اسلام کا نظام حکومت

کا نظام حکومت

 

مصنف : حامد انصاری غازی

 

صفحات: 469

 

کا نظام ِ حکومت سیاسی دنیا کےلیے ناموسِ اکبر ہے حاکمیت کی جان ہے ۔ نظام حکومت کا مآخذ کاآخری ہے۔تمام برائیوں کا خاتمہ کرتاہے اور تمام بھلائیوں کاح کم دیتا ہے جو انسان ِ کامل کو اللہ تعالیٰ کا نائب بناتا ہے۔ اوراسلام ایک کامل اور مکمل دستور ہے جہاں انفرادی زندگی میں فردکی پر زور دیتا ہے وہیں اجتماعی زندگی کے زرین وضع کرتا ہے جوزندگی کے تمام شعبوں میں انسانیت کی راہ نمائی کرتا ہے کا نظامِ وحکمرانی موجودہ جمہوری نظام سے مختلف اوراس کے نقائص ومفاسد سے بالکلیہ پاک ہے نظامِ میں جہاں عبادت کی اہمیت ہے وہیں معاملات ومعاشرت اور کو بھی اولین درجہ حاصل ہے، کا جس طرح اپنا نظامِ ہے اور اپنے اقتصادی ہیں اسی طرح کا اپنا نظامِ وحکومت ہےاسلامی نظام میں ریاست اور دین اور سلطنت دونوں ساتھ ساتھ چلتے ہیں، دونوں ایک دوسرے کی تکمیل کرتے ہیں دونوں ایک دوسرے کے مددگار ہیں، دونوں کے تقاضے ایک دوسرے سے پورے ہوتے ہیں، چنانچہ ماوردی کہتے ہیں کہ جب کمزور پڑتا ہے تو حکومت بھی کمزور پڑ جاتی ہے اورجب دین کی پشت پناہ حکومت ختم ہوتی ہے تو دین بھی کمزور پڑ جاتا ہے، اس کے نشانات مٹنے لگتے ہیں۔ فکر میں اورسیاست کی دوری کاکوئی تصور نہیں پایا جاتا اور کا اسی کانتیجہ ہے کہ ہمیشہ اپنی حکومت کواسلامی اصولوں پر قائم کرنے کی جدوجہد کرتے رہے۔ یہ جدوجہد ان کے وایمان کاتقاضہ ہے ۔ پاک اور نبویہ میں جس طرح اخلاق اور حسنِ کردار کی موجود ہیں۔اسی طرح معاشرت، اور حکومت کے بارے میں واضح احکامات بھی موجود ہیں۔ زیر کتاب’’ کا نظام حکومت‘‘مولانا حامد الانصاری غازی کی تصنیف ہے۔ اس کتاب میں انہوں نے اسلام کی ریاستِ عامہ کا مکمل دستورِ اساسی اور ضابطۂ حکومت جس میں اسلام کےنظامِ حکومت کے تمام شعبوں ،اس کےنظریہ وسیادت کے تمام گوشوں ، ریاست ومملکت اور اس کےمتعلقات اور عام دستوری کو وقت کی نکھری ہوئی اورجدید تقاضوں کی روشنی میں نہایت تفصیل سے واضح کیاگیا ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
فہرست
نقش آغاز 4
نظام اور قدیم نظریے 7
عصر
یونانی نظریہ
چین اور ہند
 نظریہ عجم
ونصاری
نظریہ عصر حاضر
ترتیب و تدوین کے محرکات 9
حکومت کے تکوینی اور
ارتقائی دور 11
ابتدائی دور 12
اجتماعی دور
نتظیمی دور
دور حکومت
 مسلمانوں کا دور حکومت
دور
مسلمانوںکا دور 14
مناسب طریق کار 15
حکومت کا مفہوم 17
پستانوی کا نظریہ 21
حکومت کی پہلی تقسیم 22
دینی حکومت ۔ دنیاوی حکومت
نطر یہ دینی
نظریہ دنیاوی 23
لار ڈ برائس کی رائے 25
علامہ و جدی کی تصریح 26
شیروانی کی تصریح
شریعتیں اور سلسلہ
انبیار 27
خلفا ء
ملک سیاسی 28
امام شاہ ولی اللہ  کی تصر یحات
اہم اور تاریخی نظریے 34
نظریہ ربانی
مہا تمابدھ کا نظریہ 35
حکومت کا قیام 37
نظیریہ ابتدائی
نظریہ حکومت آبائی 38
نظریہ معاہدہ عمرانی 39
زمانہ کی حکومتیں
ہندوستانی سلطنتیں 40
مصری سلطنتیں
بنی اسرائیلی سلطنتیں
یونانی سلطنت 40
روما کی سلطنت 41
کلیسائی حکومتیں
جرمن ٹیوٹن سلطنت
حکومت بحیثیت تنظیم انسانی
انسانی حکومتیںاور ان کی قسمیں
تین اچھی حکومتیں 42
زمانہ حال کی حکومتیں
شاہی گیر شاہی
دستور شاہی
شہنشاہی
اعیانی
عمومی حکومت
جمہوریت
مرکزی حکومت
لامرکزی حکومت 44
فیڈ رل ( وفاقی) حکومتیں
و حدانی حکومتیں
وفاقی حکومتیں ۔ و فاقی عہدیت
فطری حکومت 42
فطری حکومت کے غاصر ترکیبی 48
نبوت کا منصب عظیم اور
کی آئینی حیثیت 49
کے اجئما عیا ت کی آراء 52
قوت 53
ربان قوت 53
ربانی مہم 54
ربانی سفارت
قرآن حکیم میں کی فطری
حکومتوں کا ذکر 57
ابتدائی دور
تنظیمی دور 58
کے دو طبقتے
فطری حکومت
سیاسی 61
اسلامی کی تخلیق
انسانی کے تکوینی درجات 62
ربانی معاہد ہ انسانی تکویں سے پہلے 63
فطری کا ابتدائی ظہور 64
انسانی کی تفیہم 65
سےپہلے تاریخی
حکومتیں 66
جزیر ۃ العرب کے محل وقوع پر
ایک 68
جزیرہ نمایا جزیرہ
جزیرۃ العرب کے میں چند 70
کا سیاسی 71
علاقوں کی تقیسم 72
اور اس کی اجتماعی نظام 73
کی قدیم قومیں 74
عدنانی کی قدیم قومیں 74
عدنانی اور قحطانی عرب
ریاست فسان 75
ریاست حیرہ 76
ریاست کندہ
عصر جاہلیت کی امارت 77
اعظم سے پہلے تاریخی ملکوں
اور قوموں کی حالت 81
ایشیا 82
دور 83
عہد محمدی
راشدہدوراول
اول سیاسی آثار 88
سردار امت کی پیدائچ
واقعہ بحرالا سیاسی پہلو 90
اجماعی کردار 92
سوسائٹی کی بناء
انسانی سو سائٹی کی تنظیم 93
خفیہ انجمن 94
دارالاسلام
ہجرت ایک سیاسی
کی حیثیت سے
پیغمبراعظم مد بر حکومت کی
حیثیت سے 95
اعظم کے اجتماعی کارنامے 92
حکومت 100
راشد ہ ( ریاست عامہ )
دوراول 100
حکومت صدیق اکبر ؓ
کے عہد میں 101
صدیق اکبر اک سیاسی مرتبہ
اسلام  کی ایک سیاسی حقیقت 104
نظام حکومت 108
حکومت نظام 110
حکومت فاروق اعظم ؓ
کے عہد میں
منصب 111
نظام حکومت 112
خلاف راشدہ
دور دوم 114
حکومت حضرت
عثمانؓ کے عہد میں
نظام حکومت 112
حکومت حضرت
علیؓ کے عہد میں 118
دفعہ اور حکومت 124
قانو نی تشریحات اور نظائر
اور 127
چند قانونی حوالے 129
ایک عظیم تاریخی واقعہ 132
حکومت کا زمانہ 134
دفعہ 2 حکومت
کی عام حقیقت 134
حکومت کی تعریف
قانونی تشریحات 141
قرآن عظیم کے 142
حکم 142امانت 146
142 نعمت 147
علما امت کے 148
حکومت اعلیٰ 150
دفعہ 3
حکومت الٰہی
فرمانروائے اعلیٰ 151
دفعہ 4
دفعہ 5فرمانروائے اعلیٰ کے نام 156
دفعہ 6 فرمانروائے اعلی ٰ کی خصو صیات
دفعہ7 فرما نرد اعلیٰ کے حقو ق و
اختیارات 153
تشریحات 154
دفعہ 8اقتدار اعلیٰ 159
قرآن عظیم اور اقتدار علیٰ
قانونی تشریحات 141
اقتدار اعلیٰ کی خصوصیات
وحدت اقتدار
قدرت عامہ 162
آزادی ۔ جلالت عامہ 164
زندگی  ودوام ۔ نظائر 165
جدید نظریہ اور اس کی تنقید 166
دفعہ9 ریاست عامہ 170
نیا بتی حکومت
دفعہ10 حکومت
کا 171
نیابتی حکومت
قانونی تشریحات 172
قانون 180
قانون 183
یادداشت 184
اجماع ۔ یادداشت 185
شوریٰ ،۔قانون 186
اجتہاد ۔ قانون 187
فقہا ء قانون ، یاددواشت 188
ارتقا پذیر 189
دفعہ 11 حکومت
اور 190
تشریحات اور نظارئر
اور
یادداشے 199
حاضرہ اور مروز 200
یادداشت 201

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
10.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...