حجیت حدیث (البانی صاحب)

حجیت حدیث (البانی صاحب)

 

مصنف :

 

صفحات: 166

 

فتنہ انکار کی کے  سرسری مطالعہ سے معلوم ہوتا ہے کہ حدیث نبوی کی حجیت و اہمیت کے منکرین دو طرح کے ہیں ۔ایک وہ جو کھلم کھلا حدیث کا انکار کرتے ہیں اور اسے کسی بھی حیثیت سے ماننے کے لیے تیار نہیں ہیں۔دوسری قسم ان لوگوں کی ہے جو صراحتاً حدیث کے منکرین ،بلکہ زبانی طور پر اس کو قابل اعتماد تسلیم کرتے ہیں لیکن انہوں نے تاویل و تشریح کے ایسے وضع کر رکھے ہیں جن سے حدیث کی حیثیت مجروح ہوتی  ہے اور لوگوں پر یہ تاثر قائم ہوتا ہے کہ نبوی کو تشریعی اعتبار سے  کوئی اہم مقام حاصل نہیں ہے ۔عالم کے عظیم محدث اور جلیل القدر عالم علامہ ناصر الدین البانی ؒ کی زیر کتاب میں اسی دوسرے گروہ کے افکار کی تردید کی گئی ہے۔یہ کتاب تین رسالوں کا مجموعہ ہے پہلا رسالہ  کے مقام و مرتبہ کے بیان پر مشتل ہے۔اس میں واضح کیا گیا ہے کہ سنت کے بغیر کریم کا فہم حاصل کرنا ممکن نہیں ہے۔دوسرے رسالے میں اس امر پر بحث کی ہے کہ خبر واحد عقیدہ میں بھی حجت ہے ۔اس سلسلہ میں متکلمین اور وغیرہ کے شبہات کا مکمل ازالہ کیا گیا ہے ۔تیسرے میں بھی اسی نکتے کو ایک اور انداز میں نکھارا ہے اور اس فن میں بے شمار قیمتی نکات معرض تحریر میں آگئے ہیں ۔حجیت کے و براہین پر مشتمل بہترین کتاب کا مطالعہ ہر کو کرنا چاہیے ۔
 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمۃ الکتاب 9
1۔پہلا  29
میں نبوی کا مقام اور صرف کریم پر اکتفا کی تردید 31
کریم سے کا تعلق 31
فہم کے لیے کی ضرورت اور اس کی مثالیں 32
کو چھوڑ کر پر اکتفا کرنا گمراہی ہے 36
فہم کے لیے دانی کا فی نہیں 39
اہم تنبیہ 41
معاذ پر بحث 43
2۔دوسرا
عقائد میں آحاد سے استدلال واجب ہے مخالفین کے شبہات کا جواب 45
مقدمہ 47
عقائد میں آحاد سے استدلال واجب ہے 48
وجوبات 49
تیسرا رسالہ :عقائد و کے لیے ایک مستقل حجت ہے 87
پہلی فصل 89
کی طرف مراجعت کا وجوب اور اس کی مخالفت کی حرمت 89
کریم کا رسول سے فیصلہ کرانے کا حکم 89
ہر چیز میں نبی ﷺ کی اتباع کی دعوت دینے والی 94
مندرجہ بالا نصوص کا خلاصہ استدلال 99
عقائد اور کے اندر کی اتباع ہر دور میں لازم ہے 102
متاخرین کاسنت کو حکم بنانے کے بجائے خود اس پر حاکم بن جانا 103
متاخرین کے ہاں کی اجنبیت 104
متاخرین کے وہ جن کی وجہ سے متروک ہوئیں 105
دوسری فصل 107
پر قیاس وغیرہ کی تقدیم کا بطلان 107
پر اور قیاس کو مقدم کرنے کی غلطی کا سبب 109
تیسری فصل 117
عقائد اور دونوں میں خبر واحد کی حجیت 117
ایک شبہ اور اس کا ازالہ 118
خبر واحد کے حجت نہ ہونے کا عقیدہ  وہم و خیال کی بنیاد پر ہے 121
خبر واحد سے عقیدہ حاصل کرنے کے  وجوب پر 122
رحمتہ علیہ کا خبر واحد سے عقیدہ کا اثبات 128
عقیدہ کے لیے خبر واحد کو دلیل نہ بنانا محدثہ ہے 129
بہت سی اخبار آحاد کا اور یقین کا فائدہ پہنچانا 132
افادہ میں خبر شرعی کو دوسری خبروں پر قیاس کرنے کا فساد 135
حدیث ٖآحاد کے متعلق یقینی کے فائدہ نہ پہنچانے کے دعویٰ کا سبب کے مقام سے جہالت ہے 137
کے بارے میں بعض فقہا کے موقف اور سے ان کی نا واقفیت کی دو مثالیں 139
چوتھی فصل 142
تقلید اور تقلید کو و بنا لینا 142
تقلید کی حقیقت او راس سے بچاؤ 142
تقلید سے کی ممانعت 146
صرف تعالی اور رسول اللہ کا قول ہے 147
دلیل جاننے سے عاجز شخص کے لیے تقلید کا جواز 152
اہل کی اہل سے جنگ اور ہر شخص پر تقلید کا ایجاب 155
اپنے کے لیے تعصب کرنے میں مقلدین کا ان کی مخالفت کرنا اور ان کی تقلید کو فرض کرنا 156
مقلدین میں اختلاف کی کثرت اور اہل میں اس کی قلت 157
تقلید کی تباہ کاریاں اور مسلمانوں پر اس کے برے اثرات 162
آج کے مہذب نوجوان کا فریضہ 163

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Leave A Reply