Categories
Islam بدعت زبان سنت عقیدہ و منہج علماء نبوت نماز

شرح السنہ

شرح السنہ

 

مصنف : امام محمد الحسن بن علی بن خلف البربہاری

صفحات: 543

 

کلمہ توحید کا اقرار کر لینے کے بعد کسی بھی عمل کی قبولیت عقیدہ ومنہج کی درستگی پر ہے۔ اگر عقیدہ ومنہج میں کوئی ذرا سی بھی اونچ نیچ ہو تو وہ بڑے سے بڑے عمل کو رائیگاں کرنے کا باعث بن جاتی ہے اور عقیدہ کی درستگی چھوٹے سے چھوٹے عمل کو بھی پہاڑ جیسا بنانے میں معاون ہوتی ہے۔عصر حاضر میں مختلف میدانوں میں مسلم ممالک کے خلاف عموماً حرمین شریفین کے خلاف خصوصاً کچھ ایسی سازشیں اور بڑے منصوبے رچے جا رہے ہیں جن میں سے کچھ سازشوں کا تعلق عقیدہ وسلوک سے ہے اور کچھ کا تعلق کتاب وسنت کی تعلیمات کو چھوڑ کر کسی اور چیز پر اعتماد کرنے سے ہے اور حالت تو یہ ہے کہ ملحدانہ لہریں اللہ کےمقام پر ترید کرنے تک پہنچ چکے ہیں اور یہ لہریں وجود الٰہی کا انکار کرنے‘ اس کا مستحق عبادت نہ ہونے اور عصر حاضر میں اس کے دین کے فیصلہ سازی کی صلاحیت مفقود ہونے پر نوجوانوں کو تربیت دے رہی ہیں۔ زیرِ تبصرہ کتاب’’ شرح السنہ‘‘ میں بھی اصل عقائد کو مختصر بیان کیا گیا ہے۔ یہ کتاب اصلا عربی زبان میں ہے جس کا سلیس اور سہل ترجمہ پیش کیا گیا ہے اور ترجمے کے ساتھ ساتھ تشریح کا بھی اہتمام کیا گیا ہے۔ اس کتاب میں باطل فرقوں کا رد بھی کیا گیا ہے۔ کتاب کی ترتیب اور اس کا اسلوب نہایت اعلیٰ ہے مگر اس میں کچھ نقص بھی ہیں کہ یہ کتاب نہ تو عربی میں مکمل شرح کے ساتھ ہے اور نہ ہی مترجم نے اسے اصل کتاب سے توازن کر کے مکمل کیا ہے یہ پوری کتاب کے 172 نکات میں سے صرف 9 نکات کی شرح ہے اور مترجم نے ویسے ہی ترجمہ کر دیا ہے۔ اور حدیث کا حوالہ صرف ’کما جاء فی الحدیث‘‘ کی عبارت سے دیا گیا ہے اور حدیث کی کتاب اور اصل عبارت کو بیان نہیں کیا گیااور  کئی اہم نکات سے تعرض کیے بغیر گزر جاتے ہیں۔لیکن پھر بھی اس کی تکمیل کے لیے مصنف نے پہلے مصنف سے رہ گئی تخریج کو بھی مکمل کیا ہے اور وہی نسخہ اور اسلوب اپنایا ہے۔شرح کو عنوان بھی دیا ہے۔یہ کتاب ’لامام ابی محمد الحسن بن علی بن خلف البرنہاری‘ کی تالیف کا ترجمہ ’شفیق الرحمان الدراوی‘ نے کیا ہے۔ دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ مؤلف وجملہ معاونین ومساعدین کو اجر جزیل سے نوازے اور اس کتاب کو ان کی میزان میں حسنات کا ذخیرہ بنا دے اور اس کا نفع عام فرما دے۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 19
حدیث شارح 21
شکروتقدیر 25
عقیدہ کالغوی اوراصطلاحی مفہوم 26
عقیدہ کالغوی مفہوم 26
عقیدہ کااصطلاحی مفہوم 26
اہل سنت کامفہوم 26
جماعت کالغوی مفہوم 26
اصطلاحی مفہوم 27
عقیدہ اہل سنت والجماعت کےبنیادی اصول 28
منصف کےحالات زندگی 33
طلب علم اورمشائخ 33
علمی منزلت 33
زہدوتقوی 34
اہل بدعت کےخلاف موقف 34
آپ کےشاگرد 34
آزمائش وامتحان 35
وفات 35
مقدمہ 36
حمد کاحقیقی مستحق کون ہے؟ 36
رب العالمین کامعنی 37
اسلام کی نعمت 37
بہترین امت ہونےکاسبب 38
اسلام اورسنت 39
سنت کامعنی اوراطلاق 40
سنت کےاصطلاحی معانی 42
جماعت کی اہمیت 43
جماعت کو لازم پکڑنےکےدلائل 44
جماعت کےبنیادی اصول 44
تفرقہ بازی کی مذمت 46
جماعت سےکیامراد ہے ؟ 46
جماعت کامعنی 49
جماعت کی بنیاد کس چیز پر ہے؟ 49
اہل سنت والجماعت کامنہج 51
بدعت کی حقیقت اورانجام 52
گمراہی کاعذرباقی نہیں 54
صرف گمان کچھ کام نہیں آتا 55
سواداعظم 58
نقل کوعقل پر ترجیح 59
اتباع خواہشات کی مذمت 61
خیرسواداعظم کےساتھ ہے 63
سواداعظم کامعنی 63
اموردین میں صحابہ کی مخالفت کفر ہے 64
کفرکی اقسام 64
بدعت کاانجام 65
بدعت سےبچاؤ کی تدابیر 67
فرقوں کی ابتداء کیسےہوئی ؟ 68
دین پرثابت قدمی 70
گمراہی کےاسباب 73
اسلام کےبنیاد ی اصول 76
قیاس کی ممانعت 78
علم کلام کی مذمت 79
مسائل توحید 82
توحیداسماء وصفات 83
قرآن سےعرش پر مستوی ہونےکےدلائل 86
احادیث سےعرش پر مستوی ہونےکےدلائل 87
صفات کےمتعلق ایک قاعدہ 92
قرآن کےبارےمیں 94
دیدار الہیٰ 99
دیدار الہی کی اقسام 100
سنت سےدیدار الہیٰ کےدلائل 103
میزان پر ایمان 103
عذاب قبراورمنکرونکیر 106
کتاب اللہ سےعذاب قبرکےدلائل 108
قرآنی قیاس 114
احادیث رسول اللہ ﷺ سےدلائل 116
صحابہ کرام کاعذاب قبرکےمتعلق عقیدہ 123
عذاب قبرسےنجات کی دعائیں 125
عذاب قبرکےمنکر کےحکم 128
حوض پرایمان 129
حوض کےپہلے میزبان 130
حوض سےمحروم رہنےوالے 131
انبیاء﷩ کےحوض 132
حضرت صالح ﷤کااستثناء 132
شفاعت کامسئلہ 133
شفاعت قہر ی کی نفی 138
شرکیہ عقیدہ کارد 140
قبولیت شفاعت کی شرائط 141
شفاعت کی اقسام 142
شفاعت کبریٰ 143
سورۃ بقرہ اورآل عمران کی شفاعت 146
افراد کی شفاعت 147
شہید کی شفاعت 148
بچو کی شفاعت 148
روزہ کی شفاعت 149
حاصل کلام 149
پل صراط 149
سب سےپہلے صراط پارکرنےوالے 151
منافقین اورنور 154
انبیائے کرام ﷩ ملائکہ پر ایمان 155
ایمان بالرسالت کےارکان 156
ملائکہ پر ایمان 159
ملائکہ پر ایمان ےکارکان 162
تخلیق جنت وجہنم 162
سنت سےدلائل 170
آدم ؑ کس جنت میں تھے؟ 171
مسیح دجال 172
دجال کی آزمائشیں کیاہوں گی 174
نزول عیسی ﷤ 175
مدت قیام کتنی ہوگی 177
حضرت مہدی کی آمد 178
مہدی کی مدت قیام 179
مہدی کی نشانیاں 179
حضرت مہدی کی علماء امت کی نظر میں 180
شیعہ اوراہل سنت کےہاں مہدی کےتصور میں فرق 181
رد کی وجوبات 185
بحث ایمان 185
ایمان پڑھنے کےاسباب 187
ایمان کاخاتمہ 189
ایمان کاوقتی زوال 189
فضائل صحابہ 190
حضرت ابوبکر ﷜ کی فضیلت 191
فضائل حضرات عشرہ مبشرہ اورباقی صحابہ ﷢ 192
حکمرانوں سےمتعلق 197
حاکم کےحقوق 200
خلافت کےلیے اصل 202
خارجی کون؟ 203
خوارج کاقتل جائز ہے 204
خوارج کی نشانیاں 205
حکام کےظلم پر صبر کی تلقین 206
خوارج کاقتل کیسے ہوگا؟ 208
اصول اطاعت گزاری 209
اصول شہادت 211
خوف اورامید 213
توبہ کادروازہ 214
رجم برحق ہے 215
موزوں پر مسح 217
سفرمیں نماز قصر 219
سفرمیں افطار 220
شرعی لباس کابیان 221
نفاق کیاہے؟ 222
اعتقادی نفاق 222
عملی نفاق 225
دارکی تقسیم 225
دارالاسلام حقیقی کی تعریف 226
دارالاسلام حکمی 226
امت محمد کےمومن اورمسلم 228
مومن ہونےکی گواہی 230
کمال سےمدارج 230
اہل قبلہ کےحکام 231
اہل قبلہ کی تکفیر کاحکم 232
ہل قبلہ کون ہیں؟ 235
امام ابوحنیفہ ﷫اوراہل قبلہ کی تکفیر کامسئلہ 236
ملحدوں اورزندیقوں کادجل وفریب 238
ایک عوامی شبہ اوراس کاازالہ 238
ابن تیمیہ ﷫کی تحقیق 239
علامہ شمس الدین خیالی کی تحقیق 240
علامہ شاہ عبدالعزیز صاحب کااعتراض 240
میرسیدشریف کی تحقیق 240
علامہ انورشاہ صاحب 241
خلاصہ وحاصل کلام 241
جوانبیاء کےمعصوم ہونےکاقائل نہ ہووہ کافر ہے 243
جوشخص کسی مدعی نبوت سےمعجزہ طلب کرے وہ بھی کافر ہے 243
اللہ تعالی کےاسماءوصفات کےمتعلق آثار واحادیث 244
صفات الہیٰ کےمتعلق قاعدہ 246
صفت نزول 248
عرفہ کےدن نزول 249

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
11.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام تاریخ زبان سیرت سیرت النبی ﷺ نبوت

سیرۃ النبی ﷺ از شبلی ( تخریج شدہ ایڈیشن ) حصہ 4

سیرۃ النبی ﷺ از شبلی ( تخریج شدہ ایڈیشن ) حصہ 4

 

مصنف : علامہ شبلی نعمانی

 

صفحات: 603

 

اس روئے ارض پر انسانی ہدایت کے لیے حق تعالیٰ نے جن برگزیدہ بندوں کو منتخب فرمایا ہم انہیں انبیاء ورسل﷩ کی مقدس اصطلاح سے یاد کرتے ہیں اس کائنات کے انسانِ اول اور پیغمبرِاول ایک ہی شخصیت حضرت آدم کی صورت میں فریضۂ ہدایت کےلیے مبعوث ہوئے ۔ اور پھر یہ کاروانِ رسالت مختلف صدیوں اور مختلف علاقوں میں انسانی ہدایت کے فریضے ادا کرتے ہوئے پاکیزہ سیرتوں کی ایک کہکشاں ہمارے سامنے منور کردیتاہے ۔درخشندگی اور تابندگی کے اس ماحول میں ایک شخصیت خورشید جہاں تاب کی صورت میں زمانےاور زمین کی ظلمتوں کو مٹانے اورانسان کےلیے ہدایت کا آخری پیغام لے کر مبعوث ہوئی جسے محمد رسول اللہ ﷺ کہتے ہیں ۔ آج انسانیت کےپاس آسمانی ہدایت کا یہی ایک نمونہ باقی ہے۔ جسے قرآن مجید نےاسوۂ حسنہ قراردیا اور اس اسوۂ حسنہ کےحامل کی سیرت سراج منیر بن کر ظلمت کدۂ عالم میں روشنی پھیلارہی ہے ۔حضرت محمد ﷺ ہی اللہ تعالیٰ کے بعد ،وہ کامل ترین ہستی ہیں جن کی زندگی اپنے اندر عالمِ انسانیت کی مکمل رہنمائی کا پور سامان رکھتی ہے ۔ ۔ شروع ہی سے رسول کریم ﷺکی سیرت طیبہ پر بے شمار کتابیں لکھیں جا رہی رہیں۔یہ ہر دلعزیز سیرتِ سرورِ کائنات کا موضوع گلشنِ سدابہار کی طرح ہے ۔جسے شاعرِ اسلام سیدنا حسان بن ثابت سے لے کر آج تک پوری اسلامی تاریخ میں آپ ﷺ کی سیرت طیبہ کے جملہ گوشوں پر مسلسل کہااور لکھا گیا ہے او رمستقبل میں لکھا جاتا رہے گا۔اس کے باوجود یہ موضوع اتنا وسیع اور طویل ہے کہ اس پر مزید لکھنے کاتقاضا اور داعیہ موجود رہے گا۔ گزشتہ چودہ صدیوں میں اس ہادئ کامل ﷺ کی سیرت وصورت پر ہزاروں کتابیں اورلاکھوں مضامین لکھے جا چکے ہیں ۔اورکئی ادارے صرف سیرت نگاری پر کام کرنے کےلیےمعرض وجود میں آئے ۔اور پورے عالمِ اسلام میں سیرت النبی ﷺ کے مختلف گوشوں پر سالانہ کانفرنسوں اور سیمینار کا انعقاد کیا جاتاہے جس میں مختلف اہل علم اپنے تحریری مقالات پیش کرتے ہیں۔ ہنوذ یہ سلسلہ جاری وساری ہے ۔ اردو زبان میں سرت النبی از شبلی نعمانی ،سیدسلیمان ندوی رحمہما اللہ ، رحمۃللعالمین از قاضی سلیمان منصور پوری اور مقابلہ سیرت نویسی میں دنیا بھر میں اول آنے والی کتاب الرحیق المختوم از مولانا صفی الرحمن مبارکپوری کو بہت قبول عام حاصل ہوا۔ زیر تبصرہ کتاب ’’سیرت النبی ﷺ‘‘ برصغیر پاک وہند میں سیرت کےعنوان مشہور ومعروف کتاب ہے جسے علامہ شبلی نعمانی﷫ نے شروع کیا لیکن تکمیل سے قبل سے اپنے خالق حقیقی سے جاملے تو پھر علامہ سید سلیمان ندوی ﷫ نے مکمل کیا ہے ۔ یہ کتاب محسن ِ انسانیت کی سیرت پر نفرد اسلوب کی حامل ایک جامع کتاب ہے ۔ اس کتاب کی مقبولیت اور افادیت کے پیش نظر پاک وہند کے کئی ناشرین نےاسے شائع کیا ۔زیر تبصرہ نسخہ ’’مکتبہ اسلامیہ،لاہور ‘‘ کا طبع شدہ ہے اس اشاعت میں درج ذیل امور کا خاص خیال رکھا گیا ہے۔قدیم نسخوں سےتقابل وموازنہ ، آیات قرآنیہ ، احادیث اورروایات کی مکمل تخریج،آیات واحادیث کی عبارت کو خاص طور پرنمایاں کیا ہے ۔نیز اس اشاعت میں ضیاء الدین اصلاحی کی اضافی توضیحات وتشریحات کےآخر میں (ض) لکھ واضح کر دیا ہے ۔تاکہ قارئین کوکسی دقت کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔علاوہ ازیں اس نسخہ کو ظاہر ی وباطنی حسن کا اعلیٰ شاہکار بنانے کی بھر پور کوشش کی گئی ہے۔اور کتاب کی تخریج وتصحیح ڈاکٹر محمد طیب،پرو فیسر حافظ محمد اصغر ، فضیلۃ الشیخ عمر دارز اور فضیلۃ الشیخ محمد ارشد کمال حفظہم اللہ نےبڑی محنت سے کی ہے ۔اللہ تعالیٰ اس کتاب کی طباعت میں تمام احباب کی محنت کو قبول فرمائے اور ان کےلیے نجات کا ذریعہ بنائے (آمین)

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
فہرست مضامین سیر ۃ النبی ﷺ حصہ چہارم
مضامین
دیبا چہ 15
دیبا چہ طبع ثانی 18
مقدمہ 19
منصب  نبوت 19
کتاب کا مو ضو ع ، ا ٓ پ کے پیغمبر انہ کارنامے 19
نبی اور مصلح اور حکیم 20
نبو ت ورسالت کے ثبو ت کا اجمالی طر یقہ 22
پہلا طریقہ 23
دوسرا طریقہ 23
تیسراطریقہ 24
نبی کی ضرورت 25
نبی کی عصمت 26
نبی کی محبو بیت 27
مصلحین 27
مصلیحن کی اقسام 27
نبی کی دو بعثتیں 28
بعثت کے لیے کسی قوم کا ا نتخاب 29
بعثت کا زمانہ 29
نبی کا زمانہ 29
نبی کی یقینی کا میا بی 30
ایک شبہ اور اس کا جواب 38
نبی اور غیر بنی کے ا متیازات 47
وہبی استعداد 49
غیبی علم 52
علم انسا نی کے ما خذ 52
ذرائع علم کے حصول کے زمانے اور ان کے
مراتب 54
غیر ما دی علم 55
علم غیب 59
غیب کی حقیقت 61
و حی اور ملکہ نبوت 64
کتاب اور سنت 66
و حی متلو اور و حی غیر متلو 66
 ا حا دیث ، قرآں کا بیان ہیں 69
الہام و اجتہاد حکمت 69
ا جتہاد نبوت 70
 ساتو ا ں مبحث : ا حا دیث نبوی سے
شر یعت کے ا خذ کرنے میں علوم
نبو ی ﷺ کے اقسام ٍ 72
عصمت اور بے گنا ہی 75
بعض شہبات کا ازالہ 82
نکتہ 85
بنی کی بشر یت 89
اجتہاد نبو ی میں خطا 96
اس خطا کے معنی 97
پا نچ اجتہادی امور پر تنبیہ الٰہی 98
پہلا واقعہ 98
دوسرا واقعہ 99
تیسرا واقعہ 102
چو تھا واقعہ 103
پا نچوا ں واقعہ 103
ایک غلط استدلال 105
عقل بشر ی 108
ملکہ نبوت یا عقل نبوت کا شر عی ثبوت 110
حکمت 111
کتاب و حکمت کی تعلیم 122
علم 123
علم و حکم 125
شرح صدر 128
تبیین کتاب 132
ارائت 134
رسول کا وجو د مستقل ہدایت ہے 137
تزکیہ 138
نور 139
آیات و ملکو ں کی روایت 139
سما ع غیب 140
تبلیغ و دعوت 140
ایک شبہ کا ازالہ 143
انبیا ؑ کی تعلیم کا امتیازی نتیجہ 147
نبوت کی غر ض و غایت 148
تائید و نصرت 151
خاتمہ 152
شب ظلمت 153
پیغمبر اسلام کی بعثت کے وقت دنیا کی
مذ ہبی اور ا خلا قی حالت 153
ظہور اسلام کے وقت دینا کی تمدنی اور مذ ہبی
حالت کی تھی؟ 154
مجوس فارس 154
عیسائی روم 157
ہند و ستان 164
یہو د 166
ظہور اسلام کے وقت عرب کی مذ ہبی و
اخلا قی حالت 176
خدا کا اعتقاد 176
ملا ئکہ کی الو ہیت 177
جنا ت کی الو  ہیت 178
بت پر ستی 179
ستارہ پر ستی 184
جن اور شیاطی اور بھو ت پلیت 184
اوہام پر ستی 189
جنگ جو ئی 190
شراب خوری 191
قمار بازی 200
سود خوری 201
لو ٹ مار 202
چوری 203
سفاکی و بے رحمی و و حشت 205
زنا اور فواحش 206
بے شر می و بے حیا ئی 207
عورتو ں پر ظلم 207
وحشت و جہا لت 209
عر بو ں کی خصو صیات 211
خیر الا مم بننے کی اہلیت 211
صحت نسب 211
کسی پہلے مذ ہب میں داخل نہ تھے 212
محکو م نہ تھے 213
کتا بی فاسد تعلیم سے نا آشنا تھے 213
وہ زمین کے وسط میں ا ٓباد تھے 213
بعض اخلاقی خو بیاں 214
شجاع و بہادر تھے 214
پر جوش تھے 214
حق گو تھے 214
عقل و دانش والے تھے 214
ذہن اور حا فظہ کے تیز تھے 215
فیا ض تھے 215
مساوات پسند تھے 215
عملی تھے 216
ان اوصاف کی مصلحت 216
صج سعادت 218
ایک قوم کا انتخاب 218
اصلا ح و ہدایت کی مشکلات 219
جہالت 219
ا ٓ بائی دین و رسوم کی پا بندی 224
توہم پر ستی 228
قبائل کی خانہ جنگیا ں 230
سیاسی مشکلات 223
ذریعہ معاش 236
ر فع شک 238
تبلیغ نبو ی اور اس کے ا صول اور اس کی
کامیا بی کے اسباب 240
فریضہ تبلیغ 240
تبلیغ کی ا ہمیت 241
اس  کی وسعت 242
تبلیغ  کے اصول 244
قول لین 245
اعراض اور قول بلیغ 245
تیسیر و تبشیر 246
تد ر یج 546
تالیف قلب 247
دعوت عقل 247
مذ ہب میں زبر دستی نہیں 249
میدان جنگ میں تبلیغ 252
مسلح تبلیغی جما عتیں 255
تبلیغ و دعوت کی تنظیم 256
مبلغو ں کی تعلیم و تر بیت 257
دعوت بالقرآن 257
اشاعت اسلام کی قدر تی تر تیب 258
قبول اسلام کے لیے کیا چیز در کار  تھی 259
اشاعت اسلام کے اسباب و ذرائع 261
ایک ضروری نکتہ 267
موانع کا ازالہ 267
اسلام یا محمد رسول اللہ ﷺ کا پیغمبرانہ
کا م 274
تعلیما ت نبوی کی ہمہ گیر ی 276
اسلام کے چا ر حصے 277
عقا ئد 278
عقا ئد کی حقیقت اور اہمیت 278
اللہ تعا لی ٰ پر ایمان 285
اصلا ح عقا ئد 285
تعداد خدا کا ا بطال 286
بزر گو ں کی مشر کا نہ تعظیم سے روکنا 287
درمیانی واسطو ں کا مشر کا نا ا عتقاد 290
خوار ق خدا کے حکم سے ہوتے ہیں 291
حرام و حلال کرنا خدا کا کام ہے 293
غیر خدا کی مشر کا نہ تعظیم 294
صفا ت الٰہی کی تو حید 294
مخفی قوتو ں کا ابطال 296
اوہام و خر افات کا ابطال 298
کفارہ اور شفاعت کے غلط معنی کی تر دید 300
اجرام سما وی کی قدرت کا انکار 307
غیر خدا کی قسم سے روکنا 308
خدا کی مشیت میں کوئی شریک نہیں 309
مشتبہات شرک کی ممانعت 310
قبر پر ستی اور ےیا د گا رپر ستی سے رو کنا 311
ر یا اور عدم ا خلا ص بھی معنوی شر ک ہے 312
تو حید اور اس کے ایجابی اصول و ارکان 315
اللہ تعالیٰ کی ہستی پر دلیل 315
توحید پر عقلی دلیلیں 324
توحید کی تکمیل 325
خدا کی حقیقی عظمت 326
انسان کا مر تبہ 328
خدا کا جامع اور ما نع تخیل 332
اسما و صفات 334
صفات جمالی 344
صفات جلالی 346
نکتہ 347
صفات کمالی 347
صفا ت و حد ا نیت 348
صفات و جودی 348
علم 348
قد رت 349
نکتہ 350
تنز یہہ 350
ان تعلیمات کا اثر اخلاق انسانی پر 351
خدا کا ڈر اور پیار 357
محبت کے ساتھ خوف و خشیت کی تعلیم 357
محبت جسمانی اصطلا حات کی مما نعت 361
تعلیمات اسلامی میں محبت الٰہی کے مظاہر 363
فر شتوں پر ایمان 377
ملا ئکہ کے معنی 377
ملا ئکہ کا تخیل مذاہب قد یمہ  میں 378
ملائکہ کا تخلیل فلسفہ میں 378
یونا نی مصری فلسفہ 378
صابئی 378
اسلام میں فر شتوں کی حقیقت 378
اس عقیدہ کی عقلی حیثیت 380
آ یا ت و ا حادیث میں ملا ئکہ کا ذکر 381
ملا ئکہ کے فر ائض 381
فلسفہ و مذاہب کی ملا ئکہ کے متعلق بے ا عتدالی 389
فر شتوں پر ایمان لانے کا مقصد 392
رسولوں پر ایمان 394
ایک عام غلط فہمی کا ازالہ 394
نبو ت کسی ملک یا قوم سے مخصوص نہیں 394
تما م دنیا میں پیغمبر ا ٓ ئے 395
تمام پیغمبر وں کی صدا قت کا اعتراف 396
پیغمبروں میں تفر ق کی مما نعت 396
پیغمبروں کی غیر محدود تعداد 398
 مختلف فیہ پیغمبرو ں کی رسالت کا اقرار 399
پیغمبری کی و اضح حقیقت کا اظہار 399
پیغمروں کی منصب اور فرائض 399
پیغمبروں کی عصمت 400

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
16 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام اہل بیت زبان سلفی سنت عقیدہ و منہج علماء وسیلہ

صحیح اسلامی عقیدہ حصہ 6

صحیح اسلامی عقیدہ حصہ 6

 

مصنف : مختلف اہل علم

 

صفحات: 143

 

اسلام  کی  فلک  بوس  عمارت  عقیدہ  کی  اسا س پر قائم ہے  ۔ اگر  اس بنیاد میں  ضعف یا  کجی  پیدا ہو جائے تو دین کی عظیم عمارت  کا وجود  خطرے میں پڑ جاتا  ہے۔ عقائد کی تصحیح اخروی فوزو فلاح کے لیے اولین شرط ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اللہ کی طرف سے بھیجی جانے والی برگزیدہ شخصیات سب سے پہلے توحید کا علم بلند کرتے ہوئے نظر آتی ہیں۔  اور  نبی کریم ﷺ نے  بھی مکہ معظمہ میں  تیرا سال کا طویل عرصہ  صرف اصلاح ِعقائدکی جد وجہد میں صرف کیا عقیدہ توحید کی تعلیم وتفہیم کے لیے   جہاں نبی  کریم ﷺ او رآپ  کے صحابہ کرا م﷢ نے بے شمار قربانیاں دیں اور تکالیف کو برداشت کیا  وہاں علماء اسلام نےبھی دن رات اپنی  تحریروں اور تقریروں میں اس کی اہمیت کو  خوب واضح کیا ۔ عقائد کے باب میں اب تک بہت سی کتب ہر زبان میں شائع ہو چکی ہیں اردو زبان میں بھی اس موضوع پر قابل قدر تصانیف اور تراجم سامنے آئے ہیں اور ہنوز یہ سلسلہ جاری  ہے زیر نظر کتاب ’’ صحیح اسلامی عقیدہ‘‘ مدینہ یونیورسٹی  اور جامعۃالامام  محمد بن سعود ،الریاض کے  اساتذہ  کی ٹیم کی   تیار کردہ کتاب کا اردو ترجمہ ہے  جوکہ چھ حصوں پر مشتمل ہے ۔ یہ  کتاب جامعہ سلفیہ ،بنارس  اور ہندوستان کے کئی سلفی مدارس میں شامل نصاب ہے۔یہ کتاب اسلامی عقیدہ سیکھنے اور  مسلمانوں کےحالات کی اصلاح کے لیے بہترین کتاب ہے ۔مصنفین نے اس کتاب میں شامل تمام موضوعات کو  عمدہ اور ایسے سادہ عبارت  واسلوب میں بیان کیا ہے کہ جن سے عقائد کے مسئلہ میں پڑھنے والے کو پوری تشفی حاصل ہوجاتی ہے ۔ صحیح عقیدہ کی تعلیم واشاعت کے سلسلہ میں  مصنفین کےاخلاص کا پتہ اس بات  سے بھی چلتا ہے کہ کتاب کی تیاری  کے بعد انہوں نے اسےبراعظم افریقہ کے بعض مدارس اور وہاں منعقد ہونے والے تدریبی دوروں میں پڑھانے کاانتطام کراکر اس بات کا اطمینان حاصل کیا  ہےکہ کتاب اپنے مقصد میں کامیاب ہے۔اللہ  تعالیٰ اس کتاب کے مصنفین ،مترجم وناشرین  کی اس عمدہ کاوش کوقبول فرمائے ۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
1۔توسل 3
اس کے شرعی معنی 3
قرآن میں وسیلہ کے معنی 3
توسل کے اقسام 6
توسل شرعی 6
اعمال صالحہ کے ذریعہ اللہ کی طرف توسل 7
صالح مسلمان کی دعا کے ذریعہ اللہ کی طرف توسل 8
قسم ثانی بدعی توسل 9
توسل کے متعلق شبہات اور ان کا رد 9
پہلا شبہ 10
دوسرا شبہ 16
غلو اور اس کی خطرناکی 20
غلو کی تعریف 20
غلو عالم میں شرک کا سبب ہے 20
غلو کی مثالیں 22
غلو کی تحریم کے دلائل 23
غلو کا حکم 23
اسلام میں ولی اور ولایت 25
ولایت کی تعریف 25
ولایت کسی انسان کے ساتھ خاص نہیں 26
اولیاء کے اوصاف 27
انبیاء تمام  اولیاء سے افضل ہیں 28
شفاعت 30
اس کی تعریف 30
اس کے انواع 30
مثبت شفاعت اور اس کےشروط 31
غیر اللہ سے طلب شفاعت کی تحریم 32
مثبت شفاعت کے اقسام 33
شفاعت کبری 33
دوستی اور دشمنی 38
تعریف 38
دین میں ولاء اور براء کا مقام 38
ولاء اور براء توحید کے حقوق میں سے ہیں 39
مداہنت اور موالاۃ سے اس کا تعلق 40
مدارات اور اس کا حکم اور ولاء و براء کا اس کا اثر 41
ولاء اور براء کا نمونہ 43
نافرمانوں اور بدعتیوں سے موالاۃ کا حکم 44
تکفیر کے شروط و ضوابط 47
تکفیر کی خطرناکی 47
تکفیر سے ڈرانے کے متعلق اقوال سلف 49
تکفیر کے ضوابط 50
تکفیر کے شروط اور موانع 52
تکفیر کے شروط 52
حکم تکفیر کے موانع 52
گناہ کبیرہ اور اس کے ضوابط 56
کبیرہ کی تعریف 56
صغیرہ کی تعریف 57
کبائر و صغائر کی تقسیم کے دلائل 57
اہل سنت کے دلائل کہ مرتکب کبیرہ کافر نہیں ہے ہے 59
بدعت اور دین پر اس کا خطرہ 65
بدعت کی تعریف 65
بدعت کا خطرہ 65
بدعت کے اسباب 69
بدعت کا حکم اور اس کے انواع 69
اہل سنت والجماعت کے خصائص 72
اہل سنت کے نمایاں خصائص 73
اسلام میں عقل کا مقام 79
عقل اللہ کی نعمت ہے 79
عقل کے متعلق لوگوں کے موقف 80
عقل کے متعلق سلف کا مؤقف 81
صرف عقل پر اعتماد سے غیبیات کے انکار کی راہ کھلتی ہے 82
خبر کی صحت ثابت ہو جانے پر عقل کے لیے کوئی گنجائش نہیں 83
وجوب محبت رسول اور اس کے معنی اور اس کی کیفیت 87
وجوب محبت رسول 87
محبت رسول کی حقیقت 89
مسلمانوں کے نزدیک رسول کا مرتبہ 90
صحابہ کے حقوق 94
صحابہ کی تعریف 94
صحابہ کی فضیلت اور حقوق 94
صحابہ کو برا کہنے کا حکم 98
صحابہ کے متعلق اہل سنت کا مذہب 99
خلفاء راشدین کے لیے ہمارا فریضہ 102
خلفاء راشدین کون ہیں ؟ 102
ان کا مرتبہ اور ان کی اتباع کا وجوب 102
خلافت راشدہ کی مدت 103
ان کے درمیان فرق مراتب 103
عشرہ مبشرہ 107
صحابہ میں افضل تر عشرہ مبشرہ بالجنۃ ہیں 107
اہل بیت نبی 110
اہل بیت کون ہیں ؟ 110
اہل بیت کی فضیلت کے دلائل 110
ازواج النبی کا آپ کے اہل بیت میں داخل ہونا 110
اہل بیت سے متعلق وصیت 113
مسلمانوں کے ائمہ اور عام لوگوں کے متعلق مسلمانوں کا فریضہ 116
حاکم کی اطاعت کا حکم 117
تفرق کی خطرناکی 123
تفرق سےر وکنے والے نصوص کتاب وسنت 125
سابقہ امتوں کی ہلاکت کا سبب اختلاف و تفرق ہے 128
کیا اختلاف رحمت ہے ؟ 130
اختلاف و افتراق سے نجات کا راستہ 131

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2

Categories
Islam اسلام زبان سلفی سنت عقیدہ و منہج علماء وسیلہ

صحیح اسلامی عقیدہ حصہ 3

صحیح اسلامی عقیدہ حصہ 3

 

مصنف : مختلف اہل علم

 

صفحات: 74

 

اسلام  کی  فلک  بوس  عمارت  عقیدہ  کی  اسا س پر قائم ہے  ۔ اگر  اس بنیاد میں  ضعف یا  کجی  پیدا ہو جائے تو دین کی عظیم عمارت  کا وجود  خطرے میں پڑ جاتا  ہے۔ عقائد کی تصحیح اخروی فوزو فلاح کے لیے اولین شرط ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اللہ کی طرف سے بھیجی جانے والی برگزیدہ شخصیات سب سے پہلے توحید کا علم بلند کرتے ہوئے نظر آتی ہیں۔  اور  نبی کریم ﷺ نے  بھی مکہ معظمہ میں  تیرا سال کا طویل عرصہ  صرف اصلاح ِعقائدکی جد وجہد میں صرف کیا عقیدہ توحید کی تعلیم وتفہیم کے لیے   جہاں نبی  کریم ﷺ او رآپ  کے صحابہ کرا م﷢ نے بے شمار قربانیاں دیں اور تکالیف کو برداشت کیا  وہاں علماء اسلام نےبھی دن رات اپنی  تحریروں اور تقریروں میں اس کی اہمیت کو  خوب واضح کیا ۔ عقائد کے باب میں اب تک بہت سی کتب ہر زبان میں شائع ہو چکی ہیں اردو زبان میں بھی اس موضوع پر قابل قدر تصانیف اور تراجم سامنے آئے ہیں اور ہنوز یہ سلسلہ جاری  ہے زیر نظر کتاب ’’ صحیح اسلامی عقیدہ‘‘ مدینہ یونیورسٹی  اور جامعۃالامام  محمد بن سعود ،الریاض کے  اساتذہ  کی ٹیم کی   تیار کردہ کتاب کا اردو ترجمہ ہے  جوکہ چھ حصوں پر مشتمل ہے ۔ یہ  کتاب جامعہ سلفیہ ،بنارس  اور ہندوستان کے کئی سلفی مدارس میں شامل نصاب ہے۔یہ کتاب اسلامی عقیدہ سیکھنے اور  مسلمانوں کےحالات کی اصلاح کے لیے بہترین کتاب ہے ۔مصنفین نے اس کتاب میں شامل تمام موضوعات کو  عمدہ اور ایسے سادہ عبارت  واسلوب میں بیان کیا ہے کہ جن سے عقائد کے مسئلہ میں پڑھنے والے کو پوری تشفی حاصل ہوجاتی ہے ۔ صحیح عقیدہ کی تعلیم واشاعت کے سلسلہ میں  مصنفین کےاخلاص کا پتہ اس بات  سے بھی چلتا ہے کہ کتاب کی تیاری  کے بعد انہوں نے اسےبراعظم افریقہ کے بعض مدارس اور وہاں منعقد ہونے والے تدریبی دوروں میں پڑھانے کاانتطام کراکر اس بات کا اطمینان حاصل کیا  ہےکہ کتاب اپنے مقصد میں کامیاب ہے۔اللہ  تعالیٰ اس کتاب کے مصنفین ،مترجم وناشرین  کی اس عمدہ کاوش کوقبول فرمائے ۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
توسل اور اس کے احکام 3
توسل کے معنی 3
قرآن کریم میں وسیلہ کے معنی 3
توسل کے اقسام 4
توسل مشروع اور اس کے اقسام 4
توسل ممنوع 7
مشق 9
اسلام میں ولی اور ولایت 10
ولایت کی تعریف 10
اولیاء کے اوصاف 10
انبیاء تمام اولیاء سے افضل ہیں 11
مشق 12
شفاعت 13
اس کی تعریف 13
اس کےانواع 13
مثبت شفاعت اور اس کے شروط 15
اموات وغیرہ سے طلب شفاعت کی خطرناکی 15
مثبت شفاعت کے انواع 16
مشق 19
گناہ کبیرہ اس کے مرتکب کا حکم او راہل قبلہ میں سے کسی کےلیے جنت یا جہنم کی غیر قطعیت 21
کبائر کی تعریف 21
صغیرہ کی تعریف 22
مرتکب کبیرہ کاحکم 22
اہل سنت کے دلائل کہ مرتکب کبیرہ کا فر نہیں ہے 23
کسی معین شخص کے لیے جنت یا جہنم کی غیر قطعیت 25
مشق 26
بدعت اوردین کے لیے اس کا خطرہ 27
بدعت کا خطرہ 27
بدعت کے اسباب 31
بدعت کا حکم اوراس کے انواع 32
مشق 33
اہل سنت والجماعت 34
ان کی تعریف 34
ان کے خصائص 34
امت کے اعتدال کے مظاہر 37
مشق 38
وجوب محبت رسول ﷺ 39
محبت رسول ﷺکاوجوب 39
آپﷺسےمحبت کے معنی اور اس کی کیفیت 40
رسول ﷺانسان ہیں اللہ نے اپنی رسالت کے لیے آپ کا انتخاب فرمایا ہے 41
مسلمانوں کےدل میں رسول ﷺکا مرتبہ 42
کیا غلو آپﷺکی محبت کے موافق ہے ؟ 44
مشق 44
صحابہ ﷢کے حقوق 46
صحابی کی تعریف 46
صحابہ کی فضیلت اور ان کےحقوق 46
قرآن کریم میں ان کی فضیلت 46
صحابہ کو برا کہنے کا حکم 48
صحابہ کے متعلق اہل سنت کا موقف 49
مشق 50
خلفاء راشدین کے لیے ہمارا فریضہ 51
خلفاء راشدین کون ہیں ؟ 51
ان کا مرتبہ اوران کی اتباع کا وجوب 51
خلافت راشدہ کی مدت 52
ان کے درمیان مراتب 52
مشق 52
عشرہ مبشرہ 53
مشق 54
اہل بیت نبی ﷺ 55
اہل بیت کون ہیں ؟ 55
اہل بیت کی فضیلت کے دلائل 55
اہل بیت سے متعلق وصیت 55
مشق 56
مسلمانوں کے ائمہ اورعام لوگوں سےمتعلق مسلمان کا فریضہ 57
حاکم کی اطاعت کا حکم 58
مشق 59
دین میں اختلاف و تفرق کی مذمت اور اس کی خطرناکی 60
حق پر اجتماع کےلیےابھارنا 60
انتشار کی ممانعت 60
کیا اختلاف رحمت ہے ؟ 62
اختلاف مذموم کے اسباب 63
افتراق و اختلاف سے نجات کا راستہ 64
مشق 66
فہرست 67

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2

Categories
Islam اسلام اعمال ایمانیات توحیدوشرک رشد نذر و نیاز وسیلہ

سعادتوں کا سفر

سعادتوں کا سفر

 

مصنف : صلاح الدین بن محمد البدیر

 

صفحات: 758

 

اخروی  نجات ہر مسلمان کا مقصدِ زندگی  ہے  جو صرف اور صرف توحیدِ خالص پرعمل پیرا ہونے سے پورا ہوسکتا ہے۔ جبکہ مشرکانہ عقائد واعمال انسان کو تباہی کی راہ پر ڈالتے ہیں جیسا کہ قرآن کریم نے  مشرکوں کے لیے  وعید سنائی ہے ’’ اللہ تعالیٰ شرک کو ہرگز معاف نہیں کرے گا او اس کے سوا جسے  چاہے معاف کردے گا۔‘‘ (النساء:48) لہذا شرک کی الائشوں سے بچنا  ایک مسلمان کے لیے ضروری  ہے ۔اس کے بغیر آخرت کی نجات ممکن ہی نہیں ۔ حضرت  نوح ﷤ نے ساڑے نوسوسال کلمۂ توحید کی  طرف لوگوں کودعوت دی ۔ اور   اللہ کے آخری  رسول سید الانبیاء خاتم النبین سیدنا محمد ﷺ نےبھی عقید ۂ  توحید کی دعوت کے لیے کس قدر محنت کی اور اس  فریضہ کو سر انجام دیا  کہ جس کے بدلے   آپ ﷺ کو طرح طرح کی تکالیف ومصائب سے دوچار ہوناپڑا۔ عقیدہ توحید کی تعلیم وتفہیم کے لیے   جہاں نبی  کریم ﷺ اورآپ  کے صحابہ کرا م ﷢ نے بے شمار قربانیاں دیں اور تکالیف کو برداشت کیا  وہاں  علمائے اسلام نےبھی عوام الناس کوتوحید اور شرک کی حقیقت سےآشنا کرنے کےلیے  دن رات اپنی  تحریروں اور تقریروں میں اس کی اہمیت کو  خوب واضح کیا ۔ہنوز یہ  سلسلہ جاری  وساری ہے۔ زیر نظر کتاب’’ سعادتوں کا سفر‘‘  فضیلۃ الشیخ صلاح بن محمد البدیر حفظہ اللہ (امام وخطیب مسجد نبوی)   کے مرتب کردہ مجموعۂ احادیث  بعنوان بلوغ السعادة من أدلة توحيد العبادة کا اردو ترجمہ ہے۔شیخ موصوف نے  کئی  سال کی مسلسل  تحقیق  ومحنت کے بعد اسے  مرتب کیا ہے اوربڑی عرق ریزی سے  اس کتاب  میں  توحید کے اہم ترین موضوع پر   تقریباً بارہ صد صحیح احادیث جمع کردی ہیں ۔قارئین  کی  سہولت کےلیے ضروری مقامات پر احادیث کی شرح بھی  کی نیز قارئین کے ذہنوں میں پیدا ہونے والے سوالات کے جوابات بھی  تحریر کیے ہیں۔یہ کتاب توحید کے موضوع پر حدیث کا عظیم الشان انسائیکلوپیڈیا ، عقیدۂ توحید اور ایمانیات کا شاہکار ہے۔ خطباءاساتذہ،طلبہ، اور باذوق عوام کےلیے انمول تحفہ ہے۔اس کتاب کی افادیت کے پیش نظر جامعہ بلال اسلامیہ،لاہور نے اس  کا ترجمہ کروا کر  افادہ عام کےلیے اسے  مفت تقسیم کیا ہے۔اللہ تعالیٰ  مصنف ،مترجم  وناشرین کی اس کاوش کو قبول فرمائے اور اسے عامۃ الناس کےلیےنفع بخش بنائے ۔ آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 17
عرض مولف 22
توحید عین فطرت ہے 25
رسولوں کی بعثت کا مقصد ہی توحید ہے 29
صرف اللہ تعالیٰ ہی عبادت کا مستحق ہے 33
ارادہ شرعیہ کی حقیقت 38
توحید ہی سب سے بڑی نیکی ہے 40
توحید کی نصیحت و تاکید 45
توحید کی خصوصی بیعت 47
عمل کی قبولیت اور آخرت میں اس کے نفع بخش ہونے کے لیے توحید شرط لازم ہے 52
صرف اہل توحید ہی امن اور ہدایت کے حق دار ہیں 56
رسول اللہ ﷺ کی شفاعت صرف اہل توحید کو نصیب ہو گی 58
توحید پر خاتمہ جنت کی ضمانت ہے 60
درجات کی کمی بیشی کا دارومدار توحید کی کمی بیشی پر ہے 63
احسان کیا ہے 66
گناہ گار موحدین 68
توحید کی دعوت دینا فرض عین ہے 76
دعوت وتبلیغ کا آغاز 80
دعوت الی اللہ کے لیے نرمی سے گفتگو کرنی چاہیے 83
مشرکوں اور اہل کتاب کو کس طرح سلام کرنا چاہیے 89
مشرک سے تحائف کے تبادلے کا جواز 91
مشرکین کے لیے استغفار کرنا منع ہے 95
مشرک کے لیے ہدایت کی دعا کرنا 99
مشرکین کے لیے بددعا کرنے کا بیان 101
شرک سب سے بڑا گناہ ہے 107
شرک کرنے والے کے عمل برباد ہو جاتے ہیں 109
شرک دائمی طور پر ناقابل معافی جرم ہے 111
مشرک کی توبہ قبول ہونے اور اسلام لانے کے بعد اس کے سابقہ اعمال کا معاملہ 114
مشرک کبھی جنت میں داخل نہیں ہو گا 116
اہل فترت مشرکین کی اولاد اور دیگر ایسے لوگوں کا حکم 120
عقیدے کے مسائل میں جہالت کی شرعی حیثیت 125
شرک کی مختلف صورتیں 132
شرک سے بچنا باعث مغفرت ہے 135
لوگوں کو شرک کی دعوت دینے والوں کی مذمت 139
کلمہ توحید کے اقرار تک لوگوں سے جہاد کرنے کا حکم 143
لاالہ الا اللہ کی شرط لازمی 151
اللہ تعالیٰ کے سوا سب کی عبادت کے انکار کے بغیر توحید معتبر نہیں ہوتی 158
ظاہری عمل پر حکم لگانا اور باطن اللہ کے سپرد کرنا ضروری ہے 160
اللہ تعالیٰ کی محبت اور اس کے لوازم کا وجوب 162
اللہ تعالیٰ کا خوف اور اس کے تقاضے 166
اللہ تعالیٰ پر توکل اور اسباب اختیار کرنے کا بیان 172
مخلوق کی ایسی اطاعت حرام ہے جس سے خالق کی نافرمانی ہو 174
اطاعت اور اتباع رسول ﷺ کے تقاضے 178
کتاب وسنت کو لازم پکڑنے اور اسے رشد و ہدایت کی راہ سمجھنے کا وجوب 182
فروعات و عقائد میں خبر واحد حجت ہے 185
توحید باری تعالیٰ کی معرفت 188
بدعت کی مذمت 190
خواہش پرستوں کی صحبت سے بچنا چاہیے 197
مشرک کا موحد سے بحث وجدال اور اس کی مذمت 200
دین میں غلو اور شدت پسندی ممنوع و مذموم ہے 203
نیت اور عزم و ارادہ کی اہمیت 208
اخلاص کی فضیلت 211
ریکاری سے ڈرنے اور اس کے شرک ہونے کی وضاحت 213
جو کام نہ کیا ہو اس کا کریڈٹ لینے کی مذمت 218
چھپ کر عبادت کرنے کی فضیلت 220
ثواب کی نیت سے کیا گیا عمل ہی باعث اجر ہے 223
خود پسندی 226
اخلاص سے عمل کرنے والا مومن 230
اللہ تعالیٰ سے اچھا گمان رکھنا ضروری ہے 232
نماز میں دکھلاوے اور شرک سے بچنا ضروری ہے 235
اللہ تعالیٰ کے حضور سجدہ نہ کرنے کی سزا 240
نیکی کی طرف اٹھنے والے قدموں کے نشانات پر بھی اجر ہے 242
اذان دینے کی اجرت کا مسئلہ 244
مقابلہ بازی اور شہرت کے لیے مساجد بنانے کی حرمت کا بیان 245
تلبیہ توحید کی عظمت و فضیلت 250
دنیا کی خاطر اور دنیا و آخرت دونوں کی خاطر جہاد کرنے والے کا بیان 262
کون سا جہاد اللہ تعالیٰ کے لیے ہے 266
صرف اللہ تعالیٰ کے لیے گناہ چھوڑنے کا اجر و ثواب 268
دولت کے پجاری کی پہچان 271
بتوں اور مورتوں کی عبادت منع ہے 277
بتوں اور مورتیوں کو توڑنا واجب ہے 284
صلیب لٹکانا حرام اوراسے توڑنا ضروری ہے 287
جاندار کی تصویر کی حرمت اور اسے مٹانے کا حکم 290
آخری زمانے میں بتوں کی پوجا 301
قبروں کو پختہ کرنے اور ان پر قبے بنانے کی ممانعت 307
عورتوں کو قبرستان جانے کی اجازت دینے والوں کے دلائل 311
مرنے والے زندہ لوگوں کی بات نہیں سن سکتے 315
فوت شدہ لوگ خودزندہ لوگوں کی دعاؤں کے محتاج ہیں 320
مردوں کو زندہ لوگوں کے اعمال سے نفع پہنچنے کا بیان 322
غیر اللہ کے لیے نذر و نیاز کا بیان 326
غیر اللہ کے نام پر ذبح کرنا حرام اور شرک ہے 332
دعا ہی اصل عبادت ہے اور غیر اللہ سے دعا کرنا شرک ہے 340
اللہ تعالیٰ سے پورے یقین کے ساتھ مانگنا چاہیے 351
خبر دینا مقصود ہو تو دعا میں ان شاء اللہ کہنا جائز ہے 353
جو شخص اللہ تعالیٰ کا واسطہ دے کر مانگے اسے کچھ نہ کچھ ضرور دینا چاہیے 365
صحیح اور فاسد تاویل میں فرق 395
غیب کا علم صرف اللہ تعالیٰ کو ہے 401
السلام علی اللہ کہنا منع ہے 418
زرعت کہنا منع ہے 419
کسی کو طبیب کہنے کا عدم جواز 421
قبلہ رخ تھوکنے سے اللہ تعالیٰ کو اذیت ہوتی ہے 424
اعمال صالحہ کا وسیلہ پکڑنا مسنون ہے 434
نیک آدمی سے دعا کرانے کا وسیلہ جائز ہے 438
اللہ تعالیٰ کو مخلوق کے سامنے سفارشی کے طور پر پیش کرنا منع ہے 446
اللہ تعالیٰ کے سوا کسی اور کی قسم اٹھانا حرام اور شرک ہے 448
غیر اللہ کی قسم اٹھانے کو جائز یا صرف مکروہ قرار دینے کی دلیل 451
اہل کتاب سے قسم لینے کا طریقہ 458
قسموں کی حفاظت کرنا 464
غیر اللہ کو سجدہ کرنا حرام ہے 469
تبرک کی جائز صورتیں 478
تبرک کی ناجائز صورتیں 484
شفا صرف اللہ تعالیٰ دیتا ہے 490
جھاڑ پھونک کا بیان 491
دم کے کلمات علمائے حق سے پوچھے جائیں 495
مسنون وظائف 501
جس نے جادو کیا اس نے شرک کیا 510
علم نجوم کی ممانعت 524
اچھا شگون لینا جائز ہے 540
موت کے اعلان کا بیان 560
مرثیہ خوانی کی حیثیت 563
اللہ تعالیٰ کی نعمت کی ناشکری کفر ہے 571
شفاعت کا اثبات اور اس کی اقسام 576
اہل بیت رضی اللہ عنہم کی فضیلت 610
اختلاف کی مذمت 617
کفار سے مشابہت کی حرمت 628
نفاق اکبر کا بیان 636
نفاق اصغر کا بیان 639
خوارج اور ان کی خصلتیں 645
مسلمان حکمرانوں کے حقوق و فرائض 657
جہیمہ کی تردید 675
فرشتوں کا بیان 695
آسمانی کتابوں کا بیان 701
عذاب قبر اور اس کی نعمتوں کا بیان 707
حشر و نشر کا بیان 722
حساب کتاب اور بدلے کا بیان 727
حوض اور ترازو کا بیان 733
دوزخ کی ہولناکیاں 738
جنت کے نظارے 746

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
99.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam بدعت حج درود علماء فقہاء مقامات مقدسہ ( حرمین ، مکہ و مدینہ ، مسجد اقصٰی ، مساجد ) نماز

روضئہ اقدس کی زیارت

روضئہ اقدس کی زیارت

 

مصنف : امام ابن تیمیہ

 

صفحات: 340

 

یہ کتاب شیخ الاسلام ابن تیمیہ رحمۃ اللہ علیہ کی کتاب ’الرد علی الاخنائی‘ کا اردو ترجمہ ہے ۔اس میں جناب رسول اکرم ﷺ کے روضہ اقدس کی زیارت پر مبسوط بحث کی گئی ہے ۔روایتی فقہاء کا خیال ہے کہ روضہ رسول کی زیارت کے لیے سفر جائز ہے ،لیکن شیخ الاسلام رحمۃ اللہ علیہ نے عقلی و نقلی دلائل کے ساتھ سختی سے اس کی تردید کی ہے ۔شیخ الاسلام خوب سمجھتے تھے کہ اس نازک مسئلہ پر قلم اٹھانا آسان نہیں،لیکن انہوں نے رسول مکرم ﷺ کے عتاب کے پیش نظر اپنے آپ کو اس کٹھن کام کے لیے آمادہ کیا اور عوام کی مخالفت اور دشمنی کی پروا نہ کرتے ہوئے اس کو مفصل ،مبسوط اور واضح شکل میں پیش کر دیا۔واضح رہے کہ امام صاحب نے روضہ رسول کی زیارت کے لیے سفر سے تو روکا ہے تاہم مطلق زیارت کو جائز قرار دیا ہے ۔اس کے ساتھ ساتھ بنی معظم ﷺ کا اجلال و احترام اور توقیر و اکرام ایسے پر کشش انداز اور دل نشین پیرائے میں ذکر فرمایا ہے جو کمال محبت،جذب و مستی اور وارفتگی میں اپنی مثال آپ ہے ۔

عناوین صفحہ نمبر
شیخ الاسلام امام ابن تیمیہ 9
افتتاحیہ 10
مقدمہ 13
عظمت انسان 13
رسول کریم ﷺ کی عظمت 15
آپ پر درود بھیجنا 15
حافظ ابن تیمیہ اور زیارت روضہ نبوی 17
کیاروضہ اقدس پر کھڑے ہوکر درود بھیجنے والے کی آواز آپ سنتے ہیں؟ 18
شیخ الاسلام ابن تیمیہ پر ناروا حملے 19
شیخ الاسلام کی جلالت علمی 20
پاک و ہند میں حافظ ابن تیمیہ کے علوم و معارف کا تعارف 24
الرد علی الاخنائی کا ترجمہ 26
تمہید 28
اتباع رسول 29
اللہ پاک کاخوف 32
عدم علم کا عذر قابل قبول نہیں 33
اللہ پاک کے علاوہ کسی کو اختیارنہیں 39
رسول اکرم ﷺ کوبھی اختیار نہیں 40
سبب تالیف کتاب 43
قاضی اخنائی کی جہالت 44
قاضی اخنائی کا اعتراض 52
اثر ابن عمر 56
حافظ ابن حزم کا قول 57
امام مالک کا قول 61
آپ کی قبر شریف کی دوسری قبروں پر امتیازی حثییت حاصل ہے 63
صحابہ کرام میں زیارت قبر نبوی کا لفظ مستعمل نہ تھا 63
نبی ﷺ کی فضیلت 65
مسجد نبوی کے فضائل 67
قاضی اخنائی کی الزام تراشی 70
سوال کے الفاظ 75
جواب کے الفاظ 76
من زارنی و زار ابی …….. حدیث کی تحقیق 77
من حج نزار قبری ……… حدیث کی تحقیق 77
من زار قبری و جبت لہ شفاعتی  حدیث کی تحقیق 77
ابومحمد مقدسی کا استدلال 79
غیر مساجد ثلاثہ کی نذر 81
زیارت قبر نبوی کی تمام حدیثیں ضعیف ہیں 81
امام احمد کا قول 82
قبر نبوی کی شرعی حیثیت 84
قبروں کی زیارت کے لیے سفر کی مشروعیت پر شیعہ نے حدیثیں وضع کیں 85
قاضی اخنائی کا الزام اور اس کا جواب 89
قاضی اسماعیل بن اسحاق کا قول 92
قاضی عبدالوھاب کا قول 94
قبروں پر دعا کے لیے آنا 96
قبر نبوی کی زیارت 96
امام شعبی نخعی ابن سیرین کا مسلک 97
صاحب قبر سے دعا کرنا شرک ہے 99
مشرکین کی تین قسمیں 100
جنوں انسانوں کی سفارش 102
امام مالک کا قول 106
قاضی عیاض کا قول 107
ابوالقاسم بن جلاب کا قول 107
محمد بن مواز کا قول 108
اہل مدینہ کے لیے قبر نبوی کی زیارت کا حکم 108
ابن القاسم کا قول 111
حدیث ردّ اللہ علیٰ روحی 112
رسول اللہ ﷺ کی خصوصیات 113
زیارت قبور کے مقاصد 116
روضہ رسو ل کی زیارت 117
اہل بدعت کا حال 118
صحابہ کرام کی قبریں نجات دہند نہیں 120
ایک واقعہ 121
دوسرا واقعہ 121
کیا وفات کے بعد آپ پہلے کی طرح زندہ ہیں؟ 122
قیام امن کے دو سبب 123
اولیاء کی قبریں حصول امن کا سبب نہیں 124
مدینہ منورہ کی خوشحالی کے اسباب 126
مکہ مکرمہ میں شرک کی ابتداء 129
غیر شرعی زیارت 131
بیت اللہ کے بالمقابل دیگر معبد خانوں کا حشر 132
عزیٰ اور منات کا ذکر 133
سفیان بن عینیہ سے استفتاء 135
قبور میں اور بُت پرستوں میں مماثلت 138
ایک مثال 139
دوسری مثال 139
عبادالرحمن کون ہیں؟ 141
انبیاء کا دشمن کون ہے؟ 144
روافض،خوارج کے اوہام باطلہ 146
قبروں کا حج کرنے والے اور خوراج 148
ادّلہ شرعیہ کا ماخذ 149
کیا نماز میں آپ پر درود بھیجنا ضروری ہے 151
امام محمد باقر کا قول 152
فرشتوں او رنبیوں کی قسم کھانا 153
موحدین کے عقائد 156
عصمت انبیاء 160
قاضی عیاض کی وضاحت 161
آنحضرت ﷺ کا بکریاں چرانا 161
آپ کا اُمی ہونا 163
آپ کا شق صدر 163
آپ کی متابعت 164
حقوق مصطفیٰ سے قبل مسجدنبوی کے حقوق مقدم ہیں 167
زیارت نبوی کے آداب 169
مشروع زیارت مسجد نبوی کی 170
قبروں کی زیارت میں اختلاف 171
چند امثلہ 172
عام قبروں پرنماز جنازہ جائز ہے 176
آپ کی قبر اطہر پر جنازہ پڑھنا ثابت نہیں 177
نہی کے بعد صیغہ امر وجوب کامتقاضی نہیں 179
مثال اوّل 179
مثال ثانی 180
مثال ثالث 181
مثال رابع 181
مثال خامس 181
مثال سادس 181
مثال سابع 182
زیارت قبور کے لیے سفر کرنا 184
اوّلین شفاعت کا اعزاز آپ کو حاصل  ہے 187
آپ کا اپنی والدہ کی قبر کی زیارت کرنا 187
زیارت روضہ رسول 188
ابن حبیب کا قول 196
میرا نظریہ 197
علی بن حسین زین العابدین کامقام 198
مسجدمیں داخل ہوتے وقت آپ پر صلوٰۃ و سلام بھیجنا 201
عمرو بن دینار کا قول 202
امام نخعی کا قول 202
عقلمہ اور کعب احبار کا قول 203
سلام تحیۃ اور صلوۃ سلام میں فرق 204
قیاس فاسد کی چند امثلہ 206
قبر اطہر کی زیارت کی عدم مشروعیت کے وجوہات 212
اہل بدعت کا طرز عمل 215
قبر اطہر کی زیارت کی مشروعیت کیونکر ممکن ہے 217
صحابہ کرام بدعات سےمحفوظ تھے 221
قبر اطہر پر دعا کرنا 222
مامن احد یسلم علی الحدیث کے جوابات 230
مسجد نبوی کی خصوصیات 231
زیارت قبر نبوی کاجواز 231
قبر نبوی پر ہاتھ پھیرنا 234
رسول اکرم ﷺ کی اطاعت فرض ہے 235
آپ کی رسالت پر انبیاء کا عہد لینا 236
رسول اکرم ﷺ کو سراجاً منیراً کہا گیا ہے 240
قبروں کا حج 242
عہد صحابہ کرام اور قبر نبوی 242
حجرہ عائشہ کو کب مسجد نبوی میں داخل کیا گیا 243
عمر بن عبدالعزیز کامشورہ 244
سعید بن مسیب کا قول 245
حجروں سے کیا مراد ہے 246
ازواج مطہرات کے حجرے وقتاً فوقتاً بنائے گئے 247
مسجدنبوی میں حضرت عثمان کی توسیع 248
مسجد نبوی میں ملحقہ جگہ کا حکم 248
سلام التحیتہ 251
الاماشاء اللہ کا استثناء 259
قاضی عیاض کا نقطہ نظر 260
اسحاق بن ابراہیم فقیہ کانقطہ نظر 260
مغالطہ کا ردّ 260
قبر نبوی پر بدعات 261
قبر نبوی کی زیارت کی نذر ماننا 262
آپ کی زندگی میں آپ کی طرف سفر ہجرت 265
وفود کا سلام کے لیے سفر کرنا 265
من زار نی بعد مماتی  حدیث کی حقیقت 267
کسی بھی قبر کی زیارت کے لیے سفر کرنا جائز نہیں 269
کیا قبر نبوی کی زیارت آپ سے محبت کی علامت ہے 269
مغالطہ کی تردید 270
کیا قبر نبوی کی زیارت کے لیے سفر کرنا معصیت ہے؟ 274
سفیان ثوری کا قول 277
اہل قبور کے مناقشات 280
وہب بن منبہ کا قول 280
کیاانبیاء کی قسم اٹھانا جائز ہے؟ 282
قبر نبوی کی زیارت کی قسمیں 282
کیا قبر نبوی کو ہاتھ لگانا ثابت ہے 285
سفیان بن عینیہ کا قول 287
ابراہیم بن سعد کا قول 287
ائمہ اربعہ او رجمہور علماء کا مسلک 288
ابن حزم کا نظریہ اور استدلال 289
وہ مقامات جہاں شیاطین رہتے ہیں 290
کیا رجال غیب ہیں؟ 291
طور پہاڑ کی طرف سفر کی ممانعت 292
ابن عمر کی حدیث 292
ابو سعید خدری کی حدیث 293
جائز حکم کے وسائل 293
قبر نبوی کی زیارت کے مجوزین 295
ابن بطہ عسکری 295
ابوالوفا بن عقیل 296
زیارت قبر نبوی او راجماع فہم کا اختلاف 300
بلا دلیل کسی کو اجماع کا مخالف کہنا صحیح نہیں 302
امام احمد کا قول 302
قبروں کی زیارت ان کی تعظیم کے لیے ہے؟ 304
رسو ل اکرم ﷺ کا شفاعت فرمانا 306
عباد قبور، عباد اوثان ایک ہیں 307
انبیاء کی تعظیم 308
اہل بدعت سے جہاد 313
شد رحال 315
خاتمہ 317
تمام انبیاء ایک دین پر تھے 318
خالص توحید 323
رسول اکرم ﷺ کی عبدیت 324
حج قبور 327
ایک اشکال 328
کیا کسی کو شفاعت کا استحقاق ہے؟ 330
رسول اکرم ﷺ کی شفاعت 331
انبیاء اولیاء کی تعظیم میں غلو 333
روضہ نبوی کی زیارت 335

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اعمال توحیدوشرک سنت وسیلہ

رسالہ توحید و رد شرک

رسالہ توحید و رد شرک

 

مصنف : عبد العزیز بن محمد آل سعود

 

صفحات: 80

 

اللہ تبارک وتعالیٰ کے تنہالائقِ عبادت ہونے ، عظمت وجلال اورصفاتِ کمال میں واحد اور بے مثال ہونے اوراسمائے حسنیٰ میں منفرد ہونے کا علم رکھنے اور پختہ اعتقاد کےساتھ اعتراف کرنے کانام توحید ہے ۔توحید کے اثبات پر کتاب اللہ اور سنت رسول ﷺ میں روشن براہین اور بے شمار واضح دلائل ہیں۔ اور شرک کام معنیٰ یہ کہ ہم اللہ کے ساتھ کسی کو شریک ٹھرائیں جبکہ اس نےہی ہمیں پیدا کیا ہے۔ شرک ایک ایسی لعنت ہے جو انسان کوجہنم کے گڑھے میں پھینک دیتی ہے قرآن کریم میں شرک کوبہت بڑا ظلم قرار دیا گیا ہے اور شرک ایسا گناہ ہے کہ اللہ تعالیٰ انسان کے تمام گناہوں کو معاف کردیں گے لیکن شرک   جیسے عظیم گناہ کو معاف نہیں کریں گے ۔شرک اس طرح انسانی عقل کوماؤف کردیتا ہےکہ انسان کوہدایت گمراہی اور گمراہی ہدایت نظر آتی ہے ۔نیز شرک اعمال کو ضائع وبرباد کرنے والا اور ثواب سے محروم کرنے والا عمل ہے۔ پہلی قوموں کی تباہی وبربادی کاسبب شرک ہی تھا۔ چنانچہ جس کسی نے بھی محبت یا تعظیم میں اللہ کے علاوہ کسی کواللہ کے برابر قرار دیا یا ملت ابراہیمی کے مخالف نقوش کی پیروی کی وہ مشرک ہے۔ زیر تبصرہ رسالہ ’’شیخ الاسلام مجدد دین امام محمد بن عبد الوہاب﷫ کے تلمید خاص اور ان کی قائم کرد ہ تحریک احیاء کتاب وسنت کےممد ومعاون شیخ عبد العزیز بن محمد بن سعود ﷫ کے توحید اور شرک کے موضوع پر ایک رسالہ کاترجمہ ہے۔ یہ رسالہ اگرچہ مختصر ہے مگراپنے مشمولات ومحتویات کے اعتبار سے ایک جامع کتاب کی حیثیت کا حامل ہے۔ کیونکہ اس میں ایک دقیق النظر صاحب بصیرت عالم کتاب وسنت کی فکری کاوش اور امت مسلمہ کے ایک مخلص مجاہد ، مصلح حاکم اور مرد میدان کی عقیدہ فہمی جمع ہے۔ اس اہم رسالہ کا ترجمہ کی سعادت جناب ڈاکٹر ظہور احمد اظہر (سابق پرنسل اورئنٹیل کالج،لاہور ) نے حاصل کی۔اور محترم جناب حافظ عبدالرشید اظہر﷫ نے 1995ء میں اسے   اپنے قائم کردہ ادارے ’’دار الفکر الاسلامی ‘‘ کی طرف سے شائع کیا۔ اللہ تعالیٰ ہمیں عقیدہ توحیدپر قائم ودائم رکھیں اور اس کی نشرواشاعت وتبلیغ کی توفیق دے۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
پیش لفظ از سماحۃ الشیخ عبد العزیز بن باز 1
تقدیم از فضیلۃ الشیخ صالح بن عبد العزیز 7
تمہید 15
عقیدہ توحید کی اہمیت 16
کلمۂ توحید کے معانی 17
عبادت کا لغوی اور شرعی مفہوم 18
اختلاف کی نوعیت 19
حقیقت شفاعت 20
اللہ تعالیٰ کے حق اور انبیاء و اولیاء کے حق میں فرق 21
اولیاء اللہ کی صفات 23
اہل ایمان کی تکفیر سے اظہار براءت 24
شفاعت کی اقسام 25
حصول شفاعت کی شرائط 26
قبر نبیﷺ پر سلام کا طریقہ 31
زیارت قبور کے لیے سفر کی ممانعت 33
غیر اللہ کو مدد کے لیے پکارنا فی العبادت ہے 39
نفع نقصان کا مالک کون؟ 43
حقیقی مؤحد کے اوصاف 45
آمدم بر سر مطلب 52
عقیدہ شفاعت میں مشرکین کی غلط فہمیاں اور ن کا ازالہ 53
شرک کی اقسام 55
مشروع اور ممنوع توسل 56
مخلوق کا واسطہ دے کر دعا کرنا مکروہ تحریمی ہے امام ابو حنیفہ و دیگر ائمہ کی تصریحات 60
فوت شدگان کا وسیلہ بنانا مشرکین کے عمل سے مشابہت رکھتا ہے 71
قبروں کے ذرعیہ شرک پھیلانے کی شیطانی چال 75
امام محمد بن عبد الوہاب اور اآل سعود پر اولیاء اللہ اور ان کے مقابر کی توہین کے الزامات کی حقیقت 76

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.4 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam جوامع خطبات و محاضرات اور دروس روح زبان سنت طہارت نماز

ریاض الخطبات جلد اول

ریاض الخطبات جلد اول

 

مصنف : حافظ نثار مصطفٰی

 

صفحات: 362

 

خطابت اللہ تعالیٰ کی عطاکردہ،خاص استعداد وصلاحیت کا نام ہے جس  کےذریعے  ایک مبلغ اپنے مافی الضمیر کے اظہار ،اپنے جذبات واحساسات دوسروں تک منتقل کرنے اور عوام الناس کو اپنے  افکار ونظریات  کا قائل بنانے کے لیے  استعمال کرتا ہے ۔ایک قادر الکلام خطیب اور شاندار مقرر مختصر وقت میں ہزاروں ،لاکھوں افراد تک اپنا پیغام پہنچا سکتا ہے  اوراپنے   عقائد ونظریات ان تک منتقل کرسکتا ہے۔خطابت  صرف فن ہی نہیں ہے  بلکہ یہ عظیم الشان سعادت ہے ۔خطباء حضرات  اور مقررین کی سہولت وآسانی کے لیے       اسلامی خطبات  پر مشتمل دسیوں کتب  منظر عام پر آچکی ہیں جن   سے استفادہ کر کے تھوڑا بہت پڑھا ہو ا شخص  بھی  درس  وتقریر اور  خطبہ جمعہ کی تیاری کرکے سکتا ہے ۔زیر نظر کتاب’’ریاض الخطبات جلد اول ‘‘ڈاکٹرحافظ نثار مصطفی(خطیب  جامع مسجد محمدی اگوکی ،سیالکوٹ) کی تصنیف ہے۔یہ کتاب 22 مختلف موضوعات پر مشتمل ہے ۔  جوکہ  ڈاکٹر حافظ نثار مصطفی  کے ان  دروس اور تقاریر کی  کتابی  صورت ہے جو انہوں نے  مختلف مواقع پر مختلف اجتماعات میں بیان فرمائی ہیں۔ ان میں بعض وہ مضامین  بھی  شامل  ہیں جو ہفت روزہ الاعتصام ، ہفت روزہ اہلحدیث اور ہفت روزہ تنظیم  وغیرہ کے صفحات کی زینت بنے۔ان میں ان  کچھ تغیرو اضافہ کےاس کتاب میں شامل کرلیاگیا  ہے۔ یہ  مجموعہ خطبات  منفرد اور جداگانہ انداز  کا  حامل ہے ۔مولانا ابو انس محمد یحی گوندلوی رحمہ اللہ  شارح ترمذی و ابن ماجہ اور حافظ ناظم شہزاد صاحب کی نظر ثانی سے اس کتاب کی افادیت دوچند ہوگئی ہے۔صاحب کتاب اس کتاب کے علاوہ  بھی کئی کتب کے مترجم ومصنف ہیں ۔یہ اس کتاب کا آن لائن ایڈیشن ہے ۔ اللہ تعالیٰ مصنف کی تحقیقی وتصنیفی خدمات کو قبول فرمائے ۔(آمین) 

 

عناوین صفحہ نمبر
خصوصیات اوراسلوب 2
فہرست مضامین 3
خطبہ مسنونہ 20
تقریظ 21
خطبہ نمبر1 25
اثبات توحید 25
سونشانوں میں بے نشان توہے 31
اللہ تعالی کی وحدانیت پرعقلی ،عادی اورفطری دلیل 31
وہی ایک ذات عبادت کےلائق ہے 38
2۔قرآن کریم کی دعوت فکر 42
اللہ کے سوااورکارسازوں کی مثال مکڑی کی سی ہے 42
مچھر کی مثال اورقرآن کی اس پردعوت فکر 45
تسخیر کامفہوم 51
نعمت ہائے الہیہ انسان کےاحاطہ علم سے باہر ہیں 52
قرآن مجید کانظام کائنات سے استدلال 52
خطبہ نمبر3 56
پیارے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی چند مخصوص صفات ومحاسن 56
ہرچیز سے بڑھ کرپیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ محبت ایمان کےلئےشرط ہے
پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو جوامع الکلم عطا کیے جانا 59
پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کےلئے مال غنیمت حلال کیاجانا 59
پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کےلئے زمین کو مسجد اورباعث طہارت بنادیاجانا 60
پیارے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کاعرش کی دائیں جانب کھڑا ہونا 67
پیارے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے جسم اطہر کی نزاکت اورخوشبو 68
نبوت محمدی کےسراج منیر کے بعد کسی بھی نبی کاچراغ نہیں جل سکتا 69
مومنوں میں سے پیارے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی بعثت،مومنوں پراللہ کااحسان ہے 69
ہر عبادت کی قبولیت کےلئے شرط ہے کہ وہ پیارے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت کے مطابق ہو 70
پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کامقام ذیشان ساری امت (ساری کائنات)سے اعلی 72
شان مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 75
جامع مجمل خطبہ احمد صلی اللہ علیہ وسلم 77
سیدنا عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ اورشان مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 78
پیارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم امام الانبیاء ہیں 79
سیدہ عائشہ رضی اللہ عنہا اورشان مصطفی 79
سیدناخدیجہ رضی اللہ عنہا اورشان مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 80
سیدنا ابن عباس رضی اللہ عنہما اورشان مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 81
چند اعزازات مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 84
رفعت وعظمت شان مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 86
اللہ تعالی اورمقام مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 88
ائمہ کرام رحمہم اللہ اورشان مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم 90
عبداللہ بن عباس ،امام شعبی ،عطاء،مجاہد اورامام مالک بن انس کانظریہ 90
ائمہ اربعہ کے نزدیک پیارے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کامقام 91
اللہ اوررسول صلی اللہ علیہ وسلم کامقام 93
اللہ تعالی اپنے نبی کاخود محافظ ہے 96
اللہ تعالی کا اپنے نبی کو ابو لہب کی بیو ام جمیل سے تحفظ فراہم کرنا 99
نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا عفریت کوپکڑنا 100
آپ کی جان بچانے والے کی شہادت 101
آپ کی جان بچانے والے کی شہادت 101
2۔ابوجہل کاارادہ قتل 102
3۔عقبہ بن ابی معیط کاارادہ قتل 102
4۔سیدنا عمر کااسلام لانے سے قبل آپ کو قتل کرنا کاارادہ 103
5۔قتل کے ارادہ سے ابوطالب سے سودابازی 104
6۔وہ مشورہ قتل جو آپ کی ہجرت کاسبب بنا 105
7۔ہجرت کےبعد آپ کی گرفتاری  یا قتل پرسو اونٹ انعام کی پیش کش 105
8۔عمیر بن وہب جمحی کاارادہ قتل 2ھ 109
(9)یہود کامنصوبہ قتل4ھ 108
(10)ثمامہ بن اثال کاارادہ قتل 6ھ 109
(11)زہر آلود بکری کےگوشت سے آپ کے قتل کی یہودی سازش 7ھ 110
خسروپرویز شاہ ایران کاارادہ 7ھ 111
جادو کے ذریعہ آپ کو ہلاک کرنے کی یہودی سازش 112
دشمن قبیلہ کے ایک بدوی کاارادہ قتل 112
فضالہ بن عمیر کاارادہ قتل 8ھ 113
منافقوں کی آپ کو قتل کرنے کی سازش 9ھ 113
عامر بن طفیل اوراربد کی سازش قتل10ھ 114
اللہ تعالی کااپنےرسول کی حفاظت بذریعہ انصار کرنا 116
آزمائش اورایمان لازم وملزوم 119
آزمائش کے ساتھ ساتھ اللہ تعالی کے مدد کاحصول 122
آزمائشوں سے گناہوں کی معافی 125
ابراہیم علیہ السلام کی آزمائشیں اوران کاصلہ 126
مصائب دنیا سے نجات 129
خوف وحزن کاخاتمہ 131
اہل ایمان کی آزمائش کاعظیم واقعہ 136
7۔نماز میں خشوع کی اہمیت 139
’’ربط کلام:کامیاب ہونے والوں کی پہلی صفت 140
لغت میں خشوع کامفہوم 140
’’قال بان فارس فی (المقاییس) 141
قرآن کریم میں خشوع کااستعمال 141
نماز میں خشوع کی تعریف 142
روز محشر نماز کے فوائد 144
خشوع کے فوائد 145
نماز میں خیالات کی پراگندگی کاحل 148
خشوع کی فضیلت 151
پیارے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی خشوع وخضوع سے لبریز نماز 152
ہماری نمازوں کاحال 154
اپنی نمازوں میں خشوع وخضوع پیدا کرنے کےلئےچند تجاویز حاضر خدمت ہیں 155
عبادات کی مقصدیت 157
تخلیق انسان کامقصد اللہ تعالی کی عبادت ہے 166
عبادات کادوسرا نام 170
عبادت یعنی عمل صالح کامقاصد 171
عبادت یعنی عمل صالح کے مقاصد حاصل کرنے میں ناکامی کےاسباب 172
9۔غصہ ضبط کرنے کی فضیلت 174
اسلام ایک ہمہ گیر اورآفاتی دین 174
غیظ وغضب سے احتراز کاحکم 174
غصے کو ضبط کرنے اورعفوودرگزرنے کاحکم 175
غصہ ضبط کرنے کی فضیلت 179
غصہ ہلاکت ہے 180
طاقتورکون 181
ابلیس کےحملہ کے اوقات 182
غصہ زائل کرنے کے طریقے 182
دو عظیم سنتیں 185
10۔صدق وکذب کے اثرات 187
11۔آداب تجارت 200
قریش مکہ اورپیشہ تجارت 200
پیارے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کاپیشہ ءتجارت اختیار کرنا 201
تاجر کے ضروری اوصاف 201
وہ اشیاء جن کی تجارت ممنوع ہے 205
جہنم سے نجات دینے والی تجارت 209
12۔حقیقت دنیا 212
دنیا کس کاگھر ہے 217
پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی رہائش گاہ 218
دنیا کے فتنہ سے پناہ مانگنا 221
ہوس،اورعمر کی زیادتی کی تمنا 223
دنیا کی محبت اورموت سے بیزاری کانقصان 225
13۔بہتر مسلمان کون؟ 227
کامل اورسچا مسلمان کون؟ 227
دنیا کامال متاع غرور ہے 228
عیب جو طعنہ زن جہنم کاایندھن بنے گا 229
اللہ اوررسول صلی اللہ علیہ وسلم کے نزدیک بہترین مسلمان کوں؟ 230
مسلمان کو گالی دینا فسق ہے 230
غیبت کی وضاحت 233
بہترین اوربد ترین شخص کون 237
اللہ کامحبوب ترین کون 238
مستحق رحمت کون ہے 239
احادیث کے تناظر میں بہترین کون 240
فتنوں کے دور میں بہترین شخص 248
بہترین شخص کےاوصاف حسنہ 251
حسد!چھٹکارا کیسے 253
حسد کی ممانعت 254
نعمت دیکھ کردعائے برکت کرنا 255
دعائے برکت 255
قابل رشک دوافراد 255
حسدزائل کرنے کاایک طریقہ 256
حسدزائل کرنے کادوسرا طریقہ 257
حسدزائل کرنے کاتیسرا طریقہ 258
حاسد کے شر سے اللہ کی پناہ حاصل کرنا 259
15۔صرف ذکر الہی اطمینانِ قلب کاموثر ذریعہ ہے 261
بے سکونی اورغم سے نجات مختلف طریقے 262
اسلام میں روح کی غذا ذکرالہی ہے 262
بے سکونی سے نجات کادرست طریقہ 263
تم اللہ کو یادکرواللہ تمہیں یادکرےگا 263
ذکرالہی سے اللہ کی بخشش کاحصول 265
ذکرمحفوظ ترین قلعہ ہے 266
ذکرسے معیشت الہی کاحصول 267
ذکرالہی باللسان:ذکرباللسان اللہ تعالی کی معیت کاموثر ذریعہ ہے 268
ذکرافضل ترین عمل ہے 268
ذکرکے چند فوائد 271
16۔اطمینان قلب کےاسباب 273
تمہیدی کلمات 273
تقدیر پرایمان 274
اطمینان قلب کے اسباب میں سے دوسرا سبب ہے 276
ساری امیدیں اکیلے اللہ تعالی سے باندھنا 276
قرآن کریم کی چار آیات باعث طمانیت 279
13۔اپنے سے کم ترلوگوں کو دیکھنا 279
رسول اللہ کی شفاعت کی امید رکھنا 281
ہرقسم کے گناہ بالخصوص ظلم سے بچنا 282
17۔اللہ تعالی کی معیّت خاصہ(ساتھ،نصرت،اوراعانت)حاصل کرنے کے ذرائع 284
اللہ تعالی کی معیت خاصہ(ساتھ)کامطلب 284
18۔کرامات اولیاء اللہ 295
اولیاءاللہ کی شناخت 295
اولیاءاللہ کی تغظیم وتوقیر کے آداب 296
کرامت کامعنی 297
کرامت غیر اختیاری فعل ہے 298
کرامات کی حقانیت 298
اولیاءاللہ کے اختیارات 298
اولیاءاللہ مکلف ہیں 299
ایک باطل نظریہ 299
اولیاءاللہ کاایک سے زائد مقامات پرموجود ہونا 299
اولیاءاللہ کی چند کرامات 300
لاٹھیاں چراغ بن گئیں 300
چھ ماہ لاش محفوظ رہی 301
بددعاقبول ہوئی 302
آگ گلزار بن گئی 303
پیالے نے تسبیح کی 304
زہر بے اثر ہوگیا 304
لاش اوپر اٹھالی گئی 304
ولی اللہ پرجھوٹی تہمت کی سزا 304
بینائی لوٹ آئی 306
حد نگاہ تک قبر کاوسیع ہونا 306
وضو کے وقت اعضاءکادرست ہونا 306
گھوڑا دوبارہ زندہ ہوگیا 306
شیرڈرگیا 310
نظرسے اوجھل 311
ایک کلوسونا مل گیا 312
مدرسے کوریلوے اسٹیشن اورسڑک کاحصول 312
19۔محاسن قرآن کریم 314
قرآن مجید کے نازل کرن کی ضرورت 315
یہ کیسی عقیدت ہے 317
قرآن مجید پڑھنے کی فضیلت 320
قرآن مجید کاسفارش کرنا 321
ماہر قرآن کی فضیلت 322
قرآن سیکھنے اورسکھانے کی فضیلت 322
سورۃ البقرہ کی فضیلت 325
20۔آداب تلاوت 326
خوش آوازی کے ساتھ قرآن پڑھنا 326
تعوذپڑھنا 326
تلاوت کے ساتھ عمل ضروری ہے 326
مومنوں پرتاثیر قرآن 327
کافروں کاقرآن سے تاثر 329
پہاڑوں پرقرآن کی تاثیر 330
حضرت عمر پرقرآن کی تاثیر 331
طفیل بن عمروالدوسی پر قرآن کی تاثیر 332
قرآن کی حیرت انگیز تاثیر 333
شیاطین اورجنات پرآیت الکرسی کی تاثر 333
21۔بہتان ایک سنگین جرم ہے 337
بہتان کیا ہے 337
بہتان باندھنے کی آخرت میں سزا 338
سب سے افضل اسلام 338
مسلمان کون 339
اپنی زبان کی برائی سے اللہ کی پناہ مانگنا 339
رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کامسلمان مردوں سے بہتان ناباندھنے کی بیعت لینا 339
اپنی زبان کی حفاظت دراصل اپنی عزت کی حفاظت ہے 340
تجسّس اورٹوہ لگانا منع ہے 341
بدگمانی سے بچتے رہوکیونکہ بدگمانی سب سے بڑا جھوٹ ہے 341
22۔سیرت ابراہیم علیہ السلام کا منفرد انداز میں کائنات پرغوروفکر 348
ملکوت کامفہوم 350
انبیاءمعصوم ہوتے ہیں 351
سیدنا ابراہیم کاکائناتی مطالعہ 352
بچہ کے تعلیمی مراکز(مگر انبیاءخاص ہوتے ہیں) 354
خلاصہ گفتگو 358

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
13.4 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اذکار وادعیہ درود علماء نبوت

رسول اکرم ﷺ پر درود و سلام

رسول اکرم ﷺ پر درود و سلام

 

مصنف : ابن قیم الجوزیہ

 

صفحات: 152

 

اللہ رب العزت نے  عوام کی رہنمائی کے لیے سلسلہ نبوت جاری فرمایا جس کی آخری کڑی جناب محمد رسول اللہﷺ ہیں۔ جنہوں نے ان پڑھوں کو راہ دکھائی اور عوام کو اپنے رب کی آیات پڑھ کر سنائیں اور ان کا تزکیہ کیا اور قرآن وسنت کی تعلیم دیتے رہے‘ جب کہ ان اَن پڑھوں کی حالت یہ تھی کہ وہ اس سے پہلے گمراہیوں کا شکار تھے اور آپﷺ اللہ کے چیدہ نبی اور اس کے صادق ومصدوق رسول تھے۔ اللہ رب العزت نے ان پر درودوسلام بھیجنے کی خاص تلقین کی ہے۔ زیرِ تبصرہ کتاب  اسی موضوع پر مشتمل ہے۔ اس کتاب میں نبیﷺ پر درودوسلام سے متعلق احادیث نبویہ کا ذکر کیا ہے اور ان احادیث کی تحقیق کر کے صحت وضعف کے اعتبار سے تفصیلی جائزہ بھی لیا گیا ہے۔ درودوسلام کے اسرار وحِکم‘ تاثیرات وفوائد اور اس کی عظمت واہمیت کو واضح کیا گیا ہے اور  درود کب اور کس مقدار واجب ہے اور اختلاف ہونے کی صورت میں راجح قول کی وضاحت کی گئی ہے اور مرجوح اقوال کی تردید بھی کی گئ ہے۔۔ اس کتاب کے مطالعے سے عوام کم وقت میں زیادہ معلومات حاصل کر سکتے ہیں ۔ یہ کتاب’’ رسول اکرم پر درود سلام ‘‘ امام شمس الدین ابن القیم کی مرتب کردہ ہے۔آپ تصنیف وتالیف کا عمدہ شوق رکھتے ہیں‘ اس کتاب کے علاوہ آپ کی اور کتب بھی ہیں۔ دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ مؤلف وجملہ معاونین ومساعدین کو اجر جزیل سے نوازے اور اس کتاب کو ان کی میزان میں حسنات کا ذخیرہ بنا دے اور اس کا نفع عام فرما دے۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
سیرت النبی امیﷺ کی ایک جھلک 5
کمال شکل وصورت اورکمال جسمانی کےلیے چاراوصاف کااعتبار ہوتاہے 7
کمال اخلاق کریمانہ کےلیے چھ چیزوں کااعتبار ہوتاہے 8
بلنداقوال اورپاکیزہ گفتگو والاہونے کےلےی آٹھ باتوں کاپایا جانا ضرور ی 11
اچھے افعال اورعمدہ کردار کےلیے آٹھ صفات کااعتبار ہوتاہے 14
مقدمہ 19
مولف کتاب امام ابن قیم ﷫ کامختصر تعارف 23
امام موصو ف کےبارےمیں چند علماء کی آراءؤ 27
احادیث دورد کےرواۃ 32
آخری تشہد میں 32
نماز جنازہ میں دوسری تکبیر کےبعد 33
جمعہ کےعیدین وغیرہ کےخطبہ میں 35
اذان کےبعد 35
دعاکے وقت درود کی تین صورتیں ہیں 36
اللہ کی حمد وثناء کےبعد اوردعاسے قبل 36
دعاکی ابتدء اوسط اورخیرمیں 36
دعاسے پہلے اوردعاکےبعد 36
مذکورہ بالامواقع کےمتعلق امام ابن قیم ﷫ کاقول 37
مسجد کےاندر داخل ہوتےوقت اوراس سے باہر نکلتے وقت 38
صفا اورمروہ پر 39
مجلس میں اجتماع کےوقت اوراس کےاختتام سے قبل 39
نبی کریم ﷺ کاذکر مبارک آنے پر 40
دن کےآغاز اختتام پر 40
قبررسول اللہ ﷺ کےپاس 42
نماز عید میں 42
جمعہ کےدن اوراس کی رات م﷫ں 43
ختم قرآن کےبعد 44
قرآن حدیث میں آپ کےتذکرہ کےوقت 45
رنج وغم مصیبت پریشانی اورمغفرت طلب کرنےکے وقت 46
شادی کاپیغام دیتےوقت 47
بغیرکسی تخصیص کےہرجگہ اورہرموقع بر 47
آخری قنوت میں 47
فضائل درود احادیث نبوی کےآئینہ میں 48
رحمت الہیٰ کےنزول کاسبب 48
درجات کی بلندی اوربرائیوں میں کمی کاسبب 49
گناہوں کی مغفرت اورتفکرات سےنجات کاذریعہ 49
نبی اکرم ﷺ  کی شفاعت کاحقدار بناتاہے 50
دورد بڑھنے والے کانام اللہ کےرسول اللہ ﷺ کو پیش کیاجاتاہے 51
مجالس کولغویات سےپاک کرنےکاذریعہ ہے 52
قبولیت دعا کاسبب ہے 52
بخل جفا جیسےناپسندیدہ اوصاف سےبچانے کاسبب ہے 52
جنت کےرااستہ پر لگاتاہے 53
فوائد وبرکات درود امام بن قیم کی زبانی 55
محبت رسول اللہ ﷺ ایمان کی تکمیل کےلیےلازمی ہے 57
درودہدایت کاسبب اوردلوں کوزندہ رکھنے کاسبب ہے 58
درود پل صراط کوعبور کرتےوقت مومن کوثابت قدم رکھنے کاذریعہ ہے 58
نبی اکرم ﷺ پردورد اللہ تعالیٰ کی ذکر وشکر کوبھی شامل ہے 59
نبی کریم ﷺ پردرود بھیجنے کی حیثیت دعاکی ہے 60
لفظ اللہم  اوراس کامعنی 61
اس کےمتعلق نحویوں کےاقوال 61
دعاکےلیے تین طریقے ہیں 65
صلاۃ کےمعنی مفہوم کی وضاحت 67
اللہ کی صلاۃ اس کےبندے پر 69
اللہ کی صلاۃ دوقسمیں ہیں 69
صلاۃ عام 69
اللہ تعالیٰ کی صلاۃ کےمفہوم کی تعیین 70
اس بارےمیں مبرد کاقول 70
ایک دوسرا قول 71
نبی کریم ﷺ کےنام محمد اورمادہاشتاقق کامعنی 74
نبی کریم ﷺ کےمتعلق علی ﷜ کاقول اوراس کی تشریح 80
نبی کریم ﷺ کےمتعلق عروہ بن مسعود کاقول 86
لفظ محمد اوراحمد کےدرمیان فرق 87
لفظ آل‘کامفہوم اورماد ہ اشتقاق 89
فصل 93
نبی کریم ﷺ کےآل ‘‘سے کون لوگ مرادہیں 93
پہلاقول 93
دوسراقول 93
تیسراقول 94
چوتھا قول 94
نبی کریم ﷺ کی بیویاں 95
خدیجہ بنت خویلد ؓ 95
آپ کی چند اہم خوبیاں اورخصائص 95
سودہ بنت زمعہ ؓ 96
عائشہ بنت ابی بکر ؓ 97
آپ کی چند نمایاں خصوصیات 97
حفصہ بنت عمر ؓ 99
ام حبیبہ ؓ 100
ام سلمہ ؓ 100
زینب بنت جحش ؓ 101
زینب بنت خزیمہ ؓ 102
جویریہ بنت لحارثؓ 102
صفیہ بنت حییؓ 103
میمونہ بنت الحارث ؓ 104
ذریہ کی لفظی ومعنوی تحقیق 106
نسل انسانی کےاوپری سلسلہ یعنی آباء واحداد پرلفظ کاطلاق ہوتاہے یانہین 107
ابراہیم خلیل الرحمان کی اہمیت وخصوصیت 108
ایک مشہور مسئلہ 116
محمد ﷺ اورآل محمد ﷺ پر نزول برکت کامفہوم 119
لفظ برکت کےمعنی ومفہوم کی وضاحت 119
ابرہیم ؑ کےگھڑانے کی چند خصوصیات 124
دورد کےآخر میں اسمائے حسنی حمید ومجید کولانے کی حکمت 132
نبی ﷺ کےعلاوہ دوسروں برصلاۃ سلام کاحکم 136
مسئلہ 138
فہرست مضامین 143

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
3.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اعمال سنت وسیلہ

قرآن کریم اور صحیح ثابت شدہ سنت مبارکہ کے مطابق وسیلہ کیا ہے؟

قرآن کریم اور صحیح ثابت شدہ سنت مبارکہ کے مطابق وسیلہ کیا ہے؟

 

مصنف : عادل سہیل ظفر

 

صفحات: 31

 

وسیلہ کے معنی،ایسی چیز کے ہیں جو کسی مقصود کےحصول یا اس کے قرب کا ذریعہ ہو۔امام شوکانی ؒ فرماتے ہیں:”وسیلہ جو قربت کے معنی میں ہے،تقوی اور دیگر خصال خیرپر صادق آتا ہے جن کے ذریعے سے بندے اپنے رب کا قرب حاصل کرتے ہیں۔”اللہ کی طرف وسیلہ تلاش کرنے کا مطلب ہے کہ،ایسے اعمال اختیار کرو جس سے تمہیں اللہ کی رضا اور اس کا قرب حاصل ہو جائے۔اسی طرح منھیات ومحرمات کے اجتناب سے بھی اللہ کا قرب حاصل ہوتا ہے۔ حدیث میں اس مقام محمود کو بھی وسیلہ کہا گیا ہے جو جنت میں نبی کریم ﷺکو عطا فرمایا جائےگا،اسی لیےآپ نے فرمایا جو اذان کے بعد میرے لیے یہ دعائے وسیلہ کرےگا وہ میری شفاعت کا مستحق ہوگا۔شریعت اسلامیہ میں وسیلے کی دو قسمیں ہیں۔پہلی قسم جائز اور درست وسیلے کی ہے جبکہ دوسری قسم ناجائز اور ممنوع کی ہے۔ زیر تبصرہ کتابچہ” قرآن کریم، اور صحیح ثابت شدہ سنت مبارکہ کے مطابق “وسیلہ” کیا ہے؟” محترم عادل سہیل ظفر صاحب کی کاوش ہے جس میں انہوں نے وسیلے کا معنی ومفہوم اور اس کی حقیقت کوقرآن وسنت کی روشنی میں بیان فرمایا ہے۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ ان کی اس کاوش کو قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ 3
لغت، قرآن کریم اور صحیح ثابت شدہ سنت مبارکہ کے مطابق وسیلہ کیا ہے؟ کا معنی اور مفہوم 4
لغوی معانی اور مفاہیم 4
مخلوق میں سے کسی کی ذات اور صفات وغیرہ کو وسیلہ بنانے اور بنوانے والوں کے قرآنی دلائل اور ان کے جوابات 7
قرآن کریم میں لفظ الوسیلہ اور اس کا معنی اور مفہوم 7
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی قرآن کریم میں پہلی دلیل 7
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی قرآن کریم میں دوسری دلیل 7
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی قرآن کریم میں تیسری دلیل اور اس کا جواب 9
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی قرآن کریم میں چوتھی دلیل اور اس کا جواب 10
سنت مبارکہ میں لفظ ’’الوسیلہ، وسیلہ‘‘ اور اس کا معنی اور مفہوم 13
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی روایات، حدیث اور آثار میں سے دلائل اور ان کے جوابات 13
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی روایات، حدیث اور آثار میں سے پہلی دلیل اور اس کا جواب 13
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی روایات، حدیث اور آثار میں سے دوسری دلیل اور اس کا جواب 15
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی روایات، حدیث اور آثار میں سے تیسری دلیل اور اس کا جواب 17
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی روایات، حدیث اور آثار میں سے چوتھی دلیل اور اس کا جواب 19
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی روایات، حدیث اور آثار میں سے پانچویں دلیل اور اس کا جواب 20
مخلوق میں سے کسی ذات اور صفات وغیر ہ کو وسیلہ بناے اور بنوانے والوں کی روایات، حدیث اور آثار میں سے چھٹی دلیل اور اس کا جواب 21
دعا عبادت ہے 23
دعا کی قبولیت کے اوقات، صحیح ثابت شدہ احادیث مبارکہ کے مطابق 23
جائز حلال ’’وسیلہ‘‘ 24
عقلی،ل یعنی منطق و فلسفہ پر مبنی دلائل اور ان کے جوابات 27
عبادات کا اصل بنیادی حکم ممانعت ہے 28

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.4 MB ڈاؤن لوڈ سائز