اسلامی قانون ارتداد

ارتداد

 

مصنف : ڈاکٹر تنزیل الرحمن

 

صفحات: 117

 

مرتد کی سزائے قتل کے معاملے میں آنحضرتﷺ کے زمانے سے لے کر عہد حاضرتک تمام مجتہدین اور علمائے کا اتفاق رائے پایا جاتا ہے، لیکن ہمارے جدید یافتہ طبقہ کا ایک مغرب زدہ گروہ نبوی، آثار صحابہ، مجتہدین کی آرا اور چودہ سو سالہ تعامل کے الرغم مرتد کی سزائے قتل کو جائز نہیں سمجھتا۔ ایسے میں محترم ڈاکٹر تنزیل الرحمٰن  نے زیر کتاب لکھ کر میں ارتداد کی سزا سے متعلق کھل کر اظہار خیال کیا ہے۔ یہ کتاب اسلامی قانون میں مرتد کی سزا، مالی تصرفات پر پابندی، و میراث سے محرومی اور اس کی اولاد کے بارے میں متعلقہ پر مشتمل ہے۔ اس میں سب سے پہلے ارتداد کے لغوی اور شرعی معنی کو قرآن، اور مستند کتب کی عبارتوں کے ذریعہ مشخص کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ ارتداد کی شرائط ذکر کرنے کے بعد ارتداد کے اثرات اور نتائج سے بحث کی گئی ہے۔ یہ اثرات و نتائج مرتد کی ذات سے متعلق ہیں۔ موجودہ دور میں اہمیت کے اعتبار سے مرتد کی ذات سے متعلق اور بالخصوص ’مرتد کی سزائے قتل‘ کے بارے میں مفصل گفتگو کی گئی ہے۔ مرتد کے بارے میں شرعی نقطہ جاننے کے لیے اس کتاب کا مطالعہ بہت مفید ہے۔
 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ 5
مرتد کے احکام میں 10
باب 1۔ارتداد کے معنی ومفہوم 15
ارتداد نبوی میں 20
ارتداد میں 22
باب 2۔شرائط ارتداد 25
نتیجہ فکر 28
اکراہ کی تعریف وقسمیں 31
اکراہ تام 31
اکراہ ناقص 32
شرائط اکراہ 32
باب3۔موجبات ارتداد 33
ارتداد اعتقادی 33
قول میں ارتداد 35
کو برا بھلا کہنا 36
کفر اور قتل 38
ارتداد کا ثبوت 39
باب4۔ارتداد کے اثرات ونتائج 41
مرتد کی سزا 41
جرمانہ یا تاوان 42
مرتد کی سزا اور کریم 43
ایک اور دلیل 47
میں مرتد کی سزا 51
راشدہ کے نظائر 58
اجماع امت 62
ارتداد اور 64
مالکی 66
جدید نقطہ 68
مرتد اور جزیہ 73
تفریق کی نوعیت 77
مرتد کی میراث 83
پاکستانی 87
مرتد کا ولایت 88
ضمیمہ 90
تنبیہ 96
حواشی 108

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...