Categories
Islam اسلام تاریخ جماعت اسلامی خلافت راشدہ زبان سیرت سیرت صحابہ

شہید المحراب عمر ؓ بن الخطاب

شہید المحراب عمر ؓ بن الخطاب

 

مصنف : سید عمر تلمسانی

 

صفحات: 463

 

سیدنا فاروق اعظم ﷜کی مبارک زندگی اسلامی تاریخ   کاوہ روشن باب ہے جس  نےہر تاریخ کو پیچھے چھوڑ  دیا ہے ۔ آپ  نے حکومت کے انتظام   وانصرام  بے مثال عدل  وانصاف ،عمال حکومت کی سخت نگرانی ،رعایا کے حقوق کی پاسداری ،اخلاص نیت وعمل ،جہاد فی سبیل اللہ  ،زہد وعبادت ،تقویٰ او رخوف وخشیت الٰہی  او ردعوت کے میدانوں میں ایسے ایسے کارہائےنمایاں انجام دیے  کہ انسانی تاریخ ان کی مثال پیش کرنے  سے  قاصر ہے۔ انسانی  رویوں کی گہری پہچان ،رعایا کے ہر فرد کے احوال سے بر وقت آگاہی او رحق  وانصاف کی راہ میں کوئی رکاوٹ برداشت نہ کر نےکے اوصاف میں کوئی حکمران فاروق اعظم  ﷜ کا  ثانی نہیں۔ آپ اپنے بے  پناہ رعب وجلال اور دبدبہ کے باوصف نہایت درجہ  سادگی فروتنی  اورتواضع کا پیکر تھے ۔ آپ کا قول ہے کہ ہماری عزت اسلام کے باعث ہے  دنیا کی چکا چوند کے باعث نہیں۔ سید ناعمر فاروق کے بعد آنے والے حکمرانوں میں سے  جس  نے بھی کامیاب حکمران بننے کی خواہش کی ،اسے فاروق اعظمؓ کے قائم کردہ ان زریں اصول کو مشعل راہ  بنانا پڑا جنہوں نے اس عہد کے مسلمانوں کی تقدیر بدل کر رکھ دی تھی۔ سید نا عمر  فاروق ﷜  کے اسلام لانے اور  بعد کے  حالات احوال اور ان کی   عدل انصاف  پر مبنی حکمرانی  سے اگاہی کے لیے  مختلف اہل  علم  اور مؤرخین نے    کتب تصنیف کی ہیں۔اردو زبان میں شبلی نعمانی ،  محمد حسین ہیکل ،مولانا عبد المالک مجاہد(ڈائریکٹر دار السلام)   وغیرہ کی کتب  قابل  ذکر  ہیں ۔ زیر نظرکتاب خوان المسلمو ن کے  رہنما شیخ عمر تلمسانی  کی  عربی تصنیف   ’’  شہید المحراب عمر بن خطاب‘‘  کا اردو ترجمہ ہے  شیخ عمر تلمسانی  اخوان المسلمون کے تیسرے مرشدِ عام تھے ۔موصوف اگرچہ  وکیل تھے لیکن اسلامی علوم معارف کےحوالے   آپ کا تشخص  ممتاز اور نمایاں تھا۔شیخ عمر تلمسانی  کئی کتب کے مصنف تھے ۔شیخ عمر تلمسانی کی کتاب’’ شہید المحراب‘‘ عام روایتی انداز  میں تاریخ وسوانح کی کتاب نہیں ہے   ۔ حقیقت میں  یہ تاریخ  نہیں بلکہ ایک تحریک ہے ۔عام طور تاریخ کے موضوعات پر لکھنے والے حضرات واقعات کو تفصیل سے اورتاریخ وار لکھتے ہی ہیں  اور تاریخ نگاری کا یہی طریقہ مسلم ہے  لیکن عمر تلمسانی کا  اپنا انداز تحریر اور اسلوب ہے ۔انہوں نے  حضرت عمر فاروق﷜کی سیرت پر اچھوتے انداز میں قلم اٹھایا ہے ۔مصنف کا اس تصنیف کا مقصد واقعات  کی نقشہ کشی  نہیں  ہے بلکہ سیرت عمر﷜ سےتربیت افراداور تنظیم معاشرہ    ہے۔کتاب ہذا  شیخ عمر تلسمانی  کے الفاظ سیرت  سیدنا عمر فاروق کے خوبصورت ومعطر پھولوں سے ترتیب دیا ہوا ایک گل دستہ  ہے ۔مترجم کتاب ہذا جناب  حافظ محمد ادریس صاحب نے اس کتاب کی افادیت کے پیش کےنظر تیس سال قبل اس کا  اردوترجمہ کیا ہے جوپہلے  قسط وار ہفت روزہ ’’ ایشیا‘‘ میں شائع ہوا بعد ازاں  البدر پبلی کیشن  ،لاہور نے اسے کتابی میں صورت میں شائع کیا ۔مترجم کتاب  جماعت اسلامی کے مرکزی راہنما ہونےکے ساتھ  کئی کتابوں کے مصنف ومترجم ہیں اللہ تعالیٰ انہیں صحت وعافیت والی زندگی سےنوازے ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
دیباچہ ازمترجم 7
تعارف 12
فاتحہ الکتاب 19
پہلاباب
عمرؓ قبو ل اسلام سےپہلے 59
دوسراباب:
عمرؓ اوران کےساتھی 85
تیسراباب
سیدناعمرؓ اورقرآن مجید 145
چوتھاباب
عمرؓ بطورخلیفہ راشد 172
پانچواں باب
اسلام میں عورتوں کےحقوق ومراتب 286
چھٹاباب
جہاد 346
ساتواں باب
حضرت عمرؓ اورحضرت خالدبن ولیدؓ 399
آٹھواں باب
حضرت عمرؓ اورخراجی زمینیں 417

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8.39 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam ادب حمد و نعت سنت نبوت

شفاف نعمتیں

شفاف نعمتیں

 

مصنف : پروفیسر محمد رفیق چودھری

 

صفحات: 128

 

امام الانبیاء محمد رسول اللہﷺ کی محبت جزو ایمان ہے اس کے بغیر ایمان کاتصور بھی نہیں کیا جاسکتا محبت کے جذبات میں شعرونظم کے پیکر میں ڈھلتے ہیں تو انہیں نعت کہا جاتا ہے رسول اکرمﷺ کی مدح وستائش اور آپ ﷺ کے اوصاف کریمہ کابیان باعث شادابی ایمان ہے۔ محبت رسولﷺ سوز وگداز، ادب واحترام، سنجیدگی و مانت، حقیقت نگاری اور حفظ مرابت، سچی اور حقیقی نعت گوئی کے عناصر ترکیبی ہیں۔ حفظ مراتب سےمراد یہ ہے کہ نعت کہنے والا اللہ اور بندے میں یعنی خالق اور مخلوق میں فرق وامتیاز کو ہر حال میں ملحوظ رکھے ورنہ وہ الحاد، شرک اور زندقہ مبتلا ہو جائے گا۔ زیرتبصرہ کتاب ’’شفاف نعتیں‘‘ ماہنامہ محدث کے معروف مضمون نگار اور کئی کتب کے مصنف ومترجم محترم مولانا محمد رفیق چودھری﷾ کا مرتب شدہ مجموعۂ نعت ہے۔ اس میں ایک حمد اور 69 تعتیں شامل ہیں۔ اس میں خصوصاً یہ امر ملحوظ رکھا گیا ہے کہ کسی نعت میں کوئی مضمون ایسا نہ ہو جو خلاف شریعت ہو یا جس پر اسلامی تعلیمات کے حوالے سے کو اعتراض وارد ہوسکتاہو۔فاضل مصنف کی زندگی کا طویل حصہ قرآن مجید سمجھنے سمجھانے اور اس کی نحوی و تفسیری مشکلات حل کرنے میں گزرا ہے۔کتاب ہذا کے علاوہ آپ کئی دینی کتب کے مصنف ومترجم ہیں جن میں قرآن کریم کا اردو وانگلش ترجمہ اور تفسیر البلاغ بھی شامل ہے۔ اللہ تعالیٰ ان کی تدریسی وتعلیمی اور تحقیقی وتصنیفی خدمات کو قبول فر مائے۔ آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
دیباچہ 9
حمدباری تعالی : 9
خداوند !شہنشاہ زمین وآسماں توہے 11
شفاف نعتیں: 11
دیوانہ ءعشق احمد گہوں احسان ہےمجھ پر قسمت کا 13
کچھ نہیں مانگتاشاہوں سے یہ شیدا تیرا 15
آپ ﷺ سااورنہیں کوئی بھی انساں آقا 17
وہ ہیں محبوب حق کونین میں ہے احترام ان کا 19
کسی غمگسار کی   محنتوں کایہ خوب میں نےصلہ دیا 20
زندگی کوتاابد ممنون احساں کردیا 22
اےخاورحجاز کےرخشندہ آفتاب 25
ہرابتداسے پہلے ہراک انتہاکےبعد 26
قرآن کی تفسیر ہے گفتارمحمد 27
ہیں مہر نبوت بداماں محمد ﷺ 28
لاکھوں سلام اس شہ ءعالی صفات پر 29
وہ سید سادات وہ اللہ کےدلدار 31
خوش خصال وخوش خیال وخوش خبرخیر البشر 33
چھائی ہوئی تھی ظلمت عصیاں ترے بغیر 354
خداگواہ دل وجاں سےہوں فدائے رسول ﷺ 39
مصطفی جان رحمت پہ لاکھوں سلام 41
ہادی برحق آیہ ءرحمت ﷺ 43
روج محبت پیکر شفقت ،ﷺ 44
وردزباں ہےنام پیمبر ،ﷺ 46
رحمت اورسرورعالم ،ﷺ 47
مطلع ایماں مظہر عرفاں ،ﷺ 48
چل رہی تھی ظلم کی تلوار زیرآسماں 50
مدینے کےدرودیوار دیکھوں 54
وہ شمع اجالا جس نےکیا چالیس برس تک غاروں میں 56
چاند میں چاندنی نہیں پھول میں دلکشی نہیں 57
کھلا دل کاگلستان گنبد خضرا کےسائےمیں 58
دل جس سےزندہ ہےوہ تمنا تمہی توہو 60
سرشار جامبادہ اقراء تمہی توہو 62
شام الم کی صبح فروزاں تمہی توہو 64
پوچھو نہ فرشتوں سےنہ انسان سےپوچھو 65
مدینے کاسفر اورمیں نم دیدہ نم دیدہ 66
خوشبوہےوہ عالم میں تری اےگل چیدہ 68
کونین کےسردار ہیں مدفون مدینہ 70
اےکہ تراوجوپاک دشمن فتنہ پروری 71
مطلع نورہدی ہے سنت خیرالوری 73
غارحراتھی منزل خلوت حضورکی 75
لازم ہےمومنوں پراطاعت رسول کی 76
تونے ہرشخص کی تقدیر میں عزت لکھی 78
گماں پہ فتح اگر قوت یقیں سےملی 79
سلام اےآمنہ کےلال اےمحبوب سبحانی 81
جوسینہء سحرمیں کرتاہے ضوفشانی 83
یہی ہےوہ جہاں کی بادشاہی 84
کس پیکر نرہت کےدل میں مرے یادآئی 85
صبابہ کس کی آمد کی نوید جاں فزالائی 86
اللہ اللہ کتنااونچا ہےمقام مصطفی 87
دنیا کوگمرہی سےنکلا حضو رنے 88
سلام اس پر جسےحق نےعطاکی شان یکتائی 89
بھٹکے ہوؤں کوراہ دکھائی ہےآپ نے 90
انسانیت کادرس پڑھایا حضو رنے 91
ہیچ ہیں دونون جہاں میری نظر کےسامنے 93
مسرور کیاسرشارکیا اس کالی کملی والےنے 94
رستہ جوملافخر رسالت سےملاہے 96
جس میں تراعکس اتر گیا ہے 97
یادنبی کےلطف سےجوفیض یاب ہے 99
جب تک دیارپاک مدینہ میں ہم رہے 100
کوئی کیابتائےکہ چیز یہ گدازعشق رسول ہے 102
شمس وقمر کی ضوتر ےقدموں کی دھول ہے 103
محمد ﷺ کاہمسرجہاں میں نہیں ہے 104
کہاں وہ بات کسی صاحب صفات میں ہے 105
رخشندہ ترےحسن سےرخسار یقیں ہے 106
موسی سےسرطورکلام اپنی جگہ ہے 107
مچی اک دھوم عالم میں محمد مصطفی آئے 108
وہ موج نورجومشعل ہےکارواں کےلئے 109
رسول مجتبی کہے محمدمصطفی کیئے 111
اے امت غنودہانبوہ بےوقار 112
سلام اس پر جوچمکا کفر کی کالی گھٹاؤوں میں 116
سلام اس پر کہ جس کواحمد مختار کہتےہیں 117
سلام اس پر لقب تھار رحمتہ للعالیمن جسکا 121
سلام اس پر کہ جس نےبیکسوں کی دستگیری کی 125

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام تاریخ خلافت راشدہ زبان سیرت سیرت صحابہ قربانی

سیرت عمر فاروق ؓ

سیرت عمر فاروق ؓ

 

مصنف : محمد رضا

 

صفحات: 344

 

اللہ تعالیٰ نے امت ِاسلامیہ میں چند ایسے افراد پیدا کیے جنہوں نے دانشمندی ، جرأت بہادری اور لازوال قربانیوں سے ایسی تاریخ رقم کی کہ تاقیامت ا ن کے کارنامے لکھے اور پڑھے جاتے رہے ہیں گے تاکہ افرادِ امت میں تازہ ولولہ اور جذبۂ قربانی زندہ رہے۔ آج مغرب سر توڑ کوشش کر رہا ہے کہ مسلمان ممالک کے لیے ایسی تعلیمی نصاب مرتب کیے جائیں جوان ہیروز اور آئیڈیل افراد کے تذکرہ سے خالی ہوں کہ کہیں ایسا نہ ہو کہ نوجوان پھر سےوہی سبق پڑھنے لگیں جس پر عمل پیرا ہو کر اسلامی رہنماؤں نے عالمِ کفر کے ایوانوں میں زلزلہ بپا کردیا تھا۔ہماری بد قسمتی دیکھئے کہ ہمارے تعلیمی اداروں میں غیر مسلموں (ہندوؤں،عیسائیوں ،یہودیوں) کے کارنامے تو بڑے فخر سے پڑھائے جارہے ہیں مگر دینی تعلیمات او رااسلامی ہیروز کے تذکرے کو نصاب سے نکال باہر کیا جارہا ہے ۔ سیدنا فاروق اعظم ﷜کی مبارک زندگی اسلامی تاریخ کاوہ روشن باب ہے جس نےہر تاریخ کو پیچھے چھوڑ دیا ہے ۔ آپ نے حکومت کے انتظام   وانصرام بے مثال عدل وانصاف ،عمال حکومت کی سخت نگرانی ،رعایا کے حقوق کی پاسداری ،اخلاص نیت وعمل ،جہاد فی سبیل اللہ ،زہد وعبادت ،تقویٰ او رخوف وخشیت الٰہی او ردعوت کے میدانوں میں ایسے ایسے کارہائےنمایاں انجام دیے کہ انسانی تاریخ ان کی مثال پیش کرنے سے قاصر ہے۔ انسانی رویوں کی گہری پہچان ،رعایا کے ہر فرد کے احوال سے بر وقت آگاہی او رحق وانصاف کی راہ میں کوئی رکاوٹ برداشت نہ کر نےکے اوصاف میں کوئی حکمران فاروق اعظم ﷜ کا ثانی نہیں۔ آپ اپنے بے پناہ رعب وجلال اور دبدبہ کے باوصف نہایت درجہ سادگی فروتنی اورتواضع کا پیکر تھے ۔ آپ کا قول ہے کہ ہماری عزت اسلام کے باعث ہے دنیا کی چکا چوند کے باعث نہیں۔ سید ناعمر فاروق کے بعد آنے والے حکمرانوں میں سے جس نے بھی کامیاب حکمران بننے کی خواہش کی ،اسے فاروق اعظمؓ کے قائم کردہ ان زریں اصول کو مشعل راہ بنانا پڑا جنہوں نے اس عہد کے مسلمانوں کی تقدیر بدل کر رکھ دی تھی۔ سید نا عمر فاروق ﷜ کے اسلام لانے اور بعد کے حالات احوال اور ان کی   عدل انصاف پر مبنی حکمرانی سے اگاہی کے لیے مختلف اہل علم اور مؤرخین نے   کتب تصنیف کی ہیں۔اردو زبان میں شبلی نعمانی ، ڈاکٹر صلابی ، محمد حسین ہیکل ،مولانا عبد المالک مجاہد(ڈائریکٹر دار السلام)   وغیرہ کی کتب قابل ذکر ہیں ۔ زیرنظر کتاب ’’ سیرت عمر فاروق ﷜‘‘ محترم محمد رضاکی تصنیف ہے جوکہ خلیفہ ثانی سیدنا عمر بن خطاب ﷜ کی سیرت اورکارناموں پر مشتمل ہے ۔ نبی کریم ﷺ نے فرمایا تھا’’ اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا تو عمر فاروق﷜ہوتے ‘‘ آپ کے دور خلافت میں اسلامی سلطنت کی حدود بائیس لاکھ مربع میل تک پھیلی ہوئی تھیں۔ حتیٰ کہ غیر مسلم دانشور یہ لکھنے پر مجبور ہوگئے کہ اگر ایک عمر او رپیدا ہوجاتا تو دنیا میں کوئی کافر باقی نہ رہتا۔ اللہ تعالی مصنف ،مترجم ،ناشرین کی اس کاوش کو قبول فرمائے ۔اور تمام اہل اسلام کو صحابہ کرام﷢   کی طر ح زندگی بسر کرنے کی توفیق اور عالم اسلام کے حکمرانوں کو سیدنا عمر فاروق ﷜کے نقشے قدم   پرچلنے   کی توفیق عطا فرمائے(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 8
مقدمۃ المحقق 9
مقدمہ 15
حیات عمر بن خطاب ﷜ 20
آپ کا نسب اور تاریخ پیدائش 22
عمر فاروق ﷜ کی اولاد اور ازواج 22
دور جاہلیت میں عمر ﷜ کا گھر 23
دور جاہلیت میں آپ کا مقام و مرتبہ 23
آپ﷜ کا حلیہ 23
عمر فاروق ﷜ کا اسلام قبول کرنا 24
ظہور اسلام 33
آپ کے لقب فاروق کی وجہ تسمیہ 34
عمر ﷜ کی ہجرت مدینہ 35
اپنی لخت جگر ؓ کی رسول اللہ ﷺ سے شادی کرنا 38
عمر﷜ کا خلیفہ بننا 39
عمر﷜ کی عفت 40
آپ کےلیے امیر المومنین کا لقب 45
عمر فاروق ﷜ کے کارنامے 46
مسجد نبوی کی توسیع 47
مسجد حرام کی توسیع 50
آپ کی نرمی اورسختی 51
عمر ﷜ کا اپنی اہلیہ کے لیے ہدیہ قبول نہ کرنا 53
عمر ﷜ کا ذکر الہٰی اور تلاوت قرآن سے متاثر ہونا 53
عمر﷜ کی دعا 54
عمر فاروق ﷜ سے شیطان کا ڈرنا 54
عمر ﷜ کی فضیلت 55
آپ کاستر پوشی کرنا اور عزت کا دفاع کرنا 56
عمر ﷜ کا رات کے وقت گشت کرنا 58
دیوان مرتب کرنا 61
دیوان کی وجہ تسمیہ 63
صدقات ، مال فے اور مال غنیمت 64
عطیات کی تقسیم میں ابوبکر ﷜ کی رائے 66
عمر ﷜ کی رائے 66
ام المومنین زینب ؓ اپنا عطیہ تقسیم کر دیتیں 66
عمر ﷜ نے چھوٹے بچوں کےلیے وظیفہ مقرر کیا 67
عمر ﷜ کی شہادت 68
مختلف ممالک میں عمال کا تقرر 68
قاضیوں کا تقرر 69
عمر ﷜ کی اپنے بیٹے کو وصیت 69
عمرفاروق ﷜ کی کرامات 71
عمر بن خطاب ﷜ کی وفات پر تعریفی کلمات 72
عمر کے بارے میں مستشرقین کی آراء 74
عمر فاروق ﷜ کے بعض خطبے 76
پہلا خطبہ 76
دوسرا خطبہ 76
تیسرا خطبہ 77
چوتھا خطبہ 79
پانچواں خطبہ 81
عمر ﷜ کا قضا سے متعلق شریح کو خط 82
قضا سے متعلق عمر ﷜ کا ابو موسیٰ اشعری ﷜ کے نام خط 82
عمر ﷜ کی ابو موسیٰ اشعری﷜ کے نام خط میں وصیت 83
عمر کے اقوال زریں 85
عمر بن خطاب کی خلافت 95
آپ کا پہلا کارنامہ ابو عبیدہ اور مثنیٰ کی زیر قیادت عراق کی طرف لشکر کشی 95
معرکۂ نمارق ض 97
معرکہ جسر 97
مسلمانوں کی ہزیمن کے اسباب 100
الیس صغری 101
معرکہ بویب 102
سوق خنانس اور سوق بغداد 106
ملک شام کاتعارف 106
شام کی فضا 108
شام کی پیداوار 109
نہریں اور دریا 109
قبل از اسلام شام کے متعلق تاریخ عرب 112
شام کی لڑائی 113
دمشق کا محاصرہ 116
ابان کی زوجہ کا مسلمانوں کے ساتھ مل کر جنگ کرنا 120
رومیوں کا شب خون مارنا 122
صلح کے متعلق بات   چیت 124
ابو عبیدہ ﷜ کا سن 14ہجری میں دمشق میں داخل ہونا 125
معرکہ فحل 127
اہل دمشق کا ابو عبیدہ ﷜ کے نام خط یززجرد کی فارس پر تخت نشینی ، معرکہ قادسیہ 130
فوجی بھرتی 131
عمر ﷜ کا بذات خود عراق جانے کے لیے تیار ہونا 132
عام رائے 132
خاص رائے 133
سعد بن ابی وقاص ﷜ کا انتخاب 134
عمر ﷜ کی سعد بن ابی وقاص ﷜ کو وصیت 134
مثنیٰ ﷜ کی   وفات 136
مثنیٰ ﷜ کی سعد بن ابی وقاص ﷜ کو وصیت 138
مسلمانوں کےلشکروں کی ترتیب 139
عمر بن خطاب ﷜ اور سعد بن ابی وقاص ﷜ کے درمیان مراسلت 140
میدان قتال 142
یزد جرد کا قتال کی جلدی کرنا 143
مسلمانوں کا وفد یزد جرد کو دعوت اسلام دینے جاتا ہے 144
لشکر رستم کی روانگی 149
سعد ﷜ کا اپنے لشکر کو قتال سے روکنا 150
طلیحہ کی جرات 151
رستم قتال سے بچنے کی کوشش کرتا ہے 152
فارسی نہر عبور کرتے ہیں 158
لڑائی کی تیاری 159
سعد ﷜ کا بیمار ہو جانا 160
خطبہ سعد 160
عاصم بن عمرو کا خطبہ 161
یوم ارمات ، معرکہ قادسیہ کا پہلا دن 163
ہاتھی 164
سعد ﷜ کی اہلیہ سلمیٰ کا ا نہیں ملامت کرنا 166
یوم اغواث ( معرکہ قادسیہ کا دوسرا روز ) 167
ابو محجن ثقفی قید سے نکل کر میدان قتال میں 170
یوم عماس ( معرکہ قادسیہ کا تیسرا روز ) 174
ہاتھوں کا فرار ہونا 175
شب ہریر یا شب قادسیہ 177
لڑائی کے نقصانات 181
مسلمانوں کی فتح کی اہمیت 182
قادسیہ کے بعد فتح مدائن 183
یوم برس 183
یوم بابل 183
مدائن کی فتح 184
ایوان کسریٰ 186
مسلمانوں کا مال غنیمت 187
معرکہ جلولاء 190
تکریت اور موصل کی فتح 193
فتح ماسبذان 194
فتح قرقیسیاء 195
تاریخ ہجری 199
بصرہ کی تعمیر 200
کوفہ کی تعمیر 201
معرکہ حمص 203
فتح جزیرہ 205
فتح ارمینیہ 206
عمر﷜ کی شام کی طرف روانگی 207
معرکہ قنسرین 209
انطاکیہ کی فتح 209
معرکہ مرج الروم 210
قیساریہ کی فتح 211
بیسان کی فتح اور اجنادین کا واقعہ 211
عمرو بن عاص﷜ کی حیلہ سازی 213
عمر بن خطاب ﷜ کا شام کی طرف روانہ ہونا 215
بیت ا لمقدس کی فتح 216
عمر﷜ کی ملک شام آمد 225
عمر فاروق ﷜ کا لشکر کو خطاب 225
عمر ﷜ کی تواضع اور سا دگی 227
عمر ﷜ کا بطریق کی طرف جانا 228
عمر فاروق﷜ کا بیت المقدس میں تشریف لے جانا 229
بیت المقدس والوں کے لیے عہد 230
حلب شہر کی فتح 233
فتح عزاز 236
معرہ اور دیگر شہروں کی فتح 237
قحط کا سال 237
بارش کے لیے درخواست 238
طاعون عمواس 241
ابو عبیدہ بن جراح ﷜ کی وفات 243
معاذ بن جبل ﷜ کی وفات 247
یزید بن ابو سفیان ﷜ کی   وفات 250
شرحبیل بن حسنہ کی وفات 251
طاعون عمواس کے بعد عمر ﷜ کی شام روانگی 253
شام وعراق میں مسلمانوں کی کامیابی کے اسباب 254
مصر کی فتح 258
معرکہ عین شمس 262
بابلیوں قلعے کی فتح 264
صلح کے لیے مذاکرات 266
قلعہ بابلیوں کی فتح   پرواشنجتوں کی رائے اور مناقشہ 274
عمرو بن عاص ﷜ کا امیر المومنین کو مصر کا تعارف کرانا 277
صلح کی شروط 278
اسکندریہ کی طرف روانگی اور اس کی فتح 280
قسطاط عمرو ﷜ 281
عمر بن خطاب ﷜ کو فتح اسکندریہ کی خبر پہنچانے کے لیے معاویہ بن خدیج کی روانگی 288
دمیاط کی فتح 290
عروس نیل 291
اسکندریہ کی لائبریری آگ کی لپیٹ میں 294
بحرین سے فارس کی لڑائی 297
قدامہ ﷜ کی معزولی 297
اہواز کی فتح او رہرمزان کی شکست 301
ہرمزان کی صلح 304
بصرہ کے لشکر کا وفد عمر ﷜ کی خدمت میں 305
یزدجرد کا مسلمانوں سے قتال کے لیےدوبارہ نکلنا ،ہرمزان کی اسیری ہرمزان کی بطور قیدی مدینہ کی طرف روانگی 308
وفد کا فتوحات کی وسعت کا طلبگار ہونا 311
سوس کی فتح اور معرکہ نہاوند 312
دانیال کی قبر 314
معرکہ نہاوند میں مسلمانوں کا مال غنیمت 318
سعد بن ابی وقاص﷜ اور چغل خور 319
فتح اصبہان 321
آذر بائیجان کی فتح 322
رے وغیرہ کی فتح 322
اہل رے کی صلح 324
مدینہ الباب کی فتح 325
ترک کی لڑائی 327
عمر بن خطاب ﷜ کی شہادت 329
عمر فاروق ﷜ کا قرض 331
رسول اللہ ﷺ کے پہلو میں تدفین کی عائشہ ؓ سے اجازت لینا 331
خلافت شوریٰ 332
خلیفہ کا چناؤ 332
عمر ﷜ کی لوگوں کو وصیت 337
اپنے بعد والے خلیفہ کے لیے وصیت 338
عمر ﷜ کا قاتل ابو لؤلؤہ 340
عبید اللہ بن عمر اور ان کا ہر مزان کو قتل کرنا 341
ہرمزان اور جفینہ کی عمر ﷜ کو قتل کرنے کی سازش 343
عمر فاروق ﷜ کی تدفین 344

