اسلام کا معاشی نظام اور معاشی نظریات

کا معاشی نظام اور معاشی

 

مصنف : سید محمد امین الحق

 

صفحات: 173

 

اسلامی ایک ایسا مضمون ہے جس میں معاشیات کے اصولوں اور کا نقطہ سے مطالعہ کیا جاتا ہے۔ اس میں یہ دیکھا جاتا ہے کہ ایک میں کس طرح چل سکتی ہے۔ موجودہ زمانے میں اس مضمون کے بنیادی موضوعات میں یہ بات شامل ہے کہ موجودہ معاشی قوتوں اور اداروں کو اصولوں کے مطابق کس طرح چلایا جا سکتا ہے ۔ اسلامی معیشت کے بنیادی ستونوں میں زکوٰۃ، خمس، جزیہ وغیرہ شامل ہیں۔ اس میں یہ تصور بھی موجود ہے کہ اگر صارف یا پیداکاراسلامی ذہن رکھتے ہوں تو ان کا بنیادی مقصد صرف اس دنیا میں منافع کمانا نہیں ہوگا بلکہ وہ اپنے فیصلوں اور رویوں میں کو بھی مدنظر رکھیں گے۔ اس سے صارف اور پیداکار کا رویہ ایک مادی مغربی کے رویوں سے مختلف ہوگا اور معاشی امکانات کے مختلف نتائج برآمد ہوں گے۔ اسلامی مالیات اور کاروبار کے بنیادی اصول وسنت میں بیان کردیے گئے ہیں۔ اور قرآن وحدیث کی روشنی میں علمائے امت نے اجتماعی کاوشوں سے جو تجویز کیے ہیں وہ سب کے لیے قابل قبول ہونے چاہئیں۔کیونکہ قرآن کریم اور رسول ﷺ کے بنیادی مآخذ کو مدنظر رکھتے ہوئے معاملات میں اختلافی کےحوالے سے وفقہاء کی اجتماعی سوچ ہی جدید دور کے نت نئے سے عہدہ برآہونے کے لیے ایک کامیاب کلید فراہم کرسکتی ہے ۔ زیر کتاب ’’ کا معاشی نظام اور معاشی نظریات‘‘مولانا سید محمد امین الحق کی تصنیف ہے ۔ فاضل مصنف نے بڑے محققانہ انداز میں اسلام کے نظامِ معاش ، وسائل معاش اور معاش پر کلام کیا ہے ۔خاص طور پر مصنف نے زراعت اور کاشتکاری سے متعلق مسائل کو قرآن وسنت اور عمل کی روشنی میں بڑی وضاحت سے پیش کیا ہے جس سے ان لوگوں کے شکوک بھی ختم جو جاتے ہیں جو اپنی بے مائگی کے سبب یہ سمجھتے ہیں کہ میں جاگیر داری نظام ہے۔اس کتاب کے مطالعہ سے اسلام کے نظام ِ معاش کےبارے میں لوگوں کےبہت شبہات دور ہوئے ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ 5
معاشی نظام 8
سرمایہ دارانہ نظام 10
11
اورجدید 11
حکمرانوں کی ذمہ داری 14
اہل شوریٰ کافیصلہ 16
نظام 20
اہل دولت کے اموال میں دوسروں کاحق 21
کےحق میں 23
کے اساسی 24
جملہ اشیاء تمام لوگوں کے نفع کےلیے ہیں 29
اقتصادی اور معاشی درجات 31
کی فراخی اورتنگی کی مشیت ہے 35
بسط اور کی 37
پیغمبرانہ مقاصد 42
قابل تبدیلی امور 45
نرمی اور جوئی کاسلوک 52
اور دوسرے نظام معاشی میں فرق 58
کاقانون 61
اور دوالگ الگ مسلک ہیں 62
کے وسائل 72
بنیادی معاشی وسائل کی ضرورت 75
معاشی وسائل میں اشتراک ومعاون 78
زمین کی آباد کاری 85
زمین پر ملک کیسے حاصل ہوتی ہے 89
حضرت بلالؓ کی جاگیر کی ضبطی 93
کاشت  کاری 98
تعاون اورامداد باہمی کاحکم کرتاہے 104
کے معاشی 108
جاگیرداری 109
ضروریات معاش سے زائد اراضی 112
زمین کو کرایہ پر نہیں دیناچاہیے 115
حضرت اسیدبن زہیرکابیان 120
حضرت رافع بن خدیج کی روایت 123
نقدی لگان میں زمین کاٹھیکہ 129
ارباب ونظر کا 133
کی مشروعیت کی دلیل 144
خیبر اور وادی قریٰ کی فتح 148
خیبرکی اراضی اور کی حیثیت 153
اراضی خیبرکی تقسیم 154
اور تابعین کا تعامل 158
فقہاء کے مسالک 163
169

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
5.2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...