اسلام کا قانون اراضی

کا اراضی

 

مصنف : نصرت علی اثیر

 

صفحات: 128

 

زراعت اور کا رشتہ آفرینش انسانی سے شروع ہو جاتا ہے۔اگر غور کیا جائے تو لا تقربا من ھذہ الشجرۃ کا اشارہ اس طرف ہے کہ زراعت کی طرف رغبت انسانی فطرت میں شدت کے ساتھ موجود ہے اور مطلوب یہ ہے کہ زراعت کی یہ شدید رغبت دائرہ رضا الہی کے اندر محدود رہے۔یہ آیت انسانی میں زراعت اور شجر کاری کا تعین بھی کرتی ہے۔یعنی کے وجود میں آنے سے پہلے درخت موجود تھا۔گویا انسان نے جو سب سے پہلا مشاہدہ کیا وہ زمین کے روئیدگی کے عمل کا مشاہدہ تھا۔انسان کی جسمانی بقاء کا دارومدار بھی کلی طور پر زراعت پر ہے۔کیونکہ جسمانی بقاء کے لئے نباتات از بس ضروری ہیں۔انسان آج کے دور کا ہو یا قبل از تاریخ کا کسی نہ کسی طرح زراعت سے وابستہ ضرور رہتا ہے۔ کرام علیھم السلام کی میں زراعت کے بارے میں واضح تعلیمات موجود ہیں۔ بننے کے بعد زراعت میں بھی کچھ نئے پیدا ہوئے ،مثلا متحدہ میں مسلم ملکیت کی زمینوں کے بارے میں الجھن تھی کہ یہ خراجی ہیں یا عشری؟ زیر کتاب ” کا اراضی “محترم نصرت علی اثیر صاحب کی تصنیف ہے ،جس میں انہوں نے عشر کے انہی مسائل کااسلامی   بیان کیا ہے۔یہ کتاب مرکز دیال سنگھ ٹرسٹ لائبریری کے زیر اہتمام تیار کی گئی ہے۔ تعالی سے ہے کہ وہ مولف کی اس کاوش کو قبول فرمائے اوران کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
تقدیم 7
پیش لفظ 9
باب اول زراعت : تاریخی پس منظر 10
زراعت کا لغوی و اصطلاحی مفہوم 10
افزائش نسل انسانی اور زراعت 11
پیدواری فصلیں اور پھل دار 15
کمال 16
کپاس 16
پھل 17
کیلا 17
ناریل 18
قدیم میں زراعت کا تصور 18
زراعت اور طلو ع 28
باب دوم 35
ررعی اصلاحا ت عہد نبوی میں 35
عقائد کی 35
اخلاقی اقدار کا حیاء 38
خوف آخرت 44
فضیلت زراعت کا اجا گر کرنا 50
تنظیم 55
پرورش حیوانات 56
ثحم کسی اور رزعی 58
رز قرضے 59
نطام ا ٓب پاشی کی ترقی 60
ملکیت زمین 62
قوانین 65
رزعی لگان 73
بند و بست اراضی اور رزعی بستیاں 78
باب سوم : خلفائے راشد ین کے دور میں زراعت 79
عہد صدیقی میں رزعی اصلاحات 79
قابل قبول رزعی نظام اور فتوحات 80
صوبہ جاتی تقسیم 81
بیت المال کا قیام 82
 عمال کے ہدایت نامے 83
محاصل کی شرح کا تقرر 83
کاشت پر داخت کیلئے قطا ئع کی بخشی اور لگان کر تقرر 84
زرعی طبقات کی دلجوئی 85
گھر یلو دستکاریوں کی تر ویج 86
عہد فاروقی کی رزعی اصلاحات 87
صیغہ محاصل کی نتظیم نو 88
مردم شماری 88
خراج کا تقرر 88
زمین کی پیمائش 88
جاگیربخشی 59
بند و بست اراضی 90
بے اباد رنینوں کی ا ٓباد کاری کی تحریک 91
بیت المال 92
نظامت نافعہ ( محکمہ رفاہ عامہ) 93
و نظریاتی تربیت 93
عہد عثمانی میں رزعی اصلاحات 94
عمال کے کاموں کی نگرانئ 94
اصحاب فے کے وظائف  میں اضافہ 95
بند مہروز کی تعمیر 95
ذمی کاشتکاروں کی داد رسی 96
دور عثمانی کا زرعی 96
عہد علوی کی زرعی اصلاحات 97
عمال کی تبدیلی 97
مالگزاری کا انتظام 100
رفاہ عامہ کے اقدامات 101
گھوڑوں کی پر زکواہکا استثناء 101
باب چہارم ؛ممالک محروسہ کا نظام زراعت اور فتوحات 102
باب پنجم : اراضی 114
ملکیت زمین اور ملکیت کا مفہوم 114
ملکیت کا تصور میں 114
آثار ملکیت 114
اور جاگیر داری 114
جاگیر داری کی قباحتیں 114
احوال 114
معاشرتی عدل کے اقدامات 114
انتظامیہ کی تطہیر 114
نئے بند وبست اراضی کی ضرورت 114
مزار عین کےلیے مراعات 114
سیاسی نظام میں تبدیلی 114
زراعت و 114
خود کا شتکاری کی فضیلت 114
114
کی نا جائز شکلیں 114
کی جائز صورتیں 114
ائمہ اور 114
آب پاشی 114
ذرائع آب کی حریم 114
انفرادی اجتماعی ملکیت 114
ضمیمہ : ۔رسائل و کتب برائے مطالعہ 115

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...