اسلام کا تصور آزادی

کا تصور

 

مصنف :

 

صفحات: 352

 

کی زندگی دکھ سکھ، غمی و خوشی، بیماری و صحت، نفع و نقصان اور و پابندی سے مرکب ہے۔ اس لیے نے صبر اور شکر دونوں کو لازمی قرار دیا ہے تاکہ بندہ ہر حال میں اپنے خالق کی طرف رجوع کرے۔ دکھ ، غمی، بیماری، نقصان اور محکومیت پر صبر کا حکم ہے اور ساتھ ساتھ ان کو دور کرنے کے اسباب اختیار کرنے کا بھی حکم ہے جبکہ سکھ ، خوشی، صحت، نفع اور پر شکر کرنے کا حکم ہے اور ساتھ ساتھ ان کی قدردانی کا بھی حکم دیا گیا ہے۔ اگر دونوں طرح کے حالات کو شریعت کے مزاج اور منشاء کے مطابق گزارا جائے تو باعث اجر وثواب ورنہ وبال جان۔لیکن ہمارا المیہ یہ ہے کہ ہم دونوں حالتوں میں خدائی کو پس پشت ڈالتے ہیں۔ مشکل حالات پر صبر کے بجائے ہائے ہائے، مایوسی و ناامیدی اور واویلا کرتے ہیں جبکہ خوشی کے لمحات میں حدود شریعت کو یکسر پامال کردیتے ہیں۔ اس کی بے شمار مثالیں ہمارے سامنے ہیں۔ آپ نے اکثر دیکھا ہو گا کہ جب کسی گھر میں کوئی فوتگی ہو جاتی ہے تو لوگوں کی زبانیں خداوندی پر چل پڑتی ہیں اور مرنے والے کو کہہ رہے ہوتے ہیں کہ “ابھی تو تیرا وقت بھی نہیں آیا تھا” وغیرہ وغیرہ۔ کے مد مقابل یوں تو غلامی کا لفظ آتا ہے اور غلامی کا مفہوم عام طور پر یہی سمجھا جاتا ہے کہ کوئی یا گروہ، قوم یا نسل کسی دوسرے انسان، گروہ، قوم یا نسل کے ہاتھوں غلام بنا دی جائے۔دنیا بھر میں مختلف ممالک سال میں اپنے وطن کے لیے ایک دن ایسا مقرر کرتے ہیں کہ جس میں ان کے عوام اور حکومت وطن کی کی آزادی کا دن مناتے ہوئے ملک کی تعظیم کرتے ہیں۔ اس دن کو ”وطن کا دن ”یا یوم آزادی کہا جاتا ہے۔ یہ دن ہر سال منایا جاتا ہے۔ جوکہ شریعت اسلامیہ کی کےخلاف ہے۔ زیر کتاب ’’ کا تصور آزادی‘‘ اسلامک اکیڈمی، کی جانب سے اکتوبر 2012ء میں اسلام کا تصور جیسے اہم موضوع پر منعقد کیے گئے سیمنیار میں پیش کیے گیے کا مجموعہ ہے۔ اس سیمینار میں اور دینی جامعات کے فضلاء کے دوش وبہ دوش دانشوروں اور عصری جامعات کے فارغین نے بھی شرکت کی اور بیش قیمت مقالات پیش کیے۔ سکالرز نے موضوع کے مختلف پہلوؤں پر کھل کر اظہار رائے کیا اور موضوع سے متعلق مختلف گوشوں پر روشنی ڈالی۔ توڈاکٹر نے ان قیمتی مقالات کو بڑی خوش اسلوبی سے کتابی صورت میں مرتب کیا اور اسلامک فقہ اکیڈمی، نے اسے افادۂ عام کے لیے حسنِ طباعت سے آراستہ کیا۔

 

عناوین صفحہ نمبر
پہلا باب: تمہیدی امور
رپورٹ سیمینار 13
کلیدی خطبہ 16
تجاویز 28
دوسرا باب:
فکر و کی اور 35
آزاد عوامی حکومت۔ تصور 39
میں کا تصور 104
میں کا بنیادی تصور 117
میں فکر و اور اظہار رائے کی 153
میں کا بنیادی تصور 241
میں کا   تصور 259
میں کا بنیادی تصور 266
کی روشنی میں فرد کی سیاسی 342

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.4 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...