Categories
Islam اسلام زنا سنت سود سیرت النبی ﷺ طلاق قانون و قضا متعہ محدثین نبوت

شرعی احکام کی خلاف ورزی پر رسول اللہ ﷺ کے فیصلے

شرعی احکام کی خلاف ورزی پر رسول اللہ ﷺ کے فیصلے

 

مصنف : محمد بن فرج المالکی القرطبی

 

صفحات: 299

 

کسی بھی قوم کی نشوونما اور تعمیر  وترقی کےلیے  عدل وانصاف ایک بنیادی ضرورت ہے  ۔جس سے مظلوم کی نصرت ،ظالم کا قلع  قمع اور جھگڑوں کا  فیصلہ کیا جاتا ہے  اورحقوق کو ان کےمستحقین تک پہنچایا جاتاہے  اور  دنگا فساد کرنے والوں کو سزائیں دی جاتی ہیں  ۔تاکہ معاشرے  کے ہرفرد کی جان  ومال ،عزت وحرمت اور مال واولاد کی حفاظت کی جا  سکے ۔ یہی وجہ ہے  اسلام نے ’’قضا‘‘یعنی قیام ِعدل کاانتہا درجہ اہتمام کیا ہے۔اوراسے انبیاء ﷩ کی سنت  بتایا ہے۔اور نبی کریم ﷺ کو اللہ تعالیٰ نے  لوگوں میں فیصلہ کرنے کا  حکم  دیتےہوئے  فرمایا:’’اے نبی کریم ! آپ لوگوں کےدرمیان اللہ  کی  نازل کردہ ہدایت کے مطابق فیصلہ کریں۔‘‘نبی کریمﷺ کی  حیاتِ مبارکہ مسلمانوں کے لیے دین ودنیا کے تمام امور میں مرجع کی حیثیت رکھتی ہے۔ آپﷺ کی تنہا ذات میں حاکم،قائد،مربی،مرشد اور منصف  اعلیٰ کی تمام خصوصیات جمع تھیں۔جو لوگ آپ کے فیصلے پر راضی  نہیں ہوئے  ا ن کے بارے  میں اللہ تعالیٰ نے  قرآن کریم میں سنگین وعید نازل فرمائی اور اپنی ذات کی  قسم کھا کر کہا کہ آپ  کے فیصلے تسلیم نہ کرنے  والوں کو اسلام سے خارج قرار دیا ہے۔نبی کریمﷺ کےبعد  خلفاء راشدین  سیاسی قیادت ،عسکری سپہ سالاری اور دیگر ذمہ داریوں کے ساتھ  منصف وقاضی کے مناصب پر بھی فائزر ہے اور خلفاءراشدین نےاپنے  دور ِخلافت  میں دور دراز شہروں میں  متعدد  قاضی بناکر بھیجے ۔ائمہ محدثین نےنبی ﷺ اور صحابہ کرام  کے  فیصلہ جات کو  کتبِ  احادیث میں نقل کیا ہے  ۔اور کئی اہل علم  نے   اس سلسلے میں   کتابیں تصنیف کیں ان میں سے   زیر تبصرہ کتاب” شرعی احکام کی خلاف ورزی پر رسول اللہﷺ کے فیصلے  ‘‘ امام ابو عبد اللہ  محمدبن  فرج  المالکی   کی  نبی  کریم ﷺ کے  فیصلوں پر مشتمل   کتاب ’’اقضیۃ الرسول  ﷺ ‘‘  کا  اردو ترجمہ ہے  ۔ یہ کتاب  ان فیصلوں اورمحاکمات پرمشتمل ہے جو  نبی ﷺ نے اپنے 23 سالہ دور نبوت میں مختلف مواقع پر صادر فرمائے۔اس کتاب    میں  مصنف نے  وہ تمام فیصلے درج  کردئیے ہیں جو  فیصلے آپ نے خود فرمائے یاوہ فیصلے کرنے کا  آپ نے حکم فرمایا  ہے۔کتاب ہذا کا  ترجمہ    مولانا عبد الصمد ریالوی﷾ نے کیا ہے  اوراحادیث کی تحقیق وتخریج کا کام الشیخ طالب عواد نے کیا ہے۔ ادارہ   معارف اسلامی منصورہ نے   بھی تقریبا  28  سال قبل اس کاترجمہ کر وا کر شائع کیا تھا۔یہ اس  نسخے کا ترجمہ تھا جس پر ڈاکٹر ضیاء الرحمن  اعظمی ﷾نے تحقیق وتخریج کا  کام  کر کے   جامعہ ازہر ،مصر  سےپی   ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی ۔یہ کتاب  قانون دان حضرات اور اسلامی آئین وقانون کے نقاذ سےدلچسپی رکھنے والے  احباب کے لیے ایک نعمت غیر مترقبہ ہے  ۔اللہ تعالیٰ مصنف ، محقق ،مترجم اور ناشرین کی اس کاوش کوقبول فرمائے اور اس کو  وطن عزیز میں اسلامی آئین وقانون کی تدوین وتفیذ کا ایک  مؤثر ذریعہ بنائے (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
تمہید 11
اہل کفر میں سے محاربین کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم 16
قاتل کو بادشاہ کے پاس کیسے لے جایاجائے اور قاتل سے کیسے اقرار لیاجائے 19
رسول اللہ ﷺ کاپتھر سے قتل کرنے والے کے بارہ میں فیصلہ 23
رسول اللہﷺ کااس حاملہ عورت کے متعلق فیصلہ جس کاحمل گرادیا گیاہو 24
جس مقتول کاقاتل معلوم نہ ہواس میں قسامت کے متعلق نبی ﷺ کافیصلہ 25
نبی ﷺ کااس شخص کے متعلق فیصلہ جس نے اپنے ماں باپ کی بیوی سے نکاح کرلیا 30
نبی ﷺ کااس مقتول کے متعلق فیصلہ جو دو بستیوں میں مراہوملے 31
نبی ﷺ کازخموں کے قصاص کے متعلق فیصلہ 32
دانت کے متعلق نبی ﷺ کافیصلہ 33
شادی شدہ اگر زنا کااقرار کرےتو اس کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 34
آپﷺ کازنامیں یہود پر رحم کرنے کافیصلہ 38
رسو ل اللہﷺ کاحرام صلح کے توڑنے کاحکم 41
حدقذف وخمر میں رسول اللہﷺ کاحکم 45
چوراورباربار چوری کرنے والے کے متلعق رسول اللہﷺ کاحکم 48
جو مسلمان ذمی یاحربی آپﷺ کاگالی دے اسکاحکم اورجادو گرکے بیان میں کہ وہ کیسے قتل کیاجائے 51
اہل کفر کے متعلق رسول اللہ ﷺکاحکم 52
کتاب الجہاد
اسلام میں مشرکوں کاپہلامقتول اور پہلی غنیمت 55
جاسوس کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم 58
قیدیوں کےمتعلق رسو ل اللہﷺ کافیصلہ جس کو نبی ﷺ اپنے ہاتھ سے قتل کریں 62
قریضہ اور نضیر کے متعلق آپﷺ کافیصلہ 69
فتح کے سال رسول اللہﷺ کاامان دینے کافیصلہ 77
غنیمت کے حصہ جات غائب کاحصہ ارو عورت کو کچھ دینے کے متعلق آپﷺ کافیصلہ 89
حنین کےدن قاتل کے لیے رسول اللہﷺ کاسلب مقررکرنا 98
مشرکوں نے مسلمانوں کےجومال لےلیے پھر جب مسلما ن غالب آئیں تو مشرکین انہیں واپس کردیں اس کے متعلق رسو ل اللہﷺ کافیصلہ 99
اگر کوئی معاہد یاحربی رسو ل اللہﷺ کو تحفہ دے تو اس میں آپ کاکیا فیصلہ ہے 101
مال فے کی تقسیم جس طرح مناسب سمجھیں آپﷺ فیصلہ کریں 104
خیبر اور بنونضیر کے اموال کی تقسیم کے متعلق رسو ل اللہ ﷺ کااحکم 109
آپﷺ کے ایلچی قتل نہ کئے جائیں کفار سےوعدہ پوراکرو 112
امان کے متعلق رسول اللہﷺ کافیصلہ 115
جزیہ کےمتعلق رسول اللہﷺ کافیصلہ 121
کتاب النکاح
جس بیوہ کاس کی مرضی کےبغیر اس کاباپ نکاح کرجے تو رسول اللہ ﷺ کاحکم 125
جس عورت کاخاوند دخولسے پہلے ہی وفوت ہوجائۃ تو اس کے متعلق رسو ل اللہ ﷺکافیصلہ 127
رسول اللہ ﷺ کااس شخص کے متعلق فیصلہ جس نے کسی عورت سے نکاح کیا عواسے دیکھاوہ حاملہ ہے 129
غائب خاوند پر بیوی کے نفقہ کے متعلق رسو ل اللہﷺ  کافیصلہ 130
رسول اللہﷺ کامہرے کے متعلق فیصلہ 135
رسول اللہ ﷺ کاسیدنا علی ﷜  کو سیدہ فاطمہ ؓ پر نکاح کرنے سے منع کرنے کافیصلہ 138
مجوسی کے متعلق رسو ل اللہ ﷺ کافیصلہ 139
معترض کے متعلق رسو ل اللہﷺ کافیصلہ اور نکاح متعہ کاحکم 140
سیدہ میمونہ ؓ سے نکاح کرنے میں رسول اللہﷺ کافیصلہ 142
عورتوں میں باری مقرر کرنے کے بار ہ میں رسو ل اللہ ﷺ کافیصہ 143
دودھ پینے کے بارہ میں ایک عورت کی گواہی پر رسول اللہﷺ کافیصلہ 145
کتا ب الطلاق
حائضہ کی طلاق کے متعلق رسول اللہﷺ کافیصلہ 147
خلع میں رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 151
رسول اللہﷺ کااس لونڈی کے متعلق فیصلہ جوشادی شدہ ہوااور پھر آزاد کردیاجائے 153
رسول اللہﷺ کااس عورت کے متعلق فیصلہ جوعادل گواہ اپنے خاوند کی طلاق پر پیش کردے اور خاوند انکار کررہا ہو 154
رسول اللہ ﷺ کااپنی مملوکہ یمین یعنی لونڈی کے حرام کرنےکی قسم کے متعلق فیصلہ 157
جوشخص تین سے کم طلاقیں دے پھر عدت کے بعد دوسرا خاوند کرے پھر دوسرا فوت ہوجائے یاپرورش کے متعلق  رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 161
ظہار کے متعلق رسول اللہﷺ  کافیصلہ اور اس کے متعلق جوکچھ نازل ہوا 163
رسو ل اللہ کالعان کے متعلق فیصلہ 165
کتاب البیوع
بیع  سلم اور سود کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 171
تجارتی قافلوں کو راستہ میں جاکر ملنے جانوروں کے تھنوں میں دودھ روک کربیچنے عیب دار چیزواپس کرنے اور آمد ن کے ضامن ہونے کے متعلق رسول اللہﷺ کافیصلہ 176
مفلس قرار دے کربندش عائد کردینے قیمت اداکرنے سے قبل فوت ہوجانے اور بے علمی میں چوری کامال خریدنے کے متعلق رسول اللہﷺ کاحکم 179
آفات سے تباہ ہونے والامال اوراس کے متعلق رسول اللہﷺ کاحکم 184
جوشخص خریدوفروخت میں دھوکہ کرے اس کے متعلق رسو ل اللہﷺ کاحکم 188
رسو ل اللہﷺ کایہ فیصلہ کہ ماں بیٹے کو اکٹھے رکھا جائے بیع اور شرط میں آپ کافیصلہ 188
کتاب الاقضیتہ
مشترک رسول اللہﷺ کاظاہر کے مطابق فیصلہ کرنادلیل نہ ہونے کی صورت میں مدعی علیہ کو قسم دینا 188
دومدعیوں میں سے ایک دلیل دے او ردونوں کافی ودانی ثبوت دیدیں مسلم اور کافر کس طرح قسم اٹھائیں 188
قسم اٹھانے والے کی قسم کی کیفیت کے متعلق رسول اللہ ﷺکافیصلہ 193
مردہ اراضی آباد کرنے پانی کی تقسیم ڈاکٹر کاضامن ہونےکسی کاپیالہ توڑ دینے اور لکڑی کی کو ٹھڑی بنانے کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 193
شفع کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم 206
حصہ داری اور مزارعت کاحکم 207
مساقات آب پاشی صلح منافع اور کھجور کی حفاظت کی حدسکے متعلق رسول اللہﷺ کافیصلہ 210
کتاب الوصایا
وصیت کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم 215
اوقاف اور احباس کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 217
صدقات ہدایا  (ہبہ )عمر ی (صدقہ ) اور ان کے ثواب کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم 215
تشبیہ والی چیزوں میں رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 227
غلاموں کی آزادی قرعہ اندازی کی وصیت خاوند والی مدبر ہ امہات الاولادارو مکاتب کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم 230
جس غلام کامثلہ کیاجائے یااس کے چہرے پر تھپڑا مارگیاتواس کو آزاد کرنے کے متعلق رسول اللہﷺ کافیصلہ 237
گری ہوئی چیز کے متعلق رسو ل اللہﷺ کافیصلہ 239
ایسے شخص کے متعلق جوکہے کہ میرا باغ فی سیبل اللہ صدقہ ہے اور یہ رشتہ داروں پر صدقہ ہے اور غائب آدمی کے مال کو وقف کرنے ارو تقسیم مال پر کسی کو وکیل کرنے کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 242
امانات کے متعلق رسول اللہﷺ کاحکم 234
عاریۃ لی گئی مغلوب علیہ چیز کاضامن ہونے کے متعلق رسول اللہﷺ کافیصلہ 246
ورثتوں کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 250
رسول اللہ ﷺ کایہ فیصلہ کہ بچہ بچھونےوالے کاہے اور اس شخص کاحکم جو اپنے باپ کے مانے کے بعد کسی اپنے نسب میں شامل کرے 257
علم قیافہ کے ثبوت کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ اور اس بارہ میں سیدنا علی ﷜ کے فیصلہ کی تجویز 259
ذوی الارحام کی میراث کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 262
قاتل سے وراثت کو روکنے کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم اور جس نے اس کی یہ تفسیر کی ہے کہ یہ قتل عمدکےمتعلق ہے 264
جس مسلمان کی وصیت پر کوئی نصرانی گواہ ہواس کے متعلق اور جس غلام کاکان کاٹ دیاجائے اور صلح کی جاگیروں کے متعلق اور جو شخص اپنی عورت کے ساتھ کسی مرد کو دیکھے تواس کے متعلق رسول اللہ ﷺ کاحکم 265
کتوں کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 269
روکے ہوئے پانی کی حدود کے متعلق رسول اللہ ﷺ کافیصلہ 270
اگر وکیل کو مال بیچنے بر فائد ہ ہوتووہ فائدہ صاحب مال کاہوگا 271
مختلف امور میں رسو ل اللہ ﷺ کافیصلہ 273
رسول اللہ ﷺ کانسب 285
نبی ﷺ کو کتتے کپڑوں میں کفن دیا گیا اور آپﷺ کوغسل دینے اور لحد کاذکر 288
حوالہ جات کتب اوراسانید 291

