Categories
Islam اسلام اعمال زبان سنت شروحات حدیث علوم حدیث محدثین معاشرت

شرح اربعین نووی

شرح اربعین نووی

 

مصنف : یحییٰ بن شرف النووی

 

صفحات: 186

 

کتاب اللہ اور سنت رسول ﷺدینِ اسلامی کے بنیادی مآخذ ہیں۔ احادیث رسول ﷺ کو محفوظ کرنے کے لیے کئی پہلوؤں اور اعتبارات سے اہل علم  نے خدمات  انجام دیں۔ تدوینِ  حدیث  کا آغاز  عہد نبوی ﷺ سے  ہوا صحابہ وتابعین  کے  دور میں  پروان چڑھا او ر ائمہ محدثین کےدور  میں  خوب پھلا پھولا ۔مختلف  ائمہ  محدثین نے  احادیث  کے کئی مجموعے مرتب کئے او رپھر بعدمیں اہل علم  نے ان  مجموعات کے اختصار اور شروح  ،تحقیق وتخریج او رحواشی کا کام کیا۔مجموعاتِ حدیث میں اربعین نویسی، علوم حدیث کی علمی دلچسپیوں کا ایک مستقل باب ہے ۔عبداللہ بن مبارک﷫ وہ پہلے محدث ہیں جنہوں نے اس فن پر پہلی اربعین مرتب کرنے کی سعادت حاصل کی ۔بعد ازاں علم حدیث ،حفاظت حدیث، حفظ حدیث اورعمل بالحدیث کی علمی او رعملی ترغیبات نے اربعین نویسی کو ایک مستقل شعبۂ حدیث بنادیا۔ اس ضمن میں کی جانے والی کوششوں کے نتیجے میں اربعین کے سینکڑوں مجموعے اصول دین، عبادات، آداب زندگی، زہد وتقویٰ او رخطبات و جہاد جیسے موضوعات پر مرتب ہوتے رہے ۔اس سلسلۂ سعادت میں سے ایک معتبر اور نمایاں نام ابو زکریا یحییٰ بن شرف النووی کا ہے جن کی اربعین اس سلسلے کی سب سے ممتاز تصنیف ہے۔امام نووی نے اپنی اربعین میں اس بات کا التزام کیا ہے کہ تمام تر منتخب احادیث روایت اور سند کے اعتبار سے درست ہوں۔اس کے علاوہ اس امر کی بھی کوشش کی ہے کہ بیشتر احادیث صحیح بخاری اور صحیح مسلم سے ماخوذ ہوں ۔اپنی حسن ترتیب اور مذکورہ امتیازات کے باعث یہ مجموعۂ اربعین عوام وخواص میں قبولیت کا حامل ہے انہی خصائص کی بناپر اہل علم نے اس کی متعدد شروحات، حواشی اور تراجم کیے ہیں ۔عربی زبان میں اربعین نووی کی شروحات کی ایک طویل فہرست ہے ۔ اردوزبان میں بھی  اس کے کئی تراجم وتشریحات پاک وہند میں شائع  ہوچکی ہیں ۔زیر نظر شرح بھی  اسی سلسلے  کی ایک اہم کڑی ہے ۔جس میں احادیث کا ترجمہ  فوائد وتشریح انڈیا  کے جید عالم دین   شیخ  عبد الہادی عبد الخالق مدنی ﷾کی  کاوش ہے۔انہوں نے  آسان فہم انداز میں  بھر پور ترجمانی کی  ہے اورعلمی واصلاحی فوائد تحریر کیے ہیں ۔اس کتاب کی اہم خوبی ہرروایت  کی تخریج کےساتھ ساتھ  صحت وسقم کے اعتبار سے ہر روایت پر محدث العصر حالظ زبیر علی زئی﷫ کا نمایاں  حکم ہے ۔نیز احادیث کے متن کے لیے  دار المہناج بیروت  سے شائع شدہ اربعین نووی کے محقق نسخے  کو اصل قرار دیا گیا ہے ۔ جسے محققین نے  تین  قلمی نسخوں کی روشنی میں مرتب کیا ہے ۔اور اسی طرح فاضل نوجوان  مولانا عبد اللہ یوسف ذہبی﷾ (ایم فل سکالر لاہور انسٹی ٹیوٹ فارسوشل سائنسز) نے  اپنے رفقاء کے ساتھ بڑی محنت وجانفشانی سے اس کتاب کو خوب سے خوب تر بنانے کے لیے  ہر ممکن کوشش کی ہے ۔جس سے اس کتاب کی افادیت میں مزید اضافہ ہوگیا ہے ۔ اللہ تعالیٰ اس کتاب کو طباعت کے  لیے تیار کرنے والے  تمام احباب کوجزائے خیر عطا فرمائے  ، ان کی دین ِاسلام کی اشاعت  وترویج کے لیے محنتوں کوقبول فرمائے  اور اس کتاب کو  عوام وخواص کی اصلاح کاذریعہ بنائے (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 7
امام نووی  کے حالات زندگی 9
پیش لفظ از مترجم 18
نیک کی اہمیت 25
دین کے تین مراتب اسلام ، ایمان اور احسان 29
ارکان اسلام 34
تخلیق انسانی کے مراحل اور انجام آخرت 37
بدعت کی مذمت 41
حلال و حرام اور اصلاح قلب 43
دین خیر خواہی کا نام ہے 46
مسلمان کے جان و مال کا تحفظ 50
اطاعت رسول اور کثرت سوال کی ممانعت 53
حلال روزی کی اہمیت 56
شبہات سے اجتناب 60
غیر متعلق امور سے اجتناب 62
اخوت اسلامی 64
حرمت خون مسلم 66
ایمان کے بعض خصائل 71
غصے کی ممانعت 75
ہر کام میں احسان کا حکم 78
تقویٰ اور حسن اخلاق 80
اللہ کی حفاظت اور نصرت کے ذرائع 84
حیا ایمان کا جز ہے 91
استقامت فی الدین 93
جنت کا راستہ 96
چند اعمال صالحہ کے فضائل 99
حرمت ظلم اور حقیقت توحید 104
صدقہ اور اس کی مختلف صورتیں 110
ہر نیکی صدقہ ہے 114
نیکی اور گناہ کی پہچان 117
اتباع سنت 120
خیر کے دروازے 126
حدود الٰہی کی پابندی ضروری ہے 133
اللہ اور لوگوں کی محبت حاصل کرنے کا طریقہ 136
ضرر رسانی کی ممانعت 139
دعویٰ کیسے ثابت ہوتا ہے 141
برائی کے خاتمے کی کوشش 143
اخوت اسلامی کے تقاضے 146
آداب معاشرت اور طلب علم کی فضیلت 152
اللہ تعالیٰ کا فضل و کرم 156
تقرب الٰہی اور اس کے حصول کا ذریعہ 160
خطا نسیان اور جبر کی معافی 164
دنیا کی بے ثباتی 166
اطاعت رسول 169
توبہ و استغفار کی فضیلت 171
اربعین نووی میں جن کتب سے احادیث لی گئی ہیں 179
اربعین نووی میں صحابہ کرام ؓ کی مرویات 180
اطراف الحدیث 182

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam تاریخ زبان شروحات حدیث علماء

شروح صحیح بخاری

شروح صحیح بخاری

 

مصنف : غزالہ حامد

 

صفحات: 171

 

صحیح بخاری (عربی :الجامع المسند الصحيح المختصر من أمور رسول الله صلى الله عليہ وسلم وسننہ وأيامہ:مختصر نام الجامع الصحيح ) یا عام طور سے البخاری یا صحیح بخاری شریف بھی کہا جاتا ہے۔ محمد بن اسماعیل بخاری کا مرتب کردہ شہرہ آفاق مجموعہ احادیث ہے جو صحاح ستہ کی چھ مشہور کتابوں میں سے ایک ہے۔ اکثر سنی مسلمانوں کے نزدیک یہ مجموعہاحادیث روئے زمین پر قرآن کے بعد سب سے مستند کتاب ہے۔ ابن الصلاح کے مطابق صحیح بخاری میں احادیث کی کل تعداد 9086 ہے۔ یہ تعداد ان احادیث کو شامل کر کے ہے جو ایک سے زیادہ مرتبہ وارد ہوئی ہیں۔ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ اگر ایک سے زیادہ تعداد میں وارد احادیث کو اگر ایک ہی تسلیم کیا جائے تو احادیث کی تعداد 2761 رہ جاتی ہے۔یہی وجہ ہےکہ علماء کا اس بات پر اتفاق ہے کہ   اصح  الکتب بعد کتاب الله صحیح البخاری بے شماراہل علم  اور ائمہ  حدیث  ننے   مختلف انداز میں  صحیح بخاری کی شروحات  لکھی ہیں  ان میں  فتح الباری از ابن حافظ ابن حجر عسقلانی ﷫ کو  امتیازی مقام   حاصل  ہے  ۔  زیر نظر   ’’شروح صحیح بخاری‘‘ غزالہ حامدبنت پروفیسر عبد القیوم مؤلفہ نے  اس  میں  فتح الباری ،ارشاد الساری ،فیض الباری ،انوار الباری، لامع الدراریاور فضل الباری سے استفادہ کرتے ہوئے اس کتاب کو چار ابواب میں منقسم کیا ہے۔ پہلا باب تعارف حدیث پر مشتمل، دوسرا باب امام المحدثین امام بخاری کے حالات پر مبنی، تیسرا باب الجامع الصحیح اور چوتھا باب شروح صحیح بخاری پر مشتمل ہے گویا کہ    یہ  کتاب طالبان علوم ِنبوت کےلیے  بیش قیمت  علمی  تحفہ ہے ۔  اللہ  تعالی فاضلہ مؤلفہ کی اس عظیم  کاوش کو قبول فرمائے۔  (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
گزارش احوال واقعی 25
پہلاباب
تعارف حدیث 27
حدیث کی شرعی اہمیت 30
قرآن اورتمسک بالسنہ 30
سنت کی اہمیت زبان پیغمبرؐمیں 33
سنت کی اہمیت علمائےحدیث کےنزدیک 35
جمع وتدوین حدیث 35
عہدنبوی میں کتابت حدیث 35
تاریخی دستاویزات 37
عہدنبوت کےمکتوبہ صحیفے 38
صحیفہ سعدبن عبادہؓ 38
صحیفہ سمرہ بن جندبؓ 38
الصحیفہ الصازقہ 39
صحیفہ عبداللہ بن عباسؓ 39
صحیفہ ابوہریرہؓ ہمام بن منبہ کےلےی 39
عہدتابعین وتبع تابعین 40
حضرت قتادہؓ 40
امام زہریؓ 40
محدثین کااہتمام 40
امام مالک 40
عبداللہ بن مارک 41
امام وکیع 41
سفیان ثوری 41
امام احمدبن حنبل 41
امام بخاری 42
دوسراباب
امام بخاری کےحالات زندگی 43
نام ونسب 45
خاندان 46
ولادت 47
تربیت وتعلیم 48
شیوخ واساتذہ 50
محمدبن سلام بیکندی 50
عبداللہ بن محمدمسندی 50
ابراہیم بن الاشفث 50
طلب علم 52
علل حدیث کی شناخت میں کمال 54
اخلاق وعادات 58
ذوق عبادت 60
اتباع سنت 61
سلاطین اورامراءکی مخالفت سےپرہیز 61
امام بخاریکی شہرت 62
حدیث مقلوب کی بحث 63
درس وافتا 64
وفات 66
تصانیف امام بخاری﷫
الجامع الصحیح 69
التاریخ الکبیرفی تاریخ روات واخبارم 69
التاریخ الصغیر 70
کتاب الخلق افعال العباد 71
کتاب الضعفاءالصغیر 71
کتاب الکنی 72
کتاب الادب المفرد 72
تنویرالعینین پرفیع الیدین فی الصلوۃ 73
خیرالکلام فی القراءۃ خلف الامام 73
مخطوطات
التاریخ الاوسط 73
کتاب الضعفاءوالکبیر 74
المسندالکبیر۔التفسیرالکبیر 74
اسامی الصحابہؓ 74
الجماع الصغیرفی الحدیث 74
نایاب تصنیفات
الجامع الکبیر 75
کتاب الوحدان 75
کتاب المبسوط 75
کتب العلل 76
کتاب الفوائد 76
برالوالدین 76
کتاب الاشربہ 76
قضایاالصحابۃ والتابعین 76
کتاب الرقاق 77
تیسراباب
الجامع الصحیح 79
صحیح بخاری کی مقبولیت واہمیت 81
تالیف صحیح بخاری 84
وجہ تالیف 84
مدت وکیفیت تالف 86
عنوان کتاب 88
تراجم ابواب 90
تراجم ابواب سےمتعلق مستقل تصانیف 90
ترتیب صحیح بخاری 92
شروط صحیح بخاری 93
صحیح بخاری کی صحیح مسلم پرترجیح اورفضیلت 94

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam تاریخ زبان شروحات حدیث علماء

شروح صحیح بخاری ( جدید ایڈیشن )

شروح صحیح بخاری ( جدید ایڈیشن )

 

مصنف : غزالہ حامد

 

صفحات: 178

 

امام بخاری ﷫ کی شخصیت اور ان کی صحیح بخاری کسی تعارف کی محتاج نہیں سولہ سال کے طویل عرصہ میں امام بخاری نے 6 لاکھ احادیث سے اس کا انتخاب کیا اور اس کتاب کے ابواب کی ترتیب روضۃ من ریاض الجنۃ میں بیٹھ کر فرمائی اور اس میں صرف صحیح احادیث کو شامل کیا ۔یہی وجہ ہےکہ علماء کا اس بات پر اتفاق ہے کہ اصح الکتب بعد کتاب الله صحیح البخاری بے شماراہل علم اور ائمہ حدیث ننے مختلف انداز میں صحیح بخاری کی شروحات لکھی ہیں ان میں فتح الباری از ابن حافظ ابن حجر عسقلانی ﷫ کو امتیازی مقام حاصل ہے ۔ زیر تبصرہ کتاب ’’ شروح صحیح بخاری‘‘ پنجاب یونورسٹی سے محترمہ غزالہ بٹ (ایم فل اسلامیات) کا مقالہ ہے۔ جس میں صحیح بخاری کی تقریبا دو سو سے زائد شروح کا سراغ لگا کر کام کیا گیا ہے۔ اس مقالے کا پہلا باب حدیث کی فضیلت واہمیت پر مبنی ہے۔دوسرےباب میں امام بخاری کی حالات زندگی کو بیان کیا ہے۔تیسرے باب میں صحیح بخاری کی افادیت کو بیان کیا ہے۔ چوتھے باب میں شروح صحیح بخاری کو بیان کیا ہے۔گویا کہ کے صاحب تالیف اور ان کے رفقاء نے نہایت دیانت اور استقامت اور باریک بینی سے سرانجام دیاہے ۔اللہ تعالیٰ کتاب کی تیاری و طباعت میں شامل تمام احباب کی کاوشوں کو قبول فرمائے۔ آمین۔

 

عناوین صفحہ نمبر
گزارش احوال واقعی 25
پہلا باب
تعارف حدیث 27
حدیث کی شرعی اہمیت 30
قرآن اورتمسک بالسنہ 30
سنت کی اہمیت زبان پیغمبرؐ میں 33
سنت کی اہمیت علمائےحدیث کےنزدیک 35
جمع وتدوین حدیث 35
عہدنبوی میں کتابت حدیث 35
تاریخی دستاویزات 37
عہدنبوت کےمکتوبہ صحیفے 38
صحیفہ سعدبن عبادہؓ 38
صحیفہ سمرہ بن جندبؓ 38
صحیفہ جابربن عبداللہؓ 39
الصیحفہ الصدیقہ 39
صحیفہ عبداللہ بن عباسؓ 39
صحیفہ ابوہریرہؓ ہمام بن منبہ کےلیے 39
عہدتابعین وتبع تابعین 40
حضرت قتادہؓ 40
امام زہری 40
محدثین کااہتمام 40
امام مالک 40
عبداللہ بن مبارک 41
امام وکیع 41
سفیان ثوری 41
امام احمدبن حنبل 41
امام بخاری 42
دوسراباب
امام بخاری کےحالات زندگی 43
نام ونسب 45
خاندان 46
ولادت 47
تربیت وتعلیم 50
شیوخ واساتذہ 50
محمدبن سلام بیکندی 50
عبداللہ بن محمدمسندی 50
ابراہیم بن الاشعث 50
طلب علم 52
علل حدیث کی شناخت میں کمال 54
جرح روات میں احتیاط 57
اخلاق وعادات 58
ذوق عبادت 60
اتباع سنت 61
سلاطین اورامراء کی مخالفت سےپرہیز 61
امام بخاری کی شہرت 62
حدیث مقلوب کی بحث 63
درس وافتا 64
وفات 66
تصانیف امام بخاری
الجامع الصحیح 69
التاریخ الکبیرفی تاریخ روات واخبارہم 69
التاریخ الصغیر 70
کتاب الخلق افعال العباد 71
کتاب الضعفاءالصغیر 71
کتاب الکنی 72
کتاب الادب المفرد 72
تنویرالعینین برفع الدین ف الصلوۃ 73
خیرالکلام فی القراءۃ خلف الامام 73

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
4.1 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam زبان سیرت شروحات حدیث علماء نبوت

شرح حدیث ہرقل سیرت نبوی ﷺ کے آئینےمیں

شرح حدیث ہرقل سیرت نبوی ﷺ کے آئینےمیں

 

مصنف : حافظ محمد گوندلوی

 

صفحات: 309

 

نبی اکرم ﷺ  کے اقوال وافعال او راحوال وآثار کاریکارڈ اصطلاحی زبان میں حدیث کہلاتا ہے جس سے آپ صلی اللہ  علیہ وسلم کی سیرت وسنت کا علم ہوتا ہے ارباب علم نے احادیث کی شروح لکھنےکا اہتمام کیا جس کے دواسالیب ہیں ایک  تو یہ ہے کہ کسی ایک مجموعہ حدیث کی مکمل شرح  کی جائے اوردوسرا یہ ہے کہ کسی ایک حدیث کو لے کر اس کی شرح کی جائے  زیرنظر کتاب ’’شرح حدیث ہرقل‘‘میں صحیح بخاری کی ایک حدیث کی مفصل تشریح کی گئی ہے جو کہ دوجلیل القدر علماء کے افادات پر مبنی ہے حدیث ہرقل میں دراصل نبی اکرم ﷺ  کے کردار کی عظمت او رسیرت کی رفعت کو موضوع بحث بنایا گیا ہے اس سلسلہ میں قابل ذکر نکتہ یہ ہے کہ رسول معظم ﷺ کے کردار اور سیرت کی عظمت کی گواہی دینے والٰے دو سخت ترین  دشمن او رکافر تھے گویا’’ الفضل ماشہدت بہ الاعداء‘‘ یعنی جادو وہ جو سر چڑھ کر بولے ۔فی زمانہ جبکہ بعض بدباطن رسول اکرم ﷺ کی ذات گرامی پر بے بنیاد اعتراضات اچھال رہے ہیں اس کتاب کا مطالعہ بہت ہی مفید ثابت ہوگا۔

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 25
تقدیم حافظ صلاح الدین یوسف حفظہ اللہ 28
مقدمہ از فضیلۃ الشیخ عبداللہ ناصررحمانی حفظہ اللہ 31
خطبہ مسنونہ 35
متن حدیث ہرقل 37
شرح حدیث ہرقل از علامہ عبداللہ ناصررحمانی حفظہ اللہ
موضوع 47
ابتدائے حدیث 47
مکتوب نبوی 48
صلح حدیبیہ 48
صلح حدیبیہ کےفوائد 49
فتح مبین 50
صلح حدیبیہ کےخصائص وامتیازات 50
یہ بیعت کیاتھی ؟ 51
صحابہ کااخلاص 51
نزول سکینت 52
ایمان کی محبت 52
فتح قریب کیاہے؟ 52
صلح حدیبیہ کی برکات 53
صداقت ایمان کی شہادت 53
صحابہ کرام  رضوان اللہ علیہم اجمعین اور خشیت الہیٰ 54
تقوی کامعیار 55
اصل فتح 56
دعوت دین کی وسعت 56
کسی کافرکااسلام قبول کرنا 57
اسامہ بن زید ؓکاواقع 57
کفار کی عہدشکنی 58
صلح حدیبیہ کی اہمیت 59
مکتوب نبوی کااثر 60
ہرقل ایلیاء میں 60
مجلس کاآغاز 61
دعوت دین کےلیے غیر مسلموں کی زبان سیکھنا 61
ایک اہم نقطہ 62
رزق کےخزانے اللہ کےہاتھ میں ہیں 63
ہماری اولادکی بہتری کہاں ہے؟ 64
مکالمہ 64
نسب نامہ 65
ہرقل کی فراست 65
جھوٹ کی مذمت 67
جھوٹ کاخوفناک انجام 68
ہنسی مذاق میں جھوٹ بولنا 69
سچ کی فضیلت 69
غلبے کی اساس 70
عہدجاہلیت میں جھوٹ سےنفرت 71
ہرقل کاپہلا سوال 72
نسب کی اہمیت 72
معیار شرافت 73
برتری کی بنیاد 73
ہرقل کاتجزیہ 74
ہرقل کادوسراسوال 74
ہرقل کاتبصرہ 75
ہرقل کاتیسراسوال 75
ہرقل کاتجزیہ 75
ہرقل کاچوتھاسوال 76
أشراف کامعنی 76
ہرقل کاتبصرہ 76
السابقون الاولون 77
سبقت کی اہمیت 77
غربت اسلام 78
حضرت بلال ؓکی استقامت 78
ضعفاء الناس 79
غریبوں کی برکت 80
غرباء کی قربت 81
غرباء کی فضیلت 82
ضعفاء کی مجالست 82
ہرقل کاپانچواں سوال 83
ہرقل کاتبصرہ 83
دعوت دین میں انبیاء کامنہج 84
غلبہ دین 85
دعوت دین کی اہمیت 86
غلبہ دین کاطریقہ 87
ہرقل کاچھٹاسوال 87
ابو سفیان کاجواب 87
ہرقل کاتجزیہ 88
انشراح ایمان 88
ایمان کی مٹھاس 89
حلاوت ایمان کےاسباب 89
دین حنیف 90
صبغۃ  اللہ 90
مسلمانوں کی زبوں حالی 91
کفار کی نقالی 91
انشراح ایمان کاراستہ 92
حلاوت ایمان کاتیسراسبب 92
رسول ماننے کامعنی 92
حلاوت ایمان میں رکاوٹ 93
قبرمیں اولین امتحان 94
قبرمیں پہلا سوال 94
قبرمیں دوسراسوال 95
قبرمیں تیسراسوال 95
میزان حق 95
نتیجہ 96
محور حیات 96
ہمیں یہ حلاوت کیوں حاصل نہیں ہوتی؟ 97
حلاوت ایمان کی علامت 98
صحابہ کرام میں حلاوت ایمان کےاثرات 98
ہماراطرز عمل 99
ہرقل کاساتواں سوال 100
ہرقل کاتبصرہ 101
دھوکہ کون دیتاہے؟ 101
چہرہ نبوت کےاوصاف 102
ہرقل کاآٹھواں سوال 103
ابو سفیان کاجواب 103
ابو سفیان کےجواب کاتجزیہ 103
ہرقل کاتبصر ہ 104
انبیاء کی آزمائش 104
آزمائش کامعیار 105
آزمائش مغفرت کاذریعہ ہے 105
رسول اللہ ﷺ پرآزمائش 105
حضرت خدیجہ ؓکی خدمات او رجنت میں درجات 107
اہل طائف کودعوت 109
اہل طائف کاجواب 109
نبی رحمت 109
نبی کریم ﷺ کاتاریخی جملہ 110
رسول اللہ ﷺ پرسب سےبھاری آزمائش 111
مطعم بن عدی کےاحسان کابدلہ 112
کفار مردار ہیں 113
دعوت میں استقامت 114
ہجرت 115
ہجرت کی فضیلت 115
ہجرت حبشہ کی فضیلت 116
اہل حبشہ کےلیے دوہجرتیں 117
آزمائشوں پرصبر 118
صبرعلی اقداراللہ 118
سفلی علوم کفرہیں 119
سورہ فاتحہ بہترین د م ہے 119
انجام کارانبیاء کو کامرانی ملتی ہے 120
صبر کامقام 120
تمحیص 120
کثرت  تعدادکاکوئی فائدہ نہیں 121
مخلص ساتھی 122
شیخ الاسلام ابن تیمیہ ؒ کی استقامت 122
درس استقامت 122
ہرقل کانواں سوال 123
نبی ہی حاکم ہوتاہے 123
ابو سفیان کاجواب اور نبی ؑ کی دعوت 124
کلمہ کامعنی 126
صرف ایک معبود؟ 126
کلمے کےدومعنی 127
کلمےکافہم 127
نبی ؑ کی تعلیم 128
تعلیم نبوی کےاثرات 128
ہرقل کاتبصرہ 129
دوکافروں کافہم 129

