اسلامی اصول تحقیق

اصول

 

مصنف : پروفیسر ڈاکٹر محمد باقر خان خاکوانی

 

صفحات: 379

 

ایک اہم فریضہ ہے۔ تحقیق کے ذریعے ہم کا حاصل کرتے ہیں۔ غیر محسوس کو محسوس بناتے ہیں۔ جو باتیں پردۂ غیب میں ہوتی ہیں، انہیں منصۂ شہود پر لاتے ہیں تا کہ کسی امر میں یقینی علم ہم کو حاصل ہو، اور اس کی بنیاد پر مزید جاری رکھی جا سکے۔تحقیق ایک مسلسل عمل ہے۔مزید واقعاتی کا جائزہ لینے اور ان کے اثرات معلوم کرنے کا نام بھی تحقیق ہے ۔ تحقیق کے لفظ کا مفہوم کو ثابت کرنا یا حق کی طرف پھیرنا ہے۔ کے لغوی معنیٰ کسی شئے کی حقیقت کا اثبات ہے۔ ’’تحقیق کے لیے انگریزی میں استعمال ہونے والا لفظ ریسرچ ہے…اس کے ایک معنیٰ توجہ سے تلاش کرنے کے ہیں، دوسرے معنیٰ دوبارہ تلاش کرنا ہے۔دور حاضر میں تحقیق ایک فن سے ترقی کرتاہوا باقاعدہ ایک بلکہ ایک اہم علم کی صورت اختیار کرچکا ہے ۔ عالمِ کی تمام یونیورسٹیوں ، اداروں ، اور کلیات میں تمام علوم پر تحقیق زور شور سے جاری ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ تحقیق کا مادہ تمام عالمِ کی یونیورسٹیوں میں عموماً ا ور برصغیر کی جامعات اور متعدد اداروں میں خصوصاً نصاب کے طور پر پڑھایا جاتا ہے ۔ان تمام اداروں میں بھی جہاں گریجویٹ اوراس کے بعد کی کلاسوں میں مقالہ لکھوایا جاتا ہے یا ایم فل وڈاکٹریٹ کی باقاعدہ کلاسیں ہوتی ہیں وہاں تحقیق نگاری یا اصول تحقیق کی بھی باقاعدہ تدریس ہوتی ہے ۔ اس طرح اصول تحقیق ، تحقیق نگاری، فن تحقیق یا تحقیق کا علم جامعات اورمزید اداروں میں بہت زیادہ اہمیت حاصل کرچکا ہے۔تحقیق واصول تحقیق پر متعدد کتب موجود ہیں ۔ زیر کتاب’’ اصول تحقیق‘‘ اوپن یونیورسٹی شعبہ عربی وعلوم اسلامیہ کے ڈین جناب پروفیسر ڈاکٹر محمد باقر خان خاکوانی کی تصنیف ہے ۔فاضل مصنف نے اس کی ابواب بندی کو اپنے ذاتی تجربات کی روشنی میں ترتیب دیتے ہوئے اس کتاب میں اسلامی تحقیق کے مختلف نظریاتی پہلو بیان کرنے کے بعد دورِ حاضر میں برصغیر کے کے لیے تحقیقی مقالہ تحریر کرنے کے متعدد تحقیقی مراحل کے اہم حصوں کے بارے میں مختصر مگر جامع ہدایات پیش کی ہیں ۔اس کتاب میں پوری طرح کوشش کی گئی کہ الفاظ کی سادگی کےساتھ ایسا آسان طرز تحریر اختیار کیا جائے کہ عام طالب بھی آسانی سے اس سے استفادہ کرسکے ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
کی حقیقت 19
اصول کی بنیادیں اورانسانی علوم کی حقیقت 19
مسلمانوں کے تحقیقی کارناموں کاتقابلی جائز ہ 21
مسلمانوں کے دنیا میں تین طریق کار 23
فلسفیانہ علوم میں طریق کار 24
سائنسی میدان میں  طریق کار 25
دنیا میں کاطرہ امتیاز 27
اصول  کاتاریخی جائز 28
سائنسی میدان میں مسلمانوں کے اصول 29
ابن الہیثم کےحالات زندگی 30
ابن الہیثم کی سائنسی تحقیقات کاطریقہ 31
مغربی سائنسی اصولوں کی حقیقت 33
بقیہ سائنسی علوم کےمسلم ماہرین 33
میڈیکل اروفلسفہ کےمسلم ماہرین 34
اورشاعری کےمسلم ماہرین 35
دورحاضر میں اصول کی اہمیت اورمغربی تحقیق کے اثرات 36
علوم اسلامیہ کےماہرین کے ذمہ داریاں 38
کتاب تحریر کرنے کی وجہ 39
کتاب کااسلو ب 40
کتاب میں ابواب بندی کی ترتیب 41
دل 42
حوالہ جات 44
پہلا باب ۔ میں وتحقیق کی حقیقت ،مآخذ اورخصوصیات
فصل اول 45
میں وتحقیق کی اہمیت وارتقاء
اسلام  میں وتحقیق کا مقام واہمیت 45
اسلام وادب کی ایک علم گیرتحریک 46
مسلمانوں میں دنیا کاآغاز وارتقاء 48
علوم کی بین الاقوامی ترویج 50
اورتحقیق 51
مجید میں تحقیقی 53
اورمحقق کےبارے میں اسلامی 55
دورحاضر کےماہرین کی رائے 56
خلاصہ 57
حوالہ جات :پہلاباب 58
فصل ثانی 60
میں وتحقیق کی حقیقت ، کی شرعی
حیثیت مآخذ واہم عناصر 60
کامفہوم 60
تنقید کامفہوم 61
اصول کامختصر تعارف 63
علو م اسلامیہ میں اورحکمت کی حقیقت 64
لفظ کامفہوم اورا س کی دواقسام  نافع وغیرہ نافع 64
لفظ حکمت کامترادف 68
کامفہوم 69
حکمت کاخاصہ ، وتحقیق میں قدر مشترک 70
کاعملی مظہر 71
کی شرعی حیثیت 72
کی تقسیم 73
جمہور کی تقسیم 73
تحقیقی عمل کا فرض ہونا 73
رسول اکرم ﷺ پر حفاظت مجید کی فرضیت 74
اورمزید پر اصولوں کی پاسداری کی فرضیت 76
تحقیقی عمل کاسنت یامباح ہونا 77
تحقیقی عمل کاحرام ہونا 78
کی کاتحقیقی طریقہ سےآغاز 80
رسول اکرم ﷺ کےشخصی کردار کاجائز ہ 80
علوم اسلامیہ میں اورحکمت کی حقیقت 64
پیغام نبوی ﷺ کاتحقیق جائزہ 82
اسلامی یہ وتحقیق کے بنیادی عناصر 83
اصول کےپانچ اہم عناصر 83
اصول کاپہلاعنصر 84
کامنبع  ومآخذ ( تعالی کی ذات اقدس ) 84
اولین معلم کرام 86
اصول کادوسرا عنصر 89
بنی نوع کی کیوجہ سےفضیلت 89
اصول کاتیسرا عنصر 91
حصو ل کی فرضیت اوراہل علم کےلئے اعلی مقام 91
اصول کاچوتھا عنصر 94
حدود کی وسعت 94
وسعت کی بنیادیں 95
علوم کی تفصیل 97
اصول کاپانچواں عنصر 100
وتحقیقی سرگرمیوں کےتین مقاصد 100
الف تعالی کی پہچان 100
تحقیقی مقصو د کی نعلی دلیل 100
تحقیقی مقصود کی عقلی دلیل 103
ب۔ بنی نوع کوفائدہ پہچانا 103
ج۔دنیا وآخرت کی کامیابی 107
حوالہ جات :پہلا باب 110
فصل ثالث 113
اصول کی خصوصیات وتقابل
نظریہ وتحقیق کی چار اہم خصوصیات 113
پہلی خصوصیات وتحقیقی اصولوں میں تاریخی تسلسل 113
دوسری خصوصیت : وتحقیقی اصولوں کافکر ی :تطبیقی واطلاقی ہونا 115
تیسری خصوصیت وتحقیقی میدان میں اخلاقی اصولوں کی بنیاد رکھنا 117
چوتھی خصوصیات دنیا میں نئی تحقیق (تجدید اجتہاد )کادرواز ہ ہردورمیں کھلا رکھنا 119
اورمغربی تحقق میں  تقابل 120
مغربی اصول کےمآخذ 121
مغربی اصول کےمقاصد 122
مغربی اصول فکری ہیں لیکن تطبیقی واطلاقی نہیں 123
مغربی اصول میں اخلاقی قدروں کاانحطاط 124
مغربی اصول میں یکسانیت وتاریخی تسلسل کافقدان 125
مغربی اصول میں اخروی زندگی کےتصور کاناپیدہونا 126

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
7.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

You might also like
Comments
Loading...