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
16.2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام تاریخ خلافت راشدہ زبان سیرت صحابہ

سیدنا حضرت عمر فاروق اعظم ؓ

سیدنا حضرت عمر فاروق اعظم ؓ

 

مصنف : محمد حسین ہیکل

 

صفحات: 907

 

حضرت ابوبکر صدیق کے بعد مسلمانوں کی امارت حضرت عمر﷜ کواس وقت سونپی گئی جب حضرت ابو بکر ﷜ فتنہ ارتدار کا استیصال کرچکے تھے  اور اسلامی  فوجیں عراق  وشام کی سرحدوں پر ایران اور روم کی طاقتوں سے نبرد آزما تھیں لیکن  جب حضرت عمر ؓ کی  وفات ہوئی  تو عراق وشام کلیۃً اسلامی سلطنت کے زیر اقتدار آچکے  تھے  ،بلکہ  وہ ان سے گزر کر ایران  او رمصر میں بھی اپنے پرچم لہرا چکی تھی جس  کی وجہ سے  اس کی حدوو مشرق میں چین مغرب میں افریقہ ،شمال میں بحیرہ قزوین اورجنوب میں سوڈان  تک وسیع  ہوگئی تھیں۔سیدنا فاروق اعظم ﷜کی مبارک زندگی اسلامی تاریخ  کاوہ روشن باب ہے جس  نےہر تاریخ کو پیچھے چھوڑ  دیا ہے ۔ آپ  نے حکومت کے انتظام   وانصرام  بے مثال عدل  وانصاف ،عمال حکومت کی سخت نگرانی ،رعایا کے حقوق کی پاسداری ،اخلاص نیت وعمل ،جہاد فی سبیل اللہ  ،زہد وعبادت ،تقویٰ او رخوف وخشیت الٰہی  او ردعوت کے میدانوں میں ایسے ایسے کارہائےنمایاں انجام دیے  کہ انسانی تاریخ ان کی مثال پیش کرنے  سے  قاصر ہے۔ انسانی  رویوں کی گہری پہچان ،رعایا کے ہر فرد کے احوال سے بر وقت آگاہی او رحق  وانصاف کی راہ میں کوئی رکاوٹ برداشت نہ کر نےکے اوصاف میں کوئی حکمران فاروق اعظم  ﷜ کا  ثانی نہیں۔ آپ اپنے بے  پناہ رعب وجلال اور دبدبہ کے باوصف نہایت درجہ  سادگی فروتنی  اورتواضع کا پیکر تھے ۔ آپ کا قول ہے کہ ہماری عزت اسلام کے باعث ہے  دنیا کی چکا چوند کے باعث نہیں۔ سید ناعمر فاروق کے بعد آنے والے حکمرانوں میں سے  جس  نے بھی کامیاب حکمران بننے کی خواہش کی ،اسے فاروق اعظمؓ کے قائم کردہ ان زریں اصول کو مشعل راہ  بنانا پڑا جنہوں نے اس عہد کے مسلمانوں کی تقدیر بدل کر رکھ دی تھی۔ سید نا عمر  فاروق ﷜  کے اسلام لانے اور  بعد کے  حالات احوال اور ان کی   عدل انصاف  پر مبنی حکمرانی  سے اگاہی کے لیے  مختلف اہل  علم  اور مؤرخین نے    کتب تصنیف کی ہیں۔اردو زبان میں شبلی نعمانی ، ڈاکٹر صلابی ، محمد حسین ہیکل ،مولانا عبد المالک مجاہد(ڈائریکٹر دار السلام)   وغیرہ کی کتب  قابل  ذکر  ہیں ۔زیر نظر کتاب ’’سیدنا حضرت عمر فاروق﷜‘‘ محمد حسین   ہیکل کی کتاب  الفاروق  کا ترجمہ ہے ۔اس میں   مصنف نے  حضرت عمر فاروق ﷜ کے   عہد جاہلیت سے وفات کے حالات واقعات کو   پچیس  ابو اب میں  تقسیم کر کےاس انداز سے   بیان کیا ہے کہ  جس  سے   حضرت عمر فاروق﷜ کے تفصیلی حالات   ایک جگہ مرتب ہوگئے  ۔اللہ تعالی   مصنف  ومترجم کی  اس کاوش کو قبول فرمائے ۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
حرف آغاز 6
عہد جاہلیت کا ایک ورق 39
شرف اسلام سے سرفرازی 62
موافقات عمر ؓ 86
صدیق اکبر ؓکے دوش بدوش 113
عہد فاروقی ؓکا آغاز 134
ابو عبید ؓاور مثنٰی ؓکے کارنامے 160
فتح دمشق 191
جنگ قادسیہ کی تفصیلی رواداد 219
فتح مدائن 275
مسلمانوں کا عراق پر تسلط 299
شام سے رومی فوجوں کا اخراج 328
حضرت عمر ؓبیت المقدس میں 357
شام پر مسلمانوں کے قبضہ کی تکمیل 384
ایرانی فتوحات میں توسیع 428
فتح نہاوند 453
ایرانی فتوحات کا تتمہ 474
اسلامی فوجوں کی مصر کی طرف پیش قدمی 513
مصر میں اسلامی فوج کی کامیابیاں 556
فتح اسکندریہ 597
مصر پر مسلمانوں کا قبضہ 641
امور مملکت کا نظم و نسق 686
عہد فاروقی ؓمیں اجتماعی زندگی کا ایک نقشہ 741
حضرت عمر ؓکا اجتہاد 792
حضرت عمر ؓکی شہادت 840
حرف اختتام 886

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
30.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اذکار وادعیہ

سجود وتر اور ختم القرآن کے لیے منتخب دعائیں

سجود وتر اور ختم القرآن کے لیے منتخب دعائیں

 

مصنف : محمد بن عبد العزیز المسند

 

صفحات: 80

 

شریعتِ اسلامیہ میں دعا کو اایک خاص مقام حاصل ہے ۔او رتمام شرائع ومذاہب میں بھی دعا کا تصور موجود رہا ہے مگر موجود ہ شریعت میں اسے مستقل عبادت کادرجہ حاصل ہے ۔صرف دعا ہی میں ایسی قوت ہے کہ جو تقدیر کو بدل سکتی ہے ۔دعا ایک ایسی عبادت ہے جو انسا ن ہر لمحہ کرسکتا ہے اور اپنے خالق ومالق اللہ رب العزت سے اپنی حاجات پوری کرواسکتا ہے۔مگر یہ یاد رہے انسان کی دعا اسے تب ہی فائدہ دیتی ہے جب وہ دعا کرتے وقت دعا کےآداب وشرائط کوبھی ملحوظ رکھے۔ بہت سارے اہل علم نے قرآن وحدیث سے مسنون ادعیہ پر مشتمل بڑی وچھوٹی کئی کتب تالیف کی ہیں تاکہ قارئین ان سے اٹھاتے ہوئے اپنے مالک حقیقی سے تعلق مضبوط کرسکیں۔ زیر تبصرہ کتاب ’’منتخب دعائیں‘‘ شیخ محمد بن عبدالعزیز المسند کامرتب کردہ دعاؤں کامجموعہ ہے ۔ یہ مجموعہ شیخ موصوف نے ائمہ مساجد اور دیگر حضرات کے لیے جمع کیا ہے ۔تاکہ وہ رمضان وغیر رمضان ، سجدوں ،نماز وتر میں اور ختم قرآن کےموقعہ پر ان ادعیہ مبارکہ سے استفادہ کرسکیں

 

 

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام توحید ربوبیت زبان سلفی سنت عقیدہ و منہج علماء

صحیح اسلامی عقیدہ حصہ 4

صحیح اسلامی عقیدہ حصہ 4

 

مصنف : مختلف اہل علم

 

صفحات: 165

اسلام  کی  فلک  بوس  عمارت  عقیدہ  کی  اسا س پر قائم ہے  ۔ اگر  اس بنیاد میں  ضعف یا  کجی  پیدا ہو جائے تو دین کی عظیم عمارت  کا وجود  خطرے میں پڑ جاتا  ہے۔ عقائد کی تصحیح اخروی فوزو فلاح کے لیے اولین شرط ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اللہ کی طرف سے بھیجی جانے والی برگزیدہ شخصیات سب سے پہلے توحید کا علم بلند کرتے ہوئے نظر آتی ہیں۔  اور  نبی کریم ﷺ نے  بھی مکہ معظمہ میں  تیرا سال کا طویل عرصہ  صرف اصلاح ِعقائدکی جد وجہد میں صرف کیا عقیدہ توحید کی تعلیم وتفہیم کے لیے   جہاں نبی  کریم ﷺ او رآپ  کے صحابہ کرا م﷢ نے بے شمار قربانیاں دیں اور تکالیف کو برداشت کیا  وہاں علماء اسلام نےبھی دن رات اپنی  تحریروں اور تقریروں میں اس کی اہمیت کو  خوب واضح کیا ۔ عقائد کے باب میں اب تک بہت سی کتب ہر زبان میں شائع ہو چکی ہیں اردو زبان میں بھی اس موضوع پر قابل قدر تصانیف اور تراجم سامنے آئے ہیں اور ہنوز یہ سلسلہ جاری  ہے زیر نظر کتاب ’’ صحیح اسلامی عقیدہ‘‘ مدینہ یونیورسٹی  اور جامعۃالامام  محمد بن سعود ،الریاض کے  اساتذہ  کی ٹیم کی   تیار کردہ کتاب کا اردو ترجمہ ہے  جوکہ چھ حصوں پر مشتمل ہے ۔ یہ  کتاب جامعہ سلفیہ ،بنارس  اور ہندوستان کے کئی سلفی مدارس میں شامل نصاب ہے۔یہ کتاب اسلامی عقیدہ سیکھنے اور  مسلمانوں کےحالات کی اصلاح کے لیے بہترین کتاب ہے ۔مصنفین نے اس کتاب میں شامل تمام موضوعات کو  عمدہ اور ایسے سادہ عبارت  واسلوب میں بیان کیا ہے کہ جن سے عقائد کے مسئلہ میں پڑھنے والے کو پوری تشفی حاصل ہوجاتی ہے ۔ صحیح عقیدہ کی تعلیم واشاعت کے سلسلہ میں  مصنفین کےاخلاص کا پتہ اس بات  سے بھی چلتا ہے کہ کتاب کی تیاری  کے بعد انہوں نے اسےبراعظم افریقہ کے بعض مدارس اور وہاں منعقد ہونے والے تدریبی دوروں میں پڑھانے کاانتطام کراکر اس بات کا اطمینان حاصل کیا  ہےکہ کتاب اپنے مقصد میں کامیاب ہے۔اللہ  تعالیٰ اس کتاب کے مصنفین ،مترجم وناشرین  کی اس عمدہ کاوش کوقبول فرمائے ۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 3
مقدمہ 7
عام مقاصد 9
ہدایات 10
تمہید 11
توحید اورعقیدہ کی تعریف 11
عقیدہ صحیحہ کی اہمیت اور امتوں کو ان کی ضرورت 11
انسانیت کی اصل توحید ہے 13
اہل سنت والجماعت کے نزدیک دین کا مصدر 16
عقائد میں احادیث آحاد کو دلیل بنانا 17
عقیدہ صحیحہ سے انحراف کے اسباب 18
عقیدہ صحیحہ کے دفاع میں مصلحین کی مساعی کانمونہ 19
ایمان اور اس کا مسمی 23
ایمان کے ارکان 25
رکن اول اللہ پر ایمان 29
1۔توحید ربوبیت 29
1۔اس کی تعریف 29
2۔اللہ نے لوگوں کوتوحید پر پیدا کیا 30
اللہ کےوجود کے منکر ملحدین کا رد 31
مشرکین کا توحید ربوبیت کا اقرار انہیں اسلام میں داخل نہیں کر سکتا 32
2۔توحید الوہیت 35
اس کی تعریف 35
انسان اور جن کی تخلیق کی حکمت 35
توحید ربوبیت کی اہمیت 35
کلمہ توحید کے معنی اور اس کے مشروط 37
اس کے دو ارکان 37
اس کے شروط 38
لا الا الہ اللہ کی فضیلت 41
3۔توحید اسماء و صفات 45
نصوص صفات کے متعلق فریضہ 46
اللہ تعالیٰ کی بعض صفات کا ذکر 49
اللہ تعالیٰ کے اسماء حسنیٰ 51
اللہ تعالیٰ کے اسماء و صفات پر ایمان کا اثر 53
عبادت اوراس کی تعریف 56
عمل کی قبولیت کےشروط 57
ایک اللہ کی عبادت کا وجود 58
عبادت کے بعض انواع 60
مخلوق سے استغاثہ کب جائز ہے ؟ 66
خوف، خشیت اور ہسبت 68
خوف کے اقسام 69
امید اور رغبت 71
خوف اورامید کو جمع کرنا 73
محبت 75
محبت کے اقسام 75
محبت مشترک کے تین انواع ہیں 75
محبت خاص 76
بندہ کے اپنے رب سے محبت کی علامت 76
اللہ کی محبت حاصل کرنے کے اسباب 78
توکل 78
غیر اللہ پرتوکل کے اقسام 80
اسباب اختیار کرنا توکل کے منافی نہیں 80
استعاذہ 82
استعانت 83
ذبح 84
نذر 84
انابت 86
خشوع وخضوع 87
رکن دوم ملائکہ پر ایمان 89
ملائکہ سے مراد 89
ملائکہ پر ایمان 90
ملائکہ کے نام 90
ملائکہ کے صفات 91
ملائکہ پر ایمان کے فوائد 93
رکن سوم اللہ کی نازل کی ہوئی کتابوں پر ایمان 95
کتابوں  اور ان پر ایمان سے کیا مراد ہے ؟ 95
کتابوں کی تعداد اور ان کے نام 96
سابقہ کتب کی تحریف 96
سابقہ کتب کی تحریف کے دلائل 97
سابقہ کتب سے متعلق مسلمانوں کا مؤقف 98
قرآن پر ایمان 99
کتابوں پر ایمان کے فوائد 100
رکن چہارم رسولوں پر ایمان 102
رسول کی تعریف 102
رسولوں پر ایمان 102
رسالت انتخاب ہے 103
ان کی تعداد اور ان کے نام 104
رسولوں کی رسالت کا موضوع 105
رسولوں سے متعلق ہمارا فریضہ 105
محمد ﷺپرایمان 108
اس شہادت کا تقاضا 108
آپﷺکے حقوق 108
آپﷺکی رسالت کا عموم 109
ختم نبوت 111
آپﷺکی فضیلت اور آپ کے بعض معجزات 112
رسولوں پر ایمان کے فوائد 113
رکن پنجم آخرت پر ایمان 115
یوم آخر سے کیا مراد ہے ؟ 115
یوم آخر پر ایمان کے معنی 115
منکرین بعث کا رد 116
یوم آخر پر ایمان کن باتوں کو شامل ہے 120
علامات قیامت 120
علامات صغری 120
علامات کبری 123
قبر کی آزمائش 125
قبر کی نعمتیں اوراس کا عذاب 126
مومن کے لیے عذاب قبر کےا سباب 129
بعث و حشر 131
محشر میں لوگوں کے احوال 134
جزا اور حساب 136
حوض 138
میزان 139
صراط 141
جنت اور جہنم 144
یوم آخر پر ایمان کے فوائد 147
رکن ششم تقدیر پر ایمان 148
تقدیر اور اس پر ایمان سے مراد 148
تقدیر کے مراتب 149
بندے کی مشیت اور اس کا اختیار 150
اسباب اختیار کرنا 153
تقدیر میں بےجا غور و خوض سے ممانعت 153
تقدیر پر ایمان کے فوائد 154
مشق 156
فہرست 157

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2

Categories
Islam اسلام تراجم حدیث زبان سلفی سنت

صحیح بخاری جلد ہفتم

صحیح بخاری جلد ہفتم

 

مصنف : محمد بن اسماعیل بخاری

 

صفحات: 1091

 

امام بخاری  کی شخصیت اور  ان کی صحیح بخاری کسی تعارف کی  محتاج نہیں  سولہ سال کے طویل عرصہ میں امام  بخاری نے  6 لاکھ احادیث سے  اس کا انتخاب کیا اور اس کتاب کے ابواب کی ترتیب روضۃ من ریاض الجنۃ میں  بیٹھ کر فرمائی اور اس میں  صرف صحیح احادیث کو شامل کیا ۔ جسے اللہ تعالیٰ نے صحت کے اعتبار سےامت محمدیہ میں’’ اصح الکتب بعد کتاب اللہ‘‘ کادرجہ  عطا کیا بے شماراہل علم  اور ائمہ  حدیث  ننے  مختلف انداز میں  مختلف  زبانوں میں صحیح بخاری کی شروحات  لکھی ہیں  ان میں سے فتح الباری از ابن حافظ ابن حجر عسقلانی  کو  امتیازی مقام  حاصل  ہے  ۔اردو زبان میں سب سے پہلے  علامہ وحید الزمان نے  صحیح بخاری کا  ترجمہ کیا ہے ان کےبعد کئی شیوخ الحدیث  اور  اہل علم نے  صحیح بخاری  کا ترجمہ  حواشی اور شروح  کا کام  سرانجام دیا ۔ان میں سلفی منہج پر لکھی  جانے  والی فیض الباری  ازابو الحسن سیالکوٹی ، توفیق الباری  اور  حافظ عبدالستار حماد کی شرح بخاری  قابل ذکر ہیں ۔ زیر نظر  کتاب ’’ صحیح بخاری ‘‘ مو لانا  داؤد راز کے  ترجمے ساتھ سات مجلدات پر مشتمل یونیکوڈ  اور پی ڈی  ایف فارمیٹ میں  منفرد نوعیت  کی  حامل ہے ۔محترم سید شاہنواز حسن، محترم ابوطلحہ عبدالوحید بابر ،محترم محمد عامر عبدالوحید انصاری حفظہم  اللہ نے  بڑی محنت شاقہ سے اسے دعوتی  مقاصد کے لیے  تیا رکیا ہے  ۔کہ  جسے صحیح بخاری  مترجم سے  استفاد ہ کرنے کا تیز ترین سوفٹ وئیر کا درجہ حاصل ہے  ۔ اس پروگرام  میں  صحیح بخاری کے ابواب کی فہرست اور حدیث  نمبر پر کلک کرنے سے ایک  لمحہ میں  مطلوبہ باب  ،متنِ حدیث ، تک  پہنچ  کر  استفادہ کیا جاسکتاہے  ۔اور یونیکوڈ  فائل سے  کسی  بھی  مطلوبہ  حدیث کا  متن او راس کا ترجمہ کاپی کیا جاسکتا ہے ۔قارئین کی آسانی کی  کے پیش  نظر  حدیث کوتلاش کرنے کےلیے  صحیح بخاری کی احادیث کو سات حصوں میں  تقسیم  کر کے  فہارس  ابواب  اور حدیث نمبرز  پر لنک لگا  دئیے گئے  ہیں ۔اللہ تعالی ٰ کتاب ہذا کو تیار کرنے والوں کی تمام مساعی جمیلہ کو شرف  قبولیت سے  نوازے اور  اسے اہل اسلام کے  لیے نفع بخش بنائے ۔ (آمین)
سات حصوں میں موجود احادیث کی  تقسیم حسب  ذیل ہے ۔
حصہ 1 :  کتاب الوحی سے کتاب الجمعہ  احادیث:1سے941
حصہ2 :  کتاب صلاۃ الخوف سے کتاب فضائل مدینہ  احادیث 942 سے 1890
حصہ3 :  کتاب الصوم سے کتاب الوصایا  احادیث 8191سے 2781
حصہ4 :  کتاب الجھاد والسیر سے کتاب فضائل الصحابہ  احادیث 2782سے 3775
حصہ5 :  کتاب مناقب الانصار سے کتاب التفسیر  احادیث3776سے 4835
حصہ6 :  کتاب التفسیر (بقیہ) سے کتاب اللباس    احادیث4836سے 5969
حصہ7 :  کتاب الادب سے کتاب التوحید  احادیث5960سے 7563

 

عناوین صفحہ نمبر
کتاب اخلاق کے بیان میں
کتاب اجازت لینے کے بیان میں
کتاب دعاؤں کے بیان میں
کتاب دل کو نرم کرنے والی باتوں کے بیان میں
کتاب تقدیر کے بیان میں
کتاب قسموں اور نذروں کے بیان میں
کتاب قسموں کے کفارہ کے بیان میں
کتاب فرائض یعنی ترکہ کے حصوں کے بیان میں
کتاب حد اور سزاؤں کے بیان میں
کتاب ان کفار و مرتدوں کے احکام میں جو مسلمانوں سے لڑتے ہیں
کتاب دیتوں کے بیان میں
کتاب باغیوں اور مرتدوں سے توبہ کرانے کا بیان
کتاب زبردستی کام کرانے کے بیان میں
کتاب شرعی حیلوں کے بیان میں
کتاب خوابوں کی تعبیر کے بیان میں
کتاب فتنوں کے بیان میں
کتاب حکومت اور قضا کے بیان میں
کتاب نیک ترین آرزؤں کے جائز ہونے کے بیان میں
کتاب خبر واحد کے بیان میں
کتاب اللہ اور سنت رسول اللہ ﷺ کو مضبوطی سے تھامے رہنا
اللہ کی توحید اس کی ذات اور صفات کے بیان میں

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
16.6 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اذکار وادعیہ درود سیرت النبی ﷺ علماء نماز وسیلہ

رسول اکرم ﷺ کے معمولات شب و روز

رسول اکرم ﷺ کے معمولات شب و روز

 

مصنف : امام ابو عبد الرحمٰن احمد بن شعیب النسائی

 

صفحات: 282

 

راحت  واطمینان اللہ  تعالیٰ کے ذکر میں ہے اور اپنی کسی بھی سرگرمی کو اللہ تعالیٰ کے ذکر  سےخالی رکھنا نقصان اور حسرت کا باعث ہے ۔ اگر کسی آدمی کے شب وروز اللہ  تعالیٰ کے  ذکر سے خالی تو حسرتوں اور خساروں کے سمندر میں غرق ہے  اور اس کا علاج سوائے اللہ تعالیٰ کے ذکر کو قائم کرنے کے اور کوئی نہیں ہے ۔ان خساروں سے  تحفظ کی کامل صورت خو د رسول اللہ ﷺ نے اپنے اسوۂ حسنہ سے بتادی ہے ۔ آپ ﷺ نےہر موقعہ ومحل  کے مطابق ذکر   ودعا ء متعین فرمائی۔ جو  غفلت کے زہر کا تریاق ہے  مگر اس تریاق کے استعمال کے لیے ضروری ہے  کہ ان دعاؤں اوراذکار کے الفاظ  محفوظ ہوں تاکہ  کوئی اپنی عقل سے ان  میں کمی بیشی نہ کرے  کیونکہ دعائیں اور اذکار اللہ تعالیٰ کی صفات وعظمت کے شان کےمضامین پر مشتمل  ہیں اور اس ذات ِ بے مثال کی صفات کی بالکل صحیح تعبیر وہ ہی ہو سکتی ہے جو رسول اللہ ﷺ نے بتلائی ہے۔شریعتِ اسلامیہ کی  تعلیمات کے مطابق صرف دعا ہی  میں  ایسی قوت ہے  کہ جو تقدیر کو  بدل سکتی  ہے  ۔دعا ایک  ایسی عبادت  ہے جو انسا ن ہر لمحہ  کرسکتا ہے  اور  اپنے خالق  ومالق  اللہ  رب العزت سے اپنی  حاجات پوری کرواسکتا ہے۔مگر یہ  یاد رہے    انسان کی دعا اسے  تب ہی فائدہ دیتی ہے جب وہ دعا کرتے وقت دعا کےآداب وشرائط کوبھی  ملحوظ رکھے۔دعاؤں کے حوالے سے   بہت سے  کتابیں موجود ہیں جن میں علماء کرام نے مختلف انداز میں  دعاؤں کو جمع کیا ہے ۔ زیر  تبصرہ کتاب’’رسول اکرمﷺ کےمعمولات شب وروز‘‘امام  احمد بن شعیب نسائی﷫ کی رسول اللہ ﷺ کے شب وروز کے معمولات واذکار پر مرتب شدہ کتاب ’’ عمل  الیوم واللیلۃ‘‘ کا   اردو ترجمہ ہے ۔امام نسائی کے بعد  ابن سنی، ابو نعیم اصفہانی ، حافظ مقدسی اور علامہ جلال الدین  سیوطی﷭ نے ’’  عمل  الیوم واللیلۃ‘‘ کے  نام سے کتب مرتب کیں مگر حسنِ ترتیب کاتاج امام نسائی کی کتاب کو حاصل رہا ہے ۔  یہ کتاب حضور اکرم ﷺ کے معمولات  ِ شب وروز پر لکھی  جانے  والی  اولین کتاب ہے۔ امام نسائی کی اس  کتاب میں دعائیں؍احادیث کی تعداد706 ہے ۔زاہد محمود قاسمی نے اس کتاب کو اردو قالب میں  ڈھالا ہے ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
امام نسائی ﷫ 15
تقدیم 21
صبح کےوقت پڑھنے کی دعائیں 23
صبح وشام’’رضيت بالله ربا وبالاسلام دينا…..الخ كاثواب 23
لاحول ولاقوة الابالله پڑھنے والےکاثواب 26
صبح شام سید الاستغفار پڑھنا 28
شیطان سےحفاظت 30
سونیکیاں اورسوگناہوں کی معافی 30
رحمت وقبولیت دلانے والی دعا 31
مغفرت دلانے والی دعاء 31
مؤذن کوشہادتیں کہتے ہوئے سنے تو کیا کہے 32
موذن حی علی الصلوۃ حی علی الفلاح کہےتو کیاجواب دے 33
لاحول ولاقوة الابالله پڑھنے کی ترغیب 34
اذان کاجواب دینے کےبعد دعا مانگنے کی ترغیب 34
اذان اوراقامت کے درمیانی وقت میں نبی اکرمﷺ پر درود بھیجنے اور آپ کیلئے وسیلہ کی دعا مانگنے کاثواب 34
وسیلہ مانگنے کاطریقہ اورحضورﷺ کےلیے وسیلہ کی دعا مانگنے کاثواب 35
نبی اکرمﷺ پر درود بھیجنے کاطریقہ 35
بخیل کون ہے؟ 38
نبی اکرمﷺ پر درود نہ بھیجنے پر سختی 39
نبی اکرمﷺ آپﷺ کی ازواج مطہرات اورآپﷺ کی اولاد پر درود بھیجنا 39
نبی اکرمﷺ  پر درود نہ بھیجنے کا ثواب 40
نبی اکرمﷺ پر سلام بھیجنے کی فضیلت 41
اذان اوراقامت کےدرمیانی وقفہ میں دعاء کی ترغیب 41
اذان کےوقت ذکر 42
بیت الخلاء میں جانے کی دعاء 43
بیت الخلاء سےنکلنے کی دعا 43
وضو کی دعا 43
وضو کے بعدکی دعا 44
گھر سےباہر جانے کی دعا 45
مسجد میں داخل ہونے کی دعا 45
نماز کےلیے صف میں پہنچے تو کیا دعا پڑھے 46
نماز سےفارغ ہوتو کیا دعا پڑھے 47
ہرنماز کےبعد آیۃ الکرسی پڑھنے کاثواب 47
نمازوں کےبعد اوردعا 48
فرض نمازوں کےبعد دعا کاپسندیدہ ہونا 50
نماز کےبعد رب اعنی علی ذکرک وشکرک وحسن عبادتک کہنےکی ترغیب 50
تین بار جہنم سےاللہ کی پناہ مانگنا اورتین بار جنت کاسوال کرنا 50
بعد نماز فجر کیےبغیر سات بار دوزخ سےپناہ مانگنے کاثواب 51
فجر کےبعدکلمات توحید پڑھنے کاثواب 51
نماز سےسلام پھیرنے کےبعد دعاء 54
نمازوں کےبعد استعاذہ کی دعا 55
نمازوں کے بعدتسبیح ،تکبیر،تہلیل اورتحمید 57
نماز کےبعد مسجد میں بیٹھنا اور مذاکرہ کرنا 62
مسجدمیں اشعار پڑھنا 63

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
7.80 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اہل حدیث حج روزہ و رمضان المبارک عبادات عمرہ

رمضان کی احادیث اور سنتیں

رمضان کی احادیث اور سنتیں

 

مصنف : پروفیسر مفتی عروج قادری

 

صفحات: 181

 

روزے کی فضیلت و اہمیت دیگر عبادات کے مقابلے میں کئی گنا زیادہ اور بے حساب ہے ۔ روزہ کا اجر خود اﷲتعالیٰ عطا کرے گا۔ حدیث قدسی میں ہے کہ اﷲتعالیٰ فرماتا ہے : ’’ابن آدم کا ہر عمل اس کے لئے ہے سوائے روزے کے۔ پس یہ (روزہ) میرے لیے ہے اور میں ہی اس کا اجر دوں گا۔‘‘(بخاری:1805) روزہ دار کو اللہ تعالیٰ کی طرف سے بے انتہا اجرو ثواب کے ساتھ ساتھ کئی دیگر خوشیاں بھی ملیں گی۔ نبی اکرم ﷺ نے فرمایا : ’’روزہ دار کے لئے دو خوشیاں ہیں جن سے اسے فرحت ہوتی ہے : افطار کرے تو خوش ہوتا ہے اور جب اپنے رب سے ملے گا تو روزہ کے باعث خوش ہوگا۔ ‘‘(بخاری:1805) زیر تبصرہ کتاب “رمضان کی احادیث اور سنتیں” بھی رمضان المبارک کے انہی فضائل ومسائل پر مشتمل ہے۔ جو پروفیسرمفتی عروج قادری کی تصنیف ہے۔اس میں انہوں نے رمضان المبارک کے روزوں ،تراویح،اعتکاف،شب قدر،عید الفطر،زکوۃ اور عمرہ کے حوالے سے تقریبا 600 کے قریب احادیث نبویہ کو موضوعات کے اعتبار سے جمع کر دیا ہے۔ اختلاف امت سے بچنے اور امت مسلمہ کی یکجہتی کی کوشش کے لیے کتاب کھولتے ہی اس کے پہلے صفحہ پر اس کی صحت اور علمیت کی تصدیق کے لیے دیوبندی،بریلوی اور اہل حدیث تینوں مکاتب فکر کے جید علما اور مدرسوں کی اسناد کی نقول نظر آتی ہیں ۔جبکہ مصنف خود بھی جدید تعلیم کے ساتھ ساتھ مدرسے سے فارغ التحصیل ہیں اور ایم ایس سی اور ایم اے ہونے کے ساتھ ساتھ ملک کی مدرسے کی سب سے بڑی سند شہادۃ العالمیہ کے حامل اور باقاعدہ سند یافتہ مفتی بھی ہیں۔۔اللہ تعالی مولف کی ان خدمات کو قبول فرمائے اور ہمیں رمضان کی مبارک ساعتوں سے بھر پور استفادہ کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
دیباچہ 10
روزے کے احکام اور مسائل 13
صلوۃ اللیل اور تراویح 57
رمضان میں نبی ﷺ کا دور قرآن اور ختم قرآن مجید 61
نبی ﷺ ہر رمضان میں پابندی سے اعتکاف فرماتے تھے 63
شب قدر مغفرت اور تقدیر کے فیصلوں کی رات 70
ہر قوم کی ایک عید ہوتی ہے اور یہ ہماری عید ہے 82
زکوۃ میں غنی صحتمند یا کمانے کے قابل شخص کا کوئی حصہ نہیں ہے 95
رمضان کا عمرہ میرے ساتھ حج کرنے کے برابر ہے 134
ضمیمہ چند مسنون دعائیں 170
اگر محمد ﷺ رسول اللہ کبھی میرے گھر مہمان آئیں 173
ہمارے روز مرہ کھانوں میں شامل حرام چیزوں کی فہرست 175

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam ادب اذکار وادعیہ اعمال اہل بیت قرض وضو

قرآنی اور مستند مسنون اذکار و دعائیں

قرآنی اور مستند مسنون اذکار و دعائیں

 

مصنف : ڈاکٹر حافظ شہباز حسن

 

صفحات: 155

 

قرآن مجید میں انبیاء کرام ﷩ کے واقعات کے ضمن میں انبیاء﷩ کی دعاؤں او ران کے آداب کاتذکرہ ہوا ہے ۔ ان قرآنی دعاؤں سے اندازہ ہوتا ہے کہ اللہ کے سب سے برگزیدہ بندے کن الفاظ سے کیا کیا آداب بجا لاکر کیا کیا مانگا کرتے تھے ۔ انبیاء﷩ کی دعاؤں کو جس خوبصورت انداز سے قرآن مجید نے پیش کیا ہے یہ اسلوب کسی آسمانی کتاب کے حصے میں بھی نہیں آیا ۔ ان دعاؤں میں ندرت کاایک پہلو یہ بھی ہے کہ ہر قسم کی ضرورت کے بہترین عملی اور واقعاتی نمونے بھی ہماری راہنمائی کے لیے فراہم کردیئے گئے ہیں ۔اور شریعتِ اسلامیہ میں دعا کو اایک خاص مقام حاصل ہے ۔ تمام شرائع ومذاہب میں بھی دعا کا تصور موجود رہا ہے مگر موجود ہ شریعت میں اسے مستقل عبادت کادرجہ حاصل ہے ۔صرف دعا ہی میں ایسی قوت ہے کہ جو تقدیر کو بدل سکتی ہے ۔دعا ایک ایسی عبادت ہے جو انسا ن ہر لمحہ کرسکتا ہے اور اپنے خالق ومالق اللہ رب العزت سے اپنی حاجات پوری کرواسکتا ہے۔مگر یہ یاد رہے انسان کی دعا اسے تب ہی فائدہ دیتی ہے جب وہ دعا کرتے وقت دعا کےآداب وشرائط کوبھی ملحوظ رکھے۔  زیر تبصرہ کتاب’’ قرآنی اور مستند مسنون اذکار ودعائیں ‘‘ محترم جناب ڈاکٹر حافظ شہباز حسن ﷾ کی کاوش ہے اس کتا ب کے پہلے حصہ میں قرآنی دعائیں اور اذکار قرآنی ترتیب سے پیش کیے گئے ہیں ۔ جبکہ دوسرے حصے میں احادیث نبویہ سےثابت شدہ دعائیں اوراذکار نقل کیے گئے ہیں ۔ تالیف میں مسلمان کی عملی زندگی کی یومیہ ترتیب کو حتی الامکان ملحوظ ِ خاطر رکھا گیا ہے ۔ اس مجموعہ کی خاص بات یہ ہے کہ اس میں ادب واحترام کی غرض سے اللہ تعالیٰ کےلیے جمع کے الفاظ استعمال کیے گئے ہیں ،تاکہ دعاؤں کاور اذکار کے ترجمے کے ذریعے خالقِ کائنات کی عظمت کابھر پور اظہار کیا جاسکے ۔ دعاؤں کا یہ مجموعہ پروفیسر ڈاکٹر حافظ محمداسرائیل فاروقی صاحب کی فرمائش پر تیار کیا گیا ہے اور انہوں صدقہ جاریہ کی غرض اسے فی سبیل اللہ تقسیم کیا ہے ۔اللہ تعالیٰ مصنف وناشر کی اس کاوش کوقبول فرمائے (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
فہرست ٍ
اظہار تشکر 17
دعا اور ذکر کی اہمیت و ضرورت 20
حصہ اول
حصول ہدایت اور  شفاء کے لیے دعا 24
جہالت سے اللہ کی پنا ہ کے لیے موسی ؑ کا ارشاد 24
مکہ والوں کے لیے نا ابراہیم ؑ کی دعا 25
قبولیت عمل کے لیے سیدنا ابراہیم ؑ کی دعا 25
اولاد کو نیکی پر قائم رکھنے کے لیے سیدنا  ابراہیم و اسماعیل ؑ کی دعا 25
مصیبت اور نقصان کے وقت کیا کہیں ؟ 26
دنیا اورآخرت کی بھلائی کی دعا 26
دشمن (کفار) سے مقابلے کے وقت مسلمانوں اور ان کے سپا ہ سالار
طالوت کی دعا 26
شیطان سے حفاظت کا نسخہ ( ایۃ الکر سی ) 27
اللہ سے مغفرت طلب کرنے کی دعا 28
رحم طلبی اور دشمن پر غلبہ کی دعا 28
راہ ہدایت پر استقامت کی دعا 29
قیامت کے دن رحم کی دعا 29
گناہوں کی مغفرت اور جہنم سے بچاو کی دعا 29
رزق کے حصول اور قرض ادائیگی کے لیے دعا 30
قبولیت نذر کے لیے عیسیٰ کی والدہ مریم صدیقہ کی دعا 30
حصول  اولاد کی دعا 31
نیک لو گو ں میں شامل ہونے کی دعا 31
مغفرت ، ثابت قدمی اور غلبے کے لیے دعا 31
ہر قسم کی پریشانی  کے ازالے کے لیے 32
آخرت میں آسانی ، گنا ہوں کی معافی اور خاتمہ بالخیر کی دعا 32
ظالموں سے چھٹکارے کی دعا 33
بدکردار سے چھٹکار ے کے لیے موسیٰ ؑ کی دعا 33
نیک لوگوں میں شامل ہونے کی دعا 34
رزق کے لیے عیسیٰ ؑ کی دعا 34
مغفرت اور رحم طلبی کی دعا 35
ظالمو ں سے علیحدگی  اور استقامت کی دعا 35
حق کی فتح  کے لیے شعیب ؑ کی دعا 35
اسقتامت اور اسلام  پر مو ت کی دعا 36
اللہ سبحانہ  سے معافی کی مو سو ی دعا 36
اپنے لیے اور اپنے بھائی کے لیے مغفرت ور حمت کی دعا 36
توبہ اور مغفرت و رحمت کی دعا 36
مشکلات و مصائب سے نکلنے  کا وظیفہ 37
مصائب وآلام میں تقد یر کا سہارا 37
پریشانی میں اہل ایمان کا ورد 37
اللہ توکل کا اظہار 38
ظالم اور مظالم سے نجات کی دعا 38
سرکش دشمنوں اور ا ن کے مال و اسباب کی تباہی کی التجا 38
کشتی یا سواری پر بیٹھتے وقت پڑھیں 39
لاعلمی پر مبنی دعا کا کفارہ 39
ابرہیم ؑ اور ان کے اہل بیت کے لیے فرشتوں کی دعا 39
توفیق الٰہی  کے لیے شعیب ؑ کی دعا 40
فتنے سے بچنے کے لیے یو سف ؑ کی دعا 40
بیٹوں کو الوداع کرتے وقت یعقوب ؑ کی دعا 40
صدقہ اور غم کے وقت یعقوب ؑ کی دعا 41
بھائیوں کے لیے یوسفؑ کی دعا 41
تحدیث نعمت اور خاتمہ بالخیر کے لیے یو سف ؑ کی دعا 41
اولاد کو شر ک سے بچانے کے لیے اور ان کی نیکی وغیرہ کے لیے ابراہیم ؑ کی
دعائیں 42
اولاد کو نمازی بنانے اور دعا کی قبولیت وغیرہ کے لیے ابراہیم ؑ کی دعا 43
والدین کے لیے رحمت کی دعا 43
سفر ہجرت  کے وقت نبی ﷺ کی دعا 44
مشکلات کی آسانی کے لیے اصحاب کہف کی دعا 44
نظر بد سے محفو ظ رہنے کا وظیفہ 44
کام کی آسانی اور طلاقت لسانی کے لیے موسیٰ ؑ کی دعا 45
علم میں اضافے کی نبوی دعا 45
حصول شفاء کے لیے ایوب ؑ کی دعا 45
غم اور مشکل سے نکلنے کے لیے یو نُس ؑ کی دعا 45
حصول اولاد کے لیے زکر یا ؑ کی دعا 46
حق کی فتح کے لیے دعا 46
دعوت حق قبول نہ کیے جانے پر نوح ؑ کی دعا 46
منز ل کی تلاش کے لیے نوح ؑ کی دعا 47
عافیت کے لیے نو ح ؑ کی دعا 47
شیطانی خیالات و وساوس سے بچنے کی دعا 47
بخشش و رحمت طلبی کے لیے نیک لو گوں  کی دعا 48
جہنم سے بچنے کے لیے عباد الرحمنٰ کی دعا 48
اہل و عیال کے لیے رحمٰن کے بند وں کی دعا 49
رسوائی سے بچنے اور حصول جنت کے لیے ابراہیم ؑ کی دعا 49
ظلم سے نجات کے لیے نو ح ؑ کی دعا 50
لوط ؑ کی اپنے لیے اور اپنے اہل و عیال کے لیے دعا 50
توفیق شکر اورنیکی کی توفیق کےلیے سلیمان ؑ کی دعا 50
ملکہ سبا کی عاجزانہ دعا 51
خطا بخشی کے لیے مو سو ی دعا 51
ظالموں سے چھٹکارے کے لیے سیدنا موسیؑ کی دعا 51
خیر و برکت سے متعلق مو سیٰ ؑ کی عاجز انہ دعا 52
فسادیوںکے خلاف لوط ؑ کی دعا 52
خوشخبری ملنے پر دعا 52
طلب اولاد کے لیے ابراہیم ؑ کی دعا 52
مغفرت اور سلطنت کے لیے سلیمان ؑ کی دعا 53
اختلاف دور کرنے کے لیے نبوی دعا 53
مومنوں کے لیے ملائکہ کی دعا 53
دشمن کے خوف سےبچاو  کے لیے موسیٰ ؑ کی دعا 54
سواری پر سوار ہونے کی دعا 55
نیک اعمال کی توفیق مانگنے کے لیے کی دعا 55
دشمن پر غلبے کے لیے نو ح ؑ کی دعا 56
کینہ و بغض سے بچنے اور پہلے مو منو ں کے لیے مغفرت کی دعا 56
رجوع الی اللہ اور مغفرت کے لیے ابراہیمؑ کی دعا 56
تکمیل نور اور مغفرت کے لیے دعا 57
ظالموں سے نجات کے لیے فرعون کی مومنہ بیوی کی دعا 57
کفار کی ہلاکت کے لیے نو ح ؑ کی دعا 57
مو منوں کی مغفرت اور کفار کی تباہی کے لیے نو ح ؑ کی دعا 58
شریروں  اور جادوگروں سے محفوظ رہنے کی دعا 58
جنی اور انسا نی شیاطین  سے محفوظ  رہنے کی دعا 59
حصہ دوم
نیند  سے جاگنے کے وقت کا ذکر 61
قضائے حاجت کے لیے داخل ہونے کی دعا 61
بیت الخلا سے نکلنے کی دعا 62
غسل کا طریقہ اور ذکر 62
وضو کا طریقہ اور وضو شروع کرنے سے پہلے کا ذکر 62
تیمم کا طریقہ اور ذکر 65
وضو( یاتیمم ) سے فارغ ہونے کے بعد کا ذکر 66
گھر سے نکلتے وقت کا ذکر 66
مسجد میں داخل  ہونے کی دعا 67
مسجد سے  باہر نکلنے  کی دعا 68
گھر میں داخل ہونے کے وقت کا ذکر 68
کھانےپینے کی دعائیں 69
کھانے سے پہلے کی دعا 69
کھانا کھانے کے بعد کی دعا 69
دودھ پینے کےبعد کی دعا 70
کھانا کھلانے  والے کے لیے دعائیں 70
حسن سلوک کرنے والے کے لیے دعا 71
لباس پہننے کی ایک دعا 71
نیا کپڑ ا پہننے والے کو کیا دعادع جائے 71
سفر کی دعائیں اور اذکار 73
مسافر کی مقیم  کے لیے دعا 75
مقیم کی مسافر کے لیے دعا 75
جب سواری پھسلنے لگے تو کیا پڑ ھا جائے؟ 76
دوران سفر تکبیر وتسبیح 76
جب سفر وغیرہ سے کسی منز ل پر اترے 76
رنج و غم اور پریشانی دور کرنے کی دعائیں اور اذکار 77
مشکل اور دشواری کے وقت کی دعا 79
استغفار  ، مصائب سے نکلنے کی ذریعہ 79
مر غ کی آواز کیا پڑ ھا جائے؟ 80
گدھے کے رینکنے پر کیا پڑ ھا جائے؟ 80
کتوں کے بھو نکنے پر تعوذ پڑ ھاجائے 80
دشمنو ں کے خلاف دعائیں اور اذکار 81
اپنے اوپر دشمنوں کے خوش ہونے سے پناہ مانگی جائے 81
جب کسی سے  خطرہ ہوتو یہ دعا پڑ ھی جائے 81
دشمن سے خوف کے وقت کا ذکر اوردعا 81
دشمن سے مقابلے کے وقت کی دعا 82
دشمن کے لیے بددعا 82
قرض کی ادائیگی کی دعائیں 83
جسم کی خیر و برکت اور صحت و تندرستی کےلیے دعائیں اور اذکار 85
جسم میں درد کی دعا 85
بیمار پرسی کے وقت مریض کے لیے دعا 85
بچوں کے لیے دم 86
مصیبت زدہ کو دیکھ کر کیا پڑ ھے 87
زوال نعمت سے پنا ہ مانگنے کی دعا 87
محتاجی اور ذلت سے پناہ 88
ہدایت مانگنے کی دعا 88
جب کسی کو ہدایت ملے تو یہ دعا پڑ ھیں 88
بری عادتوں سے بچنے کی دعا 89
اچھے کاموں محبت اور برے اعمال سے نفرت 89
خلاف مرضی کا م ہوجائے تو کیا کہاجائے 90

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.9 MB ڈاؤن لوڈ سائز