حب رسول ﷺ اور صحابہ کرام ؓ

حب رسول ﷺ اور کرام ؓ

 

مصنف : حافظ محمد سعد

 

صفحات: 403

 

حبِ رسول ﷺ اہل ایمان کے لیے ایک افزاءباب کی حیثیت رکھتا ہے۔ حبِ رسول ﷺ کے بروئے کچھ تقاضے ہیں۔ خود نبی ﷺ کا ارشاد گرامی ہے: ’’تم میں سے کوئی شخص اس وقت تک مومن نہیں ہو سکتا جب تک وہ مجھے اپنی جان، مال، اولاد، ماں باپ غرض جمیع انسانیت سے بڑھ کر محبوب نہ سمجھے‘‘۔ محبت رسول ﷺ کا مظہر اطاعتِ رسول ہے ۔ رسول ﷺ سے سچی محبت کےبغیر مومن ہونے کا دعویٰ منافقت کی بیّن دلیل ہے اور حب رسول ﷺ ہی وہ پیمانہ ہےجس سے کسی کے ایمان کوماپا جاسکتا ہے۔ دعوائے محبت ہو اوراطاعت مفقود ہو تو دعویٰ کی سچائی پر حرف آتاہے۔ حب رسولﷺ کےتقاضوں میں سے ایک تقاضا تو نبی ﷺ کا و احترام کرنا، آپ سے محبت رکھنا ہے۔ ۔ اعظم وآخر الزمان ﷺ کا یہ اعجاز بھی منفرد ہے ہک آپ کے جان نثاروں کی زندگیاں جہاں محبتِ رسول کی شاہکار ہیں وہاں ہر ایک کی زندگی رسولﷺ کی آئینہ دار ہے۔ ان نفوس قدسہ نے دونوں جہتوں میں راہنمائی کا عظیم الشان معیار قائم فرمایا ہے۔ زیر کتاب’’ حب رسول اللہﷺ اور کرام َ‘‘ مجلہ منہاج (دیال سنگھ لائبریری ،لاہور) کےایڈیٹر جناب حافظ سعد اللہ صاحب کی کاوش ہے جوکہ پانچ ابواب پر مشتمل ہے ۔یہ کتاب کی پاکیزہ زندگیوں کی ان دو اہم خصوصیات کی جامع ہے ۔ مصوف نے کتب وسیر سے ایسے محبتِ رسولﷺ اور اطاعت رسول ﷺ کے ایسے نقوش جمع کر نے کی سعادت حاصل کہ سعید روحیں ان کامطالعہ کرتے وقت جھوم اٹھتی ہیں۔موصوف نے اس کتاب کو مستند مآخذ ومراجع کی مدد سے تالیف کیا ہے ۔اللہ تعالیٰ مصنف موصوف کی اس کاوش کوقبول فرمائے اور ہمیں کی طرح نبی کریمﷺ سے محبت اورآپ کی اطاعت کرنے کی توفیق دے (آمین)

 

 عناوین صفحہ نمبر
حرف دل 15
تقریظ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ڈاکٹر صاحبزادہ ساجد الرحمٰن 20
 مقدمہ : حب رسول ﷺ کی ضرورت اور عملی تقاضے 21
حب رسولﷺ کی دینی ضرورت 22
حب رسولﷺ کی عقلی ضرورت 23
نبی کریم ﷺ کے مومنین کے ساتھ رشتہ کا تقاضا 25
حب رسولﷺ کی شرعی حیثیت 26
محبت رسول ﷺ اور 30
حب رسول ﷺ کے عملی تقاضے 31
خواہشات نفس کا محمدیہ کے تابع ہونا 31
حضورﷺ کی مرغوب چیز کا مرغوب اور ناپسند ہو جانا 32
حضور ﷺ کے محبوب اور دشمن سے دشمنی رکھنا 33
فقیرانہ زندگی کو ترجیح دینا 33
ہر رسولﷺ سے محبت رکھنا 34
رضا مندی رسولﷺ کا خیال کرنا 35
کتاب الٰہی سے محبت  رکھنا 36
امت محمدیہ سے پیار کرنا 36
حضور ﷺ کی اطاعت و اتباع  کرنا 37
ذکر رسول ﷺ اور زیارت نبوی کا اشتیاق 40
ذات رسول ﷺ میں نقص تلاش نہ کرنا 41
حب رسولﷺ کے اظہار میں رسولﷺ کاخیال 44
امت رسول ﷺ میں تفریق پیدا نہ کرنا 47
ناموس رسالت کا تحفظ کرنا 50
حوالہ جات مقدمہ 52
باب اول: عقیدت و محبت رسولﷺ 57
پہلی فصل: ذات رسولﷺ ۔ ہر شے سے زیادہ محبوب 59
جذبات و تاثرات محبت۔ چند جھلکیاں 59
حضور ﷺ کے لیے معمولی تکلیف بھی پسند نہ ہونا 61
سلامتی رسولﷺ کے بعدہرمصیبت آسان 62
سینئہ نبویﷺ سے پیٹھ کو خوب چپکانا 63
حضور ﷺ سے والہانہ لپٹ جانا اور خاطر تواضع کرنا 64
بارگاہ ررسولﷺ میں حبشہ سے سلام محبت 66
جسم رسولﷺ کا بوسہ لینے کے لیے عجیب بہانہ 66
ملاقات رسولﷺ کے لیے بے تاب 68
رسول ﷺ دھوپ میں ہوں اور ابو خیثمہ سائے میں بیٹھے 68
سایہ دار درخت ﷺ کے لیے چھوڑ دینا 70
رسولﷺ کی بسلامت واپسی پروف بجانے کی نذر 70
حضورﷺ کے طواف کعبہ سے قبل طواف سے انکار 71
طویل سجدہ نبویﷺ پر وفات کا خوف لاحق ہو جانا 72
حضورﷺ کی ناراضگی اور قطع کلامی کا سب سے زیادہ فکر 72
حضور ﷺ کی طرف سے سلام کا جواب نہ ملنے پر انتہائی غم 74
میں معیت نبوی ﷺ کی آرزو 74
غلامی رسولﷺ پر قربان 76
حضور ﷺ کے کلمات ناراضگی و مزاح بھی محبوب 78
رسولﷺ سے قریب الموت العہد ہونے کا اشتیاق 80
غم رسولﷺ کے ایمان پر والد کے ایمان سے زیادہ خوشی 80
قرابت رسولﷺ سے صلہ رحمی اپنی قرابت سے زیادہ محبوب 81
حضورﷺ کی خاطر مزدوری کی رقم قربان 82
صحبت رسولﷺ کی خاطر قطعہ زمین واپس کر دینا 83
حضور ﷺ کی طرف ہجرت اور راہ میں 83
اجازت رسولﷺ کے بغیر مشرک ماں کو گھر نہ آنے دینا 84
رسالت محمدی کے مقابلے میں مسیلمہ کذاب کو انکار 84
حضورﷺ سے نفقہ میں زیادتی کے مطالبہ پر بیٹیوں کو سرزنش 85
ازواج النبی ﷺ کو کی افواہ پر کا زارو قطار رونا 87
دوسری فصل: دیدار رسول ﷺ کے لیے بے چینی 91
دیدار رسولﷺ کے بغیر چین نہ آنا 91
دیدار رسولﷺ کے بغیر کھانے پینے سے انکار 93
چہرہ رسولﷺ کے دیدار پر کی مسرت و بے خودی 95
حضور ﷺ کے بعد آنکھوں کی ضرورت نہیں 96
حضور ﷺ کے دیدار اور آمد پراہل مدینہ کی خوشی 97
تیسری فصل: یاد رسول ﷺ پر آنسو امنڈ آنا 100
حضور ﷺ کے تذکرہ پر رو پڑنا 100
وصال نبویﷺ کے اندیشہ پررو پڑنا 101
فاقہ نبوی ﷺ کو یاد کرنے پر رقت طاری ہوجانا 102
راتوں کو یاد رسولﷺ 103
وصال نبویﷺ پر کی گریہ و زاری 104
اذان بلال ؓپر حضور ﷺ کی یاد اور رقت 108
چوتھی فصل: خدمت رسولﷺ کی سعادت از خود حاصل کرنا 110
خدمت رسولﷺ کے لیے بیٹا مستقل پیش کر دینا 11
خدمت رسولﷺ کی خاطر گریز 0111
ہجرت رسولﷺ میں حضرت علی ؓکا ایثار و خدمت 112
فاقہ نبوی ﷺ کا سامان کرنے کے لیے مزدوری 113
حضور ﷺ کا فاقہ دیکھ کر فورا کھانے کا انتظام 114
حضور ﷺ کو دودھ پلانے  پر خوشی 117
مہمان رسولﷺ کی خاطر اہل و عیال سمیت بھوکا رہنا 120
مہمانان رسولﷺ کے کھانے کا ساماں 123
میزبانی رسولﷺ اور حضرت ابو ایوب ؓانصاری 124
حضور ﷺ کی مالی خدمت ۔ چند مظاہر 125
پانچویں فصل: بارگاہ رسولﷺ میں ہدیے پیش کرنا 128
بارگاہ رسولﷺ میں ہدیے بھیجنے کی چند مثالیں 128
رسولﷺ پر کھانا تیار  کر کے بھیجنا 131
حضور ﷺ کے لیے نئی چیز ادھار خرید کر ہدیہ 133
حضور ﷺ کے لیے لکڑی کا منبر 134
چھٹی فصل: حب رسولﷺ اور ازواج مطہرات 135
سیدہ خدیجہ ؓ کا کمال اخلاص و محبت 135
حضور ﷺ کے پیغام پر انتہائی مسرت 136
ازواج مطہرات کا حضورﷺ کو اختیار کرنا 138
سیدہ جویرہ ؓ کا باپ کی  بجائے حضور ﷺ کو اختیات کرنا 140
رضا مندی رسولﷺ کی خاطر اپنی باری چھوڑ دینا 141
حضور ﷺ کی جدائی کا حد درجہ افسوس 143
سیدہ عائشہ ؓ کی ناراضگی صرف حلق تک 143
سیدہ ام سلمہ اور تبرک نبوی ﷺ کا حصول 144
حوالہ جات و حواشی  باب اول 144
باب دوم : دفاع و حفاظت رسولﷺ 165
پہلی فصل: ذات رسولﷺ کا دفاع 267
ذات رسولﷺ کا دفاع  اور حضرت ابو بکر صدیق ؓ 167
ذات رسولﷺ کا دفاع اور سیدہ فاطمہ الزہرہ ؓ 169
غزوہ  بدر اور دفاع رسولﷺ 170
غزوہ احد اور کمال دفاع رسولﷺ 172
دفاع رسولﷺ اور حضور ام عمارہ 175
حضور ﷺ کا دفاع اور قدم نبوی ﷺ پر 176
مرنے کے بعد حضورﷺ کے ساتھ قتال کی تمنا 177
کیا ہم رسولﷺ کو چھوڑ جائیں گے ؟ 177
حضور ﷺ کا دفاع 178
دوسری فصل:ذات رسولﷺ کی حفاظت 179
ہجرت میں حضرت ابو بکر ؓکی حفاظت  وخدمت رسولﷺ 179
حضورﷺ کا میں داخلہ اور بنو نجارکا محافظ دستہ 182
غزرہ بدر میں ذات رسولﷺ کی حفاظت کا اہتمام 183
ذات رسولﷺ کی حفاظت کا فکر 183
حفاظت رسولﷺ کے پیش رات کو ہی تدفین کی 185
بارگاہ نبوی ﷺ میں سلام اور قوم کے نام حفاظت کا پیغام 185
حضور ﷺ کے لیٹ ہونے پر کا گھبرا جانا 186
ذات رسولﷺ پر دشمن کا خوف اور کاشانہ نبوی ﷺ کا پہرہ 188
حوالہ جات و حواشی باب دوم 190

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8.6 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...