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
5.6 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam احکام ومسائل روزہ و رمضان المبارک

سحری افطاری اور افطاریاں

سحری افطاری اور افطاریاں

 

مصنف : ام عبد منیب

 

صفحات: 40

 

سحری اور افطاری یہ دونوں کھانے روزے جیسی اہم عبادت کالازمی جزو ہیں۔شریعت نے روزے کے ساتھ یہ دوکھانے مقرر کر کے یہ باور کرا دیا کہ راہبوں اور جوگیوں کایہ خیال کہ جتنا زیادہ طویل فاقہ کیا جائے اتنا ہی زیادہ نفس پاک ہوتا ہے یہ قطعی غلط ہے۔سحری کا وقت طلوع فجر سے قبل فجر کی اذان ہونے تک ہے ۔ جان بوجھ کر سحری ترک کرنا رسول اللہ ﷺ کی نافرمانی ہے۔اور افطاری روزہ ختم ہونے کی علامت ہے ۔چاہے ایک گھونٹ پانی یا ایک رمق برابر کھانے کی چیز ہی سے افطار کیا جائے ۔افطاری کا وقت سورج غروب ہونے پر ہے ۔جیسے کہ حدیث نبوی ہے ’’ جب رات آجائے دن چلا جائے اور سورج غروب ہوجائے تو روزہ دار روزہ افطار کرلے ‘‘(صحیح بخاری)اور نبی کریم ﷺ نے فرمایا:’’ جب تک لوگ روزہ افطار کرنے میں جلدی کرتے رہے ہیں گے ۔ تب تک یہ دین غالب رہے گا کیوں کہ یہود اور نصاریٰ افطار کرنے میں تاخیر کرتےہیں‘‘۔(سنن ابوداؤد) زیر تبصرہ کتابچہ’’ سحری ،افطاری اور افطاریاں‘‘ محترمہ ام عبد منیب صاحبہ کا ہے جس میں انہوں نے سحری کی اہمیت وضرورت اور اس کے احکام ومسائل اور افطاری کےاحکام ومسائل اور روزہ افطار کروانے کی فضیلت اور عصر حاضر میں افطار پارٹیوں کا جائزہ لیتے ہوئے اس سلسلے میں معاشرے میں پائی جانے والی کتاہیوں اور فضول خرچیوں کی نشاندہی کی ہے۔ اللہ تعالیٰ اس کتابچہ کو عوام الناس کےلیے فائد ہ مند بنائے۔ آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
روزے کا مقصد تقویٰ 6
کم سونا 8
کم کھانا 11
سحری اور افطاری 15
سحری ایک بابرکت کھانا 16
سحری کا وقت 16
اذان فجر ہو جائے تو۔۔۔ 18
جان بوجھ کر سحری ترک کرنا 18
سحری کا کھانا کیسا ہو؟ 19
سحری کے لیے بیدار کرنا 20
افطاری 22
افطار کا وقت 23
اگر کوئی پہلے روزہ افطار کرلے تو 24
افطار کس چیز کے ساتھ 26
ہماری افطاری 26
کھانے کا بچ جانا 28
افطاری کی دعوتیں 29
افطار پارٹیاں 32
افطاری کے کارڈ 33
افطاری اپنی کھانے غیروں کے 33
ریا 34
بے قاعدہ اور بے اندازہ خرچ 35
افطاری ایک عبادت 37
افطار پارٹی خود ساختہ تکلف 37

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
1.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام تاریخ حج سیرت سیرت النبی ﷺ فقہ نماز

سیرت النبی ﷺ (ابن کثیر) جلد۔2

سیرت النبی ﷺ (ابن کثیر) جلد۔2

 

مصنف : حافظ عماد الدین ابن کثیر

 

صفحات: 616

 

حافظ ابن کثیر﷫(701۔774ھ) عالمِ اسلام کے معروف محدث، مفسر، فقیہہ اور مورخ تھے۔ پورا نام اسماعیل بن عمر بن کثیر، لقب عماد الدین اور ابن کثیر کے نام سے معروف ہیں۔ آپ ایک معزز اور علمی خاندان کے چشم وچراغ تھے۔ ان کے والد شیخ ابو حفص شہاب الدین عمر اپنی بستی کے خطیب تھے اور بڑے بھائی شیخ عبدالوہاب ایک ممتاز عالم اور فقیہہ تھے۔کم سنی میں ہی والد کا سایہ سر سے اٹھ گیا۔ بڑے بھائی نے اپنی آغوش تربیت میں لیا۔ انہیں کے ساتھ دمشق چلے گئے۔ یہیں ان کی نشوونما ہوئی۔ ابتدا میں فقہ کی تعلیم اپنے بڑے بھائی سے پائی اور بعد میں شیخ برہان الدین اور شیخ کمال الدین سے اس فن کی تکمیل کی۔ اس کے علاوہ آپ نے ابن تیمیہ وغیرہ سے بھی استفادہ کیا۔ تمام عمر آپ کی درس و افتاء ، تصنیف و تالیف میں بسر ہوئی۔ آپ نے تفسیر ، حدیث ، سیر ت اور تاریخ میں بڑی بلند پایہ تصانیف یادگار چھوڑی ہیں۔ تفسیر ابن کثیر اور البدایۃ والنہایۃ آپ کی بلند پایہ ور شہرہ آفاق کتب شما ہوتی ہیں۔ البدایۃ والنہایۃ 14 ضخیم جلدوں پر مشتمل ہے۔ اس وقت ’البدایۃ والنہایۃ‘ کا اردو قالب ’تاریخ ابن کثیر‘ کی صورت میں موجود ہے۔ ابن کثیر کی یہ تاریخ بھی دوسری تاریخوں کی طرح ابتدائے آفرینش سے شروع ہوتی ہے اور اس کے بعد انبیاء اور مرسلین کے حالات سامنے آتے ہیں، یہ کئی لحاظ سےاہم ہیں۔ تاریخ ابن کثیر حضرت آدم سے لے کر عراق و بغداد میں تاتاریوں کے حملوں تک وسیع اور عریض زمانے کا احاطہ کرتی ہے اور غالباً سب سے پہلی تاریخ ہے جس میں ہزاروں لاکھوں سال کی روز و شب کی گردشوں، کروٹوں، انقلابوں اور حکومتوں کومحفوظ کیا گیا ہے۔ پھر ابن کثیر نے جن حالات و واقعات کا احاطہ کیا ہے وہ اس قدر صحیح اور مستند ہیں کہ ان کا مقابلہ کوئی دوسری کتاب نہیں کر سکتی۔ زیر تبصرہ کتاب’’سیرت النبی ﷺ‘‘ امام ابن کثیر ﷫ کی مذکورہ کتاب البدایۃ والنہایۃ میں سے سیرت النبی ﷺ پر مشتمل ایک حصہ ہے۔ اس حصے کواردو قالب میں ڈھالنے کی سعادت مولانا ہدایت اللہ ندوی صاحب نے حاصل کی۔ یہ کتاب اپنے اندر بے پناہ مواد سموئے ہوئے ہے۔ امام ابن کثیر نے واقعات کا انداز تاریخ کے حساب سے رکھا ہے۔ سن وار واقعات کو درج کیاگیا ہے۔ اس کتاب کے مطالعہ سے قارئین کو بہت سے ایسی معلومات حاصل ہوں گئی جودیگر کتبِ سیرت میں نہیں ہیں۔ امام ابن کثیر ﷫ چونکہ اعلیٰ پائے کےادیب او رعمدہ شعری ذوق کے مالک تھے۔ البدایۃ میں انہو ں نےجابجار اشعار درج کیے ہیں۔محترم ندوی صاحب نے ان اشعار کوبھی اردو قالب میں ڈھالا ہے ۔نیز فاضل مترجم نے واقعات کے جابجا ذیلی عنوانات بھی دیئے ہیں جو بڑے مفید ہیں اورکہیں کہیں کچھ تشریحات بھی کی ہیں جوکہ ’’ندوی‘‘ کے تحت بریکٹ میں درج ہیں ۔اس کتاب کو عربی سے اردو قالب میں ڈھال کر حسنِ طباعت سے آراستہ کرنے کی سعادت شہید ملت علامہ احسان الٰہی ظہیر ﷫ کے ساتھ پیش آنےوالے الم ناک واقعہ میں شہادت کا رتبہ پانے والے ان کے رفیق خاص جناب مولانا عبد الخالق قدوسی شہید (بانی مکتبہ قدوسیہ، لاہور) کےصاحبزدگان نے حاصل کی ۔ مدیر مکتبہ جناب ابو بکر قدوسی صا حب نے 1996ء میں اس سیرت النبی ﷺ کو تین جلدوں میں بڑے خوبصورت انداز میں شائع کیا۔اس سے قبل 1987ء میں بھی البدایۃ والنہایۃ   کےعربی نسخے کو 14 جلدوں میں مکتبہ قدوسیہ نے شائع کیا ۔اب توجناب ابو بکر قدوسی اور جناب عمر فاروق قدوسی اوران کے دیگر برادران کی محنت سے مکتبہ قدوسیہ ماشاء اللہ بیسیوں معیاری کتابیں شائع کرچکا ہے۔ اللہ ان برادران کے علم وعمل میں خیر وبرکت فرمائے اوران کی کاوشوں کو شرف ِقبولیت سے نوازے۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
غزوہ نجدیا ذی امر 15
غورث کا معجزہ واقعہ 15
غزوہ فرع جانب بحران 16
مدینہ میں یہودی قینقاع کا واقعہ 16
خاتون کی بے حرمتی 16
عبادہؓ اور ابن ابی سلول 17
زید بن حارثہ کے فوجی دستہ کی ابو سفیان یا صفوان کےتجارتی قافلہ کی طرف روانگی 17
سریہ ارسال کرنے کا سبب اور فرات کا مسلمان ہونا 18
حضرت ام کلثومؓ کی شادی 18
کعب بن اشرف کا قتل 18
کعب کافتویٰ 20
رسول اللہ ﷺ کی مخالفت 20
حویصہ کا مسلمان ہونا اوریہودہ کے قتل کاحکم 23
غزوہ احد شوال3ھ 24
حدیث احد 24
انتقامی جذبہ 24
ابوعزہ اور نافع شاعر 25
وحشی 26
وحشی کی تحریض 26
خواب 26
خواب اور اس کی تعبیر 26
صحابہ کےجذبات 28
حضرت نعیم ﷜ 28
مسلمانوں کی پشیمانی 29
ابن سلول کاعلیحدہ ہونا 29
الگ میدان کا نقشہ 31
درے پر تیر اندازوں کا تقرر 31
سمرہ اوررافع کی عمر 31
ہندکے اشعار اورعلم برداری 32
ابودجانہ 33
حضرت حمزہ ﷜ کی شہادت 34
وحشی اور حضرت حمزہؓ 34
حضرت مصعب ؓ کی شہادت 37
رسول اللہ ﷺ کاانصار کے تلے آنا 37
حضرت عاصمؓ   کاکارنامہ 38
شکست کاسبب 40
درہ کا خالی ہونا 40
رسول اللہ ﷺ کےزخم 41
ابی بن خلف کاقتل 42
ابوسفیان کااترانا 43
رسول اللہ ﷺ کےزخموں کی تفصیل 43
جنگ کا نقشہ 43
تیراندازوں کی جلد بازی 45
سات انصاری شہیدہوئے 46
حضرت سعدبن ابی وقاص﷜ 47
حضرت ابوطلہ ؓ انصاری 48
حضرت عثمان ؓ کی بریت 49
احد میں بدر ایسے واقعات 49
اللہ کی حفاظت ونگہداشت 51
حضرت انس بن نضرؓ 52
ابی بن خلف جمحی مقتول 53
حضرت جابر کے والد حضرت عبداللہ کی فضیلت 54
حضرت یمانؓ کی شہادت 54
حضرت قتادہؓ کی آنکھ 55
رسول اللہ ﷺ کی کمان 56
رسول اللہﷺ نے بیٹھ کر نمازپڑھائی 58
فاسق کےذریعہ دین کی امداد 58
ایساجنتی جس نے کوئی نماز نہ پڑھی ہو 59
عمربن جموح کاجہاد پر اصرار 59
الوداعی گفتگو 61
نقل وحرکت کاجائزہ 61
جنگ کے اجتماعی دعا 61
حضرت سعدبن ربیع کاپیغام 62
سیدالشہداء حضرت حمزہ﷜ 63
حضرت حمزہ﷜اور شہدائے احدپر نمازجنازہ 63
حضرت صیفہؓ کا صبروثبات 65
شاح کا آہنی تلوار بن جانا 66
شہیدکا خون 66
قبر گہری اور فراح ہو 66
حضرت جابرکے والدکاواقعہ 67
شہداء کی لاشوں کی حالت 67
زیا رت قبور کی روایت 69
شہداء کی ارواح 70
شہداء کی تعداد 70
بنی دینار کی خاتون 71
حضرت علی او ردیگر صحابہ کے حسن کردا رکی تعریف 72
حضرت حمزہ ﷜ کانوحہ 72
پس منظر او روضاحت 73
ابوسفیان کاتعاقب 74
معبد خزاعی کی خیر خواہی 75
حسبنا اللہ کی فضیلت 76
عبداللہ بن ابی کی پوزیشن 78
70شہیداور22ہلاک جنگ احد کے بارے اشعار 78
واقعہ احد کا تکملہ 93
حضرت عثمان کی شادی 94
سریہ ابوسلمہ 94
واقعہ رجیع 95
حضرت خبیب ؓ 95
حضرت خبیب ؓ کا قاتل 96
مشرک سے کراہت 97
حضرت عبداللہ بن طارق 98
دورکعت نماز کادستور 99
محبت کی انتہاء 100
طریقہ قتل خبیب 100
خبیب کی لاش 100
بعض آیات کاشان نزول 101
شعراء کاکلام 101
رسول اللہ ﷺ کے قتل کی سازش 104
سریہ عمروبن امیہ ضمری 105
سریہ بئیرمعونہ 106
غزوہ بنی نضیر 110
بنی نضیر کی جلاوطنی 111
شراب کی حرمت 111
سورہ حشر کانزول 111
نخلستان کے جلانے کی حکمت 113
مال فے 117
عمروبن سعدی القرضی کاقصہ 118
غزوہ بنی لحیان 119
نمازخوف 120
غزوہ ذات الرقاع 122
وجہ تسمیہ 122
غورث بن حارث کاقصہ 123
ایک شوہر کاقصہ 124
نماز میں محویت 125
حضرت جابر کے اونٹ کاقصہ 125
غزوہ بدر دوم 127
4ھ کے حوادثات کا اجمالی خاکہ 130
حضرت ام سلمہؓ سے شادی 131
5ھ ہجری کےواقعات 132
غزوہ خندق 133
سن ہجرین کب شروع ہوا 133
غزوہ خندق کےمحرک 134
حضرت جابر کی دعوت 137
کھجوروں میں اعجاز 140
چٹان کی چمک سے عجائبات 140
خندق کی کھدائی کی تقسیم 141
ایک اور معجزہ 142
چٹان کی روایت او رمیمون 143
احزاب کامحاصرہ 145
حی اور کعب مکالمہ 145
تحقیق حال 146
محاصرہ اور غطفان سےصلح 147
حضرت علی ﷜ کی شجاعت 148
حضرت علی ؓ کی پیشانی زخمی 150
نوافل کی لاش 151
حضرت سعدبن معاذ﷜ 153
حضرت حسانؓ قلعہ کے اندر 153
حملے کی شدت اور نماز عصر 153
نماز موخر کرنا 154
نمازبر وقت پڑھنا 154
رسول اللہ ﷺ کی دعا 155
نعیم بن مسعود اشجعیؓ کی تدبیر 156
حضرت حذیفہ بن یمان اوراحزاب کانقشہ 158
آسمانی مدد 161
شہدائے خندق 161
غزوہ بنی قریظہ 162
بنی قریظہ میں نمازعصر 163
حضرت ابولبابہؓ 166
کعب کی سعی لاحاصل 166
اوس کی عرضداشت 168
حضرت سعد﷜ 168
حضرت علی ؓ کااعلان جنگ 169
اللہ کافیصلہ 169
حضرت سعدکا زخم ہراہونا 170
حضرت سعد کی دعا مستجاب 170
حضرت عائشہؓ کاتنہا جانا 171
بنی قریضہ کو یکجاکرنا 173
مقتولوں کی تعداد 173
حی نضیری 173
عطیہ قرظی اور علامت بلوغ 174
مال غنیمت کی تقسیم 175
حضرت ریحانہ ؓ 175
حضرت سعدبن معاذ کی وفات 176
عذاب قبر اور حضرت سعدؓ 176
غزوہ خندق اور بنی قریظہ کے بارے اشعاروقصائد 181
ابورافع یہودی کاقتل 190
خالدبن سفیان ھذلی کاقتل 194
عمرو بن عاص کی نجاشی کے ساتھ ملاقات کاقصہ 196
نبی ﷺ کا حضرت ام حبیبہؓ کے ساتھ نکاح 198
مہر 198
ولی اور وکیل 199
شادی کاپیغام 199
خطبہ نکاح 199
شادی کے بعد دعوات طعام 199
حدیث مسلم پر اعتر اض 200
نبی ؑ کازینب بنت جحش سے عقدکرنا 201
مہر 201
آیت حجاب کانزول 203
معجزہ 203
6ھ کے حالات 205
بنی لحیان کی طرف 205
غزوہ ذی قرد 206
حضرت ابو عیاش زرقی 206
حضرت محرز شہید 207
حضرت ابو قتادہؓ 207
حضرت عکاشہ 207
خوف وہراس 210
عورت کاقصہ اور ناقہ عضباء 211
غزوہ بنی مصطلق 214
ایک مسلمان شہید ہوا 214
ابن ابی کی خبث باطن 215
منافق کی معذرت 216
آندھی 217
عبداللہ کاجذبہ 217
اطاعت رسولﷺ 217
عزل 217
حضرت جویریہؓ سے شادی 218
خواب 218
مہر 219
واقعہ افک 219
تہمت حد 222
غزوہ حدیبیہ 224
عوام کو دعوت عمرو 225
حدیبیہ 226
بدیل 226
مکرز 227
حلیس 227
عروہ ثقفی 227
حضرت ابوبکر ؓ کاایمانی جوش 227
عجب منظر 228
سفارت 228
بیعت رضوان 229
پہلے کس نے بیعت کی 229
خود بیعت کی 229
سہیل بن عمرو اور مصالحت 229
حضرت عمر کاجوش وجذبہ 229
شرائط صلح 230
حضرت ابوجندل ﷜ 230
گواہ 231
ابوجہل کااونٹ 231
صلح حدیبیہ (صحیح احادیث کی روشنی میں) 232
معجزہ 232
پرسکون حالات کارستہ 233
معجزہ 233
شجر 234
پہلے کس نے بیعت کی 235
کیاحضرت ابن عمر پہلے مسلمان ہوئے 235
عمروحدیبیہ کا بیان 236
بدیل خزاعی 236
عروہ ثقفی 237
حضرت مغیرہؓ کاقصہ 237
رسول اللہ ﷺ کی ہیبت 238
شرائط 239
پہلی شرط 239
حضرت عمر ؓ کامکالمہ 240
ابو بصیر اور ابوجندل 241
صلح صفین کے بارے 242
سریہ حضرت عکاشہ بن محصن 243
سریہ حضرت ابوعبیدہ 243
سریہ حضرت محمدبن سلمہ 243
سریہ حضرت زیدؓبن حارثہ 243
سریہ حضرت زیدؓ 243
ابوالعاص کاتجارتی قافلہ 243
سریہ حضرت زیدؓ 244
سریہ حضرت علی ؓ 244
سریہ حضرت عبدالرحمان 244
سریہ حضرت کرزفہریؓ 244
6ھ کےاہم واقعات 246
غزوہ خبیر 247
امیر مدینہ 247
حضرت ابوہریرہؓ کی آمد 247
رسول اللہ ﷺ کےپڑاؤ 247
گدھے کاگوشت 248
شہیدعامرؓ 248
ام المومنین حضرت صفیہؓ 250
