اکیسویں صدی اور مسلمان عورت

اکیسویں صدی اور عورت

 

مصنف : عامرہ احسان

 

صفحات: 128

 

تعالی نے عورت کو معظم بنایا لیکن قدیم جاہلیت نے عورت کو جس پستی کے گھڑے میں پھینک دیا اور جدید جاہلیت نے اسے کا لالچ دے کر جس ذلت سے دو چار کیا وہ کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے ایک طرف قدیم جاہلیت نے اسے زندگی کے سے محروم کیا تو جدید جاہلیت نے اسے زندگی کے ہر میدان میں دوش بدوش چلنے کی ترغیب دی اور اسے گھر کی چار دیواری سے نکال کر شمع محفل بنادیا ۔ جاہل انسانوں نےاسے لہب ولعب کاکھلونا بنا دیا اس کی بدترین توہین کی اور اس پر ظلم وستم کی انتہا کردی کے اوراق سے پتہ چلتاہے کہ ہر عہد میں عورت کیسے کیسے مصائب ومکروہات جھیلتی رہی اور کتنی بے دردی سے کیسی کیسی پستیوں میں پھینک دی گئی اور عورت اپنی عزت ووقار کھو بیٹھی کے نام پر غلامی کا شکار ہوگئی۔ ۔ لیکن جب کا ابرِ رحمت برسا توعورت کی حیثیت یکدم بدل گئی ۔محسن انسانیت جناب رسول ﷺ نے انسانی سماج پر احسان ِعظیم فرمایا عورتوں کو ظلم ،بے حیائی ، رسوائی اور تباہی کے گڑھے سے نکالا انہیں تحفظ بخشا ان کے اجاگر کیے ماں،بہن ، اور بیٹی کی حیثیت سےان کےفرائض بتلائے اورانہیں شمع خانہ بناکر عزت واحترام کی سب سےاونچی مسند پر فائز کردیااور عورت و مرد کے شرعی احکامات کو تفصیل سے بیان کردیا ۔آج مغربی اقوام بھی عورت کی غلام بنام سے تنگ آچکی ہیں ۔ کیونکہ مغربی میں اس بے جا آزادی کے نتائج ،زنا کاری اور بے حیائی کی شکل میں ظاہر ہورہے ہیں افسو س اس بات کا ہے کہ عورت بھی آج اسی کے حصول کی کوشش میں سرگرداں آتی ہے جبکہ کے ذریعے اس کا قرآن وحدیث کے لیے اس کا مقام ، حیثیت اور وفرائض متعین کرتا ہے۔ زیر نظر کتاب ’’اکیسویں صدی اور مسلمان عورت ‘‘ محترمہ عامرہ احسان کی مرتب شدہ ہے ۔ انہوں نےاس کتاب میں عصر حاضر میں کے پیش آنے والے اور حالات کا تجزیہ کیا ہے ۔ عورت کی نفسیات کے پچیدہ پہلوؤں پر بڑی ہی پُر معنیٰ بحث کی ہے۔ کتاب کوتاریخی سے سجایا ہے اور اس تجزیے کےدوران مسلمان عورت اور زدہ عورت کےفکری خدو خال پوری طرح واضح کیے ہیں ۔ جہاں انہوں نےقرآن وحدیث کی روشنی میں عورت کے فطری مقام کوواضح کیا اور اسکےبہترین نتائج کو نئی نسل کےسامنے رکھا ہے وہیں یورپ کےعلمی ماخذ اور مستند کتابوں کے ذریعے کو دوسرے رخ سےبھی باخبر کیا ہے ۔اور بڑی محنت سے مسلمان خواتین کی رہنمائی فرمائی ہے کہ تعالیٰ اور رسول اللہﷺ ان سے کیا چاہتے ہیں اور کن فتنوں سےانہیں خود کوبھی اوراپنے خاندان کو بھی بچانا ہے جو زن کو نازن بلکہ ناگن بنادیتے ہیں ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
ابتدا ئیہ 7
پیش لفظ 11
پیش لفظ(طبع دوم) 13
ایک رہنما  کتا ب 19
تعا رف 23
عو رت :  مبا حثو ں کے گرداب میں 27
 عو رت  کا استحصال 29
جھا نسہ 29
گھمبیر  معا شر تی  مسا ئل 30
کلمہ تا زہ کیجئے 31
ہم حالت  امتحان  میں  ہیں 32
میں  عو رت اور مر د 34
رفاقتوں  کی دا ستان 35
اسلام  میں خاندان 37
عور ت  بحثیت  38
فر ا ئض کی فکر  کیجیے 39
 میا ں کا با ہم  تعلق 40
مکان  یا گھر 41
بہترین  بیو ی 41
 آبگینے 47
نا شکری سے  بچنے 48
مر د بھی نا شکر  سے بچے 49
اسلا م کا مطلو ب  گھر 51
بہترین  مر د کو ن 51
مر د بھی جواب دہ ہے 52
وصیت  ’ تا کید  و 53
صد قہ  ضا ئع نہ کیجیے 53
وہ دن  نہ بھو لیے 54
کیا کر یں 55
تقسیم کا ر 55
ما ں 56
مر د 57
عو رت 57
عو رت کی گو اہی 58
دو عو رتیں کیوں 60
عو رت کا طلا ق کا 62
عو رت  اور تعدد ازواج 64
فطر ت اٹل ہے 71
فطر ت سے نہ لڑیے 72
جس کاکا م اسی  کو سا جھے 74
رباط 75
رضا عت 76
بیرو نی  ذمہ  دا ریو ں  سے رخصت 77
عو رت کا محاذ 78
پہلی صد ی  ہجر ی  کی عو رت 79
شانہ بشا نہ 80
 یہ مر دا نگی کا شو ق 81
عور ت اور حکمرانی 82
عو رت کی 82
 خوا تین  کی تر جمانی 88
بلندئ فکر 89
تر قی کے  لو زام 90
و تر بیت 92
علم ’ عو رت کی ضرو ر ت 92
دنیاوی 94
عو رت کی کے اہد اف 95
بے ہد ف 97
عمو می  98
مو زو ں تر شعبے 99
تر قی کیا ہے 103
تقلید کی کور  نگا ہی 106
راہ فر از 111
تا وان 113
 خو ش حالی یا بد حالی 115
تن آسان  مر د کی سا زش 116
مادر پد ر 121
میڈیا کی مدد 124
نتا ئج 125
پیش کیجے 127

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
3.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...