اسلامی ریاست ( امین احسن اصلاحی )

ریاست ( امین احسن اصلاحی )

 

مصنف :

 

صفحات: 337

 

اسلام کی طرف سے آخری اور مکمل دین ہے جو انسانیت کے تمام کا پیش کرتاہے اور آج کی سسکتی ہوئی انسانیت کو امن اور سکون کی دولت عطا کرتے ہوئے دنیاوی کامیابی کے ساتھ اخروی نجات کا باعث بن سکتا ہے ۔ وہ یا نظام ہے جس میں حضور ختم المرسلینﷺ کی وساطت سے انسانیت کے نام خدا کے آخری پیغام یعنی مجید کی روشنی میں زندگی بسر کی جائے۔ اُس خداوندی کی روشنی میں فطرت کی قوتوں کو مسخر کرتے ہوئے انسانیت کی فلاح و بہبود کے لیے بروئے کار لایا جائے۔اُس ضابطہ پر کامل ایمان لاتے ہوئے قوانینِ خداوندی کے سامنے اپنا سر تسلیم خم کرنے کا نام ہے۔ تعالیٰ نے انسانوں کی رہنمائی کے لئے جو نظام اور دیا ہے اس کا نام ہے۔ اس نظام زندگی کی رہنمائی انبیا اکرام کی صورت میں جاری رہی اور حضور پاک ﷺ پر یہ سلسلہ ختم ہوگیا۔اور جو ریاست حکومت الہیہ کی شرائط پوری کرتی ہے وہی اصل میں ریاست کہلاتی ہے۔ زیرِ کتاب ’’اسلامی ریاست‘‘ مدرسہ فراہی کے ایک جلیل القدر عالم دین ، مفسر اور ممتاز ریسرچ سکالر تھے آپ امام حمید الدین فراہی کے آخری عمر کے تلمیذ خاص اور انکے افکار ونظریات کے ارتقاء کی پہلی کرن ثابت ہوئے۔ آپ نے یہ کتاب دو حصوں میں تقسیم کی گئی ہے ۔جبکہ حصہ اوّل ریاست کے متعلق چند بنیادی مباحث پر مبنی ہے، حصہ دوم میں شہریت کے وفرائض کو واضح کیا گیا ہے،حصہ سوم میں غیر مسلموں کے حقوق کو اجاگر کیا ہے، حصہ چہارم میں اطاعت کی شروط اور حدود کو بیان کیا گیا ہے، اور حصہ پنجم میں کارکنوں کی ذمہ داریاں اور ان کے اوصاف کو عیاں کیا گیا ہے۔یہ کتاب اسلامی ریاست کے و ضوابط کو سمجھنے کے حوالے سے بہت کار آمد ثابت ہو سکتی ہے ۔اور جو اہل اس موضوع پر و تحقیقی کام کرنا چاہیں گے ان کے لئے رہنمائی کا ذریعہ بنے گی۔ اس کے ساتھ ساتھ اگر آئندہ ایڈیشن میں حسب ذیل تجاویز کو مد رکھا جائے تو کتاب کی افادیت میں مزید اضافہ ہو جائے گا: بہت ساری جگہوں پر حوالہ جات ناقص ہیں، انھیں مکمل کیا جائے۔ حوالہ جات کو فٹ

 

عناوین صفحہ نمبر
دیباچہ 13
حصہ اول
چندبنیادی مباحث
ریاست کااسلامی تصور 16
اورامارت مین فرق 16
کی اصل فطرت انسانی کےاندر 16
کےتضمنات 18
کےلیے سنت 20
کےحقیقی اہل 20
کابگاڑ 21
اورایک عام ریاست مین فرق 21
ریاست کےبنیادی 23
حاکمیت کےلیے ہے 23
اولوالامرکی حیثیت 24
جمہورکی حیثیت 27
دوررسالت میں شورائی نظام سازی کی تاسیس 29
شوری اورخلفائے راشدین کےدورمیں 32
مجلس شوری کی نوعیت اوراس کےارکان کی صفات 44
نظام حکومت دوسرےنظام ہائےحکومت کےمقابل میں 46
کےلیے قرشیت کی شرط 49
الائمہ من قریش کامحل 50
چندشبہات اوران کےجواب 52
ابن خلدون کانظریہ 63
قومیت کےعوامل 65
قومیت کےعوامل 66
قومیت کانیانظریہ 67
مذکورہ عوامل کےنقائص 68
وطنی قومیت کےمفاسد 72
کےنقطہ نظرسےمذکورہ عوامل پرتنقید 76
میں نسل ونسب کادرجہ 76
اورادب کی حیثیت 79
تہذیب اورروایات 80
وطن کی حیثیت 81
82
میں قومیت کی اساس 83
قومیت کےمعاملہ مین انبیاء﷩ کاعمل 84
حضرت نوح﷤کااسوہ 86
حضرت ابراہیم﷤ کااعلان برات 88
نبی کریمﷺ کااسوہ حسنہ 89
کےبنائےقومیت ہونےکاراز 97
قومیت اورغیرمسلم 99
حصہ دوم
شہریت کےحقوق وفرائض
شہریت کےشرائط 101
غیرملکی اورحق شہریت 105
شہریت کےحقوق 106
جان ومال اورناموس کی حفاظت 106
ملک ذاتی کی حفاظت 108
شخصی 109
عقیدہ اورمذہب ومسلک کی 120
قانونی 105
معاشرتی 132
تقسیم نےمساوات 133
ہرحاجت مندکی کفالت 134
ناقابل اداقرضوں کی ادائیگی 137
بےلاگ اوربےمعاوضہ انصاف 138
140
لوگوں پرطاقت سےزیادہ بارنہ ڈالاجائےگا 142
اطاعت لہیٰ کےخلاف لوگوں کوکوئی حکم نہ دیاجائےگا 143
درخواست فریاداوارعتراض کرنےکاحق 144
شہریت کےفرائض 150
سمع وطاعت 152
خیروخواہی 153
تعاون 156
مالی 157
جانی 158
عورتوں کےحقوق وفرائض 159
مغربی نظریہ اوراسلام 159
معاشرتی نظام مین مردکوعورت پرترجیح حاصل ہے 162
اجتماعی ذمہ داریاں اورعورت 162
فوج مین عورتون کی شرکت کی نوعیت 164
حضرت عائشہ ؓکواقعہ کی نوعیت 166
عورت کےمزاج اورریاست کےمزاج مین فرق ہے 169
عورت کےحقوق 171
عورت کی ذمہ داریاں 172
تعاون 173
حصہ سوم
غیرمسلموں کےحقوق
غیرمسلموں سےمتعلق دوبنیادی سوال 176
پہلےسوال کاجواب 176
دوسراسوال کاجواب 180
اہل صلح یامعاہدرعایااوران کےحقوق 182
غیرمسلم رعایاکےساتھ حکومت کےمعاہدے 182
اہل فدک کامعاہدہ 183
نصاری بنی تغلب کےساتھ معاہدہ 184
اہل نجران کامعاہدہ 185
ایک شبہ اوراس کاجواب 189
نقض عہداوراس کےشرائط حالات 193
اہل عربسوس کانقض عہد 193
اہل جبل اللبنان کانقض عہد 194
اہل قبرص کامعاملہ 195
ذمیوں یعنی اہل العنوہ کےحقوق 200
زمین اورخراج 202
جزیہ 204
اہل ذمہ کاحق بیت المال مین 206
اہل ذمہ کی جان کی حفاظت 207
اہل ذمہ کےمال کااحترام 209

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...