فاتح خیبر 251
محمودبن مسلمہ شہید خیبر 253
دردشقیقہ 254
مرحب کاقاتل کون؟ 256
مجہول اور منقطع روایت 257
جنتی جس نے ایک سجدہ بھی نہیں کیا 258
گھوڑے کاگوشت 261
لہن 261
متعہ 261
سلالم آخر میں فتح ہوا 063
ابو الیسر کےلئے دعا 263
صفیہ بنت حی نضریہ کا قصہ 264
ولیمہ 265
خواب 266
بدعہد ی اور مخبری 266
قلعہ زبیر 267
قلعہ ابی اور سموان 268
قلعہ بزاۃ 268
وطیح اور سلالم 268
مصالحت 268
خیبر کی تقسیم 270
مزارع تابع مرضی مالک 270
تقسیم میں اختلاف 271
رسول اللہ ﷺ کا حصہ 272
کس نے پیمائش کی 273
فدک 273
رسول اللہ ﷺ کی وراثت 273
حضرت جعفرؓ کی آمد 277
حضرت جغفرؓ کے رفقا 277
حضرت ابو ہریرہ ؓ کی آمد 279
مدعم غلام 279
زہر آلود بکری کے گوشت کاقصہ اورمعجزے کااظہار 279
اعتراف جرم 080
عورت کو قتل کرایا 281
زینب زوجہ سلام یہودیہ 282
عیینہ کا جھوٹاخواب اور یہودکا اعتراف 283
حضرت ابوایو ب کے لئے دعا 284
یاد آنے پرنماز پڑھ لی 285
’’لاحول ‘‘کی فضیلت 286
شہدائے خیبر 287
حجاج بن علاط بہنری کا قصہ 287
خوشی سے غلام آزاد 289
وادی قریٰ پرنبی ﷺ کا گزرنا‘یہودکامحاصرہ کرنا اور ان سےمصالحت کرنا 291
جلاوطنی 292
حضرت عمرؓ نے جلا وطن کیا 293
عہد نامہ اوراس کی اہمیت 293
حضرت ابن عمرؓ پر حملہ 293
سریہ حضرت ابوبکر ﷜ 294
سریہ حضرت عمر ﷜ 294
سریہ عبداللہ بن رواحہ ﷜ 294
سریہ بشیر بن سعد﷜ 295
سریہ غالب بن عبداللہ کلبی ؓ 295
کلمہ توحیدکی عظمت 295
سریہ کدیہ 296
کرامت 297
سریہ بشیربن سعد 297
سریہ ابی حدرد‘ 297
اقرع بن حابس کی مصالحت کی کوشش 299
محلم کوزمین نے قبول نہ کاکیا 299
سریہ عبداللہ بن حذافہ سہمی 300
عمرۂقضا 301
عمرۂ قصاص 301
رمل 302
ابن رواحہ کےاشعار 302
سواری پرطواف کیا 303
دعوت ولیمہ 304
ھدی کےجانوروں کانگران 306
معجزہ 307
رمل اور حضرت ابن عباس 307
رمل میں اختلاف 308
اذان سے نفرت 308
رسول اللہ ﷺ کاحضرت میمونہ سے شاد ی کا قصہ 308
عمرہ قضاکی ادائیگی کے بعد مکہ سے روانگی 310
دخترحمزخ 310
عمارہ کی شادی 311
سریہ ابن ابی العوجاسلمی 312
8ھ کے واقعات 312
حضرت عمر بن عاص﷜ 312
حضرت خالد بن ولید کااسلام قبول کر نا 315
مکتوب ولیدؓ 316
خواب 316
سریہ شجاع بن وھب اسدی 317
سریہ کعب بن عمیر غفاری 318
غزوہ موتہ 318
یہودی کا تبصرہ 319
کس روز روانگی ہوئی 320
کفار کی فوج دولاکھ 320
حضرت ابن رواحہ ؓ کی ولولہ انگیزتقریر اور جذبہ 321
صف آرائی 322
نصرت کثرت سے نہیں 322
حضرت جعفرطیارؓ 323
ابن رواحہ کےاشعار 323
حضرت خالدؓ کی امارت 324
شہداءکی خبر 324
نوے سے زیادہ زخمی 324
حضرت جعفر ؓ کی جرات 325
حکمت عملی 327
استقبال 328
حضرت سلمہ ؓ 329
تعزیت اور کھانا تیارکرنا 332
تین روز تک رونے کی مہلت 333
محمدبن ابوبکر 335
شفقت 335
قثم بن عباس 335
حضرت زید بن حارثہ ﷜ 336
حضرت زید ؓ کی فضیلت 337
حضرت جعفرطیار﷜ 338
حضرت عبداللہ بن رواحہ 340
طاعت کا نمونہ 340
زہدتقویٰ 340
نعت گوشاعر 341
غزوہ موتہ کے شہداء 342
غزوہ موتہ کےامراءکی فضیلت 343
بادشاہوں کے نام ‘ رسول اللہ ﷺ کے مکاتیب 345
شاہانہ اغزاز 346
خواب 346
ابوسفیان دربارمیں 347
سوالات 347
مکتوب گرامی 348
ہرقل کااعتراف 348
حضرت ابوسفیان ﷜ کاتبصرہ 351
ابن ناظورکابیان 351
ایک اور نجومی کی تائید 351
نیاجال اور ہرقل کاحال 351
ابوسفیان ایلیامیں 352
صفاطر پادری کی شہادت 353
آنحضورﷺ کا نامہ مبارک ‘شام میں عیسائیوں کے شاہ کےنام 354
کسریٰ شاہ فارس کے نام مکتوب 355
باذام کا دو آدمیوں کوآپؐ کولانے کے لئے بھیجنا 356
مکتوبت شیرویہ 357
باذام کااسلام 357
عورت کی سربراہی 358
عجب مبلغ 358
پیشں گوئی 359
رسول اللہ ﷺ کانامہ مبارک‘مقوقس ‘ اسکندریہ کے نام 359
تحائف 360
غزوہ ذات سلاسل 361
حضرت عمرؓ کااجتہاداور غسل کرنا 362
شخیین کا ورع وتقویٰ 363
سریہ حضرت ابوعبیدہ 364
مچھلی کی جسامت 365
سریہ اسامہ بن زید 365
نجاشی کی وفات اور غائبانہ نماز جنازہ 366
فتح مکہ 366
فتح مکہ کے اسباب 366
باعث نزاع 367
پیش گوئی 369
ابوسفیان آستانہ نبوی میں 369
رازداری کی انتہا 373
زاد راہ 373
حاطب بن ابی بلتعہ کا قصہ 374
خط لکھنے کی معذرت 375
بازپرس 375
روانگی کب ہوئی 376
روزہ 376
فتح کب ہوئی 377
راستہ میں روزہ کھول دیا 377
حضرت عباس﷜ 378
ابوسفیان بن حارث اورعبداللہ کااسلام 378
مرالظہران میں 379
عبداللہ بن مسعود﷜ 379
ابوسفیان کی گرفتاری 380
حضرت عباس ؓ کی تشویش 380
بدیل اور حکیم کامسلمان ہونا 380
ابوسفیان اور حضرت عمرؓ 381
ابوسفیان اورحکم کا اعزاز 381
حضرت عباسؓ اور حضرت عمر ؓ کی تکرار 381
اسلام لشکر کا منظر 382
نبوت ہے نہ کہ بادشاہت 382
قومی غیرت 383
حضرت ابوسفیان ؓ کا شکوہ 383
نمازکانظارہ 383
جھنڈاحجون پر 385
مکہ میں کیسے داخل ہوئے 385
سیاہ عمامہ 385
سفیدجھنڈا 386
تلاوت 386
تواضع اور انکساری 386
ہیبت 386
ابوقحافہ کامسلمان ہونا 387
لشکر کی ترتیب 388
حضرت سعدؓ کاعلم 388
خیف بن کنانہ میں قیام 389
نامہ کی غلطی اور حضرت خالدؓ کاعمل 391
عبداللہ بن سعد بن ابی سرح 391
ابن خطل 392
حویرث 392
مقیس بن صبابہ 392
سارہ 392
حضرت عکرمہ﷜ 392
نمازچاشت 394
لکڑی کا کبوتر 395
قریش سے خطاب 395
آزادی او رکلیدکعبہ 396
حضرت ابراہیم کی تصویر 396
360بت 396
بت کواشارہ 397
کعبہ کے اندر تصاویر 398
کعبہ کےاندر نمازپڑھی 398
کعبہ میں اذان بلالی 399
حرم کے مسائل 400
مکہ صلح سے فتح ہوایا بزور 400
خراش خزاعی 401
دعوت میں تبلیغ کااہتمام 402
فضالہ لثیی کاارادۂ قتل 404
مجاہدین کی تعداد 407
فتح مکہ کے موقعہ پرحضرت حسان ؓ کاکلام 407
حضرت خالدؓ بن ولید کی بنی جذیمہ کی طرف روانگی 411
رسول اللہﷺ کی بیزاری 411
ابن عمر اور سالم کااعتراض 412
حضرت خالدؓ کو عتاب 413
عوف کےقتل کاواقعہ 413
حضرت خالد بن ولیدؓ کاعزیٰ کو مسمار کرنا 415
مکہ میں رسول اللہ ﷺ کے قیام کی مدت 416
قیام مکہ کےدوران احکام 417
شرعی حدودمیں سفارش 417
متعہ 418
بیعت 418
بیعت کادستور 419
حضرت ابن عباس کی فضیلت 421
ایک غلط روایت 422
غزوۂ ہوازن او رغزوۂ حنین 423
مشرک سے ہتھیار مستعار 425
12ہرازفوج 426
ذات انواط 426
غنیمت کامثردہ 427
انس ؓ غنوی کا رتبہ 427
آغازجنگ میں اہل اسلام کافرار پھر بہتر انجام 427
ثابت قدم لوگ 428
حضرت انسؓ سے سوالات 429
رسول اللہ ﷺ کی شجاعت 430
حضرت ابوقتادہؓ کی شجاعت 431
مکی لوگوں کی روانگی 432
جاسوس 433
آغازجنگ 433
صفوان کا قول 433
حضرت عباس کی منظرکشی 433
حضرت سلمہ ؓ کی صاف گوئی 434
حضرت ابن مسعودؓ کا بیان 435
70قتل کئے 435
کلام کی تاثیر 435
دعاءمستجاب 436
رعب کی کیفیت 436
شیبہ کا رسول اللہﷺ کے قتل کاارادہ کرنا 436
بنی مالک کے 70 آدمی 439
عیسائی ختنہ نہیں کرتے 439
مالک کی فراست اور زبیر ؓ 441
عورت کوجنگ میں نہ قتل کرنا 442
غزوۂ اوطاس 442
دس مشرک بھائی اورابوعامر 443
ابوعامر کی شہادت 444
لونڈی کامسئلہ 445
عجب نکتہ 445
شہدائے حنین اور اوطاس 445
غزوۂ ہوازن کےبارے اشعار 445
غزوۂ طائف 454
پہلا قصاص 456
سرتابی 456
ابو دغال 456
مسجد طائف 456
کتنے روز محاصرہ 456
23آدمی اترے 458
منجنیق 459
حضرت ابوسفیان ؓ اور حضرت مغیرہ ؓ کاکارنامہ 459
سفارت میں خیانت 459
اعمال جہادکاثوا ب 460
مخنث ھیث 460
خواب 461
شہدائے طائف 462
صخرکاعجب واقعہ 463
طائف سے واپسی اور ہوازن کےمال غنیمت کی تقسیم 464
رسول اللہ ﷺ کی حکمت عملی 465
فراخدلی 466
ہوازن کی آمد 466
ایک کوڑے کامعاوضہ 467
اسیر کب واپس کئے 468
انصار نے صبر نہ کیا 469
انصار کوتسلی 471
انصار کی شکایت 471
خوش اخلاقی اور تبرک 474
تالیف قلبی کی ایک مثال 475
مالک بن عوف نضری ؓ 475
عمروؓ بن ثعلب 476
حضرت حسان ؓ کاشکوہ 476
رسول اللہ ﷺ کی تقسیم پراعتراض 477
رسول اللہ ﷺ کی رضاعی ہمشیرہ کاجعرانہ میں آنا 479
بہن سےسلوک 479
نضیر کااظہار تشکر 480
ذی قعدہ میں عمروجعرانہ 481
عمرہ قعدہ میں جعرانہ 481
چاشت اور عمر ہ جعرانہ 482
احرام 483
حضرت معاویہ ؓ نےبال کاٹے 484
مدینہ کب آئے 484
کعب بن زہیر کامسلمان ہونا 485
اور قصیدہ بانت سعاد 485
انصار کااعتراض 492
8ھ کےمشہور واقعات 493
غزوۂ تبوک 495
ناسخ آیت 496
جد کابہانہ 496
منافقوں کی ردش 496
حضرت عثمان غنی ﷜نے سب زیادہ مال دیا 497
بر سرمنبر چندہ کی اپیل 497
جنگ سے پھیچھے رہنےوالوں کابیان 498
ابویعلی اور ابن مغفل 499
حضرت ابوموسیٰ ﷜ کاواقعہ 499
تبوک کی طرف 501
امیر مدینہ 501
حضرت ابوذر ﷜ 503
’’ساعتہ عسرۃ‘‘کی تفسیر 503
معجزا نہ بارش 503
طعام میں معجزانہ برکت 504
ثمودکےمکانات سے گزرنا 505
ناقہ والے کنوئیں پر 505
آندھی کی پیش گوئی او ردو آدمیوں کی خلاف ورزی 506
ایلہ کابادشاہ اور امن کاپروانہ 507
دو نمازوں کو جمع کرنا 507
تبوک میں کھجور کےتنے سے ٹیک لگاکر خطبہ دینے کابیان 508
نمازی کے آگے سے گزرنے کی سزا 509
معاویہ بن ابی معاویہ کی غائبانہ نمازجنازہ 510
تبوک میں رسول اللہﷺ کے پاس قیصر کےقاصد کی آمد 510
مکتوب نبوی برائے یحنہ بن رۂبہ باشندگان ایلہ 512
مکتوب نبوی برائے اہل جرباء واذرح 513
حضرت خالدؓ بن ولید کو اکیدردو مہ کی طرف روانہ کرنا 513
وادی مشفق میں پانی کامعجزہ 513
آپﷺ کی ہلاکت کامنصوبہ 515
صرف حضرت حذیفہ ؓ کو ان کے ناموں کاعلم تھا 516
چودہ فراد منافق تھے 516
مسجد ضرار کاقصہ 518
مسجد ضرار کی رخصت 518
مسجد قبایا مسجد نبویؐ 579
رسول اللہ ﷺ کاحضرت ابن عوف ؓ کی اقتدادکر نا 520
معذورلوگ برابر کے حصہ دار 520
استقبال 520
حدیث حضرت کعب ﷜ 521
ابوقتادہؓ کی بے رخی 523
شاہ غسان کامکتوب 523
ہلال کی بیوی 524
بشارت 524
ان نافرمانوں کابیان جوپیھپھے رہ گئے تھے 526
حضرت ابولبابہؓ 526
وفد ثقیف کی آمد 529
حضرت عروہ ثقفی ؓ کا اسلام اور شہادت 529
بت مسمار نہ کرنا 531
نمازنہ پڑھنا 531
اسلام کے بعد زکوٰۃ اور جہاد 531
عثمان ؓ کو امام نامزد کر دیا 531
امام کونصیحت 532
رسول اللہﷺ نے خود دم کیا 533
سحری اور افطاری 533
بت خانے کامال 534
اندھی عقیدت 534
مکتوب گرامی 536
عبداللہ بن ابی کی موت 536
رحمت عالم 537
میت کو قبرسے نکالنا 538
ثعلبہ بن حاطب 538
حضر ت ابوبکر صدیق ﷜کوامیر حج بنا کر بھیجنا 539
مشرک اور برہنہ شخص نہ حج کرے نہ طواف 540
معاہدہ کی تفصیل 541
کیا حضرت ابوبکر ﷜ واپس چلے آئے ؟ 542
9ھ کےاہم واقعات 543
نجاشی کی وفات 543
حضرت ام کلثوم کی وفات 543
مسجد ضرار 543
معاویہ لیثی اور عبداللہ بن ابی کی نمازجنازہ 543
رسول اللہ ﷺ کی خدمت میں آنے والے وفد 544
بعض وفد فتح مکہ سے قبل آئے 544
مزینہ کاسب سےپہلاوفد 545
خزاعی مزنی 545
وفدبنی تمی

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
17.3 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اسلام حج خطبات ومقالات سنت سیرت سیرت النبی ﷺ علماء عمرہ نبوت نماز وضو

صحیح خطبات رسول ﷺ

صحیح خطبات رسول ﷺ

 

مصنف : ابراہیم ابو شادی

 

صفحات: 227

 

سیرت نبوی ﷺ کامو ضوع ہر دور میں مسلم علماء ومفکرین کی فکر وتوجہ کا مرکز رہا ہے،اور ہر ایک نے اپنی اپنی وسعت وتوفیق کے مطابق اس پر خامہ فرسائی کی ہے۔ نبی کریم ﷺ کی سیرت کا مطالعہ کرنا ہمارے ایمان کا حصہ بھی ہے اور حکم ربانی بھی ہے۔قرآن مجید نبی کریم ﷺ کی حیات طیبہ کو ہمارے لئے ایک کامل نمونہ قرار دیتا ہے۔اخلاق وآداب کا کونسا ایسا معیار ہے ،جو آپ ﷺ کی حیات مبارکہ سے نہ ملتا ہو۔اللہ تعالی نے نبی کریم ﷺ کے ذریعہ دین اسلام کی تکمیل ہی نہیں ،بلکہ نبوت اور راہنمائی کے سلسلہ کو آپ کی ذات اقدس پر ختم کر کےنبوت کے خاتمہ کے ساتھ ساتھ سیرت انسانیت کی بھی تکمیل فرما دی کہ آج کے بعد اس سے بہتر ،ارفع واعلی اور اچھے وخوبصورت نمونہ وکردار کا تصور بھی ناممکن اور محال ہے۔آپ ﷺ کی سیرت طیبہ پر متعدد زبانوں میں بے شمار کتب لکھی جا چکی ہیں،اور لکھی جا رہی ہیں،جو ان مولفین کی طرف سے آپ کے ساتھ محبت کا ایک بہترین اظہار ہے۔سیرت نبوی ﷺ کے متعدد پہلو ہیں جن میں ایک پہلو آپ ﷺ کے خطبات بھی ہیں۔آپ ﷺ نے اپنی زندگی میں بے شمار خطبات ارشاد فرمائے ،مگر یہ سب خطبے اول تا آخر مکمل صورت میں کسی ایک کتاب میں ایک جگہ نہیں ملتے ہیں۔  زیر تبصرہ کتاب ’’صحیح خطبات رسولﷺ ‘‘محترم ابو انس محم سرور گوہر صاحب کی تصنیف ہے ،جس میں انہوں نے آپﷺ کے خطبات کو صحیح احادیث کو مد نظر رکھتے ہوئے تفصیل سے بیان کر دیا ہے۔اللہ تعالی مولف کی اس محنت کو قبول فرمائے اور ہمیں آپ ﷺ کے اسوہ حسنہ کو اپنانے کی بھی توفیق دے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
مقدمہ 15
خطبہ وخطیب کےآداب 33
عقیدہ اورعلامات قیامت 50
مسیح دجال 50
جنت اورجہنم کاذکر 78
تم اللہ سے اس حال میں ملاقات کروکہ تمہارے پاؤں میں جوتاہوگا نہ بدن پر کپڑا 79
ذکر قیامت 82
جنت اورجہنم کےبارےمیں ایک دوسراخطبہ 82
فتنہ قبر 90
مشرق فتنوں کی سرزمین 91
رسو ل اللہ ﷺ کاان کاموں کےمتعلق بتاناجوہوچکے اورجوہونے والے ہیں 91
لشکر کادھنسنا اورقرب قیامت 91
تمہارارب ایک ہے 92
(لاالہ الاللہ )کہوکامیاب ہوجاؤگے 92
طہارت نماز 93
جمعہ کےد ن غسل کرنا 93
جمعہ کےدن جب امام خطبہ دےرہا دورکعتیں پڑھنا 93
جب  تک نمام کاانتظار کرتےرہو تم نماز ہی میں ہوتےہو 94
رسو ل اللہ ﷺ اپنےصحابہ کرام کو نماز کی تعلیم فرماتے 95
سورج گرہن 96
نماز کسوف 100
سورج گرہن اورآپ کی گھبراہٹ 101
استسقاء 107
وہ شخص جواچھی طرح وضو کرتاہے اوراللہ کےلیے اخلاق کےساتھ دورکعتیں پڑھتاہےوہ جنتی ہےنماز جمعہ کاحکم اوراسےترک کرنے والےکی سزا 108
نماز جمعہ کاحکم اسے ترک کرنوالے کی سزا 108
عرابی تمہاری نماز عشاء کےنام پر غالب نہ آئیٹ سن لو کہ وہ عشاء ہے 109
رات کی نماز دودورکعت ہے 110
نماز جمعہ ترک کرنےوالے کی سزاکےمتعلق دوسراخطبہ 110
ہلکی نماز پڑھانے کاحکم 111
میں تمہاراامام ہوں پس مجھ سےسبقت نہ کرو 111
نماز اپنےرب سے سرگوشی کرتاہے 112
اہل قرآن وترپڑھاکرو 112
نماز میں صف درست برابرکرنا واجب ہے 112
زکوۃ وصدقات 114
صدقہ پر ترغیب 114
دینےوالا ہاتھ اوپر اولا ہے 116
روزہ 120
رمضان ماہ مغفرت 120
حج 121
عرفا ت میں خطبہ 121
فرض حج 122
قربانی کےدن خطبہ 122
حج میں لوگوں کےاحرام باندھنے کی جگہ 123
منیٰ میں خطبہ 124
حج میں خطبہ 124
قربانی کے دن دوسرا خطبہ 125
یوم الترویہ سےپہلے خطبہ 126
حج میں قربانی 126
عمرہ حج میں داخل ہوگیا 127
محرم کیاپہن سکتاہے 128
تاکید فسخ کےمتعلق آپﷺ کاخطبہ اورصحابہ کرام کی آپ کیےلیے اطاعت 129
حج کی نیت کو عمرہ میں بدلنے کاحکم 129
انگلی پررکھ کر پھینکی جانےوالی کنکری جیسی کنکریوں کےساتھ جمرہ کرو 130
جوحج کرےتوو حج میں عمرے کاتلبیہ پکارے 132
الجنائز 132
آپﷺ کازیدجعفراورعبداللہ بن رواحہ ﷢ کی وفات کی خبر دینا 132
نبی ﷺ کی وفات مسلمانوں کےلیے سب سےبڑی مصیبت ہے 133
جہاد 134
تبوک کےدن خطبہ 134
جہاد کی فضیلت 135
دشمن  سے مڈبھیڑ ہونے کی تمنا نہ کرو اجنت تلواروں کےسائے میں 136
سن لو قوت سےمراد تیراندازی ہے 136
حنین کےدن خطبہ 137
خواتین کو عظ ونصیحت 138
خواتین کووعظ ونصیحت کی اوارنہیں صدقہ کرنے کاحکم فرمایا 138
انگلیوں کےپوروں پر تسبیح کرنا 139
پڑوسن سےحسن سلوک 139
قرآن کریم ارواس سےوابستگی 140
منبر پرسورۃ ص کی قراءت 140
منبر پر سورۃ ق کی قراءت 140
قرآن کریم سے وابستگی 140
منبر پر آیت کی قراءت 142
منبر پرقرآن کی قراءت 143
اللہ کی کتاب اوراس کےنبی کی سنت کےساتھ تمسک اختیار کرنےکےبارےمیں خطبہ منبر پر سورۃ براءؤت کی قراءت 143

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
5 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اخلاق و آداب تراجم حدیث نبوت نماز وضو

صحیفہ ہمام بن منبہ(اپ ڈیٹ)

صحیفہ ہمام بن منبہ(اپ ڈیٹ)

 

مصنف : حافظ عبد اللہ شمیم

 

صفحات: 490

 

صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین نے حضور نبی کریم ﷺ سے جو احادیث منضبط کی تھیں انہیں صحیفہ کا نام دیا گیا۔ ان صحائف میں اس بات کا خیال نہیں رکھا جاتا تھا کہ احادیث کی تعداد کتنی ہے۔ مثلاً حضرت ابو ایوب انصاری ؓاور بریدہ بن حصیب ؓکے صحیفوں میں 150 سے زیادہ احادیث تھیں۔ جبکہ عبداللہ بن عمرو بن عاص اور جابر بن عبداللہ ؓ کے صحیفوں میں ایک ہزار سے زائد احادیث موجود تھیں۔ زیر نظر صحیفہ ’ہمام بن منبہ‘ بھی حضرت ابو ہریرۃ ؓکی ان روایات کا مجموعہ ہےجوانھوں نے اپنے شاگرد ہمام بن منبہ بن کامل الصنعانی کو لکھوائی تھیں۔ ’صحیفہ ہمام بن منبہ‘ اگرچہ کتب احادیث میں متعدد جگہوں میں بکھرا ہوا تھا لیکن اصل صحیفہ مفقود تھا۔ اللہ تعالیٰ محترم ڈاکٹر حمیداللہ کی قبر پر رحمت نازل فرمائے، کہ انہوں نے دمشق اور برلن کی لائبریری سے مکمل صحیفے کو دریافت کر لیا۔ اسی صحیفے کا اردو قالب اس وقت آپ کے سامنے ہے، جو حافظ حامد محمود الخضری اور ان کے تلمیذ حافظ عبداللہ شمیم کی محنت کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ جنہوں نے صحیفہ کے ترجمہ و تشریح اور تخریج و اضافہ کا کام نہایت عرق ریزی سے کیا ہے۔ اس صحیفہ کی کل 139 احادیث ہیں، ان میں سے 61 عقائد و ایمانیات، 46 عبادات، 9 معاملات، 17 اخلاق و آداب اور 6 متفرق مسائل سے تعلق رکھتی ہیں۔ علاوہ ازیں اس صحیفہ میں 12 قدسی احادیث بھی موجود ہیں۔
 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 19
مقدمۃ الکتاب 25
اجازۃ فی روایۃ الحدیث 64
امت محمدیہ علی صاحبہا الصلوۃ والسلام کی فضیلت 70
محمد ﷺ آخری نبی ہیں 73
بخیل اور سخی کی تمثیل 75
جنت کے درخت کا سایہ 80
حسد اور پیٹھ پیچھے برائی کی ممانعت کا بیان 82
جمعہ کے دن قبولیت کی گھڑی 87
فجر اور عصر کی نمازوں کی فضیلت 90
فرشتوں کی نمازوں کے لیے دعا 92
نماز میں آمین کہنے پر سابقہ گناہوں کی معافی 96
قربانی کے جانور پر سواری کی اجازت 99
کم ہنسنا اور زیادہ رونا 101
چہرے پر مارنے کی ممانعت 103
دوزخ کی آگ شدت میں دیناوی آپ سے 70گنا زیادہ ہے 106
روزہ کی فضیلت 111
روزہ دار کے منہ کی بومشک سے بھی زیادہ خوشبودار ہے 114
ایک نبی کا چیونٹیوں کو جلانا 118
رسول کریم ﷺ کا شوق جہاد فی سبیل اللہ 120
اللہ سے ملاقات کی چاہت 124
قیامت کی نشانیاں 130
قیامت کی نشانی،دو بڑی جماعتوں کی جنگ 135
اذان سن کر شیطان بھاگ جاتا ہے 142
اللہ تعالیٰ کا ہاتھ بڑی سخاوت والا ہے 145
کثرت سوال سے پرہیز 156
جنبی کے لیے روزے کا حکم 162
ایک جوتا پہن کر چلنے کی ممانعت 179
انفاق فی سبیل اللہ کی برکت 187
رسول کریم ﷺ اللہ کے خزانچی ہیں 193
نماز میں صف بندی کا حکم 200
اچھا خواب نبوت کا چھپالیسواں حصہ ہے 215
کفار کے ساتھ جہاد وقتال کا حکم 224
جنت اور دوزخ کے مابین مباحثہ 230
ایک نیکی کا ثواب دس نیکیاں 240
جنت کا سب سے کم درجہ 246
آدم ؑ کی تخلیق اور سلام کا طریقہ 254
مالدار مقروض کی وعدے میں تاخیر ظلم ہے 271
انسانی جسم سے ریڑھ کی ہڈی کو زمین نہیں کھاتی 287
صوم وصال کی ممانعت 290
انسان کےجوڑوں پر ہر روز صدقہ واجب ہے 305
حقیقی مسکین کون ہے؟ 316
موت  کی تمنا مت کرو 322
وضو کے دوران ناک میں پانی ڈالنا 366
رسول اللہ ﷺ کی سخاوت 338
جنت میں سب سے پہلے جانے والے گروہ کی فضیلت 346
پہلی امتوں کے لیے مال غنیمت حلال نہ تھا 352
بلی پر ظلم کرنے والی عورت کے لیے عذاب 353
امام کو غلطی پر خبردار کرنا 363
لوگوں کا سوال کہ اللہ کوکس نے پیدا کیا؟ 369
دو قسم کھانے والوں کے درمیان قرعہ اندازی 376
بوڑھے شخص میں طول عمر اور کثرت مال کی تمنا 384
ایک نیکی کا سات سو گنا تک بڑھنا 396
امام نماز میں تخفیف کرے 400
بغیر وضو نماز نہیں ہوتی 409
کافر سات اور مومن ایک آنت میں کھاتا ہے 420
تکبر اورغرور سے کپڑا ٹخنوں سے نیچے لٹکانا 428
نیند غالب ہو تو نماز نہ پڑھو 433
حالت نماز میں تھوک آ جائے تو 440
قریش کی عورتوں کی فضیلت 464
نماز کے انتظار کا ثواب اور فضیلت 469
دوقسم کی تجارت اور دو قسم کے لباس منع ہے 481
مال غنیمت کی تقسیم کے حکم کے متعلق 485
مال فے 485
مال غنیمت 486
مال غنیمت کا حکم 486

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
8.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اخلاق و آداب تراجم حدیث نبوت نماز وضو

صحیفہ ہمام بن منبہ

صحیفہ ہمام بن منبہ

 

مصنف : حافظ عبد اللہ شمیم

 

صفحات: 490

 

صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین نے حضور نبی کریم ﷺ سے جو احادیث منضبط کی تھیں انہیں صحیفہ کا نام دیا گیا۔ ان صحائف میں اس بات کا خیال نہیں رکھا جاتا تھا کہ احادیث کی تعداد کتنی ہے۔ مثلاً حضرت ابو ایوب انصاری ؓاور بریدہ بن حصیب ؓکے صحیفوں میں 150 سے زیادہ احادیث تھیں۔ جبکہ عبداللہ بن عمرو بن عاص اور جابر بن عبداللہ ؓ کے صحیفوں میں ایک ہزار سے زائد احادیث موجود تھیں۔ زیر نظر صحیفہ ’ہمام بن منبہ‘ بھی حضرت ابو ہریرۃ ؓکی ان روایات کا مجموعہ ہےجوانھوں نے اپنے شاگرد ہمام بن منبہ بن کامل الصنعانی کو لکھوائی تھیں۔ ’صحیفہ ہمام بن منبہ‘ اگرچہ کتب احادیث میں متعدد جگہوں میں بکھرا ہوا تھا لیکن اصل صحیفہ مفقود تھا۔ اللہ تعالیٰ محترم ڈاکٹر حمیداللہ کی قبر پر رحمت نازل فرمائے، کہ انہوں نے دمشق اور برلن کی لائبریری سے مکمل صحیفے کو دریافت کر لیا۔ اسی صحیفے کا اردو قالب اس وقت آپ کے سامنے ہے، جو حافظ حامد محمود الخضری اور ان کے تلمیذ حافظ عبداللہ شمیم کی محنت کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ جنہوں نے صحیفہ کے ترجمہ و تشریح اور تخریج و اضافہ کا کام نہایت عرق ریزی سے کیا ہے۔ اس صحیفہ کی کل 139 احادیث ہیں، ان میں سے 61 عقائد و ایمانیات، 46 عبادات، 9 معاملات، 17 اخلاق و آداب اور 6 متفرق مسائل سے تعلق رکھتی ہیں۔ علاوہ ازیں اس صحیفہ میں 12 قدسی احادیث بھی موجود ہیں۔

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 19
مقدمۃ الکتاب 25
اجازۃ فی روایۃ الحدیث 64
امت محمدیہ علی صاحبہا الصلوۃ والسلام کی فضیلت 70
محمد ﷺ آخری نبی ہیں 73
بخیل اور سخی کی تمثیل 75
جنت کے درخت کا سایہ 80
حسد اور پیٹھ پیچھے برائی کی ممانعت کا بیان 82
جمعہ کے دن قبولیت کی گھڑی 87
فجر اور عصر کی نمازوں کی فضیلت 90
فرشتوں کی نمازوں کے لیے دعا 92
نماز میں آمین کہنے پر سابقہ گناہوں کی معافی 96
قربانی کے جانور پر سواری کی اجازت 99
کم ہنسنا اور زیادہ رونا 101
چہرے پر مارنے کی ممانعت 103
دوزخ کی آگ شدت میں دیناوی آپ سے 70گنا زیادہ ہے 106
روزہ کی فضیلت 111
روزہ دار کے منہ کی بومشک سے بھی زیادہ خوشبودار ہے 114
ایک نبی کا چیونٹیوں کو جلانا 118
رسول کریم ﷺ کا شوق جہاد فی سبیل اللہ 120
اللہ سے ملاقات کی چاہت 124
قیامت کی نشانیاں 130
قیامت کی نشانی،دو بڑی جماعتوں کی جنگ 135
اذان سن کر شیطان بھاگ جاتا ہے 142
اللہ تعالیٰ کا ہاتھ بڑی سخاوت والا ہے 145
کثرت سوال سے پرہیز 156
جنبی کے لیے روزے کا حکم 162
ایک جوتا پہن کر چلنے کی ممانعت 179
انفاق فی سبیل اللہ کی برکت 187
رسول کریم ﷺ اللہ کے خزانچی ہیں 193
نماز میں صف بندی کا حکم 200
اچھا خواب نبوت کا چھپالیسواں حصہ ہے 215
کفار کے ساتھ جہاد وقتال کا حکم 224
جنت اور دوزخ کے مابین مباحثہ 230
ایک نیکی کا ثواب دس نیکیاں 240
جنت کا سب سے کم درجہ 246
آدم ؑ کی تخلیق اور سلام کا طریقہ 254
مالدار مقروض کی وعدے میں تاخیر ظلم ہے 271
انسانی جسم سے ریڑھ کی ہڈی کو زمین نہیں کھاتی 287
صوم وصال کی ممانعت 290
انسان کےجوڑوں پر ہر روز صدقہ واجب ہے 305
حقیقی مسکین کون ہے؟ 316
موت  کی تمنا مت کرو 322
وضو کے دوران ناک میں پانی ڈالنا 366
رسول اللہ ﷺ کی سخاوت 338
جنت میں سب سے پہلے جانے والے گروہ کی فضیلت 346
پہلی امتوں کے لیے مال غنیمت حلال نہ تھا 352
بلی پر ظلم کرنے والی عورت کے لیے عذاب 353
امام کو غلطی پر خبردار کرنا 363
لوگوں کا سوال کہ اللہ کوکس نے پیدا کیا؟ 369
دو قسم کھانے والوں کے درمیان قرعہ اندازی 376
بوڑھے شخص میں طول عمر اور کثرت مال کی تمنا 384
ایک نیکی کا سات سو گنا تک بڑھنا 396
امام نماز میں تخفیف کرے 400
بغیر وضو نماز نہیں ہوتی 409
کافر سات اور مومن ایک آنت میں کھاتا ہے 420
تکبر اورغرور سے کپڑا ٹخنوں سے نیچے لٹکانا 428
نیند غالب ہو تو نماز نہ پڑھو 433
حالت نماز میں تھوک آ جائے تو 440
قریش کی عورتوں کی فضیلت 464
نماز کے انتظار کا ثواب اور فضیلت 469
دوقسم کی تجارت اور دو قسم کے لباس منع ہے 481
مال غنیمت کی تقسیم کے حکم کے متعلق 485
مال فے 485
مال غنیمت 486
مال غنیمت کا حکم 486

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
11 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اخلاق و آداب اسلام بدعت تاریخ سیرت شراب نوشی فقہاء قصص و واقعات

سچے واقعات اور ہنسی مزاح کے اسلامی آداب

سچے واقعات اور ہنسی مزاح کے اسلامی آداب

 

مصنف : ابو عمار محمود المصری

 

صفحات: 518

واقعات جہاں انسان کے لیے خاصی دلچسپی کا سامان ہوتے ہیں وہیں یہ انسان کے دل پر بہت سارے پیغام اوراثرات نقش کر دیتے ہیں۔ اسی لیے قرآن مبین میں اللہ تعالیٰ نے جا بجا سابقہ اقوام کے قصص و واقعات بیان کیے ہیں تاکہ لوگ ان سے عبرت و نصیحت حاصل کریں اور اپنی زندگی میں وہ غلطیاں نہ کریں جو ان سے سرزد ہوئیں۔ دین اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے جو ہر موڑ پر مکمل راہ نمائی کرتا ہے خوشی ہو یاغمی ہواسلام ہر ایک کی حدود وقیوم کو بیان کرتا ہے تاکہ کو ئی شخص خوشی یا تکلیف کے موقع پر بھی اسلام کی حدود سےتجاوز نہ کرے فرمان نبوی ہے ’’ مومن کامعاملہ بھی عجیب ہے اس کا ہر معاملہ اس کے لیے باعث خیر ہےاور یہ چیز مومن کے لیے خاص ہے ۔ اگر اسے کوئی نعمت میسر آتی ہے تووہ شکرکرتا ہے اور یہ اس کےلیے بہترہے اور اگراسے کوئی تکلیف پہنچتی ہے تو وہ صبر کرتا ہے اور یہ بھی اس کےلیے بہتر ہے۔‘‘ نبی کریم ﷺ اور صحابہ کرام وتابعین کی سیرت وسوانح میں ہمیں جابجا پاکیزہ مزاح او رہنسی خوشی کے واقعات او رنصیت آموز آثار وقصص ملتے ہیں کہ جن میں ہمارے لیے مکمل راہ نمائی موجود ہے۔ لہذا اہمیں چاہیے کہ خوش طبعی اور پند نصیحت کےلیے جھوٹے ،من گھڑت اور افسانوی واقعات ولطائف کےبجائے ان مقدس شخصیات کی سیرت اور حالات کا مطالعہ کریں تاکہ ان کی روشنی میں ہم اپنے اخلاق وکردار اور ذہن وفکر کی اصلاح کرسکیں۔ زیر تبصرہ کتا ب’’نصیحت آموز اور عبرت انگیز سچے واقعات‘‘شیخ ابو عمار محمود المصری کی تصنیف ہے اس کتا ب میں فاضل مصنف نے قرآن وحدیث اور صحابہ وتابعین کی سیرت کی روشنی میں قارئین کرام کے لیے ہنسی مذاق کےاسلامی آداب واحکام بیان کیے ہیں اور اخلاق وکردار کی اصلاح کے لیے انتہائی سبق آموز اور نصیحت خیز واقعات ذکر کیے ہیں۔اس دلچسپ کتاب کو محترم جناب مولانا یاسر عرفات ﷾ نے اردو قالب میں ڈھالا ہے۔ اللہ تعالیٰ مصنف ، مترجم ،اور ناشرین کی اس کاوش کو قبول فرمائے اوراسے عوام الناس کی اصلاح کاذریعہ بنائے۔ (آمین)

 

عناوین صفحہ نمبر
عرض ناشر 21
خوشی طبعی اورہنسی مذاق کی جائز اورناجائز شکلیں
اسلام اورنشاط طبع 25
خوش طبعی اورسیرت  مطہرہ 25
نبی کریم ﷺ کی خوش مزاجی 27
ایک اچھوتا واقعہ 32
ایک اورقصہ 33
یہ اس کےبدلے ہے 35
الہی ہمارے اردگرد بارش برساہم پر نہ برسا 36
آپﷺ خون چکاں حالات میں بھی مسکراتے تھے 37
نبی کریم ﷺ کوگزند پہنچائی جاتی اورآپ جوابا مسکرادیتے 38
امت کو بشاشت  اورعمدہ بات کرنے کی نبوی ترغیب 39
صحابہ کرام ﷢کےنشاط طبع کے متعلق  اقوال وواقعات 39
خوش طبعی فقہاء اورمحدثین کی نظر میں 42
خوش طبعی کے آداب
مزاح کی تعریف 45
خوش طبعی کےلحاظ سےلوگوں کی تین اقسام 45
جائز خوش طبعی 46
حرام خوش طبعی 47
حرام خو ش طبعی کی صورتیں 49
کلیاں اورموتی
سچی توبہ 61
چور کی چوری 65
ہرمزان کےقبول اسلام کاواقعہ 66
سانپ اورنشے میں مست آدمی 67
رب کےدرکاسوالی جائے کبھی نہ خالی 68
وہ اللہ عزوجل کےخوف سے اپنی انگلیاں جلادیتاہے 69
سفینہ نجات 72
ایک عورت کی توبہ 74
مومن قوت کااستعمال محض رضائے الہی کی خاطر کرتاہے 76
پانچ چیزیں جو آپکو معصیت الہی سےدور لے جاتی ہیں 77
شیطان کےقدموں کی پیروی نہ کرو 79
چھے اشیاتجھے کافی ہے 83
جسم کے دوپاکیزہ اوردوخبیث اعضا 85
تم جہاں کہیں ہوموت تمھیں آگھیرے گی 86
اللہ تعالی سے راضی ہوجا 87
وہی اللہ ہے 89
سچ کی برکت 89
سموئیل کاایفائے عہد 91
دودھ فروخت کرنےوالی 92
ناقابل فراموش سبق 93
حضرت امیرمعاویہ ﷜ اوران کااچھوتا موقف 94
جودوسخا کیطرف سبقت کرو 96
کتا اورسخی غلا م 102
معززین کی لغزشوں کی تلافی کرنےوالا 96
بیوگان اوریتیموں سےحسن سلوک کی برکت 104
مومن کی فراست 108
اے میری قوم میں تم سےمال کامطالبہ نہیں کرتا 110
تمھارے گھر ہی سے بچا تقوی عیاں ہوتاہے 111
امام شافعی ﷫ اورامام احمد ﷫کےگھر میں 112
متقی دل کاصاف کلام 113
ہرجاندار کارزق اللہ کےذمے ہے 118
آزمایش 119
دنیا دنیا داروں کےساتھ ایسا ہی کرتی ہے 120
دودرہم کےعوض شادی 125
عمدہ شہر اپنے رب کےحکم سے نباتات اگاتاہے 128
بھنور جووزن میں سونے کےبرابر تھا 130
اے غلام اپنے باغ کی طرف بےخوف وخطر لوٹ جاؤ 133
بہتر بدلہ 136
اچھے کام بری موت سے بچالیتے ہین 138
عورتیں تین طرح کی ہوتی ہیں 139
شادی کی رات گراں قدروصیت 141
دنیا پانی کےگھونٹ کےبرابر بھی نہیں 142
مغیرہ بن شعبہ ﷜ کی ذہانت 143
جو ٹانگ پھیلاتا ہے جو ہاتھ نہیں پھیلاتا 143
عبداللہ بن عباس ﷜ نےخارجیوں کو لاجواب کردیا 144
ادب باعث نجات ہے 148
میں وہ شخص ہوں جو تجھے پہچانتا ہے 149
برے فہم کابرا نتیجہ 150
ایک کےبدلے دس 151
گفتگو کی چار صورتیں 152
ہمارے جگر گوشے 153
ایک ماں کی بیٹے کو وصیت 153
ممتا کادل 154
جیسا کرو گے ویسا بھر وگے 156
بیس سال ہمسائے کی تکالیف برداشت کیں تو وہ مسلما ن ہوگیا 157
امام بخاری ﷫ کی ذہانت کاعجیب وغریب واقعہ 157
ہرجھوٹے کےلیے پیغام 159
مجبور اوربے بس کی  فریاد رسی کون کرتا ہے ؟ 161
چغل چور ی سے بچ جاؤ 163
شیطانی حیلہ 164
جواپنے بھائی کےلیے گڑھا کھودے خودہی اس میں گرے گا 165
مکر کرنے والوں کاانجاام 167
حجاج اورچوبیس عورتوں کی کفالت کرنےوالے کاقصہ 168
ایک عورت کاشکوہ اورقاضی کی معاملہ فہمی 170
اونٹنی اورمہمان 172
انسان نمابھیڑیا اورگناہ کی آخری سیٹرھی 174
دعا کےعد م قبولیت کےدس اساب 177
مظلوم کی بددعا سے بچو 178
ہائے بچاؤ اے معتصم 179
گائے کی قیمت 181
اللہ اپنے بندوں کےبارے میں خوب خبر رکھنے والا ہے 184
بھسم کردینے والی ساعت اورپروانہ نجات 185
ہرجاندار کارزق اللہ کے ذمے ہے 187
اے مشکل کشا 189
سحری کی دعا 189
دعاکشادگی کی چابی ہے 190
دعاکادامن مت چھوڑو وہ شفا کےانتہائی قریب ہے 191
مشکلات کو ٹال دینے والی دعا کو لازمی اختیار کرو 193
اگر اللہ کو صدق دل سےپکارو گےتو وہ تمہاری مراد بھرلائے گا 194
جنگلی جانور اللہ کےلشکر کےلیے راستہ کشادہ کردیتے ہیں 195
طواف کےدوران خاتون کی بینائی لوٹ آئی 196
بار ش اتری اورسارا قبیلہ مسلمان ہوگیا 196
اللہ تعالی نے ہمیں آسمان سے پلا دیا 197
رات کےحصے 198
والدین کی دعائے برکت 200
وہ اپنے باپ کی ددعا سےکامیاب ہوااورمرتبہ عظیمہ کو پہنچ گیا 201
ماں کی دعا کےباعث اللہ تعالی اس کی حفاظت فرمالیتے ہیں 202
بیٹے کی دعا کےباعث باپ کو ہدایت مل گئی 203
اولاد کوبدعانہ دو 204
اس نےبددعا کی تواس کے ہاتھ ٹٹیرھے ہوگئے 205
ماں کی بددعا کی سبب اس کاسردھڑ سےجدا ہوگیا 206
قبرمیں سٹیمپ 207
ایک نوجوان اوراس کےخاندان کاخاتمہ 209
وہ تیری کھیتی اوریہ تیراحاصل ہے 217
جیسا کرو گے ویسا کرو گے 226
کسی مسلمان کوخوفزد ہ مت کرو 226
اللہ تعالی کو ظالموں کی کرتوتوں سے بے خبرنہ سمجھو 228
دن بدلتے رہتے ہیں 229
کیا ہے کوئی عبرت حاصل کرنےوالا 237
یہ کسی بشر کانہیں بلکہ رب البشر کاانصاف ہے 241
جیسا عمل  ویسا بدلہ 251
ظالموں کاانجام کیسا ہوا 253
ہر ظالم کےلیے عبرت 255
یقینا آخرت  کاعذاب زیادہ سخت اورباقی رہنے والاہے 259
بے شک تیرے رب کی پکڑیقینا بڑی سخت ہے 265
چالیس ہندوجو مسجد بابری کو منہدم کرنے کے بعداندھے ہوگئے 271
میں نے عمرو کاارادہ کیااوراللہ تعالی نےخارجہ کاارداہ کیا 273
اللہ تعالی ہی باکمال عدل اورفیصلہ کرنےوالا ہے 278
افسوس اس کوتاہی پرجو میں نےاللہ کےحق میں اختیار کی 288
میرے آقا میں نے اسے جنت پایا 294
لوگ پانچ کےمحتاج ہیں 295
امام ابو حنیفہ ﷫ کاورع 295
والد ہ کے احساسات کےلیے امام ابو حنیفہ ﷫ کاخوف 296
بادشاہ کے پاس جانے والے کے لیے ایک قیمتی نصیحت 297
اے نوجوان کیاہم نے تجھے ضائع کردیا؟ 297
اپنے مریضوں کاصدقے سے علاج کرو 299
مباحثے اورمناظرے میں ابو حنیفہ ﷫ کی فوقیت 301
امام ابو حنیفہ ﷫ جہم بن صفوان پر حجت قائم کرتے ہیں 304
اس نے سات جگہوں پر غلطی کی ہے 311
مجھے معلوم ہوگیا کہ یہ آدمی یقینا فقیہ ہے 312
یہ کس کےفتوے ہیں 313
وجود خالق کے منکرین پر اقامت حجت 314
رحمن عرش پر مستوی ہوا 314
خواب مسرت آفریں ہوتاہے  فریبی نہیں 315
کھڑا ہوجاتوعلم کاخزانہ ہے 316
مجھے معلوم ہوگیا کہ اللہ نے بلا وجہ تجھے رخصت نہیں نوازی 317
عفو اوردرگرز کی آخری بلندی 317
نبی مکرم ﷺ کے تذکرے کےوقت ان کی حالت ایسی ہی ہوتی تھی 318
نبی اکرم ﷺ کاادب اسی طرح ہوتاہے 319
حدیث رسول ﷺ کی تعظیم اسی طرح ہوتی ہے 319
اس نے مجھے باندھنا چاہا لیکن میں نے  اسے باندھ دیا 320
فرط ذکا کےباعث اس موقف سے گلوخاصی کورالی 320
یہ آدمی علم کے ایک عظیم مرتبے پر فائز ہے 322
انھیں بچھو نے ڈس لیا لیکن حدیث رسول اللہ ﷺ منقطع نہیں کی 322
رسول اللہ ﷺ کی عظمت کی خاطر سواری ترک کردی 323
ان کاقرآن کےساتھ ایسا ہی حال تھا 323
آپ پر تین دن کےروزے لازم ہیں 324
تجھے کوڑے مارے جائیں گے 324
بیشک کشادگی اللہ کےسامنے انکساری ہی سے آتی ہے 325
اگر میں دنیا سے صرف اپنی ایک چادر کامالک بھی ہوا تو اسی سے ان کی غم گساری کروں گا 326
امام مالک ﷫ کی فراست 326
عجیب خواب 327
وہ دنیا کےسورج کی مانند تھا 327
اگر تجھ سےاس نوجوان کی فقاہت فوت ہوگئی توڈرکہ قیامت تک نہ پا سکے گا 327
اخلاص غالب آتاہے 328
واللہ توعلم میں تیراندازی سےزیادہ ماہر ہے 329
آدھی کھالے اورآدھی پھینک دے 329
مخلوق کےذریعے خالق پر استدلال کرو 330
امام شافعی ﷫ کاایک عدیب ترین موقف 331
ایمان قول اروعمل ہے 332
سخاوت اورایثار کی نعمت 333
ہم نے اپنی بدعت ترک کی اوران کی اتباع کرلی 333
ان کادنیا میں زہد اسی طرح تھا 334
کتاب وسنت کو ترک کرنے والے تجھ پر لازم ہے 335
امام شافعی ﷫ کی امرا کےاتالیق کو وصیت 335
سچا بھائی چارہ اسی طرح ہوتاہے 336
ایک گراں قدر نصحیت ہے 338
لوگوں کےمتعلق حسن ظن رکھنا 338
کیاہی درست نہیں کہ ہم بھائی بھائی رہیں اگرچہ کسی مسئلے پر اتفاق نہ کرسکیں 338
مرض الموت میں امام شافعی ﷫ کی گفتگو 339
ایک واعظ کادل چسپ واقعہ 340
اگر میں لوگوں سےکوئی شے قبول کرتاہوتا توتجھ سے بھی وصول کرلیتا 342
اامام احمد ﷫ کےکپڑوں کی چوری کاقصہ 342
اللہ تعالی ان کبار ائمہ واعلام پر رحمت فرمائے 343
اگر لوگ اچھے انداز سے سوال کریں تو ہم کسی ایک کومحروم نہ رکھیں 343
ایک ہزار دینار کےبجائے دوہزار دینار 344
راستے میں موت 349
وہ گرمر گیا جب وہ گانا گا رہاتھا 352
وہ منشیات کے سبب اپنے بچے کو ذبح کردتیا ہے 352
ہم برے خاتمے سےاللہ کی پنا ہ مانگنے ہیں 353
اپنے آپ کو اورابنے گھروالوں کو آگ سے بچا لو 354
حرام عشق کابدترین انجام 361
یقینا یہ ایک الم ناک واقعہ ہے 364
ویڈیو کیسٹ جس نے میری زندگی برباد کردی 377
گناہ کی نحوست 382
یہ دوسرا قصہ ہے 383
دنیا سے بچ جاؤ عورتوں سے بچ جاؤ 384
ایڈز کی مجلس میں خوش آمدید 389
دیو رموت ہے 391
وہ اپنے بچے کودسویں منزل سے پھینک دیتی ہے 394
پسندکی شادی اورایک عجیب مصیبت 397
بیٹی کی پسند شادی پر باپ کےدماغ کی شریان پھٹ گئی 399
وہ دائمی شراب نوشی کےبعد سجدے کی حالت میں دم توڑگیا 400
اللہ نے جس کےلیے روشنی نہیں بنائی اس کےلیے کوئی روشنی نہیں 403
کیا اللہ اپنے بندوں کوکافی نہیں ؟ 405
ہم برے خاتمے سے اللہ کی پناہ چاہتے ہیں 406
شعلہ زن قبرستان 406
جنت کے طلب گار 407
مجھے اپنی رحمت سے جنت میں داخل فرما 408
معجزات اورکرامات
چاندکادو ٹکڑے ہونا 413
کھجور کےتنے کاگریہ وزاری کرنا 413
آپ ﷺ کی انگلیوں کےدرمیان سے پانی پھوٹ پڑا 415
کھانے کی تسبیح 416
اونٹ اورآداب مصطفی ﷺ 417
اونٹ نبی کریم ﷺ کےسامنے روتا اورشکایت کرتا ہے 418
بے دودھ بکری کےتھن سےدود ھ کااترنا 419
جنگلی جانوروں کانبی مکرم ﷺ کااحتر ام بجالانا 421
بھیڑیے کی شہاد ت رسالت 421
نبی کریم ﷺ چالیس جنتی آدمیوں جتنی طاقت رکھتے تھے 422
اگر وہ نبی کریم ﷺ کےقریب ہوتا توفرشتے اسے اچک لیتے 424
بچوں کی نبی مکرم ﷺ سےمحبت 424
رسول اللہ ﷺ کودھوکہ دینے والے زمین اگل دیتی ہے 425
اللہ آسمان سے بجلی گرادیتا ہے 426
قبول ہونے والی دعااور بابرکت بارش 427
دعائے نبوی کی برکت سےسیدنا ابو ہریرہ ﷜ کبھی حدیث نہ بھولے 428
شیطانی جن اور انسان سیدنا عمر ﷜ سےبھاگتے ہیں 429
اے ساریہ پہاڑ 431
عمر بن خطاب ﷜ کیطرف نیل کی طرف خط 432
ایسا عبور کہ تاریخ میں جس کی کوئی نظیرنہیں 433
اللہ پر پختہ اعتماد نے اس کی نظر لوٹا دی 436
آسمانی بارش اورقبول اسلام 436
سفینہ ﷜ رسول اللہ ﷺ کےغلام اورشیر 437
سیدنا حسن اورحسین ﷢ روشنی کی کرن میں چلتے جارہے تھے 438
سیدنا جعفر ﷜جنت میں فرشتوں کےساتھ اڑا رہے ہیں 439
فرشتے سیدنا حنظلہ ﷜ کو غسل دیتے ہیں 441
یہ خبیب ﷜ کےلیے اللہ کی طرف سےرزق ہے 443
صلہ بن اشیم ﷜ اورشیر 444
نوادرات وعجائبات
عجیب وغریب باتیں سننے کارسیا شخص 449
موت تک گھوڑے کی وفاداری 449
حفاظتی شیر اورچیتے 450
بندر حدود قائم کرتے ہیں 450
والدین سےنیکی کرنے ولا پرندہ 451
جانوروں میں ایثار 452
ایک کواآدمی کوموت سے بچاتا ہے 453
ایک بندر انسان کی خدمت کرتا ہے 454
ہاتھیوں کاانتقام 454
پرندے کی ذہانت یاسانپ کی موت ؟ 458
چیونٹی کی حرص 459
مچھر اورہاتھی 459
کتا،مرغا اورگدھا 460
کتے کی جاں نثاری 461
پرندہ اورکشتی کےمسافر 463
کتااوروٹی 464
کتا ارو اثردہا 465
قاری قرآن اورچیل 466
آدمی کی نجا وہندہ ایک مچھلی 467
تاجر اوردوکبوتر یاں 470
ایک گائے اوربادشاہ 474
ایک بیماربکری 475
ایک مچھلی اوربچہ 476
لقمے کےبدلے لقمہ 479
ایک کتا خیانت کرنےوالوں کوسز ادینا ہے 480
شیر اورخرگوش کی ذہانت 484
سانپ اوربندر 483
ایک گائے اورنیک بچہ 487
کتااپنے مالک کاانتقام لیتاہے 489
قاضی شکر اللہ سندھی اوران کاعجیب وغریب واقعہ 491
غیرمنقوظ وصیت 492
عجیب وغریب افعال 495
برف کاہوٹل 496
سمندر کی گہرئیوں میں ڈاکٹر مچھلیاں 496
کھوپڑیوں کی غلط کاری 498
پیسوں کی پیدائش 498
سب سے انوکھی بیماری 499
مریضوں کوہنساہنسا کر علا ج معالجہ کرنا 499
ڈاکٹر مچھلی 500
ایک انوکھا پودا 502
زبانیں نشانیاں ہیں 503
قریب تھاکہ نہ پیاس سےمرجاتا اورپانی اس کےسامنے تھا 503
تعجب خیز اورانوکھے اوقاف 504
ایک چیتے کےبچے کاقتل اوردس سےاوپر درندوں کاحملہ 506
اس نےشیر کےساتھ ایک بندے کمرے میں رات گزاری 508
نصرانی رومی ایک دادے اورمسلمان عربی پوتے کی ملاقات 511
کیا وہ بغیر بدلے اسے قتل کرناچاہتا ہے ؟ 514
دعائے مقبول 517

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
7.9 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam پاکستان تاریخ تاریخ برصغیر زبان فارسی قیام پاکستان

رود کوثر

رود کوثر

 

مصنف : شیخ محمد اکرم

 

صفحات: 664

 

شیخ  محمد اکرام (1908۔1971ء)چک جھمرہ (ضلع لائل پور ) میں پیدا ہوئے۔ گورنمٹ کالج لاہور اور آکسفورڈ میں تعلیم پائی ۔ 1933ء میں انڈین سول سروس میں شامل ہوئے اور سوات ، شولا پور، بڑوچ اور پونا میں اعلٰی انتظامی عہدوں پر فائز رہے۔ آپ پونا کے پہلے ہندوستانی کلکٹر اور دسٹرکٹ مجسٹریٹ تھے۔ قیام پاکستان کے بعد اطلاعات اور نشریات کے ڈپٹی سیکرٹری مقرر ہوئے۔ پھر وزارت اطلاعات و نشریات کے جائنٹ سیکرٹری اور بعد میں کچھ مدت کے لیے سیکرٹری کے عہدے پر فائز ہوئے۔ 1955ء سے 1957ء تک مشرقی پاکستان میں متعین رہے ، پہلے کمشنر ڈھاکہ اور پھر ممبر بورڈ آف ریونیو کی حیثیت سے ۔1958ء تک محکمہ اوقاف کے ناظم اعلیٰ پاکستان مقرر ہوئے۔دفتری کاموں کے ساتھ ساتھ ادبی سرگرمیاں بھی جاری رہیں۔ ہندی مسلمانوں کی ثقافتی اور مذہبی تاریخ لکھی جو تین جلدوں میں شائع ہوئی۔ آب کوثر ، رود کوثر ، موج کوثر ، غالب اور شبلی کے سوانح بھی مرتب کیے۔ برصغیر پاک و ہند کی فارسی شاعری کا ایک مجموعہ ارمغان پاک مرتب کیا۔ جو1950 ء میں شائع ہوا۔  علمی خدمات کی بنا پر حکومت ایران نے آپ کو نشان سپاس اور حکومت پاکستان نے ستارہ امتیاز کے اعزازات عطا کیے۔ پنجاب یونیورسٹی کی طرف سے ڈاکٹر آف لٹریچر کی اعزازی ڈگری ملی۔ زیر تبصرہ کتاب ’’ رودِ کوثر‘‘ شیخ  محمد اکرام کی تصنیف ہے ۔جو کہ  برصغیر پاک وہند کے  مسلمانوں کی مذہبی ،ثقافتی اور علمی تاریخ  اور ان کے کارناموں پر مشتمل ایک اہم دستاویز ہے ۔اور اس  کو سلسلۂ کوثر کی دوسری کڑی کی حیثیت حاصل ہے۔ اس کتاب میں عہد مغلیہ سے لے کر سرزمین برصغیر پر انگریزوں کے قابض ہونے تک کےواقعات معرض تحریر میں  لائے گئے  ہیں۔عہد مغلیہ میں علماء،مشائخ اور صوفیہ نے  جو خدمات انجام دیں اور ان سے  جو نتائج برآمد ہوئے  ان کی تفصیلات بیان کی گئی ہیں۔شیرشاہ سوری اور خاندان سوریہ کے دیگر حکمرانوں کے حالات اور اس عہد کے اسلامی وعلمی واقعات بھی زینت کتاب ہیں۔ کتاب میں مسلمانوں کے مختلف فرقوں کے بارے میں بھی معلوم بہم پہنچائی گئی ہیں ۔

 

عناوین صفحہ نمبر
تمہید 7
استدراک 12
1۔اکبر سےپہلے
عہد مغلیہ 17
مہدوی تحریک 24
شطاری سلسلہ 35
سلسلہ مداریہ 41
پیر روشن میاں بایزید انصاری  43
مخزن الاسلام کا اندراج 52
دبستان مذاہب کا اندراج 57
قادریہ سلسلہ
مخدوم محمد گیلانی 63
عبدالقادر ثانی 64
چشتیہ سلسلہ
شیخ سلیم چشتی 71
صابریہ سلسلہ
شیخ عبدالقدوس گنگوہی 73
مغلوں کی مخالفت 76
2۔عہد اکبری
فتوحاتا اکبری 80
مغلیہ نظام حکومت 81
طریق صلح کل 85
عبادت خانہ 89
علماءکا زوال 100
مخالفت 104
اسباب مخالفت 108
مریدان شاہی 118
ڈاکٹر اشتیاق حسین قریشی کا محاکمہ 131
اکبر کے آخری ایام
فیضی کی تفسیر غیر منقوط 133
ابو الفضل اور اکبر کا بگاڑ 135
ابو الفضل کا انجام 141
عہد اکبری میں علم وفن 161
نواب مرتضے خاں شیخ فرید 178
خواجہ کلاں 211
خواجہ حسان الدین 215
3۔حضرت مجدد الف ثانی شیخ احمد سرہندی
مخدوم عبدالاحد 223
قیام اکبر آباد 227
شادی خانہ آبادی 236
رسالہ تہلیلہ 244
ارشاد وہدایت 259
شیخ بدیع الدین 264
سنت یوسفی 271
حضرت مجدد کی مذہبی خدمات 284
روضۃ القیومیہ 304
وحدت الشہود 308
اختلافات کاحل 324
خوبہ محمد سعید 333
شیخ آدم بنوری  339
4۔ شیخ عبدالحق محدث دہلوی
علوم دینی کا نیادور 343
ابتدائی تعلیم 347
دربار اکبری 348
سفر حرمین 351
شیخ علی متقی 353
فیضی اور شیخ محدث 358
شیخ محدث اور حضرت مجدد الف ثانی 361
شیخ محدث کی علمی خدمات 383
خاندان حقی 388
5۔ علما ومشائخ عصر
ملا محمودجونپوری 391
شیخ محمد بن طاہر بٹنی 392
شیخ محمد بن فضل اللہ برہانپوری 395
قاضی نور اللہ شوستری 399
افغان مشائخ وعلما
قصور کے افغان 410
اخوند بابا درویزہ پشاور قدس سرہ 414
6۔عہد شاہجہانی
شاہ جہان 422
سرمد 433
7۔عہد عالمگیری
ارباب ظاہر 459
خوشحال خاں خطک 468
8۔ پنگال میں اسلام
بنگال میں دیشنو تحریک کے اثرات 492
سید سلطان 499
بزرگان ڈھاکہ 510
شاہ نعمت اللہ قادری 513
غیر شرعی طریقے 516
9۔ حکیم الامت شاہ ولی اللہ
1703ء 528
خاندانی حالات 534
شاہ عبد الرحیم 535
سفر حرمین 542
قرآن 551
حدیث 556
اجتہاد و تقلید 560
تصوف 563
دیگر تصانیف 570
اشعار اور مکاتیب 573
شریعت اور طریقت 579
شیعہ سنی خیالات کی تطبیق 575
اختلاف بین المذاہب 581
جدید علم الکلام کی ابتداء 583
حکیم الامت کے فرزان ارجمند
شاہ عبد العزیز  587
تحفہ اثنا عشریہ 591
شاہ رفیع الدین 596
شاہ عبدالغنی 597
10 ۔ علمائے متاخرین
زوال حکومت 598
زوال حکومت کے اسباب 601
علوم اسلامی کا فروغ
درس نظامی 605
آزاد بلگرامی 611
شیخ محمد حیات سندھی 615
11۔ شیعہ فرقہ کا فروغ
حاجی محمد محسن 620
دکن کے شیعہ علما 623
عظیم آباد 628
مجتہد العصر مولانا دلدار علی 632
علامہ تفضل حسین کاشمیری 639
اسماعیلی فرقے 640
12۔ اٹھارھویں صدی کےمشائخ
چشتیہ سلسلہ کا احیاء 641
شاہ گلشن دہلوی 643
سلسلہ مجددیہ کا دور جدید 658
شاہ احمد سعید دہلوی ثم مدنی 660
اردو زبان کی ارتقا 665
اہم تاریخیں 667
منتخب فہرست کتب 668

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
12.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اعمال معاصی و منکرات

رحمت الٰہی سے محروم لوگ

رحمت الٰہی سے محروم لوگ

 

مصنف : محمد عظیم حاصلپوری

 

صفحات: 80

 

لفظ رحمت قرآن مجید میں کئی ایک معانی کے لیے استعمال ہوا ہے۔ عمومی رحمت الٰہی سےدنیا میں ہرمومن وکافر ، فرماں بردار نافرمان مستفید ہور ہے ہیں  جبکہ رحمت خاص  سے روزِ قیامت صرف مومن ہی مستفید ہوں گے۔ اللہ کی وسیع رحمت دنیا میں ہر نیکو کار اور نافرمان کو پہنچتی ہے  جبکہ روزِ قیامت یہ صرف متقین کے لیے خاص ہے۔ زیر تبصرہ کتاب  ’’رحمتِ الٰہی سے محروم لوگ‘‘ محترم  جنا ب مولانا محمد عظیم حاصلپوری﷾ (مصنف کتب کثیرہ) کی کاوش ہے۔ انہوں اس کتاب میں قرآن  وحدیث کی روشنی میں رحمتِ الٰہی کا معنی ومفہوم، رحمت الٰہی کے اسباب کو بیان کرنے بعد  ان اعمال کا ذکر کیا ہے کہ جن کاموں کا ارتکاب کرنے سے انسان اللہ تعالیٰ کی رحمت سے محروم ہوجاتے  ہیں۔ اللہ تعالیٰ اس کتاب  کو عوام الناس کے لیے نفع بخش بنائے اور لوگوں ایسے اعمال  کرنے سے  بچائے کہ جو کام انسانوں کے لیے اللہ تعالیٰ کی رحمت سے محرومی کا سبب بنتے ہیں۔

 

عناوین صفحہ نمبر
رحمت الہی ٰ
لفظ رحمت کےمعانی 5
اللہ کی رحمت بہت وسیع ہے 8
میری رحمت میرے غضب پر غالب ہے 8
اللہ تعالی اپنےبندوں پر ماں سےزیادہ مہربان 8
اللہ تعالی نے اپنی رحمت کےسودرجے بنائے ہیں 9
سوقتل کرنے والے پر رب کی رحمت 9
رحمت الہی سےناامید مت ہو 10
رحمت الہی کےاسباب
اطاعت 11
صبر 12
نرمی وشفقت کرنا 13
استغفار 15
تقوی 16
احسان 17
انفاق 17
اصلاح ذات البین 18
خاموشی سے قرآن سننا 18
نماز قائم کرنا اورزکوۃ اداکرنا 18
عصر سےقبل چار سنتیں پڑھنا 18
لین دین میں فیاضی سےکام لینا 19
رات کاقیام 19
خوف الہی سے رونا 20
دینی علم حاصل کرنا 20
رحمت الہی سےمحروم لوگ
شوہر کی ناشکری کرنےوالی خاتون 21
نماز میں رکوع وسجود درست نہ کرنےوالا 27
خریدوفروخت میں کثرت سےقسمیں کھانے والا 30
نیکی کرکے جتلانے والا 32
بدکاری کرنےوالا 35
صحبت میں بیوی کودبر استعمال کرنےوالا 47
لواطت کرنے والا 49
جھوٹی قسمیں کھاکر سامان بیچنے والا 51
ٹخنوں سےنیچے کپڑا لٹکانے والا 55
مردوزن باہم ایک دوسرے کی مشابہت کرنےوالے 60
جھوٹ بولنے والے حکمران 62
دیوث 64
جھوٹی قسمیں کھانے والا 65
تکبر کرنےوالا فقیر 67
دنیوی مقاصد کی خاطر امام کی بیعت کرنےوالا 69
والدین کی نافرمانی کرنےوالا 71
زائد پانی روکنے والا 76
اس سلسلہ میں چند ضعیف روایات 77

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
2.7 MB ڈاؤن لوڈ سائز

Categories
Islam اعمال اہل حدیث عبادات

قربت کی راہیں ( سید ابوبکر غزنوی )

قربت کی راہیں ( سید ابوبکر غزنوی )

 

مصنف : سید ابو بکر غزنوی

 

صفحات: 178

 

محبوب حقیقی اللہ ہی ہے۔اس کی محبت سب محبتوں پر غالب ہونی چاہئے۔اس کی محبت میں کسی غیر کی محبت کو شریک کرنا کفر اور شرک ہے۔قرآن مجید میں اللہ تعالی فرماتے ہیں :اور لوگوں میں سے کچھ ایسے ہیں جو اللہ سے ہٹ کر اوروں کو اس کا ہم پلہ بناتے ہیں۔ ان سے یوں محبت کرتے ہیں جیسے اللہ سے محبت کرنی چاہئے۔اور جو اللہ پر ایمان رکھتے ہیں انہیں شدید ترین محبت اللہ ہی سے ہوتی ہے۔سیدنا ابوہریرہ ؓ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : اللہ فرماتا ہے جس نے میرے دوست سے دشمنی کی میں اس سے اعلان جنگ کرتا ہوں۔ اور میرا بندہ میری فرض کی ہوئی چیزوں کے ذریعہ میرا قرب حاصل کرتا ہے اور میرا بندہ ہمیشہ نوافل کے ذریعے مجھ سے قرب حاصل کرتا ہے یہاں تک کہ میں اس سے محبت کرنے لگتا ہوں۔ زیر تبصرہ کتاب “قربت کی راہیں” جماعت اہل حدیث کے معروف عالم دین محترم  مولانا سید ابو بکر غزنوی﷫ سابق وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور  کی تصنیف  ہے، جس میں انہوں نے ان اعمال کو جمع فرما دیا ہے جن کے ذریعے انسان اللہ کا قرب حاصل کر سکتا ہے، اور اس کا محبوب بندہ بن سکتا ہے۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ  مولف موصوف کی اس کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

 

عناوین صفحہ نمبر
پیش لفظ 5
لا محبوب الا اللہ 11
مقام رسالت ﷺ 23
حب رسول اکرم ﷺ 47
اتباع حضور اقدس ﷺ 61
حب آل محمد ﷺ 81
محمدی انقلاب کے خدو خال 95
درود شریف کی فضیلت 115

ڈاؤن لوڈ 1
ڈاؤن لوڈ 2
3.8 MB ڈاؤن لوڈ سائز