
معاشی پہلو 37
سیاسی پہلو 38
تلخی پیداہونےکےمزید وجوہ 39
دوسرے بیان کےضروری اقتباسات 42
قادیانیوں سےمتعلق مطالبات بہ یک وقت سیاسی بھی ہیں اورمذہبی بھی 42
مسلمانوں اورقادیانیوں کےاختلافات بنیادی ہیں 43
تمام منحرفین کواقلیت قرار دینےکامطالبہ ضروری نہیں 44
عدالت کےسامنےپیش کردہ قادنیوں کی بناوٹی پوزیشن 45
قادیانیوں کی جارحانہ روش محض اتفاقی نہیں ہے 52
کفر،تکفیر اورخروج ازاسلام 53
تیسرے بیان کےضروری اقتباسات 56
ختم نبوت مسلمانوں کامتفقہ عقیدہ 56
عقیدہ ختم نبوت قرآن سے ثابت ہے 56
ختم نبوت اوراحادیث نبوی 58
ختم نبوت اورمفسرین کرام 58
ختم نبوت اوراجماع صحابہ 58
ختم نبوت اورجمہورامت 60
ضمیمہ نمبر 1۔احادیث درباب ختم نبوت 62
ضمیمہ نمبر 2۔خاتم النبیین کی تفسیر میں مفسرین کےاقوال 68
ضمیمہ نمبر 3۔عقیدہ ختم نبوت اورمدعی نبوت کی تکفیر کےباب میں علمائے امت کےاقوال 74
ضمیمہ 4۔مرزاغلام احمد صاحب کی تحریک کےمختلف مراحل ان مرزاصاحب کےمختلف دعوے اورقادیانی عقیدہ عمل پر ان دعوؤں کےاثرات 79
مرزاغلام احمد کی تحریک کےمختلف مراحل کی تاریخی ترتیب 79
ابتدائی عقیدہ ختم نبوت 82
ابتدائی دعوؤں کی توجیہات 83
نبوت کےمختلف دعوے 85
امتی نبی 85
غیرصاحب شریعت 86
صاحب شریعت 86
ظلی وبروزی نبی 86
بروز محمد ﷺ 86
تمام انبیاء کامجموعہ 87
نبوت مرزاصاحب پر ختم 87
ختم نبوت کی مختلف تاویلیں 87
پہلی وتاویل 87
دوسری وتاویل 88
تیسری تاویل 88
چوتھی تاویل 88
وحی کےبارےمیں مرزاصاحب کاموقف 89
ابتدائی موقف 89
دوسراموقف 90
تیسراموقف 90
مسیح اورنزول مسیح کامسئلہ 91
پہلا موقف 91
دوسراموقف 92
قادیانی جماعت کاایک امت ہونا 93
مرزاصاحب کونہ ماننے کےنتائج اعتقادی حیثیت سے 94
ابتدائی موقف 94
آخری موقف 95
مرزاصاحب کوماننے کےنتائج عملی حیثیت سے 96
قادیانیت سےمتعلق بعض سوالات کےجوابات 99
ختم نبوت 101
خاتم النبیین کےبعد دعوائے نبوت 105
ختم نبوت کےخلاف قادیانیوں کےدلائل 111
ختم نبوت کےخلاف قادیانیوں کی ایک اوردلیل 116
قادیانیوں کی غلط تاویلات 121
کسی کےدعوی نبوت کو چانچنے کےغلط پیمانے 125
کیاجماعت احمد یہ کو مرزائی یاقادیانی کہناتنابزبالا لقاب ہے؟ 128
قادیانیوں کےخلاف تحریک چلانے کےجواز 130

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam پاکستان جماعت اسلامی علماء قادیانیت نبوت

قادیانی مسئلہ اور اس کے مذہبی ، سیاسی اور معاشرتی پہلو

قادیانی مسئلہ اور اس کے مذہبی ، سیاسی اور معاشرتی پہلو

 

مصنف : سید ابو الاعلی مودودی

 

صفحات: 451

اللہ تعالی نے نبی کریمﷺ کو آخری نبی اور رسول بنا کر بھیجا ہے۔آپ ﷺخاتم النبیین اور سلسلہ نبوت  کی سب سے آخری اینٹ ہیں ،جن کی آمد سے سلسلہ نبوی کی عمارت مکمل ہو گئی ہے۔آپ کے بعد کوئی برحق نبی اور رسول نہیں آسکتا ہے ۔لیکن آپ نے فرمایا کہ میرے بعد متعدد جھوٹے اور کذاب آئیں گے جو اپنے آپ کو نبی کہلوائیں گے۔آپ کے بعد آنے والے متعدد کذابوں میں سے ایک  کذاب مرزا غلام احمد قادیانی ہے ،جس نے نبوت کا دعوی کیا اور شریعت کی روشنی میں کذاب اور مردود ٹھہرا۔لیکن اللہ رب العزت نے اس کی حقیقت کو جھوٹ وفریب کا بے نقاب کرد یا ۔چنانچہ اس کے خلاف ایک زبر دست تحریک چلی جو اس کے دھوکے اور فریب کو تنکوں کی طرح بہا لے گئی۔ پاکستانی پارلیمنٹ نے اسے اور اس کے پیروکاروں کو غیر مسلم قرار دے کر ایک عظیم الشان فیصلہ کیا۔ زیر تبصرہ کتاب ” قادیانی مسئلہ اور اس کے مذہبی، سیاسی اور معاشرتی پہلو ” جماعت اسلامی پاکستان کے بانی مولانا سید ابو الاعلی  مودودی﷫  کی تصنیف ہے ،جس میں انہوں نے قادیانیت اور عقیدہ ختم نبوت کی شرعی حیثیت اور اس کے سیاسی و معاشرتی پہلو کو قرآن وحدیث اور علماء امت کے اقوال کی روشنی میں  بڑی تفصیل کے ساتھ ڈسکس کیا ہے۔اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ  مولف موصوف کی اس محنت کو اپنی بارگاہ میں قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 17
باب اول قادیانی مسئلہ 19
دیباچہ 20
تمہید 21
ختم نبوت کی نئی تفسیر 22
باب دوم مقدمہ مولانا سید ابو الاعلیٰ مودودی 59
اصل جرم 60
دیباچہ 61
جماعت اسلامی کی مخالفت 62
دیانت داری کا تقاضا 63
باب سوم فسادات پنجاب کی تحقیقاتی عدالت کے سامنے سید ابو الاعلیٰ مودودی کے بیانات 115

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام پاکستان قادیانیت نبوت

قادیانی کرتوت

قادیانی کرتوت

 

مصنف : محمد طاہر رزاق

 

صفحات: 210

 

اسلامی تعلیم کے مطابق نبوت ورسالت کا سلسلہ حضرت آدم ﷤ سے شروع ہوا اور سید الانبیاء  خاتم المرسلین حضرت محمد ﷺ پر ختم ہوا اس کے  بعد جوبھی نبوت کادعویٰ کرے گا وہ  دائرۂ اسلام سے خارج ہے  نبوت کسبی نہیں وہبی ہے  یعنی اللہ تعالیٰ نے  جس کو چاہا نبوت ورسالت سے  نوازاکوئی شخص چاہے وہ کتنا ہی عبادت گزارمتقی اور پرہیزگار کیوں نہ وہ نبی نہیں  بن سکتا ۔قادیانیت کے یوم پیدائش سے لے کر  آج تک  اسلام  اور قادیانیت میں جنگ جار ی ہے یہ جنگ گلیوں ،بازاروں سے لے کر حکومت کے ایوانوں اور عدالت کےکمروں تک لڑی گئی اہل علم  نے  قادیانیوں کا ہر میدان میں تعاقب کیا تحریر و تقریر ، خطاب وسیاست میں  قانون اور عدالت میں  غرض کہ ہر میدان  میں انہیں شکستِ فاش دی ۔  سب سے پہلے قادیانیوں سے  فیصلہ کن قانونی معرکہ آرائی بہاولپور   کی سر زمیں میں ہوئی جہاں ڈسٹرکٹ جج بہاولپور نے مقدمہ تنسیخ نکاح  میں مسماۃ عائشہ بی بی کانکاح عبد الرزاق قادیانی  سے فسخ کردیاکہ ایک مسلمان عورت مرتد کے نکاح میں نہیں رہ سکتی  1926ء سے  1935 تک  یہ مقدمہ زیر سماعت رہا  جید  اکابر علمائے  کرام   نے عدالت   کے  سامنے  قادیانیوں کے خلاف  دلائل کے انبار لگا دیے  کہ ان  دلائل کی روشنی میں  پہلی  بار عدالت کے ذریعے  قادیانیوں کو غیر مسلم  قرار دیا گیا  ۔   پھر  اس کے بعد بھی  قادیانیوں کے خلاف یہ محاذ جاری رہا     بالآخر تحریک ختم نبوت کی کوششوں سے 1974ء  کو  قومی اسمبلی ، پاکستان نے  ایک تاریخی بحث اور ملزموں کو مکمل صفائی کا موقع فراہم کرنے اور ان کے دلائل کما حقہ سننے کےبعد یہ فیصلہ صادر کیا کہ اب سے قادیانی  آئین او رملکی قانون کی رو سے بھی غیر مسلم  ہیں ۔مرزا قاديانی  کے  دعوۂ نبوت  سے لے کر  اب تک اس کے رد ّ میں چھوٹی بڑی بے شمار کتب شائع ہوچکی ہیں  جن کا ریکارڈ پاک وہند کی سیکڑوں لائبریریوں میں موجود ہے ۔ زیر نظر کتاب ’’قادیانی کرتوت‘‘   محمد طاہر عبدالرزاق کی 23 ویں کتاب ہے ۔ اس کتاب میں انہوں نے  ماہنامہ  ختم نبوت ، نقیب ختم نبوت، روزنامہ جنگ، روزنامہ اوصاف، ہفت روزہ تکبیر،اوردیگر اخبارات  ورسائل میں چھپنے والے 27 مضامین کو  مؤلفانہ  رشتہ میں پروکر تالیفانہ تسبیح کی شکل دی ہے ۔ یہ مضامین اگرچہ مختلف وقتوں میں  مختلف  افراد کی طرف سے لکھے گئے ہیں ۔ ان کامرکزی موضوع قادیانی کرتوتوں کے گرد ہی گھومتا ہے صاحب کتاب چونکہ  دشتِ قادیانیت  میں ایک عمر گزار چکے ہیں  اسی لیے ان کاانتخاب قارئین کےلیے چونکا دینے والا اور معلومات افزاء ہے

 

عناوین صفحہ نمبر
زخم نمائی 9
کچھ تالیف اور صاحب تالیف کے بارےمیں 15
1965ءکی جنگ ۔جنرل موسی پردہ اٹھاتےہیں 521
امریکہ کی مشروط امداد۔ مسلمان کے مذہبی 24
معاملات میں مداخلت ہے 24
ایک خطرناک قادیانی چال 27
کیاربوہ کے قصر خلافت میں ایٹمی پلانٹ تعمیر ہور رہا ہے 31
انگریزوں کی پنیری 39
مزراطاہر کی دیدہ دلیری 45
قادیانی مخمصے میں مبتلا ہیں 49
مرزا ناصر کی دوسری شادی 52
سرسیدکا خط 56
احمدی اقبال کی نظر میں 57
مرزا رفیع کے مرزا ناصر احمد سے اختلافات 64
ڈاکٹر سام کا نمک خوار ڈاکٹر مظہر بھی بولا 69
جنوبی افریقہ کی سپریم کورٹ نے بھی قادیانیوں کو غیرمسلم قرار دے دیا 72
مرزا طاہر کے منہ پر جنرل حمزہ کا زناٹے دار تھپڑ 81
قادیانی سازش بے نقاب 85
قادیانی ریشہ دوانیوں کا پس منظر 95
بنن افریقہ سے قادیانیوں کوویس نکالا مل گیا 105
بنگلہ دیش میں قادیانی سرگرمیوں کا ایک جائزہ 109
اسلام اور پاکستان کے خلاف قادیانیوں کی گھناوئی سازش 118
قادیانی اور کھر تنازعہ 128
بلوچستان میں 9مئی کا واقعہ اور تحریک ختم نبوت پر ایک نظر 133
مرزا ظاہر احمد کی پچاس لاکھ 150
پاکستانی شمس توانائی کا نظام تباہ کر دیاگیا 167
تقسیم کشمیر ایک خطرناک سازش 172
خلافت ملوکیت یا انسانیت پر ظلم 176
یہودی اخبار کی تصویر نے مجھے حیرت زدہ کر دیا 181
ڈاکٹر عبد السلام قادیانی کا مسئلہ 185
کہوٹہ پر بھارت اسرائیل حملہ کا خطرہ 188
پاکستان میں عظیم تر پنجاب تحریک اور قادیانی ٹولہ 191
مرزائیوں کی خوفناک سیاسی چالیں 193

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز