حجۃ اللہ البالغہ

حجۃ البالغہ

 

مصنف : محدث دہلوی

 

صفحات: 635

 

دہلوی برصغیر کی جانی مانی شخصیت ہیں۔ شاہ صاحب بنیادی طور پر حنفی المسلک تھے۔ وہ دور برصغیر میں تقلیدی جمود کا دور تھا اور حنفی کو حکومتی سرپرستی حاصل تھی۔شاہ ولی جیسے ماہر فقہ نے اسی مکتبہ فکر میں پرورش پائی تھی۔ لیکن جب آپ  کے لیے مکہ گئے تو وہاں سے شیوخ سے درس لیا یہیں سے آپ کی طبیعت میں تفہیم بارے تقلیدی جمود کے خلاف تحریک اٹھی۔ وہاں سے تشریف لاکر سب سے پہلے آپ نے برصغیر کے عوام کو اپنی تحریروں سے یہ بات سمجھادی کہ دین کسی ایک میں بند نہیں بلکہ چاروں اماموں کے پاس ہے۔ یہ جامد تقلید کے خلاف برصغیر میں باضابطہ پہلی کوشش تھی۔ اس کے بعد شاہ صاحب نے  ساری زندگی و کو عام کرنے کے لیے وقف کردی۔ پیش کتاب ’حجۃ البالغۃ‘ بھی موصوف ہی کی مشہور و معروف تالیف ہے جس میں آپ نے نہایت شرح و بسط کے ساتھ شرع کی حکمتوں اور مصلحتوں پر روشنی ڈالی ہے۔یہ کتاب انسانوں کے شخصی اور اجتماعی مسائل، اخلاقیات،  سماجیات او راقتصادیات کی روشنی میں فلاح انسانیت کی عظیم دستاویز کا خلاصہ ہے۔ کرنے کے فرائض مولانا خلیل احمد بن مولانا سراج احمد نے ادا کیے ہیں۔ یہ خاصا پرانا ہے اس لیے بہت سارے ایسے الفاظ استعمال کیے گئے ہیں جو موجودہ اردو کتب میں متروک ہو چکے ہیں۔ اور کتابت بھی ہاتھ سے کی گئی ہے جس کی وجہ سے کتاب کا مطالعہ کرنا قدرے مشکل ہو گیا ہے۔ کتاب کی افادیت کی پیش اس کو جدید اسلوب میں شائع کرنے کی ضرورت ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
دیباچہ 1
مقدمہ 5
باب1۔ کی صفت ابداع خلق 16
اختلاف پیدائش کا بیان 38
مدنی کے بیان میں 64
کے بیان میں 89
حکمتوں اور علتوں کے اسرار کے بیان میں 144
کتب کے طبقوں کے بیان میں 203
کا بیان 267
کی فضیلت کا بیان 290
جمعہ کا بیان 341
مناسک کا بیان 387
فرائض کا بیان 480
عدت کا بیان 514
کا بیان 553
کھانے کے کا بیان 575
کا بیان 591
صحبت کا بیان 593
مختلف ابواب 603
کابیان 614
المناقب 619

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
30.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...