اکیسویں صدی کے سماجی مسائل اور اسلام

اکیسویں صدی کے سماجی اور

 

مصنف :

 

صفحات: 259

 

اکیسویں صدی جہاں سائنسی ایجادات و اکتشافات، ٹیکنالوجی ، آزادی، مساوات، عدل و انصاف، بنیادی انسانی حقوق، حقوقِ نسواں جیسے تصورات کی صدی قرار پائی وہیں یہ صدی اپنے جلو میں بے شمار سماجی اور اختلافی بھی ساتھ لے کر آئی ہے۔ ان مسائل نے انسانی زندگی کو پیچیدہ بنانے، فتنہ وفساد، پریشان خیالی اور بے راہ روی سے دوچار کرنے میں بھی کوئی کسر نہیں چھوڑی ہے۔ جس کا نتیجہ یہ ہے کہ آج دنیا فتنہ و فساد کی آماج گاہ، اخلاق و شرافت سے عاری اور مادرپدر کے ساتھ کو حیوان اور معاشرے کو حیوانی معاشرے کی صورت میں پیش کر رہی ہے۔اس صدی کی رنگارنگی اور بوقلمونی سے جنم لیتے تو بے شمار ہیں لیکن ان میں سے چند اہم مسائل پر معروف عالم ،محقق اور مصنف ڈاکٹر نے قلم اُٹھایا ہے۔ زیرتبصرہ کتاب ” اکیسویں صدی کے سماجی اور اسلام “میں کل گیارہ ہیں ، جن میں کے بغیر جنسی تعلق، جنسی بے راہ روی اور زناکاری، رحم مادر کا اُجرت پر حصول، ہم جنسیت کا فتنہ، مصنوعی طریقہ ہاے تولید، اسپرم بنک: تصور اور مسائل، رحمِ مادر میں بچیوں کا قتل، گھریلو تشدد، بوڑھوں کے عافیت کدے، پلاسٹک سرجری اور عام تباہی کے اسلحے کا استعمال شامل ہیں۔ ان پر تحقیقی انداز میں بحث کے ساتھ ساتھ کا نقطۂ پیش کیا گیا ہےاور وقت کی ایک اہم ضرورت پوری کی گئی ہے۔ تعالی سے ہے کہ وہ مولف موصوف کی اس کاوش کو قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
پیش لفظ 11
مقدمہ 11
کےبغیر جنسی تعلق 21
عالمی صورت حال 21
کاحال 23
اسباب اورقائلین جواز کےدلائل 25
نظام خاندان ۔فطرت کاتقاضا 26
کی ترقی خاندانی نظام پر منحصر ہے 27
خاندان کوحیوان سےممتاز کرتاہے 38
عورت کاسراسر خسارہ 28
بےقید معاشرت کےتلخ  نتائج 30
موہوم 30
اسلام  کانقطہ 31
خاندان تعالیٰ کی نعمت ہے 31
جنسی تعلق کاواحد جائز ذریعہ 32
زناکی حرمت 34
بغیر کےباہم رضامندی سےبھی جنسی تعلق کی اجازت نہیں 35
خاندان کےاستحکام  کی دیگر تدابیر 36
جنسی بےراہ روی اورزناکاری 37
موجودہ صورت حال 37
سخت ترسزا کامطالبہ 38
جرائم کی روک تھام محض سےممکن نہیں 39
پورے نظام کانفاذ ضروری ہے 39
جنس کےتعلق سےمختلف رویے 40
صرف کےذریعے جنسی خواہش پوری کی جائے 41
کی ترغیب اوراسے آسان بنانا 43
تعدد ازدواج کی اجازت 45
دوسرا معیوب نہیں 46
عقائد ۔تربیت کااہم ذریعہ 47
تعالیٰ ہرجگہ موجود ہیں 48
میں دنیا کےہرعمل کاحساب ہوگا 49
جذبہ حیاکافروغ 50
کی پاکیزگی کےلیے احتیاطی تدابیر 51
نگاہیں  نیچی رکھنے کاحکم 51
نامحرم کےساتھ تنہائی میں  رہنے کی ممانعت 52
آزاد نہ اختلاط پسندید ہ نہیں 53
بغیر عورت کےسفرپر پابندی 53
عورت کےبن سنور کراورخوشبو لگاکر نکلنے کی ممانعت 54
ساتر ہو 55
کاخصوصی حکم 56
بدکاری کےمحرکات پر پابندی 56
شراب حرام ہے 56
فحاشی کی اشاعت کی اجازت نہیں 57
زنا کی سزا 58
سزاکےنفاذ کےلیے قطعی ثبوت ضروری ہے 59
تطہیر کاآزمودہ نسخہ 60
رحم مادرکااجرت پر حصول 61
اورموجودہ بصورت حال 62
میں اجرت پر رحم مادر کاحصول 63
دوسری عور ت کارحم اجرت پرلینے کےاسباب 4
قائم مقام مادریت کی صورتیں 64
اخلاقی اورتہذیبی جواز؟ 6
کی بنیادی 66
نکاح ۔توالد وتناسل کاواحد جائز ذریعہ 66
مرد کےنطفے سےکسی عورت کو بارآورنہیں کیاجاسکتا 67
شرم گاہ کی حفاظت 68
نسب  کی حفاظت ضروری ہے 69
رحم کی کرایہ ۔ کانقطہ 70
قائم مقام مادریت کی ایک جائزصورت 72
ایک شاذرائے 73
ہم جنسیت کافتنہ 75
ہم جنسیت ۔فکر اورفلسفہ 75
مغرب کی مہم جوئی 77
کاحال 78
کیاہم جنسیت پر پابندی بنیادی انسانی کی خلاف ورزی ہے 79
باہم رضامندی کاغلط تصور 80
کیایہ ذہنیت موروثی ہے؟ 81
نفسیاتی مرض 81
نظام فطرت سےبغاوت 82
خاندان اورتمدن کی پامالی 83
عامہ کوخطرہ 84
سرمایہ دارانہ استعمار کی سازش 86
تمام مذاہب  ہم جنسیت  کےخلاف ہیں 87
اسلام   کانظریہ جنس 88
قوم لوط سے عبرت پذیری 90
رسول اللہﷺ کی تنبیہات 92
فقہاء کانقطہ 95
متمتدن سماج کی ذمہ داری 95
مصنوعی طریقہ ہائےتولید 97
تولید ی  حیاتیات 98
فطری طریقہ تولید 98
فطری طریقہ  تولید میں نقائص 99
مصنوعی طریقہ ہائے تولید سے استفادہ 100
مصنوعی بارآوری 101
ٹیسٹ ٹیوب میں بارآواری 102
شوہر کےنطفے سےبارآوری 103
غیرمرد کےنطفے سےبارآوری 105
اسپرم بینک میں شوہر کانطفہ 107
انتقال بیضہ 107
قائم مقام مادریت 107
حاصل بحث 110
اسپرم بینک :تصور اورمسائل 111
فطری  طریقہ  تولید اوراس  میں نقائص 111
مصنوعی تلقیح کےمیدان میں میڈیکل کی ترقیات 112
مصنوعی تلقیح اوراسپرم بینک 114
اسپرم بینک کاآغاز  وارتقاء 116
موجودہ دورمیں اسپرم بینکوں کادائرہ اورطریقہ کار 117
اسپرم بینک مغربی کلچر کی 121
نظام خاندان پر کاری ضرب 122
نسب کی پامالی 122
انسانی کاپیش خیمہ 123
کانقطہ 124
کسی اجنبی مرد کےنطفے سےبارآوری زنا کےمترادف ہے 124
عمدہ نطفے کاانتخاب جاہلی طریقہ 126
شوہر کےانتقال کےبعداس کےمحفوظ نطفے سےبارآوری جائز نہیں 127
شوہر کی زندگی میں اس کےمحفوظ نطفے سےبارآوری کاحکم 128
اسپرم بینک کاقیام اوراسپرم کی خریدوفروخت 129
رحم مادرمیں بچوں کاقتل 131
نسل انسانی کےوجود تسلسل کافطری نظام 132
نظام فطرت میں انسانی دخل اندازی سے عدم توازن پیداہواہے 134
سماج میں لڑکیوں کی کم ترحیثیت 135
نزول کےزمانے کی صورت حال 136
لڑکیوں کوزندہ درگور کرناایک جاہلی رسم 138
جدید جاہلیت 139
موجودہ کی بےبسی 140
کی انسدادی تدابیر 141
ذہنی تربیت 141
اندیشہ فقرکاازالہ 142
لڑکیوں کو زندہدرگور کرنے کی حرمت 143
میں سخت سزاکی وعید 143
رسول ﷺ کواولاد کوقتل نہ کرنے کاعہد لیاکرتےتھے 144
لڑکیوں کی پرورش اورکفالت پرجنت کی بشارت 146
لڑکیوں کی وتربیت کی فضیلت 148
گھریلو تشدد 151
مظلومیت نسواں عہد قدیم میں 151
تحریک نسواں کےثمرات 152
عورت پھر بھی مظلوم رہی 153
گھریلو :عالمی صورت حال 154
صورت حال کےجائز ےاورتدارک کےلیے عالمی کوششیں 156
دس ممالک میں اقوام متحد ہ کاسروے 158
دیگر ممالک کاجائزہ 159
گھریلو تشدد کی روک تھام کےلیے عصر ی 162
مرض بڑھتاگیا جوں جوں دواکی 164
غلط تشخیص غلط علاج 165
گھریلو تشدد روکنے کےلیے کی تدابیر 166
مرد اورعورت رفیق ہیں نہ کہ فریق 166
میں اورفطری تقسیم کار 166

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...