Categories
Islam اسلام اعمال درود سحر اور جادو

شیطانی چالوں کا توڑ اور شرعی طریقہ علاج

شیطانی چالوں کا توڑ اور شرعی طریقہ علاج

 

مصنف : محمد طیب محمدی

 

صفحات: 152

 

جادو کرنا یعنی سفلی اور کالے  علم کے ذریعہ سے لوگوں کے ذہنوں او رصلاحیتوں کو مفلوج کرنا  او ران کو آلام ومصائب سے دوچار کرنے کی مذموم سعی کرنا  ایک کافرانہ عمل  ہے  یعنی  اس کا  کرنے والا دائرہ اسلام سے نکل جاتا  اورکافر ہوجاتا ہے یہ مکروہ عمل  کرنے والے  تھوڑے  سے نفع کے لیے  لوگوں کی زندگیوں سے کھیلتے اور ان کے امن و سکون کو برباد کرتے ہیں  جولوگ  ان مذموم کاروائیوں کا شکار ہوتے ہیں وہ عام طور پر اللہ کی یاد سے غافل ہوتے ہیں  اس لیے  ان موقعوں پربھی  وہ اللہ کی طرف رجوع کرنے  کی بجائے انہی عاملوں اورنجومیوں کی طرف رجوع کرتے ہیں جناتی  وشیطانی  چالوں اور جادوکے  توڑ اور شرعی علاج کے  حوالے سے  بازار میں کئی کتب موجود ہیں۔ زیر تبصرہ کتاب’ شیطانی چالوں کا توڑ اور شرعی یقۂ علاج‘ مولانا محمد طیب محمدی کی  تصنیف ہے اس کتاب میں انہوں نے اس بات کو واضح کیا ہے  کہ جو لوگ عاملوں، نجومیوں، کاہنوں، جادوگروں، اور پیشہ ورانہ  پیروں، فقیروں اور نام  نہاد دم درود کر کے پیسہ بٹورنے والوں کے پاس جاکر اپنا دین  وایمان او رعزتیں لوٹاتے ہیں وہ نادان لوگ اس کتاب سے استفادہ کر کے ہمیشہ  کے لیے ان نام نہاد جعلی عاملوں، پیروں  سے اپنا تعلق ختم کر کے مسنون اذکار اور فرائض کی پابندی کے ذریعے اللہ تعالیٰ سے اپنا  تعلق مضبوط بنائیں تاکہ وہ ہر قسم کی پریشانی اور شیطانی چالوں سے مکمل محفوظ رہیں۔

 

عناوین صفحہ نمبر
عقیدہ کی اصلاح 14
ستاروں میں کوئی تاثیر نہیں 14
سورج اورچاند میں کوئی تاثیر نہیں 16
حجراسود میں نفع   ونقصان کی کوئی تاثیر نہیں 17
جادوکفر ہے 18
کہانت وعرافت 22
کاہنوں کے جھوٹے ہونے کی عقلی دلائل 30
دوکاموں سے ایک تو ضرور ہوتاہے 31
دو جڑواں بھائیوں کی قسمت الگ کیوں؟ 32
نجومی کی تضاد بیانیاں 35
اصل چور )مجرم اورقاتل نجومی آج تک نہیں بتا سکے 39
کاہن کےپاس جانے والا شریعت کامنکر 39
علم   نجوم 44
ستاروں کےصرف تین مقاصد 44
ستاروں کو انسانی قسمت کےساتھ بربوط سمجھتا شرکیہ عقیدہ ہے 48
کواکب پر ستی 51
دنوں کےنام 52
دسعت شناسی 54
دسعت ثناسوں کےدلائل 55
دسعت شناہی جھوٹ فریب اورکبیرہ گناہ 57
بدشگونی 60
دورجاہلیت میں بدشگونی کی مختلف صورتیں 60
دورجاہلیت میں شگون اورفال باقاعدہ پیشہ تھا 61
بدشگونی حرام ہے 64
قرآنی دلائل 64
احادیث سےدلائل 67
بدشگونی کےخلاف صحابہ کرام ﷢ وعلمائے عظام کےچند واقعات 73
فال نامے 75
جنات قابو کرنے کی حقیقت 77
تعویذ دھاگے لٹکانے کاحکم 79
التولۃ 79
روحانی علاج 89
ایک بنیادی اورضروری قاعدہ 89
تقدیر،جادوارجنات 91
مریض کابیماری پر صبر کرنا 92
مصیبت کو ذخیرہ اجر سمجھا جائے 93
تقوی اختیار کرنا 94
اللہ پر توکل وبھروسہ 95
خلوص دل سے اللہ کی جانب جھکنا اورنافرمانیوں سے توبہ کرنا 96
نیک اعمال بجالانا 97
دین پر استقامت 98
نماز شروع کرتے وقت شیطان سےاللہ تعالی کی پناہ طلب کریں 98
نماز وں کی حفاظت 99
نماز باجماعت کی پابندی کریں 100
قیام اللیل کااہتمام   کریں 100
گھروں سے تصاویر ،ٹی وی وغیرہ نکال دینا 101
تلاوت قرآن 101
ہرکام سے پہلے ’’بسم اللہ ‘‘پڑھنا 102
آیت الکرسی 105
سورۃ البقرہ کی تلاوت کےفوائد 107
سورۃ البقرہ کی آخری دوآیات ہر شر سےبچاتی ہیں 108
معوذتین وسورۃ الاخلاص 110
سورۃ الفلق مع ترجمہ 112
سورۃ الناس مع ترجمہ 112
سورۃ اخلاص مع ترجمہ 113
کلمہ توحید کےسومرتبہ پڑھنے کےفوائد 113
چند مسنون دم 114
باوضو رہنے کی کوشش کریں 117
بیت الخلاءمیں جانے سے قبل دعا کااہتمام کریں 118
شادی کےبعد اپنی بیوی کی پیشانی پردایا ں ہاتھ رکھ کریہ دعائیں پڑھیں 118
ازدواجی تعلقات سے قبل شیطان سےپنا ہ طلب کریں 118
مسجد میں داخل ہوتے وقت یہ دعاپڑھیں 119
گھر سےنکلنے یہ دعا پڑھیں 120
مسجد سےنکلتے ہوئے یہ دعاپڑھیں 119
جادو کاتوڑ 121
جادو کے توڑ کےلیے سورۃ الفاتحہ کےذریعے دم 121
نبی ﷺ پر جادو اوراس کاتوڑ 122
دواؤں کےذریعے سے جادو کاعلاج 127
عجوہ کھجور سے علاج 127
کلونجی کےذریعے سےعلاج کرنا 128
سینگی کے ذریعے سےعلاج 128
نظر بدکی حقیقت اوراس کاعلاج 130
نظر کی تاثیر قرآن کی روشنی میں 130
نظر کی تاثیر احادیث نبویہ کی روشنی میں 131
نظر اورحسد میں فرق 134
نظر سے بچاؤ کاطریقہ 135
نظر کاعلاج 136
نظر کےلیے غسل کروانا 137
استخارہ 139
استخارہ کیاہے ؟ 139
دعائے استخارہ مع ترجمہ 140
استخارہ کی اہمیت 141
استخارہ سے پہلے نماز 141
دعائے استخارہ میں اپنے مطلوبہ کام کانام لینا یادل میں اس کاارادہ کرنا 143
کیا استخارہ کسی بھی وقت کیاجاسکتاہ 144
استخارہ کےبعد خواب الہام یااطمینان قلب 144
ایک سےزیادہ مرتبہ استخارہ کرنا 145
استخارہ کن کاموں میں کیاجاتاہے 145
استخارہ کےباجود نقصان اٹھانا 145
استخارہ کےفوائد اورحکمتیں 147
استخارہ کسی سے کروانا 149
استخارہ کےعمل میں خرافات وداہیات 151

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam ادب سیرت شروحات حدیث

شرح کتاب الجامع من بلوغ المرام

شرح کتاب الجامع من بلوغ المرام

 

مصنف : ابن حجر العسقلانی

 

صفحات: 354

 

بلوغ المرام من ادلۃ الأحکام، حافظ ابن حجر عسقلانیؒ کی حدیث پر لکھی گئی مشہور و متداول کتاب ہے۔ یہ مختصر اور جامع مجموعہ احادیث ہے۔ جس میں طہارت، نماز، روزہ، حج، زکاۃ، خرید و فروخت، جہاد و قتال غرض تمام ضروری احکام و مسائل پر احادیث کو فقہی انداز پر جمع کر دیا گیا ہے۔ ’’کتاب الجامع‘‘ اسی کتاب کا ہی ایک حصہ ہے جس میں آداب و اخلاق سے متعلق احادیث نبویہ کو جمع کیا گیا ہے۔ زیر نظر کتاب شیخ الحدیث حافظ عبد السلام بن محمد بھٹوی حفظہ اللہ نے لکھی ہے جو ’’کتاب الجامع‘‘ کے ترجمے تخریج احادیث اور تشریح احادیث پر مشتمل ہے۔ کتاب ھذا کا ترجمہ و تشریح، سادگی و سلاست کا بہترین مرقع ہے۔ کتاب میں انسان کی اصلاح سے تعلق رکھنے والے چھ ابواب جمع کئے گئے ہیں جن سے نفس انسانی کی صحیح تربیت ہوتی ہے۔ جن میں ادب کے بیان، نیکی کرنے اور رشتہ داری ملانے کے بیان، دنیا سے بے رغبتی اور پرہیزگاری کے بیان، برے اخلاق سے ڈرانے کے بیان، اچھے اخلاق کی ترغیب کے بیان اور ذکر و دعاء کے بیان پر مشتمل ابواب شامل ہیں۔ یہ کتاب اِس لائق ہے کہ اس کو مدارس ‎،کلیات اور جامعات کے ابتدا کی کلاسوں میں شامل نصاب کیا جائے تاکہ تعمیر سیرت کردار کی تکمیل ہو سکے اور مسلمانوں کی کامیابی و کامرانی کا خواب شرمندۂ تعبیر ہو سکے۔
 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 13
مقدمہ 14
ادب کا بیان 18
نیکی اور (رشتہ داری)ملانے کا بیان 65
دنیا سے بے رغبتی اور پرہیز گاری کا بیان 101
برے اخلاق سے ڈرانے کا بیان 129
اچھے اخلاق کی ترغیب کا بیان 235
ذکر اور دعا کا باب 279
اللہ تعالیٰ کو محبوب دو کلمات 347

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
6.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام سیرت سیرت النبی ﷺ

شمائل محمدیہ ﷺ

شمائل محمدیہ ﷺ

 

مصنف : محمد بن جمیل زینو

 

صفحات: 154

 

دینِ اسلام کاابلاغ او راس کی نشر واشاعت ہر مسلمان پر فرض ہے۔ لہذا اس انعام الٰہی کی وجہ سےایک عام مسلمان کی ذمہ داریاں اور بھی بڑھ جاتی ہیں کہ اصلاحِ انسانیت کےلیے  اللہ تعالیٰ نےامت مسلمہ کو ہی منتخب فرمایا ۔اور ہر دور میں مسلمانوں نےاپنی ذمہ داریوں کومحسوس کیا اور دین کی نشر واشاعت میں گرانقدر  خدمات انجام دیں۔دور  حاضر میں  ہر محاذ پر ملت  کفر  مسلمانوں پر حملہ آور ہے  او راسلام اور مسلمانوں  کے خلاف زہریلا پروپیگنڈہ اور نفرت انگیز رویہ اپنائے ہوئےہیں او ر  آئے دن نعوذ باللہ  پیغمبر اسلام کی ذات  کوہدف تنقید کا نشانہ بنا کر انٹرنیشنل میڈیا کے  ذریعے  اس کی  خوب تشہیر کی جاتی ہے۔  تو یقینا ایسی صورت حال میں  رحمت کائناتﷺ کےاخلاقِ عالیہ اور آپﷺ کےپاکیزہ کردار اور سیرت کے روشن ،چمکتے اور دمکتے  واقعات کو دنیا میں عام  کرنے کی شدید ضرورت ہے  تاکہ  اسے پڑھ کر  امت مسلمہ اپنے پیارے  نبیﷺ کے خلاق  حسنہ اور اوصاف حمیدہ سے  آگا ہ ہوسکے  اور آپ کی سیرت وکردارکوروشنی میں اپنی آنے والی نسل کی تربیت کر سکے ۔زیر نظر کتاب’’شمائل محمدیہ‘‘ سعودی عرب کے  معروف عالم  شیخ محمدبن جمیل زینو﷾ کی تصنیف کاترجمہ ہے ۔جس  میں نبی کریم ﷺ کی سیرت وکردار کوبہت ہی خوبصورت اسلوب میں مرتب کیاگیا ہے اوررسول اللہﷺ کی زندگی کاتقریبا ہر پہلو  موضوع بحث بنایاگیا۔ترجمہ کی سعادت  معروف عالم دین مترجم ومصنف کتب کثیرہ  ابو ضیاء محمود احمدغضنفر ﷫ نے  حاصل کی  ہے ۔ اللہ  تعالی مصنف ،مترجم اورناشرین کی  اس کاوش کو قبول فرمائے اور مسلمانوں کے لیے  مفید بنائے  ۔شمائل نبویﷺ کے حوالے  سے امام ترمذی﷫ کی  شمائل ترمذی کی شرح  خصائل نبوی(مطبوعہ انصار السنۃ،لاہور) اور شمائل سراج منیر(مطبوعہ مکتبہ قدوسیہ،لاہور ) بھی  انتہائی اہم  اور لائق مطالعہ ہیں ۔(آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
انتساب 6
عرض ناشر 7
مقدمہ 8
میلاد رسول ﷺ 10
رسول اللہ ﷺ کا نام اور نسب 11
الرسول ﷺ جیسا کہ آپ اس کو دیکھ رہے ہو 13
بابرکت رسولﷺ 16
رسول اللہ ﷺ کے فضائل 19
رسول اللہ ﷺ کی مہر نبوت 24
رسول اللہ ﷺ کی خوشبو کی عمدگی 25
رسول اللہ ﷺ کی نیند کا بیان 26
رسول اللہ ﷺ کی قرات اور نماز 27
نبی کریمﷺ کا روزہ 29
رسول اللہ ﷺ کی عبادت 30
رسول اللہ ﷺ کی گفتگو کا بیان 31
رسول اللہ ﷺکے حوض کا بیان 32
رسول اللہ ﷺ کی دنیا سے بے رغبتی 33
صحابہ کرام ؓ اور رسول اللہ ﷺ کی بھوک 35
رسول اللہ ﷺ کی زندگی 36
رسول اللہ ﷺ کو خواب میں دیکھنا 38
رسول اللہ ﷺ کی وفات 39
رسول اللہ ﷺ کا اخلاق 42
اخلاق کے بارے میں احادیث 47
اخلاق کے بارے میں رسول اللہ ﷺ کی دعائیں 56
رسول اللہ ﷺ کی انکساری 60
تکبر کرنے والوں کا انجام 64
غصہ اور اس کا علاج 68
رسول اللہ ﷺ کے معجزات 72
نبی کریم ﷺ کا صبر 76
رسول اللہ ﷺ کی شجاعت 84
رسول اللہ ﷺ کا عدل و انصاف 90
نبی کریم ﷺ کا جودو کرم 91
رسول اللہ ﷺ کی حیا 93
آداب اسلامیہ 97
آداب رسول ﷺ 98
رسول اللہ ﷺ کا طرز عمل 100
رسول اللہ ﷺ کا مزاح 103
وہ اشعار جو رسول اللہ ﷺ نے بطور مثال پیش کیے 105
سیدنا حسان بن ثابت رسول اللہ ﷺ کی مدح سرائی کرتے ہیں 109
مسلمان شخص کا لباس 112
مسلمان عورت کا لباس 117
لباس میں زینت کا مسئلہ 122
نماز اور لوگوں کے لیے زینت 124
نظافت اسلام سے ہے 126
سلام کے آداب 128
مصافحہ کرنا نا کہ بوسہ لینا 132
میں عورتوں کے ساتھ مصافحہ نہیں کرتا 134
چھینک اور جمائی کے آداب 135
سفید بالوں کو رنگ کرو لیکن سیاہ رنگ سے اجتناب کرو 137
رسول اللہ ﷺ کا ہم پر حق 139
رسول اللہ ﷺ کے اخلاق کو اپنانا 142
رسول اللہ ﷺ کے اعلیٰ اخلاق حسنہ 145
سیدنا حسان بن ثابت ﷜ کی طرف سے رسول اللہ ﷺ کا دفاع کرنا 149

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam سنت ملائکہ و جنات و شیاطین نماز

شیطان کی انسان دشمنی انتباہ اور بچاؤ

شیطان کی انسان دشمنی انتباہ اور بچاؤ

 

مصنف : عبد الہادی بن حسن وہبی

 

صفحات: 144

 

خدا کی آخری کتاب میں بتایا گیا ہے کہ شیطان انسان کا کھلا دشمن ہے اور اس بدبخت نے رب ذوالجلال کی جانب سے دھتکارے جانےکے بعد یہ اعلان کیا تھا کہ وہ بنی آدم کو ہر پہلو سے بہکانے اور راہ راست سے بھٹکانے کی کوشش کرے گااور انہیں اپنے ساتھ جہنم میں لے کر جائے گا۔یہ اللہ عزوجل کا انسانوں پر خصوصی فضل و کرم ہے کہ اس نے نہ صرف انہیں شیطانوں کی انسان دشمنی سے  آگاہ کیا ہے بلکہ اس سے بچاؤ کے طریقے بھی بتلا دیئے  جو کتاب و سنت میں وضاحت کے ساتھ موجود ہیں۔زیر نظر کتاب میں قرآن و حدیث کی روشنی میں ان تمام امور کو واضح کیا گیا ہے جن کے ذریعے انسان ،شیطان لعین کے خطرناک حملوں سے محفوظ رہ سکتا ہے ۔آج کے مادی و الحادی دور میں جبکہ شیطان اور اس کے پیروکار پوری قوت کے ساتھ انسانیت پر حملہ آور ہیں،ہر مسلمان کو اس کتاب کا مطالعہ کرنا چاہیے تاکہ وہ شیطانی حملوں کے بالمقابل اپنا دفاع کر سکے۔
 

عناوین صفحہ نمبر
تقدیم 1
مقدمہ 3
تمہید :شیطان کی برائیوں سے آگاہی 7
کنجوسی اور بخیلی 14
وسوسہ اندازی 17
شیطان چور ہے 19
مسلمانوں کے درمیان فساد ڈالنا 20
شیطان کی قربت اور دوستی 22
خوف ناک خواب دکھانا 27
خیر کی چیزوں کا بھلوانا 29
نیت،قول اورعمل میں خرابی پیدا کرنا 30
سر پر گرہ لگانا 37
چھوٹے چھوٹے گناہوں کو حقیر سمجھنا 43
شیطان مردو سے بچنے کا محفوظ قلعہ
پہلا قلعہ :اخلاص 50
دوسرا قلعہ :قرآن کریم کی تلاوت 53
تیسرا قلعہ :آیت الکرسی 54
چوتھا قلعہ :سورہ بقرہ کی آخری 55
پانچواں قلعہ:معوذتین پڑھنا 55
صبح وشام 57
سوتے وقت 57
ہر نماز کے وقت 58
بیماری کےوقت 59
چھٹا قلعہ :سوبار لا الہ الا اللہ کہنا 59
ساتواں قلعہ:کثرت سے اللہ 60
آٹھواں قلعہ:سجدہ تلاوت 61
نواں قلعہ :بسم اللہ کہنا 61
دسواں قلعہ:تقدیر کو تسلیم کرنا 65
گیارہواں قلعہ:قیام الیل 66
بارہواں قلعہ:استعاذہ 67
تیراہواں قلعہ:غصہ پی جانا 77
چودہواں قلعہ:صفوں کی درستگی 78
پندرہواں قلعہ:سجدہ سہو کرنا 81
سولہواں قلعہ:جماعت کا لزوم 82
سترہواں قلعہ:تشہد میں 88
اٹھارہواں قلعہ:سترہ رکھ 88
انیسواں قلعہ:اللہ عزوجل سے دعا کرنا 89
بیسواں قلعہ:شیطان کی مخالفت کرنا 91
اکیسواں قلعہ:توبہ او راستغفار کرنا 97
بائیسواں قلعہ :اچھی بات 99
تئیسواں قلعہ:اللہ عزوجل کو … 100
چوبیسواں قلعہ:بندگی 105
پچیسواں قلعہ:صراط مستقیم 107
چھبیسواں قلعہ:گھر کی حفاظت 111
خاتمہ 128
فہرست 131

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام تاریخ روح سیرت سیرت النبی ﷺ فارسی فقہ قربانی نبوت نماز یہودیت

سیرت النبی ﷺ (ابن کثیر) جلد۔1

سیرت النبی ﷺ (ابن کثیر) جلد۔1

 

مصنف : حافظ عماد الدین ابن کثیر

 

صفحات: 647

 

حافظ ابن کثیر﷫(701۔774ھ) عالمِ اسلام کے معروف محدث، مفسر، فقیہہ اور مورخ تھے۔ پورا نام اسماعیل بن عمر بن کثیر، لقب عماد الدین اور ابن کثیر کے نام سے معروف ہیں۔ آپ ایک معزز اور علمی خاندان کے چشم وچراغ تھے۔ ان کے والد شیخ ابو حفص شہاب الدین عمر اپنی بستی کے خطیب تھے اور بڑے بھائی شیخ عبدالوہاب ایک ممتاز عالم اور فقیہہ تھے۔کم سنی میں ہی والد کا سایہ سر سے اٹھ گیا۔ بڑے بھائی نے اپنی آغوش تربیت میں لیا۔ انہیں کے ساتھ دمشق چلے گئے۔ یہیں ان کی نشوونما ہوئی۔ ابتدا میں فقہ کی تعلیم اپنے بڑے بھائی سے پائی اور بعد میں شیخ برہان الدین اور شیخ کمال الدین سے اس فن کی تکمیل کی۔ اس کے علاوہ آپ نے ابن تیمیہ وغیرہ سے بھی استفادہ کیا۔ تمام عمر آپ کی درس و افتاء ، تصنیف و تالیف میں بسر ہوئی۔ آپ نے تفسیر ، حدیث ، سیر ت اور تاریخ میں بڑی بلند پایہ تصانیف یادگار چھوڑی ہیں۔ تفسیر ابن کثیر اور البدایۃ والنہایۃ آپ کی بلند پایہ ور شہرہ آفاق کتب شما ہوتی ہیں۔ البدایۃ والنہایۃ 14 ضخیم جلدوں پر مشتمل ہے۔ اس وقت ’البدایۃ والنہایۃ‘ کا اردو قالب ’تاریخ ابن کثیر‘ کی صورت میں موجود ہے۔ ابن کثیر کی یہ تاریخ بھی دوسری تاریخوں کی طرح ابتدائے آفرینش سے شروع ہوتی ہے اور اس کے بعد انبیاء اور مرسلین کے حالات سامنے آتے ہیں، یہ کئی لحاظ سےاہم ہیں۔ تاریخ ابن کثیر حضرت آدم سے لے کر عراق و بغداد میں تاتاریوں کے حملوں تک وسیع اور عریض زمانے کا احاطہ کرتی ہے اور غالباً سب سے پہلی تاریخ ہے جس میں ہزاروں لاکھوں سال کی روز و شب کی گردشوں، کروٹوں، انقلابوں اور حکومتوں کومحفوظ کیا گیا ہے۔ پھر ابن کثیر نے جن حالات و واقعات کا احاطہ کیا ہے وہ اس قدر صحیح اور مستند ہیں کہ ان کا مقابلہ کوئی دوسری کتاب نہیں کر سکتی۔ زیر تبصرہ کتاب’’سیرت النبی ﷺ‘‘ امام ابن کثیر ﷫ کی مذکورہ کتاب البدایۃ والنہایۃ میں سے سیرت النبی ﷺ پر مشتمل ایک حصہ ہے۔ اس حصے کواردو قالب میں ڈھالنے کی سعادت مولانا ہدایت اللہ ندوی صاحب نے حاصل کی۔ یہ کتاب اپنے اندر بے پناہ مواد سموئے ہوئے ہے۔ امام ابن کثیر نے واقعات کا انداز تاریخ کے حساب سے رکھا ہے۔ سن وار واقعات کو درج کیاگیا ہے۔ اس کتاب کے مطالعہ سے قارئین کو بہت سے ایسی معلومات حاصل ہوں گئی جودیگر کتبِ سیرت میں نہیں ہیں۔ امام ابن کثیر ﷫ چونکہ اعلیٰ پائے کےادیب او رعمدہ شعری ذوق کے مالک تھے۔ البدایۃ میں انہو ں نےجابجار اشعار درج کیے ہیں۔محترم ندوی صاحب نے ان اشعار کوبھی اردو قالب میں ڈھالا ہے۔ نیز فاضل مترجم نے واقعات کے جابجا ذیلی عنوانات بھی دیئے ہیں جو بڑے مفید ہیں اورکہیں کہیں کچھ تشریحات بھی کی ہیں جوکہ ’’ندوی‘‘ کے تحت بریکٹ میں درج ہیں ۔اس کتاب کو عربی سے اردو قالب میں ڈھال کر حسنِ طباعت سے آراستہ کرنے کی سعادت شہید ملت علامہ احسان الٰہی ظہیر ﷫ کے ساتھ پیش آنےوالے الم ناک واقعہ میں شہادت کا رتبہ پانے والے ان کے رفیق خاص جناب مولانا عبد الخالق قدوسی شہید (بانی مکتبہ قدوسیہ، لاہور) کےصاحبزدگان نے حاصل کی ۔ مدیر مکتبہ جناب ابو بکر قدوسی صا حب نے 1996ء میں اس سیرت النبی ﷺ کو تین جلدوں میں بڑے خوبصورت انداز میں شائع کیا۔اس سے قبل 1987ء میں بھی البدایۃ والنہایۃ   کےعربی نسخے کو 14 جلدوں میں مکتبہ قدوسیہ نے شائع کیا ۔اب توجناب ابو بکر قدوسی اور جناب عمر فاروق قدوسی اوران کے دیگر برادران کی محنت سے مکتبہ قدوسیہ ماشاء اللہ بیسیوں معیاری کتابیں شائع کرچکا ہے۔ اللہ ان برادران کے علم وعمل میں خیر وبرکت فرمائے اوران کی کاوشوں کو شرف ِقبولیت سے نوازے۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
واقعات عرب کا بیان 27
عرب عاربہ 27
عرب مستعربہ 27
یمنی عرب 27
بنی اسماعیل 27
اسلم 27
لوس’خررج 28
قحطانی اورعدنانی 28
قضاعہ قحطانی ہیں 28
جملہ عرب تین قبائل ہیں 29
                                                                                                                               قصبہ سبا 29
وجہ تسمیہ 30
بشارت 30
سباکیا ہے؟ 30
شاہی القاب 31
انیباء 31
سدمارب 31
کفران نعمت 32
ترک سکونت اورعیسائیت 32
شاہ حبشہ کی حکومت 34
ربیعہ بن نصربن ابی حارثہ بن عمر بن عامرلخمی کا قصہ 34
سطیح 35
شق 35
خواب مع تعبیر 35
شق کی تعبیر 36
احتیاطی تدابیر 36
نعمان بن منذرتبیع ابی کرب کا اہل مدینہ کے 36
ساتھ اچھے سلوک کا بیان 37
تبان اسعد 37
وجہ عناد 37
تبیع کا عقیدہ 37
نصیحت آموزاشعار 39
یمن میں یہودیت کیونکر پھیلی ؟ 40
فیصلہ کن آگ 40
بت کدو آم 40
تبع کا اسلام 40
تبع کی لڑکیاں 41
بھائی کا قتل موجب ہلاکت لخنیعہ ذوشنائر کا 41
یمن پر غاصبانہ قبضہ ذو نواس کی شکست 42
اور اریاط کی فتح 43
ابرہہ اشرم کی بغاوت اور جنگ شاہ حبش کی ناراضگی 44
اورمسندحکومت ابرہہ کا ہاتھیوں کے ہمراہ 44
تخریب کعبہ کے عزم کا سبب 44
قلیس کی تعیمر 45
کنانی کا اشتعال اور لڑائی کا آغاز 45
ذونفر اور نفیل کا مزاحم ہونا 45
ابو رغارل 46
لات 46
مکہ میں لوٹ مار 46
رئیس مکہ کی طلبی 46
اونٹوں کا مطالبہ 47
دعا 48
پرندوں کے ذریعہ عذاب 48
ابابیل 49
ابرہہ کی مذمت میں اشعار 50
قلیس کا انجام 52
حبشی حکومت کا زاول سیف کے ہاتھوں 52
تاج کسریٰ 53
غمدان 55
خواب شرمندہ تعبیر 56
یمن پر نائب کسری ٰ کی حکمرانی 56
مراسلہ کسریٰ 57
مکتوب نبویﷺاور کسری ٰ کا انجام 57
مکتوب گرامی 57
یمن میں اشاعت اسلام 58
بانی قلعہ حضر‘ساطرون کا قصہ سابورسا سانی کا محاصرہ 58
اور ناقصات عاقل کا مضاہرہ 59
رب خورنق 61
طوائف الملوکی کا بیان 62
آل اسماعیل کا تذکرہ 62
جرہم 62
اولاداسماعیلؑ 62
حکومت 63
اساف ونائلہ کے مسخ کازمانہ 63
خزاعہ کی حکومت 63
عمروکی نصیحت 65
خزاعہ اور بن لحی کا قصہ اور عرب میں آغازبت پرستی 65
پتھر کی پوجا       کا آغاز 66
شرکیہ تلبیہ اور ابلیس کی ایجاد 67
ابو خزاعہ کی تحقیق 67
کافر کے ساتھ شکل وصورت میں مشاہبت 68
عرب کی جہالت 69
بت اور ان کے پرستار 69
ود 69
سواع 69
یغوث 69
یعوق 69
نسر 70
عم انس 70
سعد 70
ہبل 70
اساف اور نائلہ 70
قلس 71
عزیٰ 71
لات 71
مناۃ 71
ذوالخلصہ 71
ر آم 71
رضاء 71
ذوالکعبات 72
حجاز کے جداعلیٰ عدنان کا ذکر 72
ارمیانبی کاعجب واقعہ 72
عدنان کا نسب 73
شجرہ طیبہ 74
حجازی عربوں کاعدنان تک سلسلہ نسب 74
قریش کے نسب وفضل اور اس کے اشتقاق کا ذکر 75
قر یش 75
سامہ بن لوی 78
مناصب کی بقا 82
دارالندرہ 82
کھانے کا انتظام اوررفادہ 83
حلیف المطیبین اوراحلاف 85
عبدمناف کی اولاد 86
عہدجاہلیت کے شہرہ آفاق اعیان 86
حتم طائی 88
حسن اخلاق کی قدرقیمت 88
فیاضی 89
ایک خواہش 90
حاتم کے منتخب اشعار 90
عجیب واقعہ 92
ام حاتم 92
وصیت 93
عبداللہ بن جدعان 93
امراؤالقیس بن حجر کندی 95
شعرنے حیات نوبخشی 95
امیہ بن ابی الصلت شقفی 97
پشیین گوئی 97
ابوسفیان کی حالت 101
خواب 101
فارعہ کا چشم دیدواقعہ 102
امیہ کا ارا دہ اسلام 104
عجیب واقعہ 105
جانوروں کی زبان 105
اچھےاشعار سننا 106
سورج کا طلوع ہونا 107
بحیراراہب 108
قس بن ساعدہ ایاری 108
جارودکااسلام لانا 110
ایک عجیب واقعہ 113
پیش گوئی 115
قس ورقہ بن نوفل 117
عامر بن ربیعہ 120
کتابت حدیث 121
عثمان بن حویرث 123
عہد فترت کے کچھ حوادثات 124
تعمیرکعبہ 124
چاہ زمزم کی تجدید 124
زمزم کا پانی 127
وبل 128
سقایہ 128
عبدالمطلب کا اپنے ایک بیٹے کی قربانی کی نذر ماننا 128
ہبل 129
فتویٰ 130
عبدالمطلب کا عبداللہ کی شادی آمنہ بنت وھب سے کرنا 130
پشیین گوئی 130
رسول اللہ ﷺکا نسب 130
اسمائے مبارک 133
والد گرامی اور چچا 133
پھوپھییاں 133
عبدالمطلب 133
ہاشم 134
عبدمناف 135
رسول اللہ ؐ     کا نسب پرتبصرہ 137
ابوسفیان کا اعتراض 139
ابو طلب کے اشعار 139
عباس کے مدحیہ اشعار 140
رسول اللہﷺکی ولادت
بروزجمعہ 142
مختلف اقوال 142
عام الفیل 144
قباث 144
سوید 144
واقعہ فیل کے بعد50روز رسول اللہ ﷺکی ولات کے واقعات وصفات 145
مدینہ میں فوتگی 145
راجح قول 146
والدہ کا خواب عبدالمطلب کا آپ کو بیت اللہ میں لانا 147
ختنہ شدہ 148
جبرائیل نے ختنہ کیا 148
دستورعرب اور نام 148
رسول اللہ ﷺکی شب ولات کے واقعات 149
یہودی تاجر کا عجب واقعہ 149
یوشع 150
ابن باطایہودی 150
شاہ ایران کے محل کے لرزجانے کا ذکر 151
مراسلہ اور اس کا جواب 151
سطیح کی تعبیر 152
چودہ کسریٰ 153
سطیح 153
مکہ میں آمد 153
امام ابن کثیر کا تبصرہ 155
فصیح جواب 155
عبدالمسیح اور خالد کا زہر کھانا 155
نرالی روایت رسول اللہﷺکی دایہ کھلایہ اور دودھ پلانے والیاں 156
ام یمن مسماۃ برکت باندی 156
ثویبہ 157
رسول اللہ ؐ کی رضاعت کا بیان 157
حلیمہؓ 157
شرح صدر 159
دعائے ابراہیمؑ 159
بعدازخدابزرگ توئی 160
نبوت کا علم 169
سلائی کے نشانات 161
عیسائی قافلہ 161
ووجدک ضالا 161
متضادقصہ 162
اعجازیاارہاص 162
خطیب ہوازن کے اشعار 162
رضاعت کے بعد 163
ابوامیں وفات 163
والدہ کے لئے دعائے مغفرت 164
اعرابی کا سوال اور ذمہ داری 165
عبدالمطلب اور امام بہیقی 166
ابن کثیر کی رائے 166
ترجیحی سلوک اور وصیت 166
ابو طالب رسول اللہ ؐ کے کفیل 167
قیافہ شناس ابوطالب کے ساتھ شام کا سفر 168
اور بیحریٰ سے ملاقات 168
قرادابونوح اور تبصرہ 170
نبی ؑ کی تربیت وپروش 172
عریانی 172
گانے کی محفل 173
حدیث بہیقی کی توجیہ 174
توفیق ربانی 174
نبی ؑ کی حرب فجارمیں شرکت 175
عتبہ کا کارنامہ 176
حلف فضول 177
مطیبیون 177
اغوا 179
وجہ تسمیہ 179
حضرت خدیجہؓ سے شادی
نکاح 180
اولاد 180
عمرمبارک 181
شادی سے قبل رسول اللہ ﷺکا شغل 181
کون ولی تھا؟ 181
کعبہ کی مرمت و تجدید 183
اسرائیلی روایات 183
حجراسود 184
حجر اسودرسول اللہﷺنے نصب کیا 184
سیلاب اور ولیدبن مغیرہ 185
اژدھا 185
کعبہ کی قدیم عمارت 186
ساحل جدہ جہاز 186
ابووہب کا کلام 186
تعمیر کی تقسیم 186
کتبے 187
حجر اسودکے بارے نزاع 188
سائب کا بیان 188
توسیع 189
حمس اور رسومات 190
رسول اللہ ﷺکی بعثت اور چندبشارات کا ذکر 191
علامات قبل از رسالت 191
آسمانی خبروں کی حفاظت 192
جنب کا کاہن 193
باعث سلام 193
بحق نبی امی 194
سلام بدری اور ایک یہودی 194
یوشع یہودی 194
ابن ہیبان یہودی 194
زیدبن سعید 195
سلمان فارسی کا مسلمان ہونا 196
مزیدپابندی 196
تعلیم وتدریس 196
نیا عالم 197
موصل میں قیام 197
نصیبین میں قیام 197
عموریہ میں رہائش 198
کلب کی بے وفائی 198
وادی القریٰ 198
مدینہ 198
آزمائش 199
سب سے اول مدینہ میں فوت ہونے والاصحابہ 199
معجزات کا ظہور 199
معجزہ 200
عیسیٰ یا وصی 200
رسول اللہ ﷺکی بعثت کے عجیب واقعات کا بیان
عبدالمطلب کا خواب 204
ابوسفیان کاایک بے ساختہ فقرہ 205
عمروبن جھنی کا واقعہ 206
مکتوب نبویؐ 207
خاص عہد 208
کب نبوت عطاہوئی 208
پیشانیوں پرنور 208
حق محمداور ایک روایت 210
ہر نبی نے اعلان کیا 210
معجزہ اور اس کی تفصیل بسترمرگ پریہودی بچےکامسلمان ہونا 211
عذرلنگ 211
علم باردوش 212
مکتوب نبوی 212
بخت نصر کا خواب اور دانیال کی تفیسر 212
تورات اورقرآن میں آپ کی صفات 213
زبور میں خیر الامم کا ذکرگذشتہ کتابو ں میں 215
آپﷺکے ذکر خیر کی تصدیق قرآن مجیدسے 215
فارقلیط 215
انجیل میں 216
عجب نوشت 216
انبیاءؑکی تصاویر 217
سیف بن ذی یزن کا قصہ 217
محمدنام کیوں رکھا؟ 220
اوس کی پیش گوئی 220
جنات کی غیبی آوازوں کابیان اور حضرت عمرؓ   کااسلام 221
سوادبن قارب 222
عزم مکہ 224
اعادۃ 225
جبل سراۃ 226
ھند 226
مازن عمانیؓ 226
مدینہ میں اول خبر 228
                                                                                                                عثمانؓ   کا سفر اور خبر 228
سعیرہ کاہنہ 228
جن کاخلصہ لڑکی سے جفتی کرنا اور اس سے بچہ پیداہونا 229
معلق سوار 230
ابن مرداس کا اسلام قبول کرنابت سے آوازاور خثعمی 230
لوگوں کا مسلمان ہونا 232
جنات سے پناہ اور عجب واقعہ 233
غیر اللہ سے پناہ 234
حضرت علی ﷜کی جنات سے جنگ‘بے بنیادقصہ 234
بسم اللہ کی فضیلت 234
نجاشی ‘زیداور ورقہ کا مذاکرہ 237
زملؓ کا مسلمان ہونا 238
                                                                                                                     مکتوب نبویؐ 239
گستاخ رسول کاقتل 239
خرعب اور شاحب کی کہانی سعدکی زبانی راہب کےکہنےپر 240
تمیم داری کا اسلام قبول کرنابتوں سےشفا یابی 241
ایک غیراسلامی عقیدہ 242
راشدؓ کا اسلام قبول کرنا 242
سکتہ طاری ہونا اورنمازی بننا 243
خریمؓ کے اسلام قبول کرنے کا واقعہ 243
سطیح کی مکہ میں آمداور پیش گوئی 245
وحی کا آغازاور قرآن پاک کی پہلی آیات کانزول
ورقہ بن نوفل 249
تا ئید 249
علقمہ کا کلام 250
نبی ﷤کے مبعوث ہونے کا وقت اور تاریخ 250
ابو شامہ کی توجیہ 250
اختلاف روایت 250
خلوت 251
لفظ حرا 251
عبادت قبل ازبعثت 252
پہلی وحی 252
ربیع الاول 252
رمضان 252
اقراء 252
سورہ فاتحہ پہلی وحی تھی؟ 255
ورقہ کے اشعار 256
پتھروں اور درختوں کا سلام 259
خطاب عبید 259
مزیدتفصیل 260
وضاحت 261
مزیدتحقیق 263
ورقہ کا سوال 263
اولین وحی 264
واظحیٰ اور اللہ اکبر 265
نبوت ورسالت 265
وحی کی بندش کا عرصہ 265
دعوت وارشاد 265
اولین مسلمان 266
فصل 266
جنات کا قرآن سنتے ہی مسلمان ہو جانا 266
نزول وحی کے وقت فرشتوں کی کیفیت 267
علم نجوم 267
آسمان کی حفاظت 267
رفع اشتباہ 268
اہل طائف کی گھبراہٹ 268
نصیبین کے جن 269
رسول اللہﷺپر وحی نازل ہونے کی کیفیت 270
سورہ مائدہ 271
طرز تعلیم 271
نبوت کے تقاضے 272
تبلیغ 272
صحابہؓ میں اولین مسلمان 273
حضرت علی ﷜ 273
عفیف کا چشم دید 274
حضرت علی ﷜کی فضیلت میں منکرحدیث 275
تبصرہ 275
تطبیق 275
حضرت ابوبکر﷜ 276
اولین مسلمان 277
امام ابوحنیفہ﷫ 277
تبلیغ 277
راہب بصریٰ 277
پہلا خطیب 279
حضرات عمر﷜کا اسلام لانا 280
عمر بن عبسہ سلمیؓ 281
سعدکا اسلام لانا 281
ابن مسعوداور معجزہ 282
خالدبن سعید 282
حضرت حمزہ﷜کا اسلام لانا 283
ابوذر کا اسلام قبول کرنا 284
انیس 286
اسلم قبیلہ 286
ضماد 286
دعوت و ارشادکے عام آغاز
معجزہ دعوت 290
ایک وضعی روایت 290
ابوطالب 292
ابولہب 292
حفاظت کا عجب انداز اورابوجہل 294
نماز کےبعددعا 296
اراشی اور ابوجہل 296
عمروبن عاص یا عبداللہ بن عمروبن عاص 297
قریش کا ابوطالب کے ہاں اجتماع 298
نئی چال اور عمارہ قریش کاناتواںمسلمانوں کو اذیت دینا 300
حسب طلب معجزات کیونکر ظاہر نہ ہوئے 301
رسول اللہ ﷺکو لالچ دینا 302
دیگر حربے 302
عبداللہ بن ابی امیہ 304
صفاسونا بن جائے 304
                                                                                 علماءیہودہ سے دریافت   کردہ سوالات 305
آیت روح کب نازل ہوئی 306
قصیدہ لامیہ 306
حضرت بلال﷜ 312
نہدیہ 313
حضرت ابوبکر اور قرآن کا نزول 313
حضرت بلال پر تشدد 313
پہلی خاتون شہید 313
ابوجہل کا طرزعمل 313
حضرت خباب﷜ 314
امام ابن کثیر کی نکتہ آفرنیی اور نماز ظہر 315
ولیدبن مغیرہ 316
ولیدبن مغیرہ کی مجلس شوریٰ 316
عتبہ بن ربیہ کی پیشکش 317
مجلس قریش 319
معجزانہ کلام 320
چوری چھپےقرآن سننا 320
اخنس کا استصواب رائے 320
ابو جہل کے ہمرہ پہلی ملاقات 321
ابوسفیان اور غیرت قومی 322
قرآن درمیانی آوازسے 322
ہجرت حبشہ 322
قافلہ کی فہرست 322
82افراد 323
پہلے مہاجر حضرت عثمان﷜ 323
دس مرد پہلے مہاجر 323
جعفر مہاجرحبشہ 323
کب ہجرت ہوئی؟ 323
عمارہ کا حشر 327
نجاشی کے ساتھ جعفرؓ کی گفتگو 328
دعا اور آمین 329
روایت ام سلمہ ؓ 329
مسلمانوں کی طلبی اور قریش کے سفراکی ناگواری 331
رشوت اور دبر 332
بغاوت 332
رشوت کی تفصیل 333
نمائندہ گان قریش اور عمارہ 333
ترجمان 335
نجاشی کی تدبیر 335
غائبانہ نماز جنازہ 336
شاہی القاب 336
بدلہ 337
حضرت عمر کا اسلام قبول کرنا 337
ا م عبداللہ کا بیان 337
کیا عمر40ویں مسلمان تھے؟ 338
قبول اسلام کے بارے میں ایک اور روایت 339
تشہر 340
کب مسلمان ہوئے؟ 341
عیسائی وفد 341
نجاشی اور خط پر تبصرہ 341
مکتوب بدست ضمری 442
فصل 343
مقاطعہ اور اس کی تحریر 344
دیمک 344
ابو طالب کی تجویز 345
قصیدہ لامیہ کا مقام 345
کاتب صحیفہ 346
ابولہب 347
نزول سورہ تبت 347
حکیم بن حزام کاغلہ 348
رسول اللہ سے استہزا اور قرآن 348
امیہ بن خلف 348
نضربن حارث 349
وحی ہم پر کیوں نہ اتری ؟ 350
رخ زیبا پر تھوکنا 350
بوسیدہ ہڈی کو زندہ کرنا 350
عبادت کا مشترکہ منصوبہ 350
زقوم 350
سورہ نجم اور کفار کا سجدہ کرنا 351
تطبیق 351
نماز میں کلام کی منسوخی 352
عثمان بن مظعون کا ولید کی پناہ رد کر دینا 352
عثمان اور لبید 353
حضرت ابوبکر ﷜کا عزم ہجرت 354
صحیفہ کی منسوخی اور معظلی 356
شعب سے کب نکلے 360
طفیل دوسیؓ 360
خواب کی تعبیر 362
ایک اور خواب 363
تطبیق 363
اعشیٰ بن قیس کا قصہ 364
زنااور شراب کی حرمت 366
رکانہ   سے دنگل 366
نادار مسلمانوں کی تضحیک 367
لاولداور قاسم 367
فرشتہ کیوں نہ آیا؟ 367
مذاق کی سزا 368
تمسخر کے سرغنہ 368
ولیدکی وصیت 369
ابو ازیر 369
ربا 370
ام غیلان 370
قحط سالی 370
ابن مسعودکا خیال 371
سورت روم اور ابوبکر کی شرط 371
اسراء ومعراج 372
اسراء ہجرت سے قبل 372
اسراءکب 372
غروب میں تاخیر 374
روایت شریک 375
شرح صدر بیت المقدس میں 375
داخل ہونے کا انکار 375
375
نماز کب پڑھائی؟ 375
آسمان پر کیسے پہہچنے 375
انبیاء سے ملاقات 375
تقرب الہیٰ 376
ظلط فہمی 376
نمازپنج گانا 376
بسم اللہ 376
دیدار الہیٰ 376
اللہ کا دیدار نہیں ہوا 377
امامت کا مسئلہ 377
عمدہ استنباط 377
پروقار اور حکیمانہ انداز 377
ابوجہل کی سازش 377
معراج جسم اطہر کے ساتھ 378
شریک کی غلطی اور توجیہ 378
کیا دونوں بیک وقت تھے؟ 379
مسلسل ترتیب 380
حدیث اسراء 380
حدیث معراج 380
اسناد 382
عمدہ بحث 382
جبرایئل کی امامت 383
ایک اشکال 383
نماز سفر اور حسن بصری 383
عہد نبوی میں شق قمر کا معجزہ 384
ابوطالب کی وفات 387
سر پر مٹی ڈال دی 388
ابوطالب کی مرض اور موت 388
ابوطالب کا ایمان 389
بات نہ کرنےکی وجہ 391
کفن ودفن 391
ابوطالب کی عظمت 392
درست توجیہ 392
ام المومنین حضرت خدیجہؓ بنت خویلد کی وفات 393
کب فوت ہوئیں 393
آیا عائشہؓ افضل ہیں 394
قدر مشترک 396
حضرت خدیجہ ؓ کی وفات کے بعد رسول اللہ ﷺکا شادی کرنا 397
خولہ نے سفارت کی 398
ابوبکر نے سودہ کا نکاح پڑھایا 399
نکتہ 400
ابوطالب کی وفات کے بعد 401
ایک شازش 402
دعوت اسلام کی خاطراہل طائف کی طرف سفر کرنا 403
عداس 404
آپ زخمی ہوئے 404
جنات کا رسول اللہ ﷺکی قراءت سننا 405
طائف سے واپسی 406
مطعم کا پناہ دینا 406
مطعم کی وفات 406
مختلف قبائل کودعوت 407
کندہ قبیلہ 408
بنی عبداللہ 408
بنی حنیفہ 408
بنی عامر 408
تبلیغ کا طریقہ کندہ اور بکربن وائل کادورہ عباسؓ کے ہمراہ 409
عکاظ میں بنی عامر 410
بحیرہ قشیری 410
دعا کا اثر 411

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
17.4 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام سیرت سیرت النبی ﷺ علماء محدثین معاشرت نبوت

سیرت نبوی ﷺ پر اعتراضات کا جائزہ

سیرت نبوی ﷺ پر اعتراضات کا جائزہ

 

مصنف : ڈاکٹر محمد شمیم اختر قاسمی

 

صفحات: 281

 

سیرت نبوی ﷺ کامو ضوع  ہر دور میں مسلم علماء ومفکرین کی فکر وتوجہ کا مرکز رہا ہے،اور ہر ایک نے اپنی اپنی وسعت وتوفیق کے مطابق اس پر خامہ فرسائی کی ہے۔ نبی کریم ﷺ کی سیرت کا مطالعہ کرنا ہمارے ایمان کا حصہ بھی ہے اور حکم ربانی بھی ہے۔قرآن مجید نبی کریم ﷺ کی حیات طیبہ کو ہمارے لئے ایک کامل نمونہ قرار دیتا ہے۔اخلاق وآداب کا کونسا ایسا معیار ہے ،جو آپ ﷺ کی حیات مبارکہ سے نہ ملتا ہو۔اللہ تعالی نے نبی کریمﷺ کے ذریعہ دین اسلام کی تکمیل ہی نہیں ،بلکہ نبوت اور راہنمائی کے سلسلہ کو  آپ کی ذات اقدس پر ختم کر کےنبوت کے خاتمہ کے ساتھ ساتھ سیرت انسانیت کی بھی تکمیل فرما دی کہ آج کے بعد اس سے بہتر ،ارفع واعلی اور اچھے وخوبصورت نمونہ وکردار کا تصور بھی ناممکن اور محال ہے۔آپ ﷺ کی سیرت طیبہ پر متعدد زبانوں میں بے شمار کتب لکھی جا چکی ہیں،اور لکھی جا رہی ہیں،جو ان مولفین کی طرف سے آپ کے ساتھ محبت کا ایک بہترین اظہار ہے۔ زیر تبصرہ کتاب ” سیرت نبوی ﷺ پر اعتراضات کا جائزہ “محترم ڈاکٹر محمد شمیم اختر قاسمی صاحب  کی تصنیف ہے ،جس  میں انہوں نے سیرت نبوی ﷺ پر کئے گئے اعتراضات کا جائزہ لیا ہے  اور ان کی علمی واستنادی حیثیت کو پرکھا ہے۔۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ  مولف موصوف کی اس کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
حرف آغاز 11
باب اول :سیرت نبوی ﷺ پر اعتراضات کاتاریخی جائزہ 17
اعلان نبوت اورکفار مکہ کارد عمل 17
مخالفت کی وجوہات 18
نبوت بشریت کےمنافی ہے 20
رسالت کاانکار 21
قرآن کریم کاانکار 22
کاہن ہونے کاالزام 24
مجنون ہونے کاالزام 24
جادوگرہونے کاالزام 25
شاعر ہونےکاالزام 25
ابتر ہونا 25
اللہ نے آپﷺ کو تنہا چھوڑدیاہے؟ 26
مطالبہ معجزات 27
بعض علمی سوالات 29
قرآن کریم مکے کےکسی رئیس پر کیوں نازل ہوا؟ 30
نبی کریم ﷺ کو ایذارسانی 31
اذیت پہنچانےکی مختلف ترکییں 32
مدینے میں آپ ﷺ کی آمداوریہودیوں کاردعمل 33
حضور ﷺ کی سیرت وشخصیت پر یہودیوں کاحملہ 35
احکام اسلام پر یہود کے اعتراضات 36
منافقین کی ریشہ دوانیاں 36
نئے دورکاآغاز 37
سیرت نبوی ﷺ پر جارحیت کاتسلسلہ 39
نیادور،نئی حکمت عملی 44
مستشرقین کےمنصوبے 46
منصوبے کی تکمیل کےلیے مستقل ادراوں کاقیام 48
دورجدید کےبعض متعصب مفکرین 52
عظمت رسول ﷺ کااعتراف 56
معاندین اسلام کےبعض اعتراضات 58
حاصل بحث 61
مآخذ ومراجع 64
باب دوم:وحی اور اس کی کیفیت نزول 69
وحی کی ضرورت 69
وحی کی حقیقت 70
وحی کےمعنی ومفہوم 71
وحی اورالہام میں فرق 73
وحی کی اہم صورتیں 74
کلام بالوحی 75
وحی قلبی 75
وحی ملکی 75
وحی خاص کی قسمیں 76
وحی متلو 76
وحی غیر متلو 76
حدیث قدسی 78
نزول وحی کےطریقے 79
قرآن الفظا اورمعناوحی الہیٰ ہے 80
نبی ﷺ پر وحی کاآغاز خواب کی حالت میں کیوں ہوا؟ 82
نزول وحی کےوقت آپ ﷺ کی کیفیت 83
کیانبی ﷺ کو اپنی نبوت کے بارےمیں شک تھا؟ 87
کیااس کیفیت کاتعلق مرگی سےہے؟ 90
کیانزول وحی میں آپ ﷺ کو خواش کادخل تھا؟ 92
انبیاء سابقین پر پھی وحی آتی تھی 93
کیاقرآن کاتعلق خواب سے ہے؟ 96
مآخذ ومراجع 99
باب سوم :کیاقرآن محمد ﷺ کی تصنیف ہے 105
قرآن مجید اللہ کی نازل کردہ کتاب ہے 106
قرآن کادعوی کہ وہ کلام الہیٰ ہے 108
قرآن کاچیلنج پوری دنیا اورقیامت تک  کےلی ہے 109
قرآن کو کلام الہی سمجھنے کےباوجود انکار 110
تمام کوششوں کےباوجود قرآن کابدل تیارنہ کرسکے 112
قرآن نےکفار مکہ کےدلوں کی دینا بدل دی 114
قرآن مجید حضور ﷺ کاکلام  ہوتاتواس میں ان  کی گرفت نہ ہوتی 116
عر ب کےماحول میں قرآن کی تصنیف ناممکن تھ﷫ 117
یک بارگی قرآن کےنازل نہ ہونےسےکلام الہی کی نفی نہیں ہوتی 118
قرآن ایک عظیم معجزہ اورجملہ علو م وفنون کامجموعہ ہے 119
قرآن کریم آ ج تک تحریف وتبدیل سےپاک ہے 121
تحریف قرآن کی تمام کوششیں ناکام ہوں گی 122
مآخذ ومراجع 123
باب چہارم:معجزات نبوی ﷺ کی حقیقت 125
معجزات بےوجہ رونمانہیں ہوتے 125
انبیائے سابقین اورمعجزات 126
انبیائے سابقین کےبعض معجزات 127
حضور ﷺ کےمعجزات کو بھی تسلیم کرناچاہیے 128
حضورﷺ کومختلف طبائع کےلحاظ سےمعجزات عطاکیےگئے 128
حضورﷺ کےمعجزات کی نوعیت 129
معجزات نبوی ﷺ کی تعداد 129
معجزات نبوی ﷺ کی قسمیں 130
حضورﷺ کےبعض اہم معجزات 131
حضورﷺ کی امیت 132
معجزہ شق القمر 135
شق صدر یاشرح صد ر 138
اشیاء خوردنوش میں اضافہ 141
شفائے امراض 144
پیشین گوئیاں 145
مآخذ ومراجع 147
باب پنجم :معراج نبوی ﷺ کی حقیقت 149
بعض انبیاء سابقین کےواقعات معراج 149
معرج نبوی ﷺ معترضین کی نظر میں 151
انبیائے کرام کومعراج کیوں کرائی جاتی ہے؟ 152
معراج نبوی ﷺکی تمہید 152
قرآن میں نبی ﷺ کی معراج کاذکر 153
معراج نبوی ﷺ کی تفصیل احادیث کی روشنی مں 154
معراج سےنصیحت حاصل کریں 156
اس واقعہ پر کفارومشرکین کارد عمل 157
مسلمانوں پر اس واقعہ کااثر 157
واقعہ معراج کب پیش آیا؟ 158
معراج کی روایتیں اورا ن کےراوی 158
معراج جسمانی تھی یاروحانی 159
اسراء معراج ایک ہی واقعہ ہے یاالگ الگ 161
معراج کےانعامات 162
امامت انبیاء کاواقعہ کب پیش آیا؟ 162
معراج کےبعض واقعات اورمشاہدات کی حکمتیں 163
منکرین معراج کاحکم 166
مآخذ ومراجع 167
باب ششم: کیانبی ﷺ نئے مذہب کےبانی تھے؟ 169
دین اسلام کی مقبولیت پر اعتراضات 170
سابقہ آسمانی کتابوں میں بعثت بنوی کاذکر 171
آیت قرآنی سے اس بشارت کی تائید 173
اس بشارت کےدروس اثرات 175
نبی ﷺ نےکس دین کی تبلیغ کی ؟ 176
دین تویکساں رہاشریعت بدلتی رہی 177
بعض انبیاء کوبعض پر فضیلت 178
سارے انبیاء لائق تعظیم ہیں 179
حاصل بحث 180
مآخذ ومراجع 183
باب ہفتم :کیاتعلیمات نبوی ﷺ پر مسیحیت کااثر ہے ؟ 185
مکہ کےماحول  میں تعلیم  کاحصول ممکن نہ تھا 186
حضور ﷺ کی امیت کےدلائل 187
کفارمکہ نےراہیوں سےعلمی استفادہ کاالزام نہیں لگایا 188
شام کےتجارتی سفرکاپس منظر 190
حضور ﷺ کےتجارتی اسفار صحیح تناظر میں 191
شام کادوسرا سفراورنسطو اسے ملاقات کی اصلیت 192
ان واقعات کا کم زور پہلو 193
غیر معمولی باتوں کااثر آپ ﷺ پر کیوں نہیں ہوا؟ 195
آیات قرآنی سےواقعہ کی تغلیط 196
علماء محدثین کےنزدیک تجارتی اسفار اورحدیث کی حقیقت 197
مستشرقین کےدعوی کی کم زوری 200
حاصل بحث 202
مآخذ ومراجع 203
باب ہشتم :رسول اللہ ﷺ کےغزوات اوران کےمحرکات 205
ہجرت مدینہ پر رد عمل 206
میثاق مدینہ کےذریعہ مدینہ کےداخلی انتشار کاانسداد 207
قریش کی دھمکی 208
اردگرد کےقبائل میں قریش مکہ کی پوزیشن مستحکم تھی 208
زیارت خانہ کعبہ کےلیے مسلمانوں پر پابندی 209
مسلمانوں کےلیے مدافعانہ جنگ کےعلاوہ کوئی چارہ نہ تھا 209
قریش مکہ کی جانب سےحملہ کی پہل 211
قریش کی جنگی کاروروائیوں کاپتہ لگانا 211
غزوہ بد رکےاسباب 212
ابوسفیان کےذریعہ مسلمانوں پر دوبارہ حملہ 214
بنو قیقاع کی معاہدہ شکنی اوراس کاانجام 215
غزوہ احد 215
مدینہ سےبنو نضیر کااجراج 216
غزوہ خندق میں قریش ان کےاتحادیوں کی شکست 217
بنی قریظہ کی غداری کاانجام 218
صلح حدیبیہ فتح مبین 219
فتخ خبیر کےبعد یہودیوں کےفتنہ سےنجات ملی 220
غزوہ موتہ 221
فتح مکہ :مسلمانوں کی کامیابی کاشان دارمظاہر ہ 222
معرکہ حنین میں مسلمانوں کامیابی 223
روم کےعیسائیوں سےمعرکہ آرائی 224
حاصل بحث 225
باب نہم :الغرانیق العلیٰ کاافسانہ 227
واقعہ غرانیق سےمستشرقین کی دل چسپی 228
سورہ نجم کی آیتوں سےاس کی تصدیق ہوتی ہے ؟ 233
سور ہ اختتام بھی دل وہلادینےوالاہے 235
اضافی جملے بےجوڑہیں 236
واقعہ صحیح ہوناتوتفصیلات میں تضاد نہیں ہوتا 237
اس واقعہ کےناقابل تسلیم ہونےکےمزید دلائل 238
مآخذ ومراجع 240
باب دھم :تعداد ازواج کامسئلہ 241
تعداد ازواج اورانبیائے سابقین 241
مختلف مذاہب میں تعدا د ازواج 242
قدیم ہندوستان میں تعداد ازدواج 243
اسلام میں تعداد ازدواج کی اجازت 243
اس رخصت کےاثرت وفوائد 244
حضور ﷺ کی ازدواجی زندگی 245
حضور ﷺ کےلیے کثرت ازدواج کی خصوصی رعایت 246
کثرت ازدواج کاسبب اصحاب کی دل جوئی تھا 247
اسلام کی توسیع اورعداوتوں کاخاتمہ 249
حضور ﷺ کی زندگی کاہرگوشہ امت کےسامن آنابھی ضروری تھا 249
حسن معاشرت کااظہار 250
عام مسلمانو ں کےمقابلے میں حضور ﷺ کےلیے پابندیاں زیادہ تھیں 252
اقتدار کےنشہ نےآپﷺ کو تعداد ازدواج پر نہیں ابھارا 253
تعداد ازدواج بعض صورتوں میں شدید ضرورت بن جاتی ہے 253
تعداد ازدواج کی ممانعت عورتوں کےحق میں بھی ظلم ہے 254
اسلام کےازدواج کی اہمیت کااعتراف 255
مسلمان دوسری قوموں کی بہ نسبت تعداد ازدواج پر عمل کم ہی کرتے ہیں 256
حاصل بحث 258
مآخذ ومراجع 261
باب یازدہم :نکاح زینب ؓ کی حقیقت 261
حضرت زیدؓ اورزینب ؓ 262
زینب ؓکےساتھ زیدؓ کانکاح 263
میاں بیوی میں کشیدگی 263
محمد ﷺ پراس گشیدگی کااثر 264
عرب معاشرے میں منھ بولے بیٹے کی حیثیت 265
حضورﷺ کاارادہ نکاح نہ ظاہر کرنےکی ایک اوروجہ 266
حضرت زینب ؓ کانبی ﷺ سےنکاح 267
نبی ﷺ کےلیے نکاح کاپیغام لےکرزیدؓ ہی کیوں گئے ؟ 268
اس نکاح کاایک اورفائدہ 270
حضور ﷺ کےلیے زینب ؓ سےملاقات کےمواقع 271
نکاح زینب ؓ کےدورس اثرات 271
مآخذ ومراجع 273
کتابیات 275

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
5.2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام تاریخ زبان سنت سیرت سیرت النبی ﷺ نبوت

سیرۃ النبی ﷺ از شبلی ( تخریج شدہ ایڈیشن ) حصہ 3

سیرۃ النبی ﷺ از شبلی ( تخریج شدہ ایڈیشن ) حصہ 3

 

مصنف : علامہ شبلی نعمانی

 

صفحات: 555

 