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام حلال و حرام زبان سنت سود شروحات حدیث علوم حدیث محدثین معاملات

شرح اربعین نووی 40 احادیث ) عبد المجید سوہدروی )

شرح اربعین نووی 40 احادیث ) عبد المجید سوہدروی )

 

مصنف : عبد المجید سوہدروی

 

صفحات: 105

 

کتاب اللہ اور سنت رسول ﷺدینِ اسلامی کے بنیادی مآخذ ہیں۔ احادیث رسول ﷺ کو محفوظ کرنے کے لیے کئی پہلوؤں اور اعتبارات سے اہل علم نے خدمات انجام دیں۔ تدوینِ حدیث کا آغاز عہد نبوی ﷺ سے ہوا صحابہ وتابعین کے دور میں پروان چڑھا او ر ائمہ محدثین کےدور میں خوب پھلا پھولا ۔مختلف ائمہ محدثین نے احادیث کے کئی مجموعے مرتب کئے او رپھر بعدمیں اہل علم نے ان مجموعات کے اختصار اور شروح ،تحقیق وتخریج او رحواشی کا کام کیا۔مجموعاتِ حدیث میں اربعین نویسی، علوم حدیث کی علمی دلچسپیوں کا ایک مستقل باب ہے ۔عبداللہ بن مبارک﷫ وہ پہلے محدث ہیں جنہوں نے اس فن پر پہلی اربعین مرتب کرنے کی سعادت حاصل کی ۔بعد ازاں علم حدیث ،حفاظت حدیث، حفظ حدیث اورعمل بالحدیث کی علمی او رعملی ترغیبات نے اربعین نویسی کو ایک مستقل شعبۂ حدیث بنادیا۔ اس ضمن میں کی جانے والی کوششوں کے نتیجے میں اربعین کے سینکڑوں مجموعے اصول دین، عبادات، آداب زندگی، زہد وتقویٰ او رخطبات و جہاد جیسے موضوعات پر مرتب ہوتے رہے ۔اس سلسلۂ سعادت میں سے ایک معتبر اور نمایاں نام ابو زکریا یحییٰ بن شرف النووی کا ہے جن کی اربعین اس سلسلے کی سب سے ممتاز تصنیف ہے۔امام نووی نے اپنی اربعین میں اس بات کا التزام کیا ہے کہ تمام تر منتخب احادیث روایت اور سند کے اعتبار سے درست ہوں۔اس کے علاوہ اس امر کی بھی کوشش کی ہے کہ بیشتر احادیث صحیح بخاری اور صحیح مسلم سے ماخوذ ہوں ۔اپنی حسن ترتیب اور مذکورہ امتیازات کے باعث یہ مجموعۂ اربعین عوام وخواص میں قبولیت کا حامل ہے انہی خصائص کی بناپر اہل علم نے اس کی متعدد شروحات، حواشی اور تراجم کیے ہیں ۔عربی زبان میں اربعین نووی کی شروحات کی ایک طویل فہرست ہے ۔ اردوزبان میں بھی اس کے کئی تراجم وتشریحات پاک وہند میں شائع ہوچکی ہیں زیر تبصرہ کتاب ’’شرح اربعین نووی‘‘ مولانا حکیم عبدالمجید سوہدروی ﷫ کی ہے۔انہوں نے کتبِ احادیث کا ترجمہ کرنے کا آغاز اربعین نووی سے ہی کیا اور ساتھ ہی بڑی آسان ، معاشرتی اوراخلاقی پہلوؤں پر مشتمل اور بہت سے نکات کی حامل شرح لکھی۔ جو پہلی بار 1955ء میں شائع ہوئی۔اس کےبعد اب جناب مولانا محمد نعمان فاروقی صاحب (مدیر مسلم پبلی کیشنز )نےاسے بڑی عمدہ طباعت سے آراستہ کیا ہے۔اپنی افادیت کےباعث یہ کتاب اس قابل ہے کہ اسے خواتین کےمدارس میں عمومی طور پر اور بچوں کے مدارس کی ابتدائی کلاسوں میں اور دینی سکولوں کےنصاب میں شامل کیا جائے ۔جن احباب نےبھی کتاب کوطباعت کےلیےتیار کرنےمیں حصہ لیا ہے اللہ تعالیٰ ان کی کاوشوں کو قبول فرمائے (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 9
پیش لفظ 11
سیرت امام نووی  13
نیت اور ارادے کی اہمیت 15
ایمان ، اسلام اور احسان کیا ہیں 17
ارکان اسلام 22
انسان کی ولادت اور اس کے بعد سعادت یا شقاوت 24
دین میں نئے امور 27
حلال و حرام اور ان کے درمیان مشتبہ معاملات 29
دین خیر خواہی کا نام ہے 32
جہاد و قتال کا ایک مقصد 34
بال کی کھال اتارنے والے سوالوں سے اجتناب 36
حرام کے استعمال سے دعائیں قبول نہیں ہوتیں 38
مشکوک معاملات سے کنارہ کشی 40
اسلام کا حسن 41
دوسرے کے لیے وہی کچھ پسند کریں جو اپنے لیے کرتے ہیں 42
قتل مسلم کی تین وجوہات 44
اللہ اور آخرت پر ایمان کے چند تقاضے 46
غصہ نہ کیا کرو 48
انسان تو کیا حیوانوں کے ساتھ بھی احسان 49
اللہ تعالی کا ڈر اور لوگوں سے اچھا برتاؤ 51
نصیحت نبوی کے گراں مایہ پہلو 53
شرم و حیا کی اہمیت 57
استقامت 59
نماز ، روزے کا اہتمام اور حلال و حرام کی تمیز 61
صفائی کی اہمیت اور کلمات کی فضیلت 63
جامع ترین حدیث قدسی 66
نیکی میں مقابلہ 69
صدقے کے مفہوم کی وسعت 72
نیکی اور برائی کی تعریف 74
نبی کریم ﷺ کا ایک وعظ 76
جہنم سے نجات اور جنت میں داخلہ مگر کیسے 79
احکام و حدود کی پاسداری 82
اللہ کا محبوب اور لوگوں کا پیارا بننے کے لیے 84
نقصان نہ اپنا نہ دوسروں کا 86
دلیل کے بغیر دعوے بے سود ہیں 87
برائی سے روکنے کے تین مراتب 88
مسلم معاشرے کے چند ضابطے 90
درد دل اور جذبہ حصول علم 93
اعمال نامے میں نیکی اور برائی لکھنے کا ضابطہ 96
قرب الہٰی کی جستجو 98
بھول چوک اور مجبوری قابل گرفت نہیں 100
جگہ جی لگانے کی دنیا نہیں ہے 101

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام سیرت فقہ محدثین

سیرت بخاری 

سیرت بخاری 

 

مصنف : عبد الرشید عراقی

 

صفحات: 74

 

امام محمد بن اسماعیل بخاری ﷫ کی شخصیت اور ان کی صحیح بخاری محتاجِ تعارف نہیں۔ آپ امیر االمؤمنین فی الحدیث امام المحدثین کے القاب سے ملقب تھے۔ ان کے علم و فضل ، تبحرعلمی اور جامع الکمالات ہونے کا محدثین عظام او رارباب ِسیر نے اعتراف کیا ہے امام بخاری ۱۳ شوال ۱۹۴ھ؁ ، بروز جمعہ بخارا میں پیدا ہوئے۔ دس سال کی عمر ہوئی تو مکتب کا رخ کیا۔ بخارا کے کبار محدثین سے استفادہ کیا۔ جن میں امام محمد بن سلام بیکندی، امام عبداللہ بن محمد بن عبداللہ المسندی، امام محمد بن یوسف بیکندی زیادہ معروف ہیں۔اسی دوران انہوں نے امام عبداللہ بن مبارک امام وکیع بن جراح کی کتابوں کو ازبر کیا اور فقہ اہل الرائے پر پوری دسترس حاصل کر لی۔ طلبِ حدیث کی خاطر حجاز، بصرہ،بغداد شام، مصر، خراسان، مرو بلخ،ہرات،نیشا پور کا سفر کیا ۔ ان کے حفظ و ضبط اور معرفت حدیث کا چرچا ہونے لگا۔ ان کے علمی کارناموںم میں سب سے بڑا کارنامہ صحیح بخاری کی تالیف ہے جس کے بارے میں علمائے اسلام کا متفقہ فیصلہ ہے کہ قرآن کریم کے بعد کتب ِحدیث میں صحیح ترین کتاب صحیح بخاری ہے ۔ فن ِحدیث میں اس کتاب کی نظیر نہیں پائی جاتی آپ نے سولہ سال کے طویل عرصہ میں 6 لاکھ احادیث سے اس کا انتخاب کیا اور اس کتاب کے ابواب کی ترتیب روضۃ من ریاض الجنۃ میں بیٹھ کر فرمائی اور اس میں صرف صحیح احادیث کو شامل کیا ۔امام بخاری ﷫ کی سیر ت پر متعدد اہل علم نے کتب تصنیف کی ہیں لیکن سب سے عمدہ کتاب مولانا عبد السلام مبارکپوری کی تصنیف ”سیرۃ البخاری ” ہے جو کہ کتاب وسنت ویب سائٹ پر موجود ہے ۔ اس کتاب کا عربی ترجمہ ڈاکٹر عبد العلیم بستوی کےقلم سے جامعہ سلفیہ بنارس سے شائع ہوچکا ہے ۔زیر نظر کتاب مشہور ومعروف سیرت نگار مولاناعبدالرشید عراقی ﷾ کی تصنیف ہے جسے انہوں نے تین ابواب میں تقسیم کیا ہے ۔باب اول میں امام بخاری کے حالات زندگی از ولادت تاوفات مختصراً درج کئے ہیں ۔ باب دو م میں ان کے گیارہ مشہور استاتذہ او رسات مشہور تلامذہ کے حالات قلم بند کئے ہیں ۔او رباب سوم میں امام صاحب کی تصانیف اور ان کی لاجواب کتاب ” صحیح بخاری ” پر روشنی ڈالنے کے علاوہ اس باب میں برصغیر پاک وہند کےعلمائے حدیث نے ”صحیح بخاری”کی جو خدمت کی ہے اس کابھی مختصراً ذکر کیا ہے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 10
پیش لفظ 11
باب اول امام محمد بن اسماعیل بخاری 13
نام ونسب 13
ولادت 13
تعلیم و تربیت 14
پہلا سفر 14
رحلت سفر 15
نیشاپور کا سفر 15
قوت حافظہ 15
امام بخاری کی شہرت 16
فضل و کمال 17
شیوخ و معاصرین کا اعتراف 18
اخلاق و عادات 22
سادگی اور قناعت 23
زہد وتقویٰ 23
دور ابتلاء و آزمائش 24
امام بخاری کا مسلک 26
سنن کی پابندی 27
ملفوظات 27
جلا وطنی 27
وفات 28
باب دوم اساتذہ و تلامذہ 30
اساتذہ 30
تلامذہ 38
باب سوم تصانیف 47
قضایا الصحابہ والتابعین 47
التاریخ الکبیر 47
التاریخ الاوسط 47
التاریخ الصغیر 47
الجامع الکبیر 48
خلق الافعال والعباد 48
کتاب الضعفاء والصغیر 48
المسند الکبیر 48
التفسیر الکبیر 48
کتاب الہبہ 48
کتاب الوحدان 49
کتاب العلل 49
الادب المفرد 49
جز رفع الیدین 50
کتاب الرقاق 50
کتاب المناقب 50
الجامع الصحیح البخاری 51
صحیح بخاری کے شروع وحواشی 58
امام بخاری کی دوسری تصانیف 71

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam تراجم حدیث زبان

صحیح مسلم مع مختصر شرح نووی جلد۔3

صحیح مسلم مع مختصر شرح نووی جلد۔3

 

مصنف : امام مسلم بن الحجاج

 

صفحات: 936

 

صحیح مسلم امام مسلم ﷫(204ھ۔261ھ) کی مرتب کردہ شہرہ آفاق مجموعہء احادیث ہے جو کہ صحاح ستہ کی چھ مشہور کتابوں میں سے ایک ہے۔ امام بخاری کی صحیح بخاری کے بعد دوسرے نمبر پر سب سے مستند کتاب ہے۔امام مسلم کا پورا نام ابوالحسین مسلم بن الحجاج بن مسلم القشیری ہے۔ 202ھ میں ایران کے شہر نیشاپور میں پیدا ہوئے اور 261ھ میں نیشاپور میں ہی وفات پائی۔ انہوں نے مستند احادیث جمع کرنے کے لئے عرب علاقوں بشمول عراق، شام اور مصر کا سفر کیا۔ انہوں نے تقریباًتین لاکھ احادیث اکٹھی کیں لیکن ان میں سے صرف7563 احادیث صحیح مسلم میں شامل کیں کیونکہ انہوں نے حدیث کے مستند ہونےکی بہت سخت شرائط رکھی ہوئی تھیں تا کہ کتاب میں صرف اور صرف مستند ترین احادیث جمع ہو سکیں۔ صحیح مسلم کی اہمیت کے پیش نظر صحیح بخاری کی طرح اس کی بہت زیادہ شروحات لکھی گئیں۔ عربی زبان میں لکھی گئی شروحات ِ صحیح مسلم میں امام نوویکی شرح نووی کو امتیازی مقام حاصل ہے ۔پاک وہند میں بھی کئی اہل علم نے عربی واردو زبان میں اس کی شروحات وحواشی لکھے ۔عربی زبان میں نواب صدیق حسن خاںاور اردو میں علامہ وحید الزمان کا ترجمہ قابل ذکر   ہے اورطویل عرصہ سے یہی ترجمہ متداول ہے لیکن اب اس کی زبان کافی پرانی ہوگئی ہے اس لیے ایک عرصے سےیہ ضرورت محسوس کی جارہی ہے تھی کااردو زبان کے جدید اسلوب میں نئے سرے سے کتب ستہ کے ترجمے کرکے شائع کیے جائیں۔ زیر تبصرہ کتاب ’’صحیح مسلم مع مختصر شرح نووی وتخریج‘‘ علامہ وحید الزمان کی ترجمہ شدہ ہے۔لیکن اس میں اس ترجمہ کی قدم اردو کو تسہیل کےساتھ پیش کیا گیا ہے ۔صحیح مسلم کے کئی نسخے بازار میں دستیات ہیں مگر مکتبہ اسلامیہ، لاہور نےاس عظیم کتاب کو منفرد انداز اورامتیازی خوبیوں کےساتھ قارئین کی خدمت میں پیش کرنے کی سعادت حاصل کی ہے۔ یہ نسخہ درج ذیل امتیازات اور خصوصیات سے مزین ہے۔ مختلف نسخوں سےتقابل کے بعدصحیح ترین عبارت نقل کی گئی ہے،آیات کریمہ کی تخریج کا اہتمام کیا گیا ہے،تخریج حدیث اور رقم الحدیث کے ذریعے دیگر کتب احادیث کی طرف رہنمائی کامنفرد کام، مسلسل حدیث نمبر کا انتخاب، ہر حدیث مبارکہ کی مکمل تشریح حدیث کے ساتھ ہی مکمل کی گئی ہے،قارئین کی سہولت کے لیے حدیث کےمتن یعنی آپ ﷺ کے الفاظ کو سند اور دیگر عبارات سے الگ فونٹ کے ذریعے واضح کیا گیا ہے۔ اللہ ناشرین کی اس کاوش کو قبول فرمائے۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
فہرست
مضمون
کتا ب الجہا دوالسیر 9
جن کافروں کو دین کی دعوت پہنچ چکی ہو ان پر بغیر
دعوت دئیے حملہ کرنے کابیان 9
امام امیروں کولڑ ائی پر کیو نکر بھیجے اور ان کو طر یقے
کیو نکر بتلائے 10
معاملہ میں آسانی پیداکرنے اورنفرت کو ترک کرنا 12
عہد شکنی حرام ہے 13
لڑائی میں مکر اور حلیہ درست ہے 14
جنگ کی آرزو کرنا منع ہے اورجنگ کے وقت صبر کرنا 14
دشمن سے ملاقات (جنگ) کے وقت فتح کی دعا مانگنا 15
لڑائی میں عورتوں اور بچوں کے مارنے کی ممانعت 16
روات کو اگر چھا پاماریں توعورتوں اور بچوں کا قتل 16
کافروں کے درخت کاٹنا اور جلانا درست ہے 17
اس امت کے لیے خاص لوٹ کا حلال ہونا 18
لو ٹ کا بیان 19
قا تلو ں کو مقتول کا سامان دلانا 21
قیدیوں کے ذریعے مسلمان قیدیوں کو آزاد کروانا 26
جو مال کافروں کا بغیر لڑائی کے ہاتھ ا ٓئے 27
رسول اللہ ﷺ کا قول کہ جو مال ہم چھو ڑ جائیں
اسکا کو ئی وارث نہیں بلکہ وہ صدقہ ہو تا ہے 31
غنیمت کا مال کیوں کر تقسیم ہو گا 36
فر شتوں کی مدد غزوہ بد ر میں اور مبا ح ہونالوٹ کا 36
قیدیوں کو باند ھنا اور بند کرنا اور اس کو مفت چھوڑ دینا 39
یہو دیوں کو حجاز مقدس سے جلا وطن کردینے کابیان 41
یہود و نصار ی کو جزیرہ عرب سے نکالنے کا بیان 42
جو عہد توڑ ڈالے اس کو مارنا درست ہے اور قلعہ والوں
کو کسی عادل شخص کے فیصلے پر اتارنا درست ہے 42
جہاد میں جلدی کرنا اور دونوں کا م ضروری ہوں تو؟ 45
انصار نے جو مہاجرین کو دیا تھا وہ ان کو واپس ہونا ۔۔۔الخ 46
غنیمت کے مال میں اگر کھانا ہو تو دارالحرب میں ۔۔۔الخ 47
رسول اللہﷺ کے خط کا بیان جو ا ٓپ ﷺ نے
اسلام لانے کے لیے شام کے بادشاہ ہر قل کو لکھا تھا 48
رسول اللہﷺ کے خط کا فر با دشا ہوں کی طرف 53
جنگ حنین کابیان 53
طائف کی لڑائی کابیان 57
بدرکی لڑائی کابیان 58
مکہ کے فتح ہونے کابیان 59
مکہ کے ارد گرد کو بتوں سے پاک کرنے کا بیان 62
فتح (مکہ ) کے بعد (قیامت تک ) کسی قریشی کو باندھ
کر قتل نہ کیے جانے کابیان 63
حد یبیہ میں جو صلح ہو ئی اس کابیان 64
اقرار کو پورا کرنا 68
غزوہ احزاب یعنی جنگ خندق کے بیان میں 69
جنگ احد کابیان 71
جس کو رسول اللہﷺ خود قتل کریں ۔۔الخ 73
رسول اللہ ﷺنے مشرکوں اورمنا فقوں کے ہاتھ
سے جو تکلیف پا ئی اس کا بیان 73
رسول اللہ ﷺ کی دعا اور منا فقین کی تکالیف پر صبر 77
ابوجہل مرد ود کے مارے جانے کابیان 79
کعب بن اشر ف یہود کے سر غنہ کے قتل کابیان 80
خیبر کی لڑائی کابیان 82
غزوہ احزاب یعنی جنگ خندق کابیان 86
ذی قر دوغیر ہ لڑائیوں کا بیان 87
اللہ تعالیٰ کے فرمان ( وھو الذی کف ایدیھم
عنکم ) کےنزول کابیان 97
عورتوں کا مر دوں کے ساتھ لڑائی میں شریک ہونا 97
جو عورتوں جہاد میں شریک ہوں ان کو انعام ملے گا
اور حصہ نہیں ملے گا اور بچوں کوقتل کرنا منع ہے 99
رسول اللہ ﷺ نے کتنے جہاد کیے 102
ذات الر قا ع کےجہا کابیان 104
کافر سے جاہد میں مد د لینا منع ہے مگر ضرورت سے 104
کتاب امارت کےبیان میں 106
خلیفہ قریش میں سے ہونا چاہیے 106
خلفیہ بنا نا اور نہ بنانا 109
امارت کی درخواست اور حرص کرنا منع ہے 111
بےضرورت حاکم بننا اچھا منع نہیں ہے 113
حاکم عادل کی فضیلت اور حاکم ظالم کی برائی 114
غنیمت میں چوری کرنا کیساگنا ہ ہے 117
جو شخص سر کاری کام پر مقر ر ہو تحفہ نہ لے 119
بادشاہ یا حاکم یا امام کی اطاعت واجب ہے ۔۔الخ 121
امام مسلمانوں کی سپر ہے 127
جس خلیفہ سے پہلے بیعت وہ اسی کو قائم رکھنا چاہیے 127
حاکموں کےظلم اور بے جاتر جیح پر صبر کرنے کابیان 129
اُمر ا کی اطاعت کا حکم اگر چہ وہ حق تلفی ہی کریں 130
فتنہ اور فساد کے وقت بلکہ ہر وقت مسلمانو ں کی
جماعت کے ساتھ رہنا 130
جو شخص مسلمانو ں کے اتفاق میں خلل ڈالے 134
جب دو خلیفوں سے بیعت ہو 135

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
31.2 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam ایصال ثواب تراجم حدیث زبان نماز

صحیح مسلم مع مختصر شرح نووی جلد۔2

صحیح مسلم مع مختصر شرح نووی جلد۔2

 

مصنف : امام مسلم بن الحجاج

 

صفحات: 730

 

صحیح مسلم امام مسلم ﷫(204ھ۔261ھ) کی مرتب کردہ شہرہ آفاق مجموعہء احادیث ہے جو کہ صحاح ستہ کی چھ مشہور کتابوں میں سے ایک ہے۔ امام بخاری کی صحیح بخاری کے بعد دوسرے نمبر پر سب سے مستند کتاب ہے۔امام مسلم کا پورا نام ابوالحسین مسلم بن الحجاج بن مسلم القشیری ہے۔ 202ھ میں ایران کے شہر نیشاپور میں پیدا ہوئے اور 261ھ میں نیشاپور میں ہی وفات پائی۔ انہوں نے مستند احادیث جمع کرنے کے لئے عرب علاقوں بشمول عراق، شام اور مصر کا سفر کیا۔ انہوں نے تقریباًتین لاکھ احادیث اکٹھی کیں لیکن ان میں سے صرف7563 احادیث صحیح مسلم میں شامل کیں کیونکہ انہوں نے حدیث کے مستند ہونےکی بہت سخت شرائط رکھی ہوئی تھیں تا کہ کتاب میں صرف اور صرف مستند ترین احادیث جمع ہو سکیں۔ صحیح مسلم کی اہمیت کے پیش نظر صحیح بخاری کی طرح اس کی بہت زیادہ شروحات لکھی گئیں۔ عربی زبان میں لکھی گئی شروحات ِ صحیح مسلم میں امام نوویکی شرح نووی کو امتیازی مقام حاصل ہے ۔پاک وہند میں بھی کئی اہل علم نے عربی واردو زبان میں اس کی شروحات وحواشی لکھے ۔عربی زبان میں نواب صدیق حسن خاںاور اردو میں علامہ وحید الزمان کا ترجمہ قابل ذکر   ہے اورطویل عرصہ سے یہی ترجمہ متداول ہے لیکن اب اس کی زبان کافی پرانی ہوگئی ہے اس لیے ایک عرصے سےیہ ضرورت محسوس کی جارہی ہے تھی کااردو زبان کے جدید اسلوب میں نئے سرے سے کتب ستہ کے ترجمے کرکے شائع کیے جائیں۔ زیر تبصرہ کتاب ’’صحیح مسلم مع مختصر شرح نووی وتخریج‘‘ علامہ وحید الزمان کی ترجمہ شدہ ہے۔لیکن اس میں اس ترجمہ کی قدم اردو کو تسہیل کےساتھ پیش کیا گیا ہے ۔صحیح مسلم کے کئی نسخے بازار میں دستیات ہیں مگر مکتبہ اسلامیہ، لاہور نےاس عظیم کتاب کو منفرد انداز اورامتیازی خوبیوں کےساتھ قارئین کی خدمت میں پیش کرنے کی سعادت حاصل کی ہے۔ یہ نسخہ درج ذیل امتیازات اور خصوصیات سے مزین ہے۔ مختلف نسخوں سےتقابل کے بعدصحیح ترین عبارت نقل کی گئی ہے،آیات کریمہ کی تخریج کا اہتمام کیا گیا ہے،تخریج حدیث اور رقم الحدیث کے ذریعے دیگر کتب احادیث کی طرف رہنمائی کامنفرد کام، مسلسل حدیث نمبر کا انتخاب، ہر حدیث مبارکہ کی مکمل تشریح حدیث کے ساتھ ہی مکمل کی گئی ہے،قارئین کی سہولت کے لیے حدیث کےمتن یعنی آپ ﷺ کے الفاظ کو سند اور دیگر عبارات سے الگ فونٹ کے ذریعے واضح کیا گیا ہے۔ اللہ ناشرین کی اس کاوش کو قبول فرمائے۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ
فہرست
مضمون
زکوٰ ۃ کے مسائل 9
پانچ اوسق سےکم میں ز کو ۃ نہیں 9
عشر اور نصف کا بیان 11
غلام اور گھوڑے پر زکوٰۃ نہیں 12
زکوٰ ۃ کی تقدیم اور اس سے روکنا 13
مسلما نو ں پر کجھور اور جو میں سے صدقہ فطر کابیان 14
عید الفطر کی نماز ادا کرنے سے پہلے صدقہ ادا کیا
کیا جائے 17
زکوٰۃ نہ دینے کا عذاب 17
زکوٰۃ کے تحصیلداروں کو اراضی کرنے بیان 23
زکو ٰ ۃ نہ دینے والوں کو سخت سز ا دیئے جانے کابیان 24
صدقہ کو تر غیب دینا 25
مال کو خزانہ بنانے والوں کے بارے میں ان کو
ڈانٹ 27
سخاوت کی فضیلت کا بیان 29
اہل و عیال پر خرچ کرنے کابیان 30
پہلے اپنی ذات پر ،پھر اپنے گھر والوں پر ، پھر قرابت
والوں پر خرچ کرنے کابیان 31
والدین اور دیگر اقربا پر خرچ کرنے کی فضیلت اگرچہ
وہ مشر ک ہوں 31
میت کے ایصال ثواب کابیان 35
ہر نیکی صدقہ ہے 36
سخی اور بخیل کے بارے میں 38
صدقہ قبول کرنے والا نہ پانے سے پہلے پہلے صدقہ
کرنے کی تر غیب کابیان 38
پاک کمائی سے صدقہ کا قبو ل ہونا اور اس کا پر ورش
پانا 40
ایک کجھور یا ایک کام کی بات بھی صدقہ ہے اور دوزخ
سے آ ڑ کر نے والا ہے 41
حمال (قلی وغیرہ) مزدوروں کو بھی صدقہ کرنا
چاہیے اور تھوڑی مقدار میں صدقہ کرنے والوں کی
اہانت کر نے کو سختی سے منع فرمایا 45
دودھ والا جانور مفت دینے کی فضیلت 45
سخی اور بخیل کی مثال 46
صدقہ دینے والے کو ثواب ہے اگر چہ صدقہ اس کے
حقدار نہ پہنچے 47
خازن ،امانتدار اور عورت کو صدقہ کا ثواب ملنا
جب وہ اپنے شوہرکی اجازت سے خواہ صاف
اجازت ہو یا دستور کی راہ سے اجازت ہو صدقہ
دے 48
غلام کا اپنے مالک کے مال سے خر چ کرنا 49
صدقہ سے اور چیز ملانے کی فضیلت کا بیان 51
خر چ کرنے کے فضیلت اور گن گن کر رکھنے کی
کراہت 52
تھوڑے صدقہ کی فضیلت اور اس کا حقیر نہ جاننے کا
بیان 53
صدقہ حالی اور تندرستی میں صدقہ کرنے کی فضیلت 54
صدقہ دینا ا فضل ہے لینا افضل نہیں 55
سوال کرنے کی ممانعت 56
مسکین کون ہے ؟ 57
لوگوں سے سوال کرنے کی کراہت 58
کس شخص کےلیے سوال کر نا جائز ہے ؟ 60
بغیر سوال اور خواہش کے لینے کا بیان 60
حرص دنیا کی مذمت 62
اگر ا ٓدم کے بیٹے کے پاس دو وادیا ں مال کی ہوں تو
وہ تیسری چاہے گا 63
قنا عت کی فضیلت اور اس کی تر غیب کابیان 64
دنیا کی کشادگی اور زینت پر مغرور مت ہو 64
صبر و قنا عت کی فضیلت 67
کفایت شعاری اور قناعت پسندی کابیان 67
مو لفتہ القلوب اور جسے اگ نہ دیاجائے تو اسکے ایمان کا
خوف ہو اسے دینے اور جو اپنی جہالت کی وجہ سے سختی
سے سوال کر ے اور خوارج اور ان کے احکا ما ت کا
بیان 67
ضیعف الایمان لوگوں کو دینے کابیا 69
قوع الایمان لوگو ں کی صبر کی تلقین 70
خوارج اور ان کی صفات کا ذکر 77
خوارج کے قتل پر ابھارنے کے بارے میں 84
خوارج کا ساری مخلوق سے بد تر ہونے کابیان 87
رسول اللہ ﷺ اور آپ ﷺ کی اولاد بنی ہاشم و
بنی عبدالمطلب پر زکوٰۃ حرام ہے 88
آل نبی ﷺ کا صدقہ کو استعمال نہ کرنے کابیان 90
حضور اکرم ﷺ اور آپ کی اولاد پر ہدیہ حلال ہے 92
رسول اللہ ﷺ کا ہد یہ قبول کرنا اور صدقہ کو رد کرنا 94
صدقہ لانے والے کو دعادینے کا بیان

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
23.6 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام تراجم حدیث زبان

صحیح مسلم (آن لائن ایڈیشن) جلد۔3

صحیح مسلم (آن لائن ایڈیشن) جلد۔3

 

مصنف : امام مسلم بن الحجاج

 

صفحات: 2018

 

صحیح مسلم امام کی مرتب کردہ شہرہ آفاق مجموعہء احادیث ہے جو کہ صحاح ستہ کی چھ مشہور کتابوں میں سے ایک ہے۔ امام بخاری کی صحیح بخاری کے بعد دوسرے نمبر پر سب سے مستند کتاب ہے۔امام مسلم کا پورا نام ابوالحسین مسلم بن الحجاج بن مسلم القشیری ہے۔ 202ھ میں ایران کے شہر نیشاپور میں پیدا ہوئے اور 261ھ میں نیشاپور میں ہی وفات پائی۔ انہوں نے مستند احادیث جمع کرنے کے لئے عرب علاقوں بشمول عراق، شام اور مصر کا سفر کیا۔ انہوں نے تقریباًتین  لاکھ احادیث اکٹھی کیں لیکن ان میں سے صرف7563 احادیث صحیح مسلم میں شامل کیں کیونکہ انہوں نے حدیث کے مستند ہونےکی بہت سخت شرائط رکھی ہوئی تھیں تا کہ کتاب میں صرف اور صرف مستند ترین احادیث جمع ہو سکیں۔ صحیح مسلم کی اہمیت کے پیش نظر صحیح بخاری کی طرح اس کی بہت زیادہ شروحات لکھی گئیں۔ عربی  زبان میں  لکھی گئی  شروحات ِ صحیح مسلم میں امام نوویکی شرح نووی کو امتیازی مقام حاصل ہے۔ پاک وہند میں بھی کئی اہل علم نے عربی  واردو  زبان میں اس کی شروحات  وحواشی لکھے۔ عربی زبان میں نواب صدیق حسن خاںاور اردو میں علامہ وحید الزمان کا ترجمہ قابل ذکر ہے اورطویل عرصہ سے یہی  ترجمہ متداول ہے۔لیکن  اس قدیم اردو کی تسہیل و تھذیب اوراحادیث کی ترقیم کرکے اب کئی مکتبات نے بڑی عمدہ طباعت کے ساتھ صحیح مسلم کا ترجمہ شائع کیا ہے۔ او ر دار السلام تو نے نئے ترجمہ وحواشی کے ساتھ اسے طبع کیا ہے۔ زیر تبصرہ صحیح مسلم کا ترجمہ محترم عزیز الرحمن صاحب نے کیا ہے جو کہ تین مجلدات پر مشتمل ہے۔ اور تینوں جلدوں کی فہارس عناوین ابواب کےساتھ  لنک شدہ ہیں۔ اسی لیے اسے  ویب سائٹ پر  پبلش کیا گیا ہے تاکہ اس سے استفادہ کرنے میں آسانی ہوسکے۔

 

عناوین صفحہ نمبر
باب: گری پڑی چیز کا بیان 27
باندھنے کی ڈوری اور اس تھیلی کی پہچان اور گمشدہ بکریوں اور اونٹوں کے حکم کے بیان میں 27
حاجیوں کی گمشدہ چیزوں کا بیان 35
جانور کے مالک کی اجازت کے بغیر اس کا دود دوہنے کی حرمت کے بیان میں 36
مہمان نوازی کے بیان میں 38
بچا ہوا مال مسلمانوں کی خیر خواہی میں لگانے کے استحباب کے بیان میں 40
جب کمی ہو تو سب کے زاد راہ آپس میں ملانے اور آپس میں مواسات کرنے کے استحباب کے 41
باب: جہاد کا بیان 42
جن کافروں کو پہلے اسلام دیا جا چکا ہو ایسے کافروں کو دوبارہ اسلام کی دعوت 42
لشکر کا امیر بنانے اور اسے وصیت اور جہاد کے آداب وغیرہ کے احکام دینے کے بیان میں 43
آسانی والا معاملہ اختیار کرنے اور نفرت والا معاملہ ترک کرنے کےت بیان میں 46
جنگ میں دشمن کو دھوکہ دینے کے جواز میں بیان میں 54
دشمن سے ملاقات کے وقت نصرت کی دعا کرنے کے استحباب کے بیان میں 56
شب خوب میں بلا ارادہ عورتوں اور بچوں کے مارے جانے کے جواز کے بیان میں 59
کافروں کے درختوں کو کاٹنے اور ان کو جلا ڈالنے کے جواز کے بیان میں 61
خاص اس امت محمدیہ کے لیے غنیمت کا مال حلال ہونے کے بیان میں 62
غنیمت کے بیان میں 64
مقتول کو سلب کرنے پر قاتل کے استحقاق کے بیان میں 69
انعام دے کر مسلمان قیدیوں کو چھڑانے کے بیان میں 76
فے کے حکم کے بیان میں 77
نبیﷺ کا فرمان: ہمارا کوئی وارث نہیں ہوتا جو ہم چھوڑیں وہ صدقہ۔۔۔ 83
باقی فہرست کمپوز ہو رہی ہے۔۔۔۔

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
29.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam تراجم حدیث زبان

صحیح مسلم (آن لائن ایڈیشن) جلد۔2

صحیح مسلم (آن لائن ایڈیشن) جلد۔2

 

مصنف : امام مسلم بن الحجاج

 

صفحات: 1271

 

صحیح مسلم امام کی مرتب کردہ شہرہ آفاق مجموعہء احادیث ہے جو کہ صحاح ستہ کی چھ مشہور کتابوں میں سے ایک ہے۔ امام بخاری کی صحیح بخاری کے بعد دوسرے نمبر پر سب سے مستند کتاب ہے۔امام مسلم کا پورا نام ابوالحسین مسلم بن الحجاج بن مسلم القشیری ہے۔ 202ھ میں ایران کے شہر نیشاپور میں پیدا ہوئے اور 261ھ میں نیشاپور میں ہی وفات پائی۔ انہوں نے مستند احادیث جمع کرنے کے لئے عرب علاقوں بشمول عراق، شام اور مصر کا سفر کیا۔ انہوں نے تقریباًتین  لاکھ احادیث اکٹھی کیں لیکن ان میں سے صرف7563 احادیث صحیح مسلم میں شامل کیں کیونکہ انہوں نے حدیث کے مستند ہونےکی بہت سخت شرائط رکھی ہوئی تھیں تا کہ کتاب میں صرف اور صرف مستند ترین احادیث جمع ہو سکیں۔ صحیح مسلم کی اہمیت کے پیش نظر صحیح بخاری کی طرح اس کی بہت زیادہ شروحات لکھی گئیں۔ عربی  زبان میں  لکھی گئی  شروحات ِ صحیح مسلم میں امام نوویکی شرح نووی کو امتیازی مقام حاصل ہے۔ پاک وہند میں بھی کئی اہل علم نے عربی  واردو  زبان میں اس کی  شروحات  وحواشی لکھے۔ عربی زبان میں نواب صدیق حسن خاںاور اردو میں علامہ وحید الزمان  کا ترجمہ قابل ذکر ہے اورطویل عرصہ سے یہی  ترجمہ متداول ہے۔لیکن  اس قدیم اردو کی تسہیل و تھذیب اوراحادیث کی ترقیم کرکے اب کئی مکتبات نے بڑی عمدہ طباعت کے ساتھ صحیح مسلم کا ترجمہ شائع کیا ہے۔ او ر دار السلام تو نے نئے ترجمہ وحواشی کے ساتھ اسے طبع کیا ہے۔ زیر تبصرہ صحیح مسلم کا ترجمہ محترم عزیز الرحمن صاحب نے کیا ہے جو کہ تین مجلدات پر مشتمل ہے۔ اور تینوں جلدوں کی فہارس عناوین ابواب کےساتھ  لنک شدہ ہیں۔ اسی لیے اسے  ویب سائٹ پر  پبلش کیا گیا ہے تاکہ اس سے استفادہ کرنے میں آسانی ہوسکے

 

عناوین صفحہ نمبر
باب: روزوں کا بیان 17
باب ماہ رمضان کی فضیلت کے بیان میں 17
چاند دیکھ کر رمضان المبارک کے روزے رکھنا اور چاند دیکھ کر عید الفطر کرنا اور اگر 18
رمضان المبارک سے ایک یا دو دن پہلے روزہ نہ رکھنے کا بیان 28
اس بات کے بیان میں کہ ہر شہر کے لیے اس کی اپنی ہی رؤیت معتبر ہے۔ 34
چاند کے چھوٹے بڑے ہونے کا اعتبار نہیں اور جب بادل ہوں تو تیس دن شمار کر لو 35
نبیﷺ کے اس قول کے معنی کے بیان میں کہ عید کے دو مہینے 37
روزہ طلوع فجر سے شرعو ہو جاتا ہے اس سے قبل تک کھانا پینا جائز ہے اور اس باب میں 38
روزہ طلوع فجر سے شرعو ہو جاتا ہے اس سے قبل تک کھانا پینا جائز ہے اور اس باب میں 41
روزہ طلوع فجر سے شرعو ہو جاتا ہے اس سے قبل تک کھانا پینا جائز ہے اور اس باب میں 42
سحری کھانے کی فضیلت اور اس کی تاکید اور آخری وقت تک کھانے کے استحباب کے بیان میں 46
روزہ پورا ہونے اور دن کے نکلنے کے وقت کے بیان میں 51
صوم و صال کی ممانعت کے بیان میں 54
اس بات کے بیان میں کہ روزہ میں اپنی بیوی کا بوسہ لینا حرام نہیں شرط یہ ہے 60
جنی ہونے کی حالت میں جس پر فجر طلوع ہو جائے تو اس کا روزہ درست ہے 68
رمضان کے دنوں میں روزہ دار ہم بسری کی حرمت اور اس کے کفارہ کے وجوب میں 73
باقی فہرست کمپوز ہو رہی ہے۔۔۔

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
18.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز