جدید تجارتی شکلیں شرعی نقطۂ نظر

جدید تجارتی شکلیں شرعی نقطۂ

 

مصنف : قاضی مجاہد الاسلام قاسمی

 

صفحات: 676

 

ہرمسلمان کے لیے اپنے دنیوی واخروی تمام معاملات میں شرعی اور دینی کی پابندی از بس ضروری ہے کیونکہ تعالیٰ کا فرمان ہے :َیا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا ادْخُلُوا فِي السِّلْمِ كَافَّةً وَلَا تَتَّبِعُوا خُطُوَاتِ الشَّيْطَانِ إِنَّهُ لَكُمْ عَدُوٌّ مُبِينٌ(سورۃ البقرۃ:208)’’اے اہل ایمان میں پورے پورے داخل ہوجاؤ اور شیطان کے قدموں کے پیچھے مت چلو ،یقیناً وہ تمہارا کھلا دشمن ہے ‘‘۔کسی کے لیے یہ جائز نہیں کہ وہ عبادات میں تو کتاب وسنت پر عمل پیرا ہو او رمعاملات او رمعاشرتی میں اپنی من مانی کرے او راپنے آپ کوشرعی پابندیوں سے آزاد تصور کرے۔ ہمارے کی وسعت وجامعیت ہےکہ اس میں ہر طرح کے تعبدی امور اور کاروباری معاملات ومسائل کا مکمل بیان موجود ہے۔ ان میں معاشی زندگی کے مسائل او ران کے کو خصوصی اہمیت کے ساتھ بیان کیاگیا ہے ہر بہ آسانی انہیں سمجھ کر ان پر عمل پیرا ہوسکتاہے۔ تجارت، لین ، اورباہمی معاہدہ کی مختلف دور میں مختلف صورتیں رائج رہی ہیں ، بہت سے عقود اورمعاملات بنیادی طور پر قدیم زمانہ میں بھی رائج تھے او رعہد جدید میں ان کی ترقی یافتہ صورتیں رائج ہوگئیں ہیں۔ تجارتی میں ایک اہم یہ ہےکہ کیا خریدی ہوئی چیز پر قبضہ کرنے سے پہلے اس کو فروخت کیا جاسکتاہے یا نہیں اوراس کا منافع حاصل کرنا جائز ہوگا یا نہیں؟ آج قبضہ کےعنوان سے بہت سارے مسائل پیدا ہورہے ہیں لہذا ان مسائل کے پیش نظر  ’’مجمع الفقہ الاسلامی الہند ‘‘ نے ’’بیع قبل القبض ‘‘کےعنوان پر 14 ؍اکتوبر 1996ء جے پور(انڈیا) نواں فقہی سیمنار میں منعقد کروایا۔ زیر کتاب’’ جدید تجارتی شکلیں شرعی نقطۂ نظر ‘‘مذکورہ سیمینار میں اور ارباب افتاء کی طرف سے پیش گیے کا مجموعہ ہے۔ مقالہ نگاروں نے وحدیث کی عبارات واشارات اور اربعہ کے اجتہادات کو سامنے رکھ کر اپنا نقظہ پیش کیا کرنے کی کوشش کی ہے۔ اردو میں اپنے موضوع پر منفرد کتاب ہے۔ موضوع کی اہمیت وضرورت اور افادیت کے پیش نظر اسلامک اکیڈمی نے اسے کتابی صورت میں شائع کیا ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
پیش لفظ۔۔۔ مولانا رحمانی 11
افتتاحیہ۔۔۔ حضرت مولانا قاضی مجاہد الاسلام قاسمی 15
پہلا باب تمہید امور
اکیڈمی کا فیصلہ 21
سوالنامہ 23
تلخیص مقالات۔۔۔ اختر ندوی 26
عرض 38
سوال نمبر 1: رحمانی 38
سوال نمبر 2: مفتی فہیم اختر ندوی 48
قبضہ کی حقیقت اور قبضہ سے پہلے خریدو فروخت فقہ کی روشنی میں 81
قبضہ سے پہلے خرید و فروخت اور قبضہ کی نوعیت 97
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت۔ اصولی مباحث 125
میں قبضہ سے پہلے خریدو فروخت 150
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت میں فساد و بطلان کی تعین 228
خریدو فروخت میں قبضہ کی حقیقت اور اس کا مفہوم 241
بیع میں تحریری وثائق و دستاویز پر قبضہ کی حیثیت 284
قبضہ شرعی سے قبل اشیاء کی خریدو فروخت کا شرعی حکم 344
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت کی ممانعت عمومی یا خصوصی 371
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت سے متعلق چند جدید 487
خرید و فروخت میں تخلیہ کی حیثیت 501
قبضہ سے پہلے بیع کی شرعی حیثیت 515
اشیاء کی نوعیت کے اعتبار سے قبضہ کا تیعن 519
خریدو فروخت میں قبضہ اور تخلیہ کی شرعی معیار 553
میں قبضہ سے پہلے خریدو فروخت کا حکم 556
بیع و شر میں قبضہ حسی حکمی کی نوعیت 564
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت اور کا حکم 568
خریدو فروخت میں وثیقہ اور کی حیثیت 577
میں قبضہ کا مفہوم و مصداق 579
کتاب و کی روشنی میں قبضہ کی حقیقت 589
میں قبضہ سے پہلے خریدو فروخت کا اعتبار 598
بیع پر قبضہ سے پہلے اس کی فروختگی کا حکم 608
قبضہ سے پہلے بیع و شراء کا شرعی حکم 213
اشیاء منقولہ کی بیع قبضہ سے پہلے 619
قبضہ سے پہلے کسی چیز کو فروخت کرنا 224
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت اور فقہاء کی تشریحات 642
اشیاء منقولہ اور غیر منقولہ میں قبضہ کا حکم 645
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت اور اس کے چند اہم پہلو 652
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت 661
قبضہ سے پہلے خریدو فروخت کا شرعی حکم 669
قبضہ سے متعلق کی حیثیت اور غرر کے 675

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
12.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...