اسلامی قانون فوجداری ترجمہ کتاب الاختیار

فوجداری کتاب الاختیار

 

مصنف : نا معلوم

 

صفحات: 464

 

فوجداری ضابطہ یا ضابطہ تعزیرات ایک دستاویز ہے جس میں کسی مقام پر عمل در آمد ہونے والے تمام یا بیشتر جرائم کے کو یکجا کیا جاتا ہے۔ عموماً ایک ضابطہ تعزیرات جرائم کا احاطہ کرتا ہے جو عمل در آمد علاقے میں تسلیم کیے گئے ہیں، جرمانے جو ان جرائم پر عائد ہوتے ہیں اور کچھ مخصوص پہلوفوجداری ضابطے عمومًا دیوانی قوانین مشترک ہیں، جس کی وجہ یہ ہے کہ ان سے قانونی نظاموں کی تشکیل پاتی ہے ان ضابطوں اور اصولوں پر جو نسبتاً مبہم ہیں اور انہیں معاملوں کی اساس پر رو بعمل لایا جاتا ہے۔ اس کے برعکس وہ شاذ و نادر ہی عام عمل درآمد کرنے والے علاقوں میں نافذ العمل ہوتے ہیں۔انگریزوں کی واپسی کے بعد، تعزیرات ہند کو ورثے میں ملا۔ بعد ازاں ان تعزیرات میں فوجداری کی متعدد دفعات بھی شامل کی گئیں۔ زیر کتاب ’’اسلامی فوجداری ‘‘ مولانا سلامت علی خان المعروف حذاقت خان محمد پوری کی کتاب ’’ الاختیار‘‘ کا ہے یہ کتاب 1212ھ میں قاضیوں اور عام یافتہ حضرات کی رہنمائی کے لیے تیار کی گئی تھی اس کتاب کو اس وقت بڑی شہرت اور مقبولیت حاصل ہوئی ۔ دان حضرات اسے استفادہ کرتے ہیں حتیٰ بعض حنفیہ میں یہ داخل نصاب ہے ۔صاحب کتاب محمد آباد میں عدالت مرافعہ میں بطور فیصلہ نویس وریسرچ آفیسر کام کرتے تھے۔انہوں نے اس کتاب میں تمام تعزیرات وجرائم کے متعلق قانونِ فوجداری کی تمام دفعات مختلف ابواب وفصول میں حنفی کی مستند کتابوں کے حوالے سے نہایت جامعیت کے ساتھ جمع کردی ہیں ۔اس کتاب کی افادیت کےپیش نظرمیر احمد شریف وکیل حیدرآباد کی فرمائش 1929ء میں ’’ دار المصنفین اعظم گڑھ‘‘ نے اس کتاب کا ارد وترجمہ کرواکر شائع کیا۔اسی ترجمے کو سنگ میل پبلی کیشنز ،لاہور نے شائع کیا ہے ۔ تعزیرات ، قصاص ودیت سے متعلق اب کئی جدید کتب اردو میں طبع ہوچکی ہیں۔کتاب ہذا کو محض قدیم کتاب ہونے کی وجہ سے قانون دان حضرات کے استفادے کے لیے کتاب وسنت سائٹ پر پبلش کیا گیا ہے۔کتاب کے مندرجات سے ادارے کا کلی اتفاق ضروری نہیں ہے ۔

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
15.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...