حرمت مسلم اور مسئلہ تکفیر

حرمت مسلم اور تکفیر

 

مصنف : ربانی

 

صفحات: 175

 

امن وسلامتی اور باہمی اخوت ومحبت کا ہے۔انسانی جان ومال اور عزت وآبرو کا تحفظ کے اہم ترین مقاصد اور اولین فرائض میں سے ہے۔کسی کی جان لینا، اس کا ناحق خون بہانا اور اسے اذیت دینا شرعا حرام ہے۔ کسی کے خلاف ہتھیار اٹھانا ایک سنگین جرم ہے اور اس کی سزاجہنم ہے۔ عصر حاضر میں مسلم حکمرانوں اور مسلم معاشروں کے افراد کے خلاف ہتھیار اٹھانے ، اغوا برائے تاوان، خود کش دھماکوں اور قتل وغارت گری نے ایک خطرناک فتنے کی صورت اختیار کر لی ہے۔ افسوس کی بات یہ ہے کہ یہ سارے جرائم اسلام اور کے نام پر کئے جارہے ہیں۔یوں تو بہت سارے زخم ہیں جو رس رہے ہيں لیکن بطور خاص عالم اسلام کو خارجی فکرو کے سرطان نے جکڑ لیا ہے۔ ہرچہار جانب تکفیر و تفریق اور بغاوت کی مسموم ہوائیں چل رہی ہیں اور سارا تانا بانا بکھرتا ہوا محسوس ہورہا ہے ۔ امت کے جسم کا ایک ایک عضو معطل، اجتماعیت اور وحدت کی دیواروں کی ایک ایک اینٹ ہلی ہوئی سی  ہے اور ایسا لگتا ہے جیسے اب تب امت کے شاندار عمارت کی کہنہ دیوار پاش پاش ہو جائےگی۔ زیر کتاب” حرمت مسلم اور تکفیر “معروف داعی محترم مولانا ربانی صاحب کی تصنیف ہے، جس کی ثانی محترم مولانا مبشر احمد ربانی صاحب نے کی ہے۔مولف موصوف نے اس کتاب میں وسنت کی روشنی میں حرمت خون مسلم کی عظمت اور فتنہ تکفیر کی سنگینی اور نقصانات کو بیان فرمایا ہے۔ تعالی سے ہے کہ وہ مولف موصوف کی ان کو اپنی بارگاہ میں قبول ومنظور فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے اور تمام مسلمانوں کو متحد ومتفق فرمائے۔ آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 11
مقدمہ ۔از لشیخ مبشراحمد ربانی ﷾ 13
ابتدائیہ 13
حرمت مسلم اورمسئلہ تکفیر کی شان حرمت
کون ہے 21
مسلمانوں کےباہمی تعلقات 22
کو گالی دینا فسق ہے 25
کی طرف اسلحہ سےاشارہ کرنا 25
جہنم کی طرف 25
جس نےمسلمانوں پر اسلحہ اٹھایا وہ ہم میں سےنہیں 26
کلمہ گوکاقتل ایک سنگین جرم 26
کلمہ قتل کی راہ میں رکاوٹ ہے 29
الحدیث 30
لاالہ الااللہ کی حرمت اورعلم کامسئلہ 31
مسلمانوں کاباہمی قتال کفر یہ فعل ہے 32
روز کاپہلا فیصلہ 33
جب عبادت رائیگاں جائے گی 33
ناقابل معافی جرم 33
فرقہ بندی کےنام پر قتل وغارت کی مذمت 34
فوائد 35
کسی کےقتل کی حرص کی سزا بھی جہنم ہے 36
قتل مسلم ،کبائر میں سے ہے 36
قتل مسلم ہلاکت انگیز گناہ 37
بے گناہ کاقتل ( مجید کی روشنی میں) 37
پوری انسانیت کاقتل 38
عمداقتل مسلم (سزاؤں کاموجب 39
قتل ناحق کی مزید سزائیں 40
ردعمل میں بھی قتل کرناجرم ہے 40
فوائد 41
محض شبہ کی بناپر قتل کی ممانعت 41
قتل مسلم کاگناہ اوروبال ( کی روشنی میں) 42
خون مسلم کی مباح صورتیں 43
فوائد 43
انتباہ 44
کااصول قتال ومقاتلہ 44
تکفیر اورفتنہ تکفیر
کو کافر کہنے کاگنا ہ 46
کی تکفیر اس کےقتل کی طرح ہے 47
کوکافر کہنے کامطلب 48
فتنہ تکفیر 49
فتنہ تکفیر یہودکی باقیات سئیات میں سے ہے 49
امت مسلمہ میں فتنہ   تکفیر 51
خوارج کی وجہ سے تسمیہ 51
فتنہ خوارج اورقرآن مجید کے ی 51
فتنہ خوارج ، کی روشنی میں 53
فوائد 54
فتنہ خوارج عہد رسالت میں 54
فتنہ خوارج عہد عثمانی میں 56
عہد علوی میں خوارج کی منظم تحریک کاآغاز 56
فتنہ خوارج کرا ﷢ کی میں 58
خوارج کےعقائد ونظریات 60
خوارج کی شقاوت قلبی اورانتہا پسندی 61
خوارج کی منہجی علامات 62
خوارج کی منہج پر عمل پیراہونے والے بھی خارجی ہیں 63
خوراج کاحکم 64
خوارج کےمتعلق رسالت مآب ﷺ کافیصلہ 66
خارجیوں اورتکفیریوں کی پہلی اوربنیادی غلطی فہم میں ہے 66
طاغوت کی تعریف اورحکم
طاغوت اورفاسق میں اصولی اختلاف 75
طاغوت سے کفر کرنےکاحکم 76
فاسق حکمران اورمسئلہ خروج 77
کفر بواح کےبغیر افاسق حکومت کے خلاف بغاوت کی ممانعت 77
امام احمد بن حنبل ﷫ کاطرز عمل 84
امام مالک ﷫ کاطرز عمل 85
ظالم وفاسق حکومت کےخلاف منہج دعوت یامسلح بغاوت 85
اس فریضے کےلیے اجتماعی جدوجہد کرنا 88
فاسق حکومت کےخلاف خروج وقتال کےدلائل کاشرعی جائز ہ 90
الکفر والتکفیر کی بحث
’’الکفر ‘‘کی اصطلاحی تعریف 101
’’الکفر ‘‘کی اقسام 101
کفر اکبر اوراصغر کی بحث 103
کفر اکبر 103
کفر اصغر 105
’’کفر دون کفر ‘‘کی اصطلاح 108
کفر اعتقادی اورکفر عملی میں تفریق نہ کرنے کاخطرناک نتیجہ 111
اجماع کی بحث 112
کفار سے مشابہت 113
ایمان اورتکمیل   ایمان کافرق ملحوظ رکھنا 114
طعن فی الدین ( کااستہزا ء وانکار ) 115
اہانت رسول 117
اسم تصغیر کی بحث 119
توہین رسالت ناقابل معافی جرم ہے 119
شان رسالت کےسوا کسی کسی توہین کی سزا قتل نہیں 122
وضع کرنے والے کی تکفیر کامسئلہ 122
اہل کی اصطلاح 124
ضروریات کاانکار 125
کافر کو کافر کہنا 126
کافر کون ہے ؟( مجید کی روشنی میں) 127
’’موالات کفر ‘‘کی شرعی حیثیت 129
غیر حربی کافروں کی تفصیل درج ذیل ہے 131
غیر حربی کافر ہے 131
حربی کافر 134
ضوابط التکفیر اورموانع کفر
’’الاکراہ ‘‘(مجبوری )اورنیت   کااعتبار کرنا 135
اقسام کفر ملحوظ رکھنا 137
کبائر کی وجہ سے تکفیر میں احتراز کرنا 138
لاعلمی کااعتبار کرنا 141
بے اختیاری یاسبقت   142
کے انکار پر تکفیر درست نہیں 144
اختلاف نظائر اورتاویل کی موجودگی میں تکفیر سےاحترا ز 144
تکفیر میں مصالح اورمفاسد کااعتبار ضروری ہے 145
تکفیر معین میں ہر ممکنہ حدتک احتیاط کیاجائے 147
تکفیر سےمتعلق چند ملاحظات 148
تکفیر (علمائے امت   کےاقوال کی روشنی میں) 149
تکفیر سےمحفوظ رہنے   کاراستہ منہج کی پیروی ہے 155
منہج نبوی دعوت   ہے تکفیر نہیں 157
پرفتن دورمیں دعوت کاکام کیسے ممکن ہے 160
عدل وانصاف کولاز م پکڑنا 162
قول وعمل میں محتاط رویہ 164
پرفتن دور میں اہل ایما ن کاطرز عمل
فتنہ پروری کی مذمت 165
فتنہ بازی سےاجتناب کی فضیلت 165
الحدیث 173
فتوی نویسی کےاصول وآداب 173
ملی ومذہبی عمائدین وذمد داران سےالتماس 175

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...