اسلامی ثقافت اور دور جدید

ثقافت اور دور جدید

 

مصنف : مارما ڈیوک ولیم پکتھال

 

صفحات: 210

 

مغرب اور یا اسلام اور مغرب اس دور کا گرم موضوع ہے ۔ چراغ مصطفوی سے شرار بولہبی ہمیشہ ہی ستیزہ کار رہا ہے ۔ لیکن ہر دور کے  افراد اپنے دور کو ہی سمجھتے ہیں ۔ جب کہ تاریخ اپنے آپ کو دہرا رہی ہوتی ہے ۔ مغرب سے تعامل کی وجہ سے آج جو تہذیبی اور ثقافتی مسلمانوں کو درپیش ہیں محسوس ہوتا ہے کہ نئے اور جدید ہیں ۔ ماضی قریب کی تاریخ پر ڈالیں تو ایسے نئے اور جدید بھی نہیں ستر ، پچتر برس قبل اور اس سے بھی قبل ، ہندستان پر برطانوی قبضے کے بعد جو دور گزرا یہ اس دور کے بھی ہیں ۔ ان مسائل کے حوالے سے مؤقف کو پیش کرنے کے لیے بہت کچھ لکھا گیا ۔ لیکن جو بات مغرب کے اپنے فرزندکی و قلم سے ہو سکتی ہے و کسی سکہ بند عالم کے بیان میں شائد ملے ۔ محترم محمد مارما ڈیوک پکتھال ایک نومسلم عالم تھے ۔ وہ اپنی ذات میں ایک عالم ، ادیب ، صحافی ، محقق ، مفکر ، مترجم اور خطیب و مبلغ تھے ۔ انہوں نے اپنی زندگی کے احیا اور جدید دنیا کے سامنے مؤقف واضح کرنے کی بھرپور کوشش فرمائی ۔ انہیں جزائے خیر عطا فرمائے ۔ موصوف نے امت کے جدید فکر میں موقف کی بہترین ترجمانی فرمائی ہے ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
پیش لفظ 9
محمد مارماڈیوک پکتھال 11
خطبہ اول ۔ تہذیب 35
خطبہ دوم۔اسباب عروج وزوال 45
مسلمانوں کی ہمسایہ اقوام 45
یا تلوار 46
مسلمانوں کی رواداری 47
غلامی 53
55
زوال کے اسباب 57
دانش گاہیں 58
علما کی تنگ نظری 61
کی صداقت پسندی 62
اور ترکوں کے کارنامے 63
خطبہ سوم ۔اخوت 68
حجۃ الوداع 68
اخوت 71
74
دولت کا حصول اور مصرف 75
اور 78
78
اور کا معاشی نظام 80
82
خطبہ چہارم ۔ اور 87
کیمیا 87
طبیعیات 88
جغرافیہ 89
طب 89
90
نقاشی 91
داستان گوئی 93
تعمیرات 96
تراجم 98
98
100
تصورف 101
خطبہ پنجم۔رواداری 114
کافر ، مشرک اور اہل کتاب 114
تاریخی 120
سلطنت میں ایک وقف 125
خطبہ ششم۔ پرستی 137
137
توشہ 147
خطبہ ہفتم۔ میں عورت کا مقام 156
156
165
بیوگان 169
تعداد ازدواج 170
خطبہ ہشتم۔ اور رسولﷺ کی حکمرانی یعنی حکومت 181
اخوت 181
جنگ اور قومیت 195
ریاست 197
اشاعت اور تعلیم کی نوعیت 200
کا احیاء 201
202
پرستی 203
عورتیں 302
اور غیر اسلامی ادارے 306

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...