سیرت عائشہ رضی اللہ عنہا (سید سلیمان ندوی)

عائشہ رضی عنہا (سید سلیمان ندوی)

 

مصنف :

 

صفحات: 350

 

ام المومنین سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ ، حضرت ابوبکر صدیق ﷜ کی صاحبزادی تھیں۔ والدہ کا نام زینب تھا۔ ان کا نام عائشہ لقب صدیقہ اور کنیت ام تھی۔ حضور ﷺ نے سن 11 نبوی میں سیدہ عائشہ ؓ سے کیا اور 1 ہجری میں ان کی رخصتی ہوئی۔ آپ حضور ﷺ کی سب سے کم عمر زوجہ مطہرہ تھیں۔ انہوں نے حضور ﷺ کے ساتھ نو برس گذارے۔ ام الموٴمنین حضرت سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ عنہاوہ خوش قسمت ترین عورت ہیں کہ جن کو حضور کی زوجہ محترمہ اور ”ام الموٴمنین“ ہونے کا شرف اور ازواج مطہرات میں ممتاز حیثیت حاصل ہے۔ و اور کے اوراق آپ کے و مناقب سے بھرے پڑے ہیں۔ام الموٴمنین حضرت سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ عنہاسے سے قبل حضور نے میں دیکھا کہ ایک فرشتہ ریشم کے کپڑے میں کوئی چیز لپیٹ کر آپ کے سامنے پیش کر رہا ہے… پوچھا کیا ہے؟ جواب دیا کہ آپ کی ہے، آپ نے کھول کہ دیکھا تو حضرت عائشہ ہیں۔ میں حضرت ابو موسی اشعری سے روایت ہے کہ رسول ﷺنے فرمایا ” مردوں میں سے تو بہت تکمیل کے درجے کو پہنچے مگر عورتوں میں صرف مریم دختر عمران، آسیہ زوجہ فرعون ہی تکمیل پر پہنچی اور عائشہ کو تمام عورتوں پر ایسی فضیلت ہے جیسے ثرید کو تمام کھانوں پر ۔آپ ﷺکو حضرت عائشہ صدیقہ ؓ عنہا سے بہت محبت تھی، ایک مرتبہ حضرت عمرو ابن عاص ﷜ نے حضور سے دریافت کیا کہ… آپ دنیا میں سب سے زیادہ کس کو محبوب رکھتے ہیں؟ آپ نے فرمایا کہ عائشہ ؓ عنہا کو، عرض کیا گیا کہ اے اللہ کے رسول! مردوں کی نسبت سوال ہے! فرمایا کہ عائشہ کے والد ابوبکر صدیق ﷜ کو۔ام الموٴمنین حضرت سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ عنہا کا امت مسلمہ پر بہت بڑا احسان ہے کہ ان کے مبارک واسطہ سے امت کو کا بڑا حصہ نصیب ہوا۔حضرت ابو موسیٰ اشعری ؓ عنہ فرماتے ہیں کہ کرام ﷢کو کبھی ایسی مشکل پیش نہ آئی جس کے بارے میں ہم نے حضرت عائشہ ؓ عنہا سے پوچھا اور ان سے اس کے بارے میں کوئی ہم کو نہ ملی ہوں۔ حضور ﷺ وصال کے 48 سال بعد 66 برس کی عمر میں 17 المبارک 58 ہجری میں وصال فرمایا۔سید عائشہ رضی تعالی عنہا کی زندگی خواتین کے لیے بہترین نمونہ ہے۔ زیر تبصرہ ’’ عائشہ‘‘برصغیر پاک وہند کے نامو ر مؤرخ اور سیرت نگار   علامہ سید سلیمان ندوی ﷫ کی ابتدائی تصنیف ہے۔ 1920ء میں یہ کتاب پہلی بارشائع ہوئی۔ اس کے بعد اس کتاب کی جامعیت اور مقبولیت کی وجہ سے اس کے کئی ایڈیشن شائع ہوئے ہیں۔ موجودہ ایڈیشن دارالابلاغ، لاہورنے نئی اور تخریج وتسہیل کے اہتمام کےساتھ ایک نئے خوبصورت دیدہ زیب انداز میں شائع کیا ہے۔ کتاب میں موجود وآثار کی مکمل تخریج فاضل نوجوان محترم نصیر احمد کاشف نے کی ہے۔ سیدہ عائشہ کی مروی روایات کا کرکے کتاب میں شامل کردیا ہے۔ کتاب میں قرآنی آیات، اور باقی تمام عبارات پر اعراب کا اہتمام کردیاگیا ہے۔ اس کتاب ثانی معروف مترجم و مصنف کتب کثیرہ جناب مولانا محمود احمد غضنفر ﷫ نے کی ہے جس   سے اس کتاب کی افادیت میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
عفیفہ کی پاکیزہ 12
دیباچہ طبع سوم 15
عائشہ ؓ کی اہمیت 17
مآخذ 18
ابتدائی حالا ت (پیدائش سے تک ) 20
انتساب 18
نام ونسب ،خاندان 20
ولات 22
بچپن 23
24
ہجرت 29
رخصتی 31
وتربیت 33
خانہ داری 44
معاشرت ازدواجی 47
سے محبت 48
شوہر سے محبت 52
کی مدارات 55
دل بہلانا 56
گھر میں فرائض نبوت 67
سوکنوں کے ساتھ برتاؤ 69
مشتبہ اور غلط روایات 78
سوتیلی اولاد کے ساتھ برتاؤ 81
غلط اور مشتبہ روایات 84
واقعہ افک 85
سرولیم میور کابیان 93
تیمم کے حکم کانزول 96
تحریم،ایلااور تخیر 98
تحریم 98
ازفہ شکوک 101
ایلا 103
تخیر 105
بیوگی 11ھ 106
عام حالات 110
عہد صدیقی 110
داغ بے پدری 111
عہدفاروقی 112
سیدناعثمان ﷜ کاعہد 113
سیدنا علی مرتضی ﷜   کاعہد 118
کی دعوت 120
عورت ک فرائض 120
جنگ جمل 132
سیدہ عائشہ اور سیدناعلی ﷜ کے باہمی ملال خاطر کی تردید 137
سیدناامیر معاویہ ﷜ کازمانہ 141
سیدناحسن ﷜ کی تدفین کاواقعہ 144
وفات 146
تبنی 148
حلیہ اور 149
اخلاق وعادات 151
قناعت پسندی 151
ہم جنسوں کی امداد 152
شوہر کی اطاعت 152
غیبت اور بدگوئی سے احتراز 152
عدم قبول احسان 153
خودستانی سے پرہیز 154
خودداری 154
دلیری 155
فیاضی 156
خشیت الہی اورقیق لقلسمی 157
عبادت الہی 158
معمولی باتوں کالحاظ 160
غلاموں پر شفقت 160
فقراکی حسب حیثیت اعانت 161
کااہتمام 162
مناقب 163
فضل وکمال 164
واجتہاد 167
مجید 168
179
سیدہ عائشہ ؓ اور ازواج مطہرات ﷢ 179
سکٹرین روایت میں سیدہ عائشہ ؓ کا درجہ 181
سیدہ عائشہ ؓ کی روایتوں کی تعداد 181
مکثرین میں روایت کے ساتھ درایت 181
بار بار پوچھنا 185
روایت میں احتیاط 185
روایت مخالف حجت نہیں 186
مغرسخن تک پہنچنا 192
ذاتی واقفیت 196
قوت حفظ 198
سیدہ عائشہ ؓ کی حدثیوں کی ترتیب وتدوین 200
وقیاس 200
مجید 201
203
قیاس عقلی 205
سنن کی تقسیم 207
معاصرین کے اختلاف 208
کلام وعقائد 212
تعالی کے لیے اعضاکااطلاق 212
رؤیت باری تعالی 213
غیب 215
اوراخفائے   216
انبیاء ﷤ معصوم ہیں 217
روحانی 217
الصحابۃ عدول 219
ترتیب 220
عذاب قبر 220
سماع موقی 221
اسرار الدین 221
مجید کی ترتیب نزول 223
مدینہ میں کی کامیابی کاسبب 225
جمعہ کے دن نہانا 226
میں دو رکعت 226
صبح او رنماز عصرکے بعد نماز پڑھنے کی ممانعت 227
بیٹھ کر پڑھنا 227
مغرب میں تین رکعتیں کیوں ہیں 229
صبح کی دوہی رکعت کیوں رہی 229
عاشور اکاسبب 229
پورے میں آپ ﷺ   نے تراویج کیوں نہ پڑھی 231
کی حقیقت 231
داوی محصب میں قیام 232
کاگوشت تین دن سے زیادہ رکھنے کی ممانعت 232
تعمیر کعبہ اور بعض اعمال 233
سوار ہوکر 234
ہجرت 235
آپﷺ کاحجرہ میں دفن ہونا 236
طب ، وادب وخطابات وشاعری 237
طب 237
238
242
خطابت 243
244
تعلیم ،افتااو رارشاد 256
256
افتا 265
خلفائے 265
صحابہ ﷢ 266
عامہ ممالک اسلامیہ 368
ارشاد 272
جنس نسوانی پر سیدہ عائشہ ؓ کی احسانات 280
عالم نسوانی میں سیدہ عائشہ ؓ کی درجہ 292
سیدہ عائشہ ؓ کی عمران کے کے وتق کیاتھی 296
سیدہ عائشہ ؓ کی عمر 202
مولانا سیدسلیمان ندوی کے اعتراضات کاجواب 303
صغر کی اور سیدہ عائشہ ؓ 302
اصل مبحث 306
بنائے استدالال 303
ضمنی بحث کی وجہ سے کم توجہی 304
نوسال کی عمر میں کی روایات 305
کی روایات 305
رخصتانہ 206
دوسری روایات سے عمر کاقیاس 206
سیدہ عائشہ ؓ کی ایک اور روایت 308
عمر کے متعلق سیدہ عائشہ ؓ کاخیال 309
صاحب مشکوۃ کاقول 309
حضرت سیدہ صاحب ﷫ کاجواب 311
سیدہ عائشہ ؓ کی عمر 311
مولانا محمدعلی صاحب کے شبہات کاجواب 311
کے وقت سیدہ عائشہ ؓ کی عمر 313
علامہ عینی ﷫ کابیان 315
علامہ ابن عبدالبر﷫ 316
صاحب مشکوۃ کاقول 317
عائشہ ؓ سے استناد 319
فریق کے دومویدات 322
سیدناابوبکر ﷜ ک ےارادہ ہجرت کے واقعہ سے استدلال 323
پہلا طریقہ 323
تسلیم کرکے جواب 328
دوسراعام طریقہ 336
سورۃ نجم اور سورۃ قمر کے نزول سے استدلال 336
میں صغیر کارواج 339
خلاصہ بحث 341

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Leave A Reply