امام مالک 

امام مالک 

 

مصنف : محمد

 

صفحات: 491

 

امام مالک﷫ کے فقہی مسلک کو مالکی کہتے ہیں۔ آپ کا نام مالک بن انس ہے۔ آپ امامِ مدینہ، امام اہلِ حجاز اور امام دار الہجرت کے لقب سے مشہور ہوئے۔ آپ 93ھ میں میں پیدا ہوئے۔ آپ کا شمار مجتہدین، فقہاء اور عظیم محدثین میں ہوتا ہے۔ آپ نے و فقہ کا پہلے ربیعہ رائی، پھر ابن ہرمز سے حاصل کیا۔ ان کے اساتذہ میں امام ابن شہاب زہری اور دیگر ستر اساتذہ شامل ہیں۔ امام مالک ﷫ نے سترہ برس کی عمر میں مدینے میں درس و تدریس کی مسند سنبھالی۔ آپ کا درس بڑے و احترام سے دیا کرتے تھے، غسل کرتے، صاف ستھرا پہنتے، خوشبو لگاتے اور پھر درس کی مسند پر تشریف فرما ہوتے۔ بیک وقت اور کے امام تھے۔ آپ کے طرزِ فکر میں اور فقہ کا حسین امتزاج ملتا ہے۔آپ کی تصانیف میں مدونہ الکبریٰ اور موطاء معروف تصانیف ہیں۔ زیر کتاب’’ امام مالک ﷫ ‘‘ مشہور مصری سوانح نگار پروفیسر محمدابو زہرہ کی تصنیف کا ہے اس کتاب میں امام دارالہجرت کے سوانح حیات ،امام صاحب کے زمانہ ، ان کی آراء وافکار اور قانوں میں مالکی کیاامتیازی شان کا مفصل بیان ہے ۔کتاب کو عربی قالب میں ڈھالنے اور اس پرحواشی کا کام عبیداللہ قدسی نے انجام دیا ہے

 

عناوین صفحہ نمبر
ملاحظات 15
مقدمہ 19
تمہید 23
کےبےتعصب مسلک کی پیروی 23
خود کامسلک بے تعصبی تھا 24
کےمصنف اورانکا تعصب 24
مناقب پر کتابیں 25
امام کی نشو نمامیں ابہام 26
مدینہ میں قیام آب نےسفر نہیں کیا 26
مدینہ میں تمام علو م حاصل کیے 27
مالکی کی تدوین اوراصول 29
موطا 29
المدونہ 29
ہماری میں مالکی کامقام 30
بالرائے میں مقام مالک 31
ہماری رائے کی موافقت 31
حصہ اول
مالک 31
مولداورنسب 33
مدینہ میں ولادت 34
قبیلہ یمنی کی نسبت 34
مالک تھے 35
جداعلی کامدینہ میں وردو 36
وہ صحابی نہیں تھے 37
نشوونما 37
ندینتہ الحدیث میں پرورش 38
مدینہ کااثر کامالک کی پرورش میں 39
وحدیث پر توجہ 40
ربیعہ رانی کی شاگردی 41
ابن ہرمرزکی شاگر دی 41
حضرت نافع سےحصول 45
ابن شہاب الزہری کی شاگردی 46
بچپن سےاحتزام تھا 47
مالک کاشوق اوراس زمانہ کاطریقہ 48
کیاکیا علوم حاصل کیے 49
درس اورافتا
درس اورافتا کامرتبہ مالک کی میں 52
جب مسند درس پر بیٹھے آپ کی عمر کیاتھی 53
معتصبین کادرس کےمتعلق دعوی 53
اس دعوے کی تنقید 53
صحیح روایتوں کی تردید 54
ہماری رائے 56
اما م کی مجلس درس کادوام 58
معیشت 59
خلفاکےتحفے قبول کرنا 60
تنگ دستی 61
بعد کی فراخی 62
امام صاحب کادرس دینا 66
درس کےوقت امام کی حالت 66
وقار اورشکوہ 67
قرضی سے اجتناب واقعی امور پر فتوے 69
درس کےوقت شاگردوں کااملالکناخلفا اورحکام سےتعلق 71
دوراموی اوردور عباسیہ کااثر فکر امام 73
عمر بن عبدالعزیز کےحکاماتکااعتبار 74
حکام کےخلاف بغاوتیں فکر امام پر اثر 75
خوارج سے تکالیف 76
فتنوں سےاجتناب 78
حسن بصری اوراما م مالک میں موازنہ 80
امویہ کےمتعلق ان کاموقف اور کےمقام پر گفتگو 82
اورحصرت عباس سےروایت کم لینےکی وجہ ےس پر مصیبت 84
روایات کاختلاف اوراسباب 86
ہماراخیال 89
ابوجعفر یاولی مدینہ 90
تاریخی شہادتیں 91
خلفااور کی نصیحت 92
چھوٹے حکام کی تعریف سےمنع کرنا 95
مالک اوراس کااسباب 95
ہم عصر اوربعد کےعلماءکی 98
مالک مکی صفات اورخداعطیے قوت حافظ اورعلمی نشو نمامیں اس کااثر 100
طلب میں جدجہد 103
فتاوی میں وقت اور اخلاص 103
جدال سے دوری 107
بعض مناظرے 108
اورفتوے میں احتیاط 110
قاضیوں کےفیصلوں سے اجتناب 111
اورابو حنیفہ سےموازنہ قوت فراست 112
مالک کےشیوخ اوراساتذہ
مدینہ میں کی کثرت کاسبب 117
وسط میں مالک کی پرورش 119
فتاوی عمر کی مخصوص طلب 120
اورحدیث کےاساتذہ 121
ابن ہرمز سےحصول 122
نافع سےحصول 124
ابن شہاب سےحصول 126
ابو الزنا د سے حصول 126
یحیی بن 127
ربیع الرائی اوران کااثر مالک کےدل میں 127
ابن ندیم کےدعوے کابطلان 129
مالک اور ربیعہ کاختلاف 132
مالک کامطالعہ اورمخصوص 132
ہمیشہ موسم میں سے ملاقات 136
عراقی سےواقفیت 137
علماکے ساتھ مخصوص مجالس 137
علماسے مراسلت 138
اما م مالک کارسالہ اللیث کے نام 138
مالک کےنام اللیث کارسالہ 140
دونوں رسالوں سے نتیجہ 148
کازمانہ
سن رشد اموی دور میں 151
سیاسی حالت اورمالک کااس پر اثر 152
دولت عباسی 155
اجتماعی حالت 156
اس دور میں عقلی حالت 158
اس درو میں افکار ومذاہب 159
فکر میں یونانی 162
اور کی آمد 162
163
شہروں کاامتیاز 164
مدینہ 164
خلفاکے نزدیک مدینہ کامرتبہ 165
دوسروں کی بہ نسبت مدینہ کی منزلت 167
مدینہ میں سات فقیہ 168
ان کامختصر بیان 169
سعید بن المسیب 169
عرو ہ ابن وزبیرالعوام 172
ابو بکر بن عبید 173
القاسم بن محمد 173
عبید بن 173
سلیمان بن یسار 173
خارجہ بن زید 174
ان سات فقہامیں راےئ کی مقدار 174
رائے اور
کارائے پر چلنا اور اس کی مقدار میں اختلاف 177
تابعین کارائے پر چلنا اوراس کی مقدار میں اختلاف 178
اس زمانہ کاحال 180
جھوٹ کی کثرت اورسول سےنسبت 180
عراق میں رائے کی کثرت 182
مدینہ میں رائے 183
عراقی اورمدین میں فرق 185
مدینہ میں رائے کی مقدار 186
مدنی رائے کی حقیقت 188
فرقوں  کابیا ن 186
فرقہ 192
خوارج 192
اعتقادی فرقے 194
جبریہ 194
مرجیہ 194
قدریہ 195

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
12.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...