سیرت سید احمد شہید حصہ دوم

سید احمد شہید حصہ دوم

 

مصنف :

 

صفحات: 591

 

اس وقت برصغیر پاک و ہند میں جس قدر بھی ہو رہا ہے اس کے بارے میں اگر یہ رائے رکھی جائے تو بے جا نہ ہو گا کہ اس کی اساس سید احمد شہید ؒ نے رکھی تھی ۔ آپ ؒ نے اس وقت جہاد بلند کیا جب برصغیر میں کیا بلکہ پورے عالم میں زوال کے آثار نمایاں تھے ۔ امت کا انتشار و افتراق اور سے جہالت بہت بڑھ چکی تھی ۔ انگریز اور سکھ اپنے خونی پنجے گاڑھ چکے تھے ۔ حالات میں مایوسی اپنی انتہاؤں کو پہنچ چکی تھی ۔ اس صورت حال میں سید صاحب نے مسلمانوں کو جہاد کی ترغیب دلائی ۔ اور ایک جماعت کی اساس رکھی ۔ آپ نے خیبر پختونخوا میں ایک ریاست اسلامیہ کی تاسیس بھی رکھی ۔ حتی کہ خطبوں میں بھی آپ کا نام لیا جانے لگا ۔ تاہم اپنے کی غداری کا شکار ہوئے ۔ آپ کے بعد بھی جماعت مجاہدین نے اپنی جدوجہد جاری رکھی ۔ مسلمانان برصغیر میں جذبہء جہادی و کی آپ کی ہی کاوشوں کا نتیجہ تھا۔ اس کے ساتھ ساتھ آپ نے لوگوں کے شرکیہ عقائد اور بدعی اعمال کی کا بھی بیڑا اٹھایا ۔ تعالیٰ نے اس میدان میں آپ کو کامیابیوں سے نوازا ۔ زیرنظرکتاب مولانا ابوالحسن ندوی ؒ کی تصنیف سید احمد شہید ؒ کی و کے کئی ایک پہلؤوں پر توجہ دلاتی ہے ۔ یہ کتاب اپنے موضوع پر ایک محولہ اور جامع کتاب ہے ۔ مصنف محترم کو اجر سے نوازے۔
 

عناوین صفحہ نمبر
حرف گفتی 17
پہلا باب شیدو کی جنگ 19۔32
دوسرا باب بونیر و سوات کا دورہ 33۔39
تیسرا باب پنجتار کا مرکز مجاہدین 40۔47
چوتھا باب ہزارے کے سرداروں کی امداد 48۔55
پانچواں باب اگرور اور پکھلی کے علاقے میں 56۔67
چھٹا باب ڈمگلا اور شنکیاری کی اور ہندوستانی مجاہدین کے قافلے 68۔80
ساتواں باب خیر کا قیام 81۔87
آٹھواں باب اتمان زئی کی جنگ 88۔104
نواں باب بیعت کی تجدید اور نظام شرعی کا قیام اور اس کے اثرات 105۔111
دسواں باب پنجتار کا نظارہ 112۔117
گیارہواں باب خادی خاں کی مخالفت و ساز باز ، ویٹورہ کی آمد و پسپائی اور قلعہ اٹک کی مہم 118۔128
بارہواں باب اور کا دوبارہ اجتماع اور نیا عہد وپیمان 129۔138
تیرہواں باب ویٹورہ کی دوبارہ آمد اور جنگ پنجتار 139۔149
چودہواں باب ہنڈ کی تسخیر اور تنگی کی مہم 150۔157
پندرہواں باب جنگ زیدہ اور یار محمد خاں کا قتل 158۔172
سولہواں باب پنجتار میں 173۔184
سترہواں باب پائندہ خاں کی ملاقات 185۔201
اٹھارواں باب پائندہ خاں کی مزاحمت اور عشرہ اور امب کی 202۔216
انیسواں باب چھتر بائی 217۔224
بیسواں باب پھولڑے کی جنگ 225۔233
اکیسواں باب امب کا قیام 234۔241
بائیسواں باب سکھوں کسی سعی مصالحت اور سفیروں کی گوئی و جرات 242۔254
تئیسواں باب ملک سمہ کی دوبارہ تسخیر و انتظام اور جنگ مردان 255۔264
چوبیسواں باب سلطان محمد خاں کی لشکر کشی 265۔271
پچیسواں باب مایار کی جنگ 272۔282
چھبیسواں باب مایار کے شہداء ومجروحین 283۔292
ستائیسواں باب پشاور کا قصد 293۔301
اٹھائیسواں باب مردان سے پشاور تک 302۔307
انتیسواں باب پشاور میں 308۔315
تیسواں باب پشاور کی سپردگی کی تجویز 316۔323
اکتیسواں باب سلطان محمد خاں کی ملاقاتیں اور پشاور کی سپردگی 324۔333
بتیسواں باب پنجتار کو واپسی 334۔343
تینتیسواں باب حکومت شرعیہ کے عمال اور غازیوں کا قتل عام 344۔356
چوتیسواں باب ابرار مجاہدین کی مظلومانہ 357۔372
پینتیسواں باب محفوظ مجاہدین 373۔383
چھتیسواں باب غذر کے اسباب کی اور ہجرت کا عزم 384۔396
سینتیسواں باب ہجرت کا دوسرا 397۔407

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
10 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Leave A Reply