اس روئے ارض پر انسانی ہدایت کے لیے حق تعالیٰ نے جن برگزیدہ بندوں کو منتخب فرمایا ہم انہیں انبیاء ورسل﷩ کی مقدس اصطلاح سے یاد کرتے ہیں اس کائنات کے انسانِ اول اور پیغمبرِاول ایک ہی شخصیت حضرت آدم کی صورت میں فریضۂ ہدایت کےلیے مبعوث ہوئے ۔ اور پھر یہ کاروانِ رسالت مختلف صدیوں اور مختلف علاقوں میں انسانی ہدایت کے فریضے ادا کرتے ہوئے پاکیزہ سیرتوں کی ایک کہکشاں ہمارے سامنے منور کردیتاہے ۔درخشندگی اور تابندگی کے اس ماحول میں ایک شخصیت خورشید جہاں تاب کی صورت میں زمانےاور زمین کی ظلمتوں کو مٹانے اورانسان کےلیے ہدایت کا آخری پیغام لے کر مبعوث ہوئی جسے محمد رسول اللہ ﷺ کہتے ہیں ۔ آج انسانیت کےپاس آسمانی ہدایت کا یہی ایک نمونہ باقی ہے۔ جسے قرآن مجید نےاسوۂ حسنہ قراردیا اور اس اسوۂ حسنہ کےحامل کی سیرت سراج منیر بن کر ظلمت کدۂ عالم میں روشنی پھیلارہی ہے ۔حضرت محمد ﷺ ہی اللہ تعالیٰ کے بعد ،وہ کامل ترین ہستی ہیں جن کی زندگی اپنے اندر عالمِ انسانیت کی مکمل رہنمائی کا پور سامان رکھتی ہے ۔ ۔ شروع ہی سے رسول کریم ﷺکی سیرت طیبہ پر بے شمار کتابیں لکھیں جا رہی رہیں۔یہ ہر دلعزیز سیرتِ سرورِ کائنات کا موضوع گلشنِ سدابہار کی طرح ہے ۔جسے شاعرِ اسلام سیدنا حسان بن ثابت سے لے کر آج تک پوری اسلامی تاریخ میں آپ ﷺ کی سیرت طیبہ کے جملہ گوشوں پر مسلسل کہااور لکھا گیا ہے او رمستقبل میں لکھا جاتا رہے گا۔اس کے باوجود یہ موضوع اتنا وسیع اور طویل ہے کہ اس پر مزید لکھنے کاتقاضا اور داعیہ موجود رہے گا۔ گزشتہ چودہ صدیوں میں اس ہادئ کامل ﷺ کی سیرت وصورت پر ہزاروں کتابیں اورلاکھوں مضامین لکھے جا چکے ہیں ۔اورکئی ادارے صرف سیرت نگاری پر کام کرنے کےلیےمعرض وجود میں آئے ۔اور پورے عالمِ اسلام میں سیرت النبی ﷺ کے مختلف گوشوں پر سالانہ کانفرنسوں اور سیمینار کا انعقاد کیا جاتاہے جس میں مختلف اہل علم اپنے تحریری مقالات پیش کرتے ہیں۔ ہنوذ یہ سلسلہ جاری وساری ہے ۔ اردو زبان میں سرت النبی از شبلی نعمانی ،سیدسلیمان ندوی رحمہما اللہ ، رحمۃللعالمین از قاضی سلیمان منصور پوری اور مقابلہ سیرت نویسی میں دنیا بھر میں اول آنے والی کتاب الرحیق المختوم از مولانا صفی الرحمن مبارکپوری کو بہت قبول عام حاصل ہوا۔ زیر تبصرہ کتاب ’’سیرت النبی ﷺ‘‘ برصغیر پاک وہند میں سیرت کےعنوان مشہور ومعروف کتاب ہے جسے علامہ شبلی نعمانی﷫ نے شروع کیا لیکن تکمیل سے قبل سے اپنے خالق حقیقی سے جاملے تو پھر علامہ سید سلیمان ندوی ﷫ نے مکمل کیا ہے ۔ یہ کتاب محسن ِ انسانیت کی سیرت پر نفرد اسلوب کی حامل ایک جامع کتاب ہے ۔ اس کتاب کی مقبولیت اور افادیت کے پیش نظر پاک وہند کے کئی ناشرین نےاسے شائع کیا ۔زیر تبصرہ نسخہ ’’مکتبہ اسلامیہ،لاہور ‘‘ کا طبع شدہ ہے اس اشاعت میں درج ذیل امور کا خاص خیال رکھا گیا ہے۔قدیم نسخوں سےتقابل وموازنہ ، آیات قرآنیہ ، احادیث اورروایات کی مکمل تخریج،آیات واحادیث کی عبارت کو خاص طور پرنمایاں کیا ہے ۔نیز اس اشاعت میں ضیاء الدین اصلاحی کی اضافی توضیحات وتشریحات کےآخر میں (ض) لکھ واضح کر دیا ہے ۔تاکہ قارئین کوکسی دقت کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔علاوہ ازیں اس نسخہ کو ظاہر ی وباطنی حسن کا اعلیٰ شاہکار بنانے کی بھر پور کوشش کی گئی ہے۔اور کتاب کی تخریج وتصحیح ڈاکٹر محمد طیب،پرو فیسر حافظ محمد اصغر ، فضیلۃ الشیخ عمر دارز اور فضیلۃ الشیخ محمد ارشد کمال حفظہم اللہ نےبڑی محنت سے کی ہے ۔اللہ تعالیٰ اس کتاب کی طباعت میں تمام احباب کی محنت کو قبول فرمائے اور ان کےلیے نجات کا ذریعہ بنائے (آمین)

عناوین صفحہ نمبر
                                  فہرست مضامین سیرۃ انبی ﷺ حصہ سوم
مضامین
دیبا چہ طبع سوم 13
دیبا چہ ( طبع اول) 14
دلائل و معجزات 16
روحانی نو ا میس کا و جود 16
بنو ت کے فطری وروحانی ا ٓ ثار 16
بنو ت کے روحانی نوا میس انسانی قوانین پر
حکمران ہیں 17
بنو ت کے روحانی نو امیس کے اسباب و علل
سے ہم اسی طر ح لاعلم ہیں جس طر ح جسمانی
قوانین کے 17
انبیا کے ا صلی معجزہ خود ان کا سر تا پا وجود ہے 18
انبیا کے کامل پیر وان سے معجزہ نہیں مانگتے تھے 18
معاند ین معجزوں کے بعد بھی ایمان نہیں لائےا 18
معجزوں سے کن کو فائدہ پہنچتا ہے 18
ان واقعات کا اصطلا حی نام 19
دلائل وبرہان و آیات کا تعلق انبیا کی سیر تو ں سے 19
دلائل و  ا ٓ یا ت کا تعلق سیرت محمد ی سے 20
دلائل و معجزات اور عقیلت 21
دلائل و معجزات اور فلسفہ قدیم و علم کلام 23
اطلا ع غیب 25
رویت ملائکہ 25
خوار ق عادت 26
وحی مشا ہدہ 27
معجزات 40
اسباب خفیہ کی تو جیہ بے کار ہے 48
حکمائے اسلام کی غلطی کا سبب 48
اشاعرہ اور معتزلہ میں نتیجہ کا اختلا ف نہیں 49
خر ق عادت سے انکار کا اصلی سبب سلسلہ
اسباب و  علل پر یقین ہے 49
سلسلہ اسباب و علل پر علم انسانی کو ا حتوا نہیں 50
حقیقی علت خدا کی قدرت اور ارادہ ہے 51
مولانا روم اور اسباب و علل اور معجزہ کی حقیقت 52
علت، خا صیت اور اس کی حقیقت 54
اسباب و علل محض عادی ہیں 55
اسباب عادیہ کا علم صر ف تجربہ سے ہو تا ہے 56
اسباب و علل کا علم بدلتا رہتا ہے 56
اسباب و علل کا علم تجر بہ سے ہو تا ہے 57
علامہ ابن تیمیہ کا بیان کہ اسباب و علل تجر بی ہیں 59
تجر بیا ت کی بنا شہادت اور روایت اور تاریخ پر
ہے 62
فلسفہ اور سائنس بھی ایک قسم کی تاریخ ہیں 62
تاریخی شہا دتو ں کے شرا ئط استناد 63
مسلمانوں کا علم روایت 64
نا ویدہ واقعات پر یقین کرنے کا ذ ریعہ صر ف
روایات کی شہادت ہے 65
خبر احا د پر بھی عملا یقین ہوتا ہے 65
واقعات پر یقین کے  لیے اصلی بنیا د امکان اور
عدم امکان کی بحث نہیں بلکہ روایت کے ثبوت
اور عدم ثبوت کی ہے 66
جس درجہ کا واقعہ ہواسی درجہ کی شہادت ہونی
چاہیے 66
معجزات دراصل تجر بیات کے خلاف نہیں ہو تے 66
معجزات کا ثبوت روایتی شہا دتیں ہیں 67
خلاصہ مبا حث 67
یقین معجزات کے اصول نفسی 68
امام غزالی رحمتہ اللہ علیہ اور یقین اور اذعان کی صور تیں 68
معجزہ اور سحر کا فر ق 70
معجزہ دلیل بنو ت ہوسکتا ہے یا نہیں 74
امام غزالی رحمتہ اللہ علیہ کی تقریر 77
امام رازی رحمتہ اللہ علیہ کی تقریر 78
مولانا روم کے حقو ئق 79
صحابہ ؓ کو کیوں کر رسالت کا یقین ا ٓ یا 83
دلائل و معجزات اور عقلیات جدیدہ 87
مفہوم نبو ت 87
مفہو م معجزہ 88
ترتیب مبا حث 88
امکان معجزات 89
ہیوم کا استدلال 89
قوانین فطرت کی حقیقت 92
شہادت معجزات 99
امکان ، وقوع کے لیے کا فی نہیں 99
ہیو م کا فتو یٰ 100
ہیوم کا تعصب 100
کافی شہادت 101
ہیوم کا صر یح تنا قض 103
انتہائی استبعاد 104
استعباد معجزات 104
فطر ت کی یکسانی 104
ایجادات سائنس 106
تنویم 106
معجزات شفا 107
عام تجربات 108
رو یا ئے صادقہ 109
حقیقی اسرار نبوت 110
حقیقی ا ٓ یات نبوت کی عام مثالیں 110
مقدمات ثلثہ 114
اصلی بحث یقین کی ہے 114
یقین معجزات 115
یقین کی ا ہمیت 115
نظریات حکمت کا یقین 116
یکسانی جذبہ 116
نظریا ت فلسفہ کا یقین 117
مشاہدات کا یقین 118
نفسیا ت یقین 120
خواہش یقین 121
مو ا نع و مو یدات یقین 121
نفسیات یقین کی شہادت و اقعات سیرت ے 123
غایت معجزات 125
معجزہ منطقی دلیل نہیں 125
معجزہ کی ا صلی غایت 126
پہلی صور ت 127
بعض وسو سو ں کا جواب 129
ایک اور اعتراض 130
دوسری صورت 131
اس صورت کے مختلف احتمالات 131
یقین معجزہ کی شرائط 134
لب لباب 139
آیا ت و دلائل اور قرآن مجید 140
انبیااور آ یا ت ودلائل 140
لفظ ا ٓیت و معجزہ کی حقیقت 141
ا ٓیات اللہ 143
آیا ت و دلائل کی دو قسمیں ، ظاہری اورباطنی 147
نبوت کی با طنی نشانیاں ، واقعات کی روشنی میں 147
قرآن مجید اور نبوت کی باطنی علامات 151
ظاہری ا ٓ یات اور نشانیاں 154
ظاہری نشا نا ت صر ف معا ندین طلب کرتے ہیں 154
کفار کا یہ معجزہ طلب کرنا نفی معجزہ کی دلیل نہیں 155
معاندین کو معجزہ سے بھی تسلی نہیں ہو تی 156
معاندین کو معجزہ سے بھی ایمان کی دولت نہیں ملتی 159
با ایں ہمہ انبیا معا ندین کو معجزات دکھاتے ہیں
اور وہ ا عراض کر تے ہیں 163
اس لیے با لا ٓ خر معا ندین کو طلب معجزہ سے
تغافل بر تا جا تا ہے 166
معجزہ کے انکار یا تا خیر کے اسباب 167
عقیدہ معجزات کی ا صلا ح 171
مسلہ اسباب و علل میں افراط و تفریط 175
قرآن مجید اسباب و مصا لح کا قائل ہے 177
لین علت حقیقی قدر ت و مشیت ہے 182
قرآن میں سنت اللہ کا مفہوم ہ 184
قرآن میں فطر ۃ اللہ کا مفہوم 185
معجزہ کا سبب صرف ارادہ الٰہی ہے 186
معجزہ کی باعتبار خر ق عادت کے چا ر قسمیں 187
اہل ایمان پر اثر کے لحاظ سے معجزات کی دو قسمیں 188
کفار کے لیے نتا ئج کے لحاظ سے معجزات کی دو قسمیں 190
آنحضرت ﷺ اور معجزہ  ہدایت 193
شق قمر ا ٓخری نشان ہدا یت تھا 194
آنحضرت ﷺ اور معجزہ ہلاکت 195
غزوہ بد ر معجزہ ہلا کت تھا 200
سحر اور معجزہ کا فرق اور ساحر اور پیغمبر میں امتیاز 204
معجزات اور نشانات سے کن لو گو ں کو ہدایت
ملتی ہے 206
صداقت کو نشانی صر ف ہدایت ہے 209
آیا ت و لائل نبوی کی تفصیل 210
خصائص النبو ۃ 211
مکالمہ الٰہی 213
وحی 214
نزو ل ملا ئکہ 222
نز ول جبریل علیہ السلام 223
فر شتہ میکا ئیل کا نزول 229
عام ملائکہ کا نزول 230
عالم رویا 235
رویائے تمثیلی 242
مشا ہدات و مسمو عات 249
عالم بیداری 249
اسرا یا معراج 254
انبیا اور سیر ملکو ت 254
معراج نبوی 255
معراج نبو ی کا وقت و تاریخ اور تعد ادوقوع 255
معراج کی صحیح روایتیں 259
معرا ج کا واقعہ 260
کفار کی تکذیب 267
کیا آ پ ﷺ نے معراج میں خدا کو دیکھا ؟ 268
معراج جسمانی تھی یا روحانی ، خواب تھا یا بیدار ی 272
معراج کے بحالت بیداری ہونے پر صحیح استدلال 277
بد عیان رویا کا مقصود بھی رویا سے عام خواب
نہیں 278
رویا ئے صادقہ کی تا ویل 278
رویا سے مقصو د ر و حانی ہے 279
قرآن مجیداور معراج 289
(معراج کے اسرار ، اعلانات احکا  م بشار تیں
اور انعاما ت) 289
آنحضر ت ﷺ کا نبی القبلتین ہونا 289
بنی اسرائیل کی مدت تولیت کا اختتام 291
کفارمکہ کے نام ا ٓ خری اعلان 292
معراج کے احکام و وصایا 294
ہجرت اور عذاب 297
نماز پنجگا نہ کی فر ضیت 299
ہجرت کی دعا 300

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
15.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam سیرت سیرت النبی ﷺ عمرہ

سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم ( محمد صارم )

سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم ( محمد صارم )

 

مصنف : محمد صارم

 

صفحات: 194

 

اس روئے ارضی پر انسانی ہدایت کے لیے  اللہ  تعالیٰ کے بعد حضرت  محمد ﷺ ہی ،وہ کامل  ترین ہستی ہیں جن کی زندگی  اپنے اندر عالمِ انسانیت کی مکمل  رہنمائی کا پور سامان رکھتی ہے ۔ رہبر انسانیت سیدنا محمد رسول اللہ ﷺ  کی شخصیت قیامت تک آنے والےانسانوں کےلیےبہترین نمونہ ہے  ۔ گزشتہ چودہ صدیوں  میں اس  ہادئ کامل ﷺ کی سیرت وصورت پر ہزاروں کتابیں اورلاکھوں مضامین لکھے جا چکے ہیں ۔اورکئی ادارے صرف سیرت نگاری پر کام کرنے کےلیےمعرض وجود میں آئے  ۔اور پورے عالمِ اسلام  میں  سیرت  النبی ﷺ کے مختلف گوشوں پر سالانہ کانفرنسوں اور سیمینار کا انعقاد کیا  جاتاہے   جس میں  مختلف اہل علم  اپنے تحریری مقالات پیش کرتے ہیں۔ ہنوذ یہ سلسلہ جاری وساری ہے ۔ زیرنظرکتاب’’آسان اورعام فہم سیرت النبیﷺ‘‘محترم محمد صارم صاحب کی کاوش ہے ۔فاضل مصنف نےاس  کتاب میں بچوں کی ذہی سطح کو  مد نظر رکھتے ہوئے سیرت النبی کا دلنشیں تذکرہ کیا ہے اور مواد کو  سلیس،آسان ،سادہ اور دل چسپ بناکر بچوں کے ذوق ورجحان اور ان کی نفسیات کا پورا پورا لحاظ رکھتے ہوئے پیش کیا ہے۔نیز صحت روایت کا بھی التزام کیا ہے۔کتاب ہذا کی انفرادیت میں  یہ  بات بھی شامل ہے کہ  فاضل مصنف نے سیرت کے مکی دور کومکہ مکرمہ میں اور مدنی دور کو مدینہ منورہ میں بیٹھ کر لکھنے کی سعادت حاصل کی ہے۔سیرت النبی ﷺ پر یہ آسان فہم کتاب  بچوں ، بڑوں ، ڈاکٹرز ،  طلبہ  واساتذہ، وکلاء اور CSS کرنے والوں کے لیے یکساں مفید ہے ۔اللہ تعالیٰ  مصنف  کی کاوش کو قبول فرمائے اور اسے قبول  عطاعام فرمائے ۔آمین 

 

عناوین صفحہ نمبر
سیرت کسے کہتے ہیں ؟ 9
آپﷺکےخاندان کی باتیں 11
د ودلچسپ معلوماتی واقعات 13
پیدائش سے جوانی تک کی کہانی 16
تعمیر کعبہ ، غار حرا اور پہلی وحی 18
مکہ والوں کا پیار دشمنی میں کیسے بدلا؟ 21
دشمن کی تکالیف کی کہانی 25
ہجرت حبشہ کےدلچسپ واقعات 32
بائیکات کی کہانی 36
سفر طائف کی کہانی 39
معراج کی کہانی 43
اسباب ہجرت سے سفر ہجرت کے آغاز تک 52
غار ثور سے مدینہ تک سفر کی کہانی 57
بابے عبد اللہ کی سرداری کی کہانی 67
مدینے آمد پر تین اہم کام 73
غزوہ بدر کی کہانی 80
غزوہ قینقاع کی کہانی 87
غزوہ سویق کی کہانی 91
ایک بدتمیز یہودی کا انجام 93
غزوہ احد کی کہانی 96
حمراء الاسد کا دلچسپ قصہ 106
رسول اللہ ﷺ سے محبت کی لازوال داستان 108
ستر صحابہ کرام ﷢کی دھوکہ سے شہادت 110
نبی کریم ﷺ کے قتل کی سازش کی کہانی 113
خندق کی کہانی 115
یہودیوں کی وعدہ خلافی پر خوفناک سزا کا واقعہ 122
سلام بن ابی التحقیق کا انجام 124
کنواں پر جھگڑے کی کہانی 126
نبی کریم ﷺنے ایک خواب دیکھا 132
پوری دنیا میں تبلیغ کیسے شروع ہوئی؟ 138
یہودیوں سے آخری فیصلہ کن لڑائی کی کہانی 142
کافر نے آپﷺپر تلوار اٹھا کر عجیب سوال کیا 150
رہ جانے والے عمرہ کرنے کا واقعہ 152
مسلمان کی شہادت کا بدلہ لینے کی کہانی 154
فتح مکہ کی داستان 157
غزوہ حنین کی کہانی 162
غزوہ تبوک کی کہانی 164
وفود کی آمد 170
حجۃالوداع کا واقعہ 174
عمرہ کا آسان فہم طریقہ 174
نبی کریم ﷺ کےالوداعی جملے 188

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
17.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام اعمال امہات المومنین تاریخ سیرت نماز

سیرت عائشہ رضی اللہ عنہا (سید سلیمان ندوی)

سیرت عائشہ رضی اللہ عنہا (سید سلیمان ندوی)

 

مصنف : سید سلیمان ندوی

 

صفحات: 350

 

ام المومنین سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ ، حضرت ابوبکر صدیق ﷜ کی صاحبزادی تھیں۔ والدہ کا نام زینب تھا۔ ان کا نام عائشہ لقب صدیقہ اور کنیت ام عبد اللہ تھی۔ حضور ﷺ نے سن 11 نبوی میں سیدہ عائشہ ؓ سے نکاح کیا اور 1 ہجری میں ان کی رخصتی ہوئی۔ آپ حضور ﷺ کی سب سے کم عمر زوجہ مطہرہ تھیں۔ انہوں نے حضور ﷺ کے ساتھ نو برس گذارے۔ ام الموٴمنین حضرت سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ عنہاوہ خوش قسمت ترین عورت ہیں کہ جن کو حضور کی زوجہ محترمہ اور ”ام الموٴمنین“ ہونے کا شرف اور ازواج مطہرات میں ممتاز حیثیت حاصل ہے۔قرآن و حدیث اور تاریخ کے اوراق آپ کے فضائل و مناقب سے بھرے پڑے ہیں۔ام الموٴمنین حضرت سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ عنہاسے شادی سے قبل حضور نے خواب میں دیکھا کہ ایک فرشتہ ریشم کے کپڑے میں کوئی چیز لپیٹ کر آپ کے سامنے پیش کر رہا ہے… پوچھا کیا ہے؟ جواب دیا کہ آپ کی بیوی ہے، آپ نے کھول کہ دیکھا تو حضرت عائشہ ہیں۔صحیح بخاری میں حضرت ابو موسی اشعری سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا ” مردوں میں سے تو بہت تکمیل کے درجے کو پہنچے مگر عورتوں میں صرف مریم دختر عمران، آسیہ زوجہ فرعون ہی تکمیل پر پہنچی اور عائشہ کو تمام عورتوں پر ایسی فضیلت ہے جیسے ثرید کو تمام کھانوں پر ۔آپ ﷺکو حضرت عائشہ صدیقہ ؓ عنہا سے بہت محبت تھی، ایک مرتبہ حضرت عمرو ابن عاص ﷜ نے حضور سے دریافت کیا کہ… آپ دنیا میں سب سے زیادہ کس کو محبوب رکھتے ہیں؟ آپ نے فرمایا کہ عائشہ ؓ عنہا کو، عرض کیا گیا کہ اے اللہ کے رسول! مردوں کی نسبت سوال ہے! فرمایا کہ عائشہ کے والد ابوبکر صدیق ﷜ کو۔ام الموٴمنین حضرت سیدہ عائشہ صدیقہ ؓ عنہا کا امت مسلمہ پر بہت بڑا احسان ہے کہ ان کے مبارک واسطہ سے امت کو دین کا بڑا حصہ نصیب ہوا۔حضرت ابو موسیٰ اشعری ؓ عنہ فرماتے ہیں کہ صحابہ کرام ﷢کو کبھی ایسی مشکل پیش نہ آئی جس کے بارے میں ہم نے حضرت عائشہ ؓ عنہا سے پوچھا اور ان سے اس کے بارے میں کوئی معلومات ہم کو نہ ملی ہوں۔ حضور ﷺ وصال کے 48 سال بعد 66 برس کی عمر میں 17 رمضان المبارک 58 ہجری میں وصال فرمایا۔سید عائشہ رضی اللہ تعالی عنہا کی زندگی خواتین اسلام کے لیے بہترین نمونہ ہے۔ زیر تبصرہ ’’سیرت عائشہ‘‘برصغیر پاک وہند کے نامو ر مؤرخ اور سیرت نگار   علامہ سید سلیمان ندوی ﷫ کی ابتدائی تصنیف ہے۔ 1920ء میں یہ کتاب پہلی بارشائع ہوئی۔ اس کے بعد اس کتاب کی جامعیت اور مقبولیت کی وجہ سے اس کے کئی ایڈیشن شائع ہوئے ہیں۔ موجودہ ایڈیشن دارالابلاغ، لاہورنے نئی تحقیق اور تخریج وتسہیل کے اہتمام کےساتھ ایک نئے خوبصورت دیدہ زیب انداز میں شائع کیا ہے۔ کتاب میں موجود احادیث وآثار کی مکمل تخریج فاضل نوجوان محترم نصیر احمد کاشف نے کی ہے۔ سیدہ عائشہ کی مروی روایات کا ترجمہ کرکے کتاب میں شامل کردیا ہے۔ کتاب میں قرآنی آیات، احادیث اور باقی تمام عربی عبارات پر اعراب کا اہتمام کردیاگیا ہے۔ اس کتاب نظر ثانی معروف مترجم و مصنف کتب کثیرہ جناب مولانا محمود احمد غضنفر ﷫ نے کی ہے جس   سے اس کتاب کی افادیت میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
عفیفہ کائنات کی پاکیزہ سیرت 12
دیباچہ طبع سوم 15
سیرت عائشہ ؓ کی اہمیت 17
مآخذ 18
ابتدائی حالا ت (پیدائش سے شادی تک ) 20
انتساب 18
نام ونسب ،خاندان 20
ولات 22
بچپن 23
شادی 24
ہجرت 29
رخصتی 31
تعلیم وتربیت 33
خانہ داری 44
معاشرت ازدواجی 47
بیوی سے محبت 48
شوہر سے محبت 52
بیوی کی مدارات 55
دل بہلانا 56
گھر میں فرائض نبوت 67
سوکنوں کے ساتھ برتاؤ 69
مشتبہ اور غلط روایات 78
سوتیلی اولاد کے ساتھ برتاؤ 81
غلط اور مشتبہ روایات 84
واقعہ افک 85
سرولیم میور کابیان 93
تیمم کے حکم کانزول 96
تحریم،ایلااور تخیر 98
تحریم 98
ازفہ شکوک 101
ایلا 103
تخیر 105
بیوگی 11ھ 106
عام حالات 110
عہد صدیقی 110
داغ بے پدری 111
عہدفاروقی 112
سیدناعثمان ﷜ کاعہد 113
سیدنا علی مرتضی ﷜   کاعہد 118
اصلاح کی دعوت 120
مسلمان عورت ک فرائض 120
جنگ جمل 132
سیدہ عائشہ اور سیدناعلی ﷜ کے باہمی ملال خاطر کی تردید 137
سیدناامیر معاویہ ﷜ کازمانہ 141
سیدناحسن ﷜ کی تدفین کاواقعہ 144
وفات 146
تبنی 148
حلیہ اور لباس 149
اخلاق وعادات 151
قناعت پسندی 151
ہم جنسوں کی امداد 152
شوہر کی اطاعت 152
غیبت اور بدگوئی سے احتراز 152
عدم قبول احسان 153
خودستانی سے پرہیز 154
خودداری 154
دلیری 155
فیاضی 156
خشیت الہی اورقیق لقلسمی 157
عبادت الہی 158
معمولی باتوں کالحاظ 160
غلاموں پر شفقت 160
فقراکی حسب حیثیت اعانت 161
پردہ کااہتمام 162
مناقب 163
فضل وکمال 164
علم واجتہاد 167
قرآن مجید 168
حدیث 179
سیدہ عائشہ ؓ اور ازواج مطہرات ﷢ 179
سکٹرین روایت میں سیدہ عائشہ ؓ کا درجہ 181
سیدہ عائشہ ؓ کی روایتوں کی تعداد 181
مکثرین میں روایت کے ساتھ درایت 181
بار بار پوچھنا 185
روایت میں احتیاط 185
روایت مخالف قرآن حجت نہیں 186
مغرسخن تک پہنچنا 192
ذاتی واقفیت 196
قوت حفظ 198
سیدہ عائشہ ؓ کی حدثیوں کی ترتیب وتدوین 200
فقہ وقیاس 200
قرآن مجید 201
حدیث 203
قیاس عقلی 205
سنن کی تقسیم 207
معاصرین کے اختلاف 208
علم کلام وعقائد 212
اللہ تعالی کے لیے اعضاکااطلاق 212
رؤیت باری تعالی 213
علم غیب 215
پیغمبر اوراخفائے   وحی 216
انبیاء ﷤ معصوم ہیں 217
معراج روحانی 217
الصحابۃ عدول 219
ترتیب خلافت 220
عذاب قبر 220
سماع موقی 221
علم اسرار الدین 221
قرآن مجید کی ترتیب نزول 223
مدینہ میں اسلام کی کامیابی کاسبب 225
جمعہ کے دن نہانا 226
سفر میں دو رکعت نماز 226
نماز صبح او رنماز عصرکے بعد نماز پڑھنے کی ممانعت 227
بیٹھ کر نماز پڑھنا 227
مغرب میں تین رکعتیں کیوں ہیں 229
صبح کی نماز دوہی رکعت کیوں رہی 229
صوم عاشور اکاسبب 229
پورے رمضان میں آپ ﷺ   نے تراویج کیوں نہ پڑھی 231
حج کی حقیقت 231
داوی محصب میں قیام 232
قربانی کاگوشت تین دن سے زیادہ رکھنے کی ممانعت 232
تعمیر کعبہ اور بعض اعمال حج 233
سوار ہوکر 234
ہجرت 235
آپﷺ کاحجرہ میں دفن ہونا 236
طب ،تاریخ وادب وخطابات وشاعری 237
طب 237
تاریخ 238
ادب 242
خطابت 243
شاعری 244
تعلیم ،افتااو رارشاد 256
تعلیم 256
افتا 265
خلفائے اسلام 265
اکابر صحابہ ﷢ 266
عامہ ممالک اسلامیہ 368
ارشاد 272
جنس نسوانی پر سیدہ عائشہ ؓ کی احسانات 280
عالم نسوانی میں سیدہ عائشہ ؓ کی درجہ 292
سیدہ عائشہ ؓ کی عمران کے نکاح کے وتق کیاتھی 296
سیدہ عائشہ ؓ کی عمر 202
مولانا سیدسلیمان ندوی کے اعتراضات کاجواب 303
صغر سنی کی شادی اور سیدہ عائشہ ؓ 302
اصل مبحث 306
بنائے استدالال 303
ضمنی بحث کی وجہ سے کم توجہی 304
نوسال کی عمر میں نکاح کی روایات 305
تاریخ نکاح کی روایات 305
تاریخ رخصتانہ 206
دوسری روایات سے عمر کاقیاس 206
سیدہ عائشہ ؓ کی ایک اور روایت 308
عمر کے متعلق سیدہ عائشہ ؓ کاخیال 309
صاحب مشکوۃ کاقول 309
حضرت سیدہ صاحب ﷫ کاجواب 311
سیدہ عائشہ ؓ کی عمر 311
مولانا محمدعلی صاحب کے شبہات کاجواب 311
نکاح کے وقت سیدہ عائشہ ؓ کی عمر 313
علامہ عینی ﷫ کابیان 315
علامہ ابن عبدالبر﷫ 316
صاحب مشکوۃ کاقول 317
سیرت عائشہ ؓ سے استناد 319
فریق کے دومویدات 322
سیدناابوبکر ﷜ ک ےارادہ ہجرت کے واقعہ سے استدلال 323
پہلا طریقہ 323
تسلیم کرکے جواب 328
دوسراعام طریقہ 336
سورۃ نجم اور سورۃ قمر کے نزول سے استدلال 336
عرب میں نکاح صغیر کارواج 339
خلاصہ بحث 341

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam ادب تراجم حدیث زبان شعر محدثین

صحیح مسلم شریف جلد پنجم

صحیح مسلم شریف جلد پنجم

 

مصنف : امام مسلم بن الحجاج

 

صفحات: 408

 

صحیح مسلم امام مسلم کی وہ مہتم بالشان تصنیف ہے ،جو صحاح ستہ میں سے ایک اور صحیح بخاری کے بعد سب سے صحیح ترین کتاب  ہے۔اس کی تمام روایات صحیح درجہ کی ہیں اور اس میں کوئی بھی روایت ضعیف یا موضوع نہیں ہے۔امام مسلم نے اس کتاب کو کئی لاکھ احادیث نبویہ کے مجموعہ سے منتخب فرما کر بڑی جانفشانی اور محنت سے مرتب فرمایا ہے۔اس کے بارے میں وہ خود فرماتے ہیں کہ میں نے ہر صحیح حدیث اپنی کتاب میں بیان نہیں کی بلکہ میں نےاس کتاب میں صرف وہ حدیث بیان کی ہے کہ جس کی صحت پر محدثین کا اجماع ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج چہار دانگ عالم میں ’صحیح مسلم‘ پوری آب وتاب کے کےساتھ جلوہ گر ہے۔ صحیح مسلم کا یہ طبع   کمپیوٹرائزڈچھ جلدوں اور علامہ وحید الزماں کے ترجمے پر مشتمل ہے،جسے خالد احسان پبلشرز لاہور نے شائع کیا ہے۔اس نسخے میں تمام احادیث کو نئے سرے سے کمپوز کیا گیا ہے اور راوی حدیث کے متن حدیث کا مرکزی حصہ الگ فونٹ میں لکھا گیا ہے تاکہ فرمان نبوی کا حصہ نمایاں ہو جائے۔تمام احادیث کی عالمی معیار کے مطابق نمبرنگ کی گئی ہےتاکہ قارئین کو حوالہ تلاش کرنے میں آسانی رہے۔عربی اعراب کی درستگی کے ساتھ ساتھ بعض جگہوں پر اردو زبان کے پرانے الفاظ کو جدید الفاظ میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔بارگاہ الہی میں دعا ہے کہ وہ مولف ،مترجم ،اورناشر  کی ان خدمات کو قبول فرمائے اور تمام مسلمانوں کو احادیث نبویہ پر عمل کرنے کی توفیق عطافرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
کتاب الجہاد 11
امام امیروں کولڑائی پر کیونکر بھیجے اور ان کو لڑائی کے طریقے کیونکر بتلا دے 12
عہد شکنی حرام ہے 14
لڑائی میں عورتوں اور بچوں کو مارنے کی ممانعت 18
کافروں کےدرخت کاٹنا اورجلانا درست ہے 19
اس امت کے لیے خاص لوٹ کا حلال ہونا 19
لوٹ کے بیان میں 21
قاتل کو مقتول کا سامان دلانا 21
غنیمت کامال کیونکر تقسیم ہو گا 39
قیدی کو باندھنا اور بند کرنا 42
یہودیوں کوملک حجاز سے نکال دیا 44
درا لحرب 51
جنگ حنین کا بیان 57
طائف کی لڑائی کا بین 62
بدر کی لڑائی کا بیان 62
مکہ کے فتح ہونے کا بیان 63
صلح حدیبیہ کا بیان 68
اقرار کاپورا کرنا 73
جنگ خندق کابیان 74
جنگ احد کا بیان 76
کتاب امارت
خلیفہ قریش میں سے ہونا چاہیے 113
خلیفہ بنانا اور نہ بنانا 116
امام مسلمانوں کی ڈھال ہے 135
جب دو خلیفہ سے بیعت ہو 143
اچھے اوربرے حاکموں کا بیان 144
عورتوں کیونکر بیعت کریں 149
گھوڑ دوڑ کا بیان 152
گھوڑوں کی فضیلت 153
اللہ کی راہ میں جہاد کرنا 154
شہیدوں کی روحین جنت میں ہیں 160
مجاہدین کی عورتوں کی حرمت کا بیان 166
شہید کے لیے جنت ہونا 167
کتاب شکار اور ذبیحوں کے بیان میں ۔ الخ
سدھائے ہوئے کتوں سے شکار کرنے کا بیان 185
دریا کے مردے کا مباح ہونا 191
شہری گدھوں کا گوشت حرام ہے 194
گوہ کا گوشت حلال ہے 197
ٹڈی کھانا درست ہے 202
خرگوشت حلال ہے 202
کتاب قربانیوں کے بیان میں 206
قربانیوں کی عمر کا بیان 210
قربانی اپنےہاتھ سے کرنا مستحب ہے 212
ذبح ہر جیز سے بہتر ہے الخ 213
فرع اور عتبر کا بیان 218
کتاب شرابون کے بیان میں
خمر کی حرمت کا بیان 222
شراب کا سرکہ بنانا حرام ہے 227
کھجور کی شراب ملاکر بھگونا مکروہ ہے 228
دودھ پینے کابیان 243
کھڑے ہوکر پانی پینے کا بیان 247
کھانے کا آداب کا بیان 253
شوربے اور کدو کا باین 263
کھجور کے ساتھ لکڑی کھانا 264
مدینہ کی کھجور کی فضیلت 266
کھمبی کی فضیلت الخ 267
راک کے پھل کی فضیلت 268
سرکہ کی فضیلت 268
لہسن کا کھانا درست ہے 269
مہمان کی خاطر داری کرنا چاہیے 271
کتاب لباس میں
اور زینت کے بیان میں 280
چاندی اور سونے کے استعمال کا بیان 280
یمن کی چادر وں کی فضیلت 291
سونے کی انگوٹھی مرد کو حرام ہے 286
وسطی اور اس کے ساتھ والی 299
جوتی پہننا مستحب ہے 300
قزع کی ممانعت 314
راستوں میں بیٹھنے کی ممانعت 314
کتاب ادب کے بیان
ابو القاسم کنیسۃ رکہنے کی ممانعت 320
برے ناموں کا بدل ڈالنا مستحب ہے 324
شہنشاہ نام رکھنے کی حرمت 325
اجازت چاہیے کے بیان میں 330
غیر کے گھر جھانکنا حرام ہے 334
جو نظر اچانک پڑ جائے 335
کتاب سلام کا بیان
سوار پیدل کوسلام کرے 336
یہود و نصاری کو خود سلام نہ کرے 338
بچوں کو سلام کرنا مستحب ہے 340
ہیجڑا اجنبی عورت کے پاس نہ جائے 342
باب جادو کے بیان میں 351
زہر کا بیان 353
بیمار پر منتر پڑھنا 353
جذامی سے پرہیز کرنے کا بیان 378
سانپوں کے مارنے کا بیان 381
گرگٹ کا مارنا مستحب ہے 382
چیونٹی کے مارنے کی ممانعت 387
بلی کے مارنے کی ممانعت 388
کتاب شعر کے بیان میں
چوسر کھیلنا حرام ہے 397
کتاب خواب کا بیان میں 398
رسو ل اللہ ﷺ کے اس قول کا بیان 402
خوابوں کی تعبیر کا بیان 404

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
